قومی

پنجاب بھر میں پولیس اور سیکورٹی اداروں کا مشترکہ کومبنگ آپریشن کا فیصلہ –

پنجاب کے اہم شہروں میں آج سے ہی کومبنگ آپریشن کا آغاز کیا جارہا ہے اور پولیس افسران کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ضرورت کے مطابق فورس کو استعمال کریں-

لاہور : سانحہ کوئٹہ کے بعد پنجاب بھر میں پولیس اور سیکورٹی اداروں کے مشترکہ کومبنگ آپریشن کا فیصلہ کیا گیا ہے اور ریجنل پولیس سربراہان کو باضابطہ ہدایات جاری کر دی گئی ہیں ۔

ذرائع کے مطابق پنجاب کے اہم شہروں میں آج سے ہی کومبنگ آپریشن کا آغاز کیا جارہا ہے اور پولیس افسران کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ضرورت کے مطابق فورس کو استعمال کریں ۔ کومبنگ آپریشن کے لئے فوج، رینجرز، سی ٹی ڈی ، پولیس اور ایلیٹ فورس کو خصوصی ٹیموں میں شامل کیا جارہا ہے اور مشترکہ آپریشن کی رپورٹس وزارت داخلہ کے ذریعے حکومت اور سیکورٹی کے دیگر اداروں کو روزانہ کی بنیاد پر بجھوائی جائیں گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سانحہ کوئٹہ کے بعد پنجاب میں سیکورٹی ہائی الرٹ رکھنے کے فیصلے کے بعد کومبنگ آپریشن کی ضرورت محسوس کی گئی جس پر فوری عملدرآمد کا فیصلہ ہوا ہے ۔

 

وزیراعلیٰ سندھ کی آغا خان ہسپتال میں سانحہ کوئٹہ کے زخمیوں کی عیادت –

سانحہ کوئٹہ کے 29 زخمیوں کوپاک فضائیہ کے خصوصی طیارے سے کراچی لایا گیا اور انہیں آغا خان اسپتال میں داخل کیا گیا

کراچی:  وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے آغا خان ہسپتال میں سانحہ کوئٹہ کے زخمیوں کی عیادت کی، ہسپتال میں 27 زخمی زیر علاج ہیں ان میں سے تین کی حالت تشویشناک ہے ۔

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے آغا خان ہسپتال میں سانحہ کوئٹہ کے زخمیوں کی عیادت اور ان کی جلد صحتیابی کے لئے دعا کی ۔ سانحہ کوئٹہ کے 29 زخمیوں کوپاک فضائیہ کے خصوصی طیارے سے کراچی لایا گیا اور انہیں آغا خان اسپتال میں داخل کیا گیا ۔ ان زخمیوں میں ایک خاتون شامل ہیں ۔ زخمیوں کو میڈیکل ، سرجیکل اور انتہا ئی نگہداشت کے وارڈز میں رکھا گیا ہے ۔ رات کو دو زخمیوں کو دوسرے ہسپتال منتقل کر دیا گیا ۔ آغا خان ہسپتال میں 27 زخمی زیر علاج ہیں جن کی عمریں 20 سے 50 سال کے درمیان ہیں ان میں سے تین کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے ۔

نیشنل ایکشن پلان، وزیراعظم نے اعلیٰ سطح کا اجلاس کل طلب کرلیا

وزیراعظم ہائوس سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس بات کا فیصلہ وزیراعظم نواز شریف کی زیر صدارت اجلاس میں ہوا،وزیرداخلہ چودھری نثار علی خان نے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمداور آئندہ کے اقدامات پر بریفنگ دی ۔ اجلاس میں ملک کی اندرونی سلامتی کی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا گیا، آپریشن ضرب عضب اور دہشت گردوں کے خلاف کارروائیوں کے نتائج پر بھی غور کیا گیا۔

قومی سلامتی کے مشیر ناصر خان جنجوعہ نے دہشت گردوں کی طرف سے آسان اہداف کو نشانہ بنانے کے بارے میں بریفنگ دی ۔ ناصر جنجوعہ کا کہنا تھا کہ دہشت گردی آپریشن ضرب عضب اور فاٹا میں فوج کی کامیاب کارروائیوں کے بعد معصوم شہریوں کو نشانہ بنارہے ہیں۔

وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ ہم ایک نظریے کے خلاف حالت جنگ لڑ رہے ہیں، یہ نظریہ ہماری انداز زندگی کو بدلنا چاہتاہے ،۔سانحہ کوئٹہ کے شہدا کا خون رائیگاں نہیں جائیگا، وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ حکومت سانحہ کوئٹہ میں ملوث دہشت گردوں کو انجام تک پہنچانے کے لیے اقدامات کریگی ۔

وزیراعظم نے کم سے کم وقت میں بہترین نتائج کے لیے وفاقی اور صوبائی انٹیلی جینس اداروں میں کوآرڈینیشن کو یقینی بنانے کی ہدایات دیں۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ملک کو ہر قسم کی دہشت گردی اور انتہاپسندی سے محفوظ بنانے کا عزم کررکھا ہے، ملک صحیح راستے پر ہے ، عوام کو محفوظ ، مستحکم اور خوشحال پاکستان دینگے، دہشت گردغلط فہمی میں مبتلا ہیں۔اور قوم میں انتشار اور عدم اتفاق کا بیج بونا چاہتے ہیں۔ مگر پوری قوم متحد ہے ، اور دہشت گردوں کے خلاف جاری کاررائیوں کی بھرپور حمایت کرتی ہے۔

فیصلہ کرنا ہوگا کسی کی پراکسی وار نہیں لڑیں گے،اچکزئی

پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے کہاہےکہ ہمیں فیصلہ کرنا ہوگا کہ کسی کی پراکسی وار نہیں لڑیں گے، دہشت گردوں کے خلاف بلا امتیاز کارروائی ضروری ہے، فوج عدلیہ اور حکومت کو دہشت گردی کے خلاف تجدید عہد کر کے دہشت گردوں کے خلاف حالت جنگ کا عملی نفاذ کرنا ہو گا ۔

قومی اسمبلی میں سانحہ کوئٹہ پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے محمود خان اچکزئی نے کہہ کہ کوئٹہ حملہ پاکستان پر حملہ ہے، یہ ہماری انٹیلی جنس ایجنسیز کی ناکامی ہے،را یا موساد پر الزام لگانےکی بجائے اپنی اصلاح کریں، وزیر اعظم انٹیلی جنس اداروں کوحکم دیں کہ ٹھیک ، ٹھیک نتیجہ چاہئے۔

محمود اچکزئی نے کہا کہ کل دونوں شریف الگ الگ کوئٹہ پہنچےہم دنیا کو کیا پیغام دینا چاہتے ہیں؟ہمیں بتایاجائے اس ملک کے فیصلے کس نے کرنے ہیں ، ہمیں کس کے پیچھے چلنا ہے، وزیراعظم سانحہ کوئٹہ کو ٹیسٹ کیس بناکرسول اور ملٹری انٹیلی جنس ایجنسیز کو ٹائم فریم دیں اگر وہ نتائج نہ دیں تو ان کے سربراہوں کو فارغ کردیں۔

محمود خان اچکزئی نے کہا کہ وزیر اعظم سانحہ کوئٹہ سمیت ملکی سیکورٹی صورتحال پر پارلیمنٹ کا مشترکا اجلاس بلائیں تاکہ خارجہ اور داخلہ پالیسی پر بات ہو سکے۔ ہماری بیوروکریسی روز نئے جواز پیش کرتی ہے، ہماری ایجنسیز گدلے پانی سے سوئی ڈھونڈ سکتی ہیں تو ان دندناتے دہشت گردوں کو کیوں نہیں پکڑسکتیں ؟آج بھی پاکستان کے سیکڑوں لوگوں کی جیبوں میں فرشتوں کے کارڈز ہیں،کیا ہم کرائے کے قاتل ہیں ؟

محمود خان اچکزئی نے ایوان میں سانحہ کوئٹہ کے شہدا کے لیے فاتحہ خوانی کے بعد کہاکہ وہ آئندہ پارلیمنٹ میں فاتحہ خوانی نہیں کریں گے کیا یہ ایوان صرف دعاؤں کے لیے ہے؟

وزیر اعلیٰ سندھ کو متحر ک دیکھ کر وزراء بھی حرکت میں آگئے-

وزیراعلیٰ سید مراد علی شاہ نے صبح سویرے کام کرنے کی وہ مثال قائم کی کہ انکے وزیر بھی چارج ہوئے بغیر نہ رہ سکے۔ وزیر صنعت منظوروسان نے سائٹ لمیٹڈ کا اچانک دورہ کیا۔ انہوں نے دفتر میں گندگی اور ٹوٹا پھوٹا فرنیچر دیکھ کر ضروری ہدایات جاری کیں ۔

308 ملازمین کو غیر حاضر پایا جن میں ایم ڈی غلام مجتبیٰ جویو، سیکریٹری آغا فخر اور ڈپٹی چیف انجنیئرعبدالمالک بھٹی شامل تھے۔منظور وسان نے غیر حاضر ملازمین کو شوکاز نوٹسز جاری کردیئے۔ وزیرصنعت نے غیر حاضرملازمین کی تنخواہیں روکنے کی بھی ہدایت جاری کردی ۔

صوبائی وزیر برائے بہبود آبادی ممتاز جاکھرانی بھی پیچھے نہ رہ سکے اور وزارت کا قلمدان سنبھالنےکےبعدصبح 9بجے دفتر جاپہنچے ۔ انہوں نے ملازمین کی حاضری چیک کی اور دفتردیرسےآنےوالےملازمین کو شوکاز جاری کرتے ہوئے غیر حاضر ملازمین کی تنخواہیں روکنے کے احکامات جاری کردیئے۔

وزیر اعلیٰ کے چست ہوتے ہیں وزراء بھی حرکت میں آگئے ہیں اور امید ہے کہ اس تبدیلی کے بہتر نتائج برآمد ہوں گے۔

اچکزئی ’’را‘‘ کا ایجنٹ؛ نوازشریف کا خاص آدمی ہے، شیخ رشید

کوئٹہ: پاکستان عوامی مسلم لیگ  کے سربراہ شیخ رشید احمد نے کہاہے کہ محموداچکزئی ’’را‘‘ کا ایجنٹ ہے اور نوازشریف کاخاص آدمی ہے، حکومت نااہل اورکرپٹ ہے،غیرملکی ایجنٹوں پرآہنی ہاتھ ڈالا جائے۔

انھوں نے کوئٹہ میں سول اسپتال کادورہ کیا اورزخمیوں کی عیادت کی، اسپتال کے باہرمیڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ موجودہ حکومت نااہل اور کرپٹ ہے،غیر ملکی ایجنٹوں پر آہنی ہاتھ ڈالا جائے۔ شیخ رشید نے کہاکہ محموداچکزئی نے وزیراعظم سے مفادت حاصل کیے ،محمودخان اچکزئی کے بیان کی مذمت کرتاہوں اورپوری قوم دہشت گردی کی مذمت کرتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی ایجنسیاں محدودوسائل میں بہترین کام کررہی ہیں۔ ان کوسلام پیش کرتاہوں،جہاں جہاں ’’را‘‘ موساد اور خادسمیت دیگرغیر ملکی ایجنسیوں کے ایجنٹ موجود ہیں ان سے آہنی ہاتھوں سے نمٹاجائے،انھوں نے کہاکہ دہشت گردبلوچستان کاامن تباہ کرناچاہتے ہیں۔

سانحہ کوئٹہ، تحریک انصاف نے تین روز کیلئے سیاسی سرگرمیاں معطل کر دیں –

سانحہ کوئٹہ پر تحریک انصاف نے تین روز کیلئے سیاسی سرگرمیاں معطل کر دیں۔ چیئرمین عمران خان زخمیوں کی عیادت کیلئے کل کوئٹہ جائیں گے۔

اسلام آباد: بنی گالہ اسلام آباد میں چیئرمین عمران خان کی زیر صدارت تحریک انصاف کی سینئر قیادت کا اجلاس ہوا۔ پارٹی ترجمان نعیم الحق نے بتایا کہ اجلاس میں کوئٹہ دھماکے کی شدید مذمت کی گئی اور فیصلہ کیا گیا کہ تین روز تک سیاسی سرگرمیاں معطل رکھی جائیں گی۔ چیئرمین عمران خان منگل کو کوئٹہ جائیں گے جہاں وہ دھماکے کے زخمیوں کی عیادت کریں گے۔ نعیم الحق نے بتایا کہ اجلاس میں اتفاق کیا گیا کہ دہشت گردی کے ناسور سے نمٹنے کیلئے ملک کی سیاسی جماعتوں اور عسکری قیادت کو ملکر لائحہ عمل طے کرنا ہوگا۔ نعیم الحق کا کہنا تھا کہ تین روز بعد تحریک انصاف کی قیادت کا دوبارہ اجلاس ہوگا جس میں تیرہ اگست کے احتجاجی پروگرام کو حتمی شکل دی جائے گی۔ ذرائع نے بتایا کہ اجلاس میں تیرہ اگست کے احتجاجی پروگرام پر غیر رسمی جائزہ لیا گیا۔ شرکاء نے راولپنڈی کے علاقے صدر سے اسلام آباد کے علاقوں آبپارہ، ایف نائن پارک یا فیصل مسجد تک احتساب ریلی نکالنے کی تجاویز پر غور کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق اجلاس میں صدر راولپنڈی سے فیصل مسجد اسلام آباد تک ریلی نکالنے پر فیصلہ ہوا تاہم حتمی فیصلہ اور اعلان تین روز بعد ہونے والے اجلاس میں کیا جائے گا۔

 

سانحہ کوئٹہ، وزیراعظم اور آرمی چیف کی سی ایم ایچ میں زخمیوں کی عیادت –

وزیر اعظم نواز شریف اور آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے سی ایم ایچ کوئٹہ میں سول ہسپتال دھماکے کے زخیموں کی عیادت کی۔

کوئٹہ:وزیر اعظم نواز شریف تمام مصروفیات ترک کر کے اسلام آباد سے کوئٹہ پہنچے ۔ ان کے ساتھ قومی سلامتی کے مشیر ریٹائرڈ لیفٹننٹ جنرل ناصر خان جنجوعہ اور وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات پرویز رشید بھی تھے۔ وزیر اعظم نواز شریف نے آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے ہمراہ سی ایم ایچ کوئٹہ میں سول اسپتال دھماکے کے زخیموں کی عیادت کی۔ اس موقع پر وزیراعظم نے کہا شہدا کے لواحقین کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔ شہدا کے بچے میرے بچے ہیں اور امن دشمنوں کو ان کے انجام تک پہنچایا جائے گا۔ زخمیوں کی عیادت کے بعد وزیر اعظم بلوچستان کی سیکورٹی کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کریں گے۔ وزیراعظم کو امن و امان کی صورتحال پر بریفنگ دی جائے گی

 

Google Analytics Alternative