سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

ایچ آئی وی سے نمٹنے کے لیے کینسر کی ادویات سے مدد

سائنس دانوں کے مطابق کینسر کے علاج میں مدافعتی عمل کی کارکردگی سمجھنے میں زبردست ترقی سے ایچ آئی وی کے علاج میں بھی مدد مل سکتی ہے۔

مدافعتی نظام کو ایچ آئی وی اور کینسر دونوں کا مقابلہ کرنے میں مشکل پیش آتی ہے۔ لیکن امیونو تھیراپی کے تیزی سے پھلتے پھولتے شعبے کی بدولت کینسر کے بعض ایسے مریضوں کو بھی مکمل شفا ملی ہے جن کا مرض آخری سٹیج پر تھا۔

امید کی جا رہی ہے کہ اسی قسم کے طریقۂ علاج سے ایچ آئی وی سے بھی مکمل شفا ممکن ہے۔ تاہم بعض ماہرین نے اس سلسلے میں محتاط رہنے کا مشورہ دیا ہے۔

ایچ آئی وی کے علاج کے لیے اینٹی ریٹرو وائرل ادویات استعمال ہوتی ہیں جو وائرس کو مار ڈالتی ہیں۔ اگر اس وائرس پر قابو نہ پایا جائے تو وہ آگے چل کر ایڈز کا مرض پیدا کر دیتا ہے جو مدافعتی نظام کو تباہ کر دیتا ہے۔

فی الحال اس مرض کا مکمل علاج ممکن نہیں ہے کیوں کہ مدافعتی نظام جسم کے اندر چھپے ہوئے وائرس کا سراغ نہیں لگا سکتا۔

ایچ آئی وی دریافت کرنے والی نوبیل انعام یافتہ سائنس دان فرانسوا بارے سنوسی نے بی بی سی کو بتایا: ‘ایچ آئی وی سے متاثرہ خلیے کسی حد تک رسولی کے خلیوں کی طرح عمل کرتے ہیں۔

‘یہ خلیے ایسے مالیکیول پیدا کرتے ہیں جو رسولی کے خلیوں کے اندر پیدا ہوتے ہیں۔ اس سے سوال اٹھتا ہے کہ کیا ہم ایچ آئی وی سے نمٹنے کے لیے کینسر کے علاج جیسا طریقہ آزما سکتے ہیں؟’

سنوسی اس وقت پیرس میں ایچ آئی وی اینڈ کینسر فورم میں شرکت کر رہی ہیں۔

آسٹریلیا کے ڈورٹی انسٹی ٹیوٹ کی ڈائریکٹر پروفیسر شیرن لیون اس سے اتفاق کرتی ہیں کہ ایچ آئی وی کے معالجین کو کینسر سے سبق لینا چاہیے۔ ‘ان میں بہت سی چیزیں مشترک ہیں۔ میرے خیال میں اس کا بہت امکان ہے۔’

کینسر زدہ خلیے ایسی تکنیک استعمال کرتے ہیں کہ مدافعتی نظام کی نظروں میں نہ آ سکیں۔ وہ اپنی سطح کے اوپر PD-L1 پروٹین چسپاں کر دیتے ہیں جس سے مدافعتی نظام کے حملہ آور خلیے ناکارہ ہو جاتے ہیں۔

گائے کی مدد سے بنایا جا سکتا ہے ایڈز کا ٹیکا

امریکی محققین کا کہنا ہے کہ ایچ آئی وی سے نمٹنے کے لیے ویکسین بنانے میں گائے کافی مددگار ثابت ہو سکتی ہے۔

مدافعت کے طور پر گائے مسلسل ایسے خاص اینٹی باڈی بناتی ہے جن کے ذریعے ایچ آئی وی کو ختم کیا جا سکتا ہے۔

کہا جاتا ہے کہ گائیوں کے نظام ہضم میں بیکٹریا کی بڑی تعداد موجود ہونے کے باعث ان کی مدافعتی صلاحیت بہت زیادہ ہوتی ہے۔

امریکہ کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ نے اس نئی معلومات کو بہترین قرار دیا ہے۔

ایچ آئی وی ایک مہلک بیماری ہے اور مریض کے مدافعتی نظام پر حملہ کرتا ہے۔

ایک ویکسین مریض کے مدافعتی نظام کو ایسا بنا سکتا ہے جس سے اینٹی باڈیز بن سکیں جن کے باعث لوگوں کو ایچ آئی وی نہ ہو۔

انٹرنیشنل ایڈز ویکسین انیشی ایٹو اور دی سكرپس ریسرچ انسٹیٹیوٹ نے گائیوں پر تجربے شروع کیے۔

ایک محقق ڈاکٹر ڈیون سوک نے بی بی سی نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا ‘ان تجربات کے نتائج نے ہمیں حیران کر دیا۔’

انھوں نے بتایا کہ گائیوں میں مدافعتی نظام کے لیے ضروری اینٹی باڈیز چند ہفتوں میں بن جاتی ہیں۔

ڈاکٹر سوک نے کہا ‘یہ انتہائی حیران کر دینے والا موقع تھا۔ انسانوں میں ایسے اینٹی باڈیز تیار ہونے میں تقریباً تین سے پانچ سال لگ جاتے ہیں۔‘

ایپل کا باحجاب خاتون کا ایموجی متعارف کرانے کا اعلان

واشنگٹن: پیغام رسانی کے دوران جذبات اور احساسات کی عکاسی کے لیے استعمال ہونے والے ’’ایموجیز‘‘ کے عالمی دن کے موقع پر امریکی کمپنی ایپل نے باحجاب خواتین کی نمائندگی کے لیے نیا ایموجی متعارف کرانے کا اعلان کردیا۔

امریکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ایپل نے اعلان کیا ہے کہ وہ متعدد نئے ایموجیز پر کام کررہا ہے جن میں ایک باحجاب خاتون، داڑھی والے شخص، یوگا کے ایموجیز شامل ہیں۔ کمپنی کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق یہ نئے ایموجیز رواں برس کے آخر تک ایپل کے صارفین کو دستیاب ہوں گے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ باحجاب خاتون کے ایموجی کا خیال 16 سالہ سعودی لڑکی رؤف الحمیدی نے ایموجیز بنانے والی غیر منافع بخش تنظیم یونی کوڈ کنسورشیم کو پیش کیا تھا جس نے یہ آئیڈیا ایپل کے ساتھ شیئر کیا اور ایپل نے اسے اپنے سسٹم میں شامل کرنے کی حامی بھری۔

رؤف الحمیدی نے اپنی تجویز منظور ہونے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایپل کی مشکور ہیں جس نے اپنی ڈیوائسز میں یہ ایموجی شامل کرنے کی حامی بھری۔ انہوں نے بتایا کہ اس ایموجی کا خیال ان کے ذہن میں اس لیے آیا کیوں کہ وہ میسجز میں اپنی طرح دکھنے والے ایموجی کا اضافہ چاہتی تھیں۔

ٹوئیٹر پر حجابی ایموجی کی تصاویر وائرل ہونے کے بعد دیگر افراد نے بھی ایپل اور ٹم کُک سے اپنی پسند کے ایموجیز تیار کرنے کا مطالبہ شروع کردیا ہے۔

نوکیا کا نیا اسمارٹ فون لانچ ہونے کےلیے تیار

فن لینڈ: نوکیا کےلیے موبائل فونز تیار اور لانچ کرنے والی کمپنی ایچ ایم ڈی گلوبل نے نوکیا کے نئے اسمارٹ فون لانچ کرنے کا عندیہ دے دیا ہے جو شاید اب تک نوکیا کے سب سے مہنگے فونز میں سے ایک ہوگا۔

اسے نوکیا 8 اور نوکیا 9 کا نام دیا جائے گا تاہم ایک جرمن ویب سائٹ وِن فیوچر کے مطابق اسے ماڈل نمبر ٹی اے 1004 کے نام سے نوکیا 8 کا نام دیا گیا ہے اور 31 جولائی کو پہلے اسے یورپ میں فروخت کے لیے پیش کیا جائے گا۔

تاہم یہ خبر اب بھی حتمی نہیں کیونکہ افواہیں گرم تھیں کہ نوکیا 8 اور نوکیا 9 اسی سال کے وسط میں ریلیز کئے جائیں گے جو اب تک نوکیا کی جانب سے پیش کردہ سب سے مہنگا فون بھی ہوسکتا ہے۔ اس میں اسنیپ ڈریگن 835 پروسیسر نصب ہوگا جو کوالکوم کمپنی کا تیارکردہ اب تک سب سے جدید پروسیسر بھی ہوگا۔ اس میں 4 جی بی ریم اور 64 جی بی انٹرنل اسٹوریج رکھی گئی ہے۔ یورپ میں اسے دو سِم کی گنجائش کے ساتھ ہی پیش کیا جارہا ہے۔

نوکیا 8 چار رنگوں میں پیش کیا جائے گا جن میں نیلا، اسٹیل ، سنہرا نیلا اور سنہرا تانبے جیسا رنگ شامل ہیں۔ اس کی قیمت 590 یورو یعنی پاکستانی 72 ہزار روپے تک ہوسکتی ہے۔ تاہم وِن فیوچر ویب سائٹ نے اس کی مزید تفصیلات کا اندازہ لگاتے ہوئے کہا ہے کہ اس میں 5.7 ایچ ڈی ڈسپلے اور 13 میگا پکسل کیمرہ نصب ہوگا۔

نوکیا نے جرمنی کی مشہور لینس ساز کمپنی ’’کارل زائس‘‘ سے معاہدہ کیا ہے اور اسی بنا پر کہا جاسکتا ہے کہ اگلے نوکیا فون میں کارل زائس لینس موجود ہوسکتا ہے۔

ہرم کے نیچے سے سائنسدانوں کو سرنگ مل گئی

دریافت ہونے والی سرنگ کے متعلق ماہرین کو معلوم ہوا ہے کہ اس کا ’’موت‘‘ اور ’’انڈرورلڈ‘‘ کے ساتھ کوئی تعلق ہے جو کھو چکا ہے۔

میکسیکو سٹی(نیٹ نیوز ) عرصہ قبل ماہرین آثارقدیمہ نے میکسیکو کے شہر (Teotihuacan) میں 2ہزار سال قدیم ہرم (Pyramid of the Moon)دریافت کیا تھا۔اب اس ہرم کے نیچے ایک سرنگ کی موجودگی کا انکشاف ہوا ہے لیکن جب سے ماہرین کو معلوم ہوا کہ سرنگ کس طرف جاتی ہے تو وہ اسے کھولنے کی ہمت ہی نہیں کر پا رہے ۔ رپورٹ کے مطابق یہ ہرم افزائش نسل اور تخلیق کی دیوی کے لیے بنایا گیا تھا۔

دریافت ہونے والی سرنگ کے متعلق ماہرین کو معلوم ہوا ہے کہ اس کا ’’موت‘‘ اور ’’انڈرورلڈ‘‘ کے ساتھ کوئی تعلق ہے جو کھو چکا ہے ، سائنسدان اس انکشاف کے بعد اس سرنگ کو کھولنے میں ہچکچاہٹ کا شکار ہیں ان کے خیال میں اس سرنگ کے اندر راستوں کا ایک جال بچھا ہو سکتا ہے اور ممکنہ طور پر قدیم حکمرانوں کی باقیات بھی مل سکتی ہیں۔ماہر آثار قدیمہ ورونیکا اورٹیگا کا کہنا ہے کہ اس سرنگ سے اس قدیم تہذیب کو سمجھنے کے لیے بنیادی چیزیں مل سکتی ہیں۔

ہمیشہ مسکرائیے اور امیر نظر آئیے، تحقیق

ٹورانٹو: کینیڈا کے ماہرینِ نفسیات کا کہنا ہے کہ اگر آپ زندگی میں کامیاب ہونا چاہتے ہیں تو چہرے پر امیروں جیسا تاثر اور شاہانہ مسکراہٹ ہمیشہ سجائے رکھیے۔

یونیورسٹی آف ٹورانٹو کینیڈا میں فیکلٹی آف آرٹس اینڈ سائنس کے تحت کیے گئے اس وسیع سماجی و نفسیاتی مطالعے میں معاشرے کے مختلف طبقات سے تعلق رکھنے والے افراد کے اُن تاثرات کا جائزہ لیا گیا جو اُن کے چہروں پر عموماً موجود رہتے ہیں۔

اگرچہ ہزاروں سال سے سماجی طور پر یہ کہا جاتا ہے کہ امیری اور غریبی کسی بھی انسان کے چہرے پر ایک مستقل تاثر قائم کرتی ہیں لیکن مذکورہ مطالعے میں پہلی بار باقاعدہ طور پر اس تاثر کی نوعیت جاننے کی کوشش کی گئی ہے۔

اس مطالعے کے دوران ہزاروں خواتین و حضرات کے چہروں کا اس وقت جائزہ لیا گیا جب وہ معمول کی حالت میں تھے یعنی نہ تو غمگین تھے اور نہ ہی خوش۔ معمول کے اس تاثر میں چہرے کے خد و خال کی بنیاد پر پٹھوں کی ساخت معلوم کی گئی جبکہ دوسرے مختلف افراد کو یہ چہرے دکھا کر پوچھا گیا کہ وہ تصویر میں دکھائی دینے والے شخص کو (صرف اس کا چہرہ دیکھتے ہوئے) امیر سمجھتے ہیں یا غریب۔

رضاکاروں کے جوابات سے جہاں یہ تصدیق ہوئی کہ امیر اور مالدار لوگوں کے چہروں پر خوشی اور اطمینان کا تاثر اکثر نمایاں رہتا ہے جس میں ان کے ہونٹوں پر ایک ہلکی سی مسکراہٹ بھی شامل ہوتی ہے؛ وہیں یہ بھی معلوم ہوا کہ دوسرے لوگ اسی تاثر اور ہلکی سی مستقل مسکراہٹ کو دیکھتے ہوئے کسی شخص کو مالدار سمجھتے ہیں، چاہے وہ شخص حقیقتاً غریب ہی کیوں نہ ہو۔

اس کے برعکس اگر کسی مالدار شخص نے اپنے چہرے پر غمزدگی اور سنجیدگی طاری کر رکھی ہو تو دوسرے لوگ بالعموم اسے غریب یا متوسط طبقے کا خیال کرتے ہیں۔

اپنے چہرے پر بشاشت اور خوشی طاری رکھنے والے لوگوں کے لیے اپنی زندگی اور کیریئر میں زیادہ مواقع ہوتے ہیں کیونکہ انہیں دیکھ کر سامنے والے فرد میں خوشگواری کا احساس جنم لیتا ہے۔

مطالعے میں یہ تصدیق بھی ہوئی کہ کسی انسان کے چہرے پر قائم ہونے والا مستقل تاثر (چاہے وہ سنجیدگی اور مسکینی کا ہو یا پھر خوشی کا) زندگی میں ہونے والے تجربات اور اتار چڑھاؤ کا نتیجہ ہوتا ہے اور شاید انسان نے اس تاثر کی بنیاد پر امیری یا غریبی کے بارے میں رائے قائم کرنے کا لاشعوری عمل ہزاروں سال میں پختہ کیا ہے۔

اس تحقیق کے نتائج ’’جرنل آف پرسنیلٹی اینڈ سوشل سائیکولوجی‘‘ کے تازہ شمارے میں شائع ہوئے ہیں جن کا لبِ لُباب صرف اتنا ہے کہ حالات کیسے بھی ہوں، ہمیشہ مسکراتے رہیے؛ کامیابی آپ کے قدم ضرور چومے گی۔

پرندوں کی طرح غوطہ لگانے والا ڈرون

واشنگٹن: امریکہ میں نیول ریسرچ لیبارٹری کے ماہرین نے پیلی کن اور دیگر آبی پرندوں سے متاثر ہوکر ایک ڈرون بنایا ہے جو پانی میں غوطہ لگا کر دوبارہ فضا میں پرواز کرسکتا ہے۔

اسے اڑنے والے سی گلائیڈر کا نام دیا گیا ہے اور اس کے ایک نمونے کا کامیاب تجربہ بھی کیا گیا ہے۔ چھوٹے تجرباتی گلائیڈ سے حوصلہ افزا نتائج حاصل ہونے کے بعد اگلے برس اس کا بڑا یعنی فل اسکیل ماڈل تیار کیا جائے گا۔ 30 کلوگرام وزنی یہ ڈرون 150 میل تک کا فاصلہ طے کرسکے گا جبکہ ضرورت پڑنے پر پانی میں جاکر کسی آبدوز کا روپ اختیار کرلے گا۔

تکنیکی طور پر اڑنے اور تیرنے میں بہت فرق ہوتا ہے کسی مشین کو ایک ساتھ دونوں کاموں کے لیے بنانا کسی چیلنج سے کم نہیں ہوتا۔ اس کا ایک ظاہری استعمال تو دشمن کی جاسوسی ہی سمجھ میں آتا ہے لیکن اسے سمندری تحقیق اور وسائل کی کھوج کے لیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ اس کے علاوہ سمندری حادثوں اور تیل بردار جہازوں کے رساؤ کا فوری پتا لگانے میں بھی غوطہ خور ڈرون بہت اہم کردار ادا کرسکتےہیں.

واٹس ایپ کے7 اہم نئے فیچرزمتعارف

انٹرنیٹ صارفین کی زندگی میں واٹس ایپ لازم و ملزم حصہ بن گیا ہے اور یہ سوشل میڈیا ایپلی کیشن اتنی موثر اور مفید ثابت ہوئی ہے کہ ہر گزرتے دن کے ساتھ اس کے صارفین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اوراب واٹس ایپ نے 7 نئے فیچرز متعارف کرائے ہیں جو آپ کے لیے کافی مفید ثابت ہوسکتے ہیں۔

1) جیفس بنانا اور ویڈیو ایڈیٹنگ:

ان دنوں انٹرنیٹ پر پیغام رسانی کے لیے جفس کا استعمال زیادہ سے زیادہ ہوتا جارہا ہے۔ اسی لیے واٹس ایپ نے نیا فیچر متعارف کرایا ہے جس کی مدد سے آپ ویڈیو میں ایڈیٹنگ کرکے انہیں جفس میں تبدیل کرسکتے ہیں۔ اس کے لیے ویڈیو آپ کے موبائل میں محفوظ ہونا ضروری ہےجب آپ کسی ویڈیو کو سینڈ کرتے ہیں تو ایڈیٹنگ کے آپشن بھی سامنے آجاتے ہیں، اگر آپ ویڈیو کی لمبائی یا دورانیہ 6 سیکنڈ کا کردیں گے تو خودبخود جفس کا آپشن آپ کے سامنے آجائے گا جسے استعمال کرکے آپ جفس بنا سکتے ہیں۔

آپ ویڈیو میں کسی بھی جگہ 6 سیکنڈ کے دورانیہ کا جفس بنا سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ ویڈیو پر آپ کچھ لکھ بھی سکتے ہیں اور ایموجیز بھی شامل کرسکتے ہیں۔

2) تصاویر میں ایڈیٹنگ

واٹس ایپ نے حال ہی میں انتہائی اہم ایڈیٹنگ کا آپشن بھی متعارف کرایا ہے، جس کی مدد سے آپ اپنی تصاویر کو ارسال کرتے وقت ہاتھ کے ہاتھ انہیں ایڈٹ بھی کرسکتے ہیں۔ اس آپشن کے ذریعے آپ تصاویر پر کچھ تحریر کرسکتے ہیں، کٹ کرسکتے ہیں، چاروں سمت گھماسکتے ہیں اور ان میں ایموجیز شامل کرسکتے ہیں۔ اس کے علاوہ بھی ایڈیٹنگ کے مزید آپشن کو استعمال کرکے پیغام کو موثر بنا سکتے ہیں۔

3) چیٹس کو پن کرنا:

بسا اوقات اس قدر پیغامات آتے ہیں کہ اہم چیٹس کو فورا تلاش کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔ واٹس ایپ نے اس مسئلے کو حل کرتے ہوئے چیٹس کو ’’پن‘‘ کرنے کا آپشن متعارف کرایا ہے جس کے نتیجے میں آپ غیر ضروری چیٹس کو نیچے اور اہم چیٹس کو اوپر لاسکتے ہیں۔

4) ٹیکسٹ کا فارمیٹ تبدیل کرنا

اس آپشن کے ذریعے آپ تحریر کو بولڈ (نمایاں) کرسکتے ہیں، فانٹ تبدیل اور چھوٹا بڑا بھی کرسکتے ہیں۔

5) زبان

واٹس ایپ آپ کو مختلف زبانوں میں گفتگو کی سہولت بھی فراہم کرتا ہے۔

6) بات چیت کا شارٹ کٹ

آپ جس شخص یا گروپ میں بہت زیادہ چیٹ کرتے ہیں اس کا ہوم اسکرین پر شارٹ کٹ بھی بنا سکتے ہیں۔ اس طرح آپ کو آسانی ہوگی اور ہر بار واٹس ایپ کھولنے اور پھر چیٹ پر جانے کی زحمت سے بچ جائیں گے۔

7) نوٹی فکیشنز کی کسٹمائزیشن

اس فیچر کے ذریعے آپ اہم افراد کے پیغامات کے نوٹی فکیشنز موصول کرسکتے ہیں۔ اس آپشن کو فعال کرنا آسان ہے۔ کسٹم نوٹی فکیشنز میں جاکر اپنی مرضی کے کنٹیکٹس کے نوٹی فکیشن سبسکرائب کریں۔

 

Google Analytics Alternative