قومی

یہ کون ہے جسے رانا ثنا اللہ سے ملنے چل کے آنا پڑا

مسلم لیگ نواز کے رہنما اور رکن قومی اسمبلی رانا ثنا اللہ خاں سے جیل میں ملاقات کی اجازت نہ ملنے پر قومی اسمبلی میں قائد حزبِ اختلاف شہباز شریف ان سے ملاقات کے لیے انسدادِ منشیات کی عدالت پہنچ گئے۔

شہباز شریف کو اپنے سابق صوبائی وزیر سے ملاقات کیلئے لگ بھگ ایک کلو میٹر کا فاصلہ پیدل چل کر طے کرنا پڑا.

اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کے مطابق انھوں نے رانا ثنا اللہ سے ملاقات کیلئے متعلقہ حکام کو ایک سے زیادہ مرتبہ درخواست دی لیکن انھیں اجازت نہیں ملی.

کسی سے جواب طلب کریں تو کہتے ہیں انتقامی کارروائی ہو رہی ہے، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کسی سے جواب طلب کریں تو کہتے ہیں انتقامی کارروائی ہو رہی ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد میں اقلیتوں کے حوالے سے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تعلیمی اداروں میں ریاست مدینہ پر پی ایچ ڈی ہونی چاہیے، پاکستان واحد ملک ہے جو اسلام کے نام پر بنا، مدینہ کی ریاست تمام مسلمانوں کیلئے رول ماڈل ہے، نبی اکرم ﷺ کی زندگی ہمارے لیے قیامت تک مثال رہے گی۔

وزیراعظم نے کہا کہ لوگ سمجھتے ہیں ریاست مدینہ کی بات ووٹ لینے کیلئے کرتا ہوں لیکن ایسا نہیں ہے، سب جانتے ہیں کن لوگوں نے اسلام کے نام پر دکانیں کھولی ہوئی ہیں، سندھ میں سنتے ہیں کہ لوگوں کو زبردستی مسلمان کیا جارہا ہے، زبردستی لوگوں کو اسلام میں شامل کرنے والے قرآن وحدیث نہیں جانتے، ہم کیسے لوگوں کو زبردستی مسلمان کرنے کا معاملہ اپنے ہاتھ میں لے لیتے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ میں باہر سے پیسہ پاکستان لایا، پارٹی کا صدر ہونے کی حیثیت سے جواب دہ ہوں، پاکستان میں تماشا دیکھیں، سابق صدر اور وزیراعظم عدالت میں خود کو بے قصور ثابت نہیں کرتے۔

عمران خان نے کہا کہ ہماری تباہی کا سبب 10 برس میں 24 ہزار ارب کا مقروض ہونا ہے، جن لوگوں نے ملک کو مقروض کیا ان سے حساب مانگو تو کہتے ہیں کہ انتقامی کارروائی ہورہی ہے، وہ جواب نہیں دیتے، ان کے لیے جیلوں میں اے سی لگا ہوا ہے، جو جتنا بڑا مجرم ہے اسے جیل میں اتنی زیادہ سہولیات ملی ہوئی ہیں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ پاکستان میں قانون کی بالادستی نہیں، ہماری جنگ حقوق اور قانون کی بالادستی کی جنگ ہے، اندرون سندھ میں براحال ہے، لوگ پیچھے رہ گئے، انہیں حقوق نہیں ملیں گے تو وہ کیسے پاکستان کی بات کریں گے۔

حفیظ شیخ کو جیل میں ڈالیں، پتہ چل جائے گا کدھر ہیں کروڑوں روپے، آصف زرداری

اسلام آباد: سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ وہ جو باہر جاکر کہتے ہیں کروڑوں کھاگئے، وہ حفیظ شیخ پکڑ کر جیل میں ڈالیں، پتہ چل جائے گا کہ کدھر ہیں ہزاروں اور کروڑوں روپے۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت میں میگامنی لانڈرنگ کیس کی سماعت ہوئی جس میں وکیل آصف زرداری لطیف کھوسہ نے دلائل دیے جب کہ نیب کی جانب سے سابق صدر کے جسمانی ریمانڈ میں 10 روز کی توسیع کی درخواست کی گئی۔

اس موقع پر سابق صدر آصف زرداری نے عدالت سے کہا کہ عید کے بعد ہی کیس کی سماعت رکھ لیں جس پر جج محمد بشیر نے کہا کہ عید کے بعد نہیں رکھ سکتے، زیادہ سے زیادہ ریمانڈ 15 دن کا ہو سکتاہے۔

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد سابق صدر آصف علی زرداری اور بہن فریال تالپور کے جسمانی ریمانڈ میں 10 روز کی توسیع کردی، عدالت نے سابق صدر کو 8 اگست کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا۔

عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو میں سابق صدر آصف زرداری کا کہنا تھا کہ کرپشن پر باتیں کرنے والےعبدالحفیظ شیخ کو پکڑیں، وہ جو باہر جاکر کہتے ہیںکروڑوں کھاگئے، وہ حفیظ شیخ پکڑ کر جیل میں ڈالیں، پتہ چل جائے گا کہ کدھر ہیں ہزاروں اور کروڑوں۔

صحافی کے سوال پر کہ کیا آپ مولانا فضل الرحمان کے ملین مارچ میں شرکت کریں گے، آصف زرداری نے کہا کہ ملین مارچ میں ہم کورٹ سے شریک ہوں گے، فکرنہ کرو۔

نیب نے حمزہ شہباز کی آف شور کمپنیوں کا سراغ لگا لیا

لاہور: نیب لاہور نے منی لانڈرنگ اور آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں حمزہ شہباز کی آف شور کمپنیوں کا سراغ لگا لیا۔

قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے صاحبزادے سلمان شہباز کے بعد حمزہ شہباز کی بھی اف شور کمپنیوں کا سراغ لگالیا، نیب لاہور کی تحقیقاتی ٹیم  نے پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کی آف شور کمپنیوں کی تفصیلات  احتساب عدالت میں جمع کروا دیں۔

نیب رپورٹ کے مطابق حمزہ شہباز کی آف شور کمپپنیوں سے کروڑوں روپے  منتقل کیے گیے، اور یہ آف شور کمپنیاں انہیں   کمپنیوں کے ملازم کے نام پر بنائی گئی ہیں اور حمزہ شہباز کے 4 ملازمین کے نام پر میسرز یونی ٹاس اور گڈ نیچر کمپنیاں بنائی گئیں، جن ملازمین کے نام پر آف شور کمپنیاں بنائی گئی ان میں سید طاہر نقوی، علی احمد خان، ناصر احمد گل شامل ہیں ۔

رپورٹ کے مطابق حمزہ شہباز اپنی آف شور کمپنیوں سے رقم کی منتقلی اپنے ملازم علی احمد خان کے اکاؤنٹ سے کرتے ہیں، 2 کروڑ 50 لاکھ کی اور  25 ملین کی رقم اگست 2016 میں مختلف ٹرانزیکشن سے منتقل ہوئیں، یہ رقم علی احمد خان کے اکاونٹ سے کمپنی کے اکاونٹ میں اور پھر حمزہ شہباز ودیگر فیملی ممبران کے اکاؤنٹس میں منتقل ہوتی رہی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق حمزہ شہباز کی آف شور کمپنیاں جن  ملازمین کے نام پر بنائی گئی وہ  نیب کا سامنا کرنے سے کترا رہے ہیں، ملازمین کا کہنا ہے کہ ان کو نہیں معلوم کہ ان کے نام پر آف شور کمپنیاں بنائی گئیں اور بینک اکاؤنٹس بھی کھلوائے گئے۔ حمزہ شہباز سے سلمان شہباز اور رابعہ عمران سے متعلق بھی تفتیش کی گئی، حمزہ شہباز  سلمان شہباز اور رابعہ عمران کے ساتھ بزنس میں شراکت داری بھی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ حمزہ شہباز سے رمضان شوگر مل اور چودھری شوگر ملز کا ریکارڈ کے حوالے سے بھی تفتیش کی گئی اور نیب کی تحقیقاتی ٹیم آف شور کمپنیوں کے حوالے سے تحقیقات مکمل کرنے کے لیے بہت پر امید دکھائی دیتے ہیں۔

شہباز شریف نے ڈیلی میل پر مقدمہ نہیں کیا صرف شکایت کی، شہزاد اکبر

اسلام آباد: معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر کا کہنا ہے کہ ڈیلی میل کی خبر پر شہباز شریف عدالت نہیں گئے صرف اخبار سے شکایت کی ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ خبر دینے والا صحافی آج بھی اپنے دعوی پر قائم ہے، شہباز شریف عدالت نہیں گئے صرف اخبار سے شکایت کی، شہبازشریف کا میرے خلاف مقدمہ کرنے کا دعویٰ کہاں گیا، شہباز شریف کی 4 صفحات پر مشتمل شکایت میں خبر کی تردید نہیں کی گئی، میں نے واضح کیا تھا کہ کس طرح پیسہ ٹرانسفر کیا گیا۔

شہزاد اکبر نے کہا کہ شہباز شریف نے شکایات میں کہا کہ خبر عوامی مفاد میں نہیں تھی، شہباز شریف نے اخبار سے شکایت کی کہ ان کا موقف شامل نہیں کیا گیا، منظور احمد اور محبوب علی کون ہیں اس کا جواب شہبازشریف نے نہیں دیا، میرا دعویٰ ہے کہ شہبازشریف لندن کی عدالت میں نہیں جائیں گے تاہم میں وعدہ کرتاہوں کہ اگر آپ عدالت میں نہیں گئے تو میں خود جاؤں گا، شہبازشریف سے درخواست ہے کہ وہ مجھے لیگل نوٹس بھیجیں۔

معاون خصوصی احتساب کا کہنا تھا کہ 10سالوں کی تحقیقات کے لیے کمیشن بن چکاہے، کرپشن تحقیقات کی بات کریں تو کہتے ہیں سی پیک خطرے میں ہے، شہباز شریف نے بڑے چور اپنے داماد علی عمران کو باہر بھگا دیا، منی لانڈرنگ کی بات کرو تو کہتے ہیں برطانیہ سے تعلقات خطرے میں ہیں تاہم ہمارے تعلقات اور فنڈنگ اس سے متاثر نہیں ہوتی۔

شہزاد اکبر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے عرفان صدیقی کے معاملے اور انہیں ہتھکڑیاں لگانے کا نوٹس لیا ہے، اس معاملے پر تحقیقات ہونی چاہیے، چھٹی کے روز عرفان صدیقی کی ضمانت بھی غیر معمولی بات ہے تاہم عرفان صدیقی کی ضمانت ہوئی یہ اچھی بات ہے۔

 

16 پاکستانی عازمین حجاز مقدس میں جاں بحق

لاہور: فریضہ حج کی ادائیگی کے لیے جانے والے پاکستانیوں میں سے 16 عازمین حجاز مقدس میں جاں بحق ہوگئے ہیں جنہیں مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں سپرد خاک کردیا گیا ہے۔

اب تک ایک لاکھ 29 ہزار پاکستانی عازمین حج سعودی عرب پہنچ چکے ہیں، جن میں 93 ہزار سرکاری جب کہ 36 ہزار عازمین نجی حج سکیم کے ذریعے پہنچے ہیں۔

سرکاری حج اسکیم کے تحت آنے والے 81 ہزار عازمین حج اس وقت مکہ مکرمہ میں موجود ہیں جن میں 47 ہزار عازمین مدینہ منورہ کی زیارت مکمل کر کے مکہ پہنچے ہیں جب کہ 12 ہزار عازمین حج ابھی مدینہ منورہ میں موجود ہیں۔ اب تک مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں 16 عازمین کی طبعی اموات واقع ہوئی ہیں جن میں سے 12 سرکاری اور 4 نجی حج اسکیم کے تحت حجاز مقدس پہنچے تھے، تمام کی تدفین مدینہ منورہ کے جنت البقیع اور مکہ مکرمہ کے شرائع قبرستان میں کر دی گئی۔

وزارت مذہبی امور سے 187 افسران اور عملہ سعودی عرب میں فرائض سرانجام دے رہا ہے۔ مذہبی امور کی مانیٹرنگ ٹیموں نے 336 نجی حج کمپنیوں کی مانیٹرنگ مکمل کر لی ہے۔ 545 پاکستانی معاونین جب کہ 9 سو لوکل خدام بھی تعینات کیے جا چکے ہیں، حج میڈیکل مشن کے تحت 469 ڈاکٹر، نرسیں اور پیرامیڈیکل اسٹاف کام کررہا ہے۔ شعبہ گمشدگی و بازیابی عازمین حج کا سامان، نقدی اور وہیل چیئر وغیرہ کی بازیابی میں مصروف عمل ہے۔ حرم گائیڈز نے حرم کے باہر 66 ہزار سے زائد عازمین کو رہنمائی فراہم کی اور راستہ بھولنے والے 225 عازمین کو ان کی رہائش گاہوں تک پہنچایا گیا۔

افغان شہریوں کے لئے پاکستانی ویزے کا اجرا محدود

کابل: اکستانی سفارت خانے نے نوسر بازوں کے خلاف کارروائی تک افغان شہریوں کے لئے ویزے کا اجرا محدود کردیا ہے۔

کابل میں واقع پاکستانی سفارت خانے نے افغان شہریوں کے لئے ویزے کا اجرا محدود کردیا ہے، اس حوالے سے سفارت خانے کے ترجمان نے اپنے بیان میں کہا کہ افغانی نوسرباز گروہ لوگوں سے پیسے لے کر سفارت خانے کے قونصلر سیکشن تک جانے کے لئے رسائی دیتا ہے، نوسر باز گروہ کو پولیس کی بھی تائید حاصل ہے اور اس گروہ کے خلاف پولیس بھی کارروائی نہیں کر رہی، نو سر بازوں کے خلاف کارروائی کے بعد مکمل ویزا سروس کھول دی جائے گی۔

سفارت خانے کے ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے لئے اب صرف بزرگ، مریض، خواتین، اور کاروباری حضرات کو ویزے جاری کئے جائیں گے، نوسر بازوں کے خلاف کارروائی کے بعد مکمل ویزا سروس کھول دی جائے گی۔

کرایہ داری ایکٹ میں گرفتار عرفان صدیقی کی ضمانت منظور

اسلام آباد: عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے مشیر عرفان صدیقی کی ضمانت منظور کرلی ہے۔  

کرایہ داری ایکٹ کی خلاف ورزی پر گرفتار ہونے والے سابق وزیراعظم نواز شریف کے مشیر عرفان صدیقی کی ضمانت منظور کرلی گئی ہے، مجسٹریٹ مہرین بلوچ نے 20 ہزار روپے کے مچلکوں کے عوض درخواست ضمانت منظور کی جس کے بعد عرفان صدیقی کے وکلاء کی ٹیم رہائی کے روبکار لے کر اڈیالہ جیل روانہ ہوگئی ہے۔

واضح رہے کہ اسلام آباد پولیس نے عرفان صدیقی کو جمعے اور ہفتے کی درمیانی شب گرفتار کیا تھا۔ پولیس کا کہنا تھا کہ عرفان صدیقی کے خلاف سیکشن 188 کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے، انہوں نے گھر کرائے پر دے رکھا تھا، انہوں نے کرایہ داری پر عمل درآمد نہ کیا اور نہ ہی پولیس اسٹیشن میں اس کا اندراج کروایا۔

بعد ازاں پولیس نے عرفان صدیقی کو جوڈیشل مجسٹریٹ مہرین بلوچ کے روبرو پیش کیا جہاں عدالت نے عرفان صدیقی کی بریت کی درخواست مسترد کرتے ہوئے انہیں 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیج دیا تھا۔

Google Analytics Alternative