سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

فیس بک کا اپنی تمام میسجنگ ایپس اکھٹی کرنے کا فیصلہ

انسٹاگرام، واٹس ایپ اور فیس بک میسنجر ایک ہی کمپنی کی مختلف میسجنگ اپلیکشنز ہیں اور اربوں افراد انہیں استعمال کرتے ہیں، مگر ایک ایپ سے دوسری میں میسج بھیجنا ابھی ناممکن ہے۔

مگر اب لگتا ہے کہ یہ بات ماضی کا قصہ بننے والی ہے کیونکہ فیس بک انسٹاگرام، میسنجر اور واٹس ایپ صارفین کو ایک دوسرے کو کسی بھی اپلیکشن میں میسج بھیجنے کی سہولت فراہم کرنے پر کام کررہی ہے۔

نیویارک ٹائمز کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ یہ تینوں سروسز خودمختار ایپ کے طور پر کام کرتی رہیں گی مگر ایسا انفراسٹرکچر بنایا جائے گا جو صارفین کو اس کمپنی کی تمام ایپس میں میسجنگ کی سہولت فراہم کرے گا۔

تمام ایپس میں اینڈ ٹو اینڈ انکرپشن کا فیچر بھی دیا جائے گا تاہم ایسا کب تک ہوتا ہے فی الحال کچھ کہنا مشکل ہے۔

فیس بک کے ایک ترجمان کی جانب سے جاری بیان کے مطابق ‘ہم ہر ممکن حد تک بہتر میسجنگ تجربہ صارفین کو فراہم کرنا چاہتے ہیں اور لوگ بھی تیز، سادہ، قابل انحصار اور نجی میسجنگ کے خواہشمند ہیں، یہی وجہ ہے کہ ہم اپنی مسیجنگ پراڈکٹس کو اینڈ ٹو اینڈ انکرپشن سے لیس کرنے پر کام کررہے ہیں جبکہ تمام نیٹ ورکس پر دوستوں اور رشتے داروں تک رسائی کو آسان بنارہے ہیں’۔

تینوں ایپس کے صارفین کو تمام پلیٹ فارمز پر ایک دوسرے سے بات کرنے کا موقع فراہم کرنے پر فیس بک کو توقع ہے کہ صارفین اپنا زیادہ وقت اس کی ایپس میں گزاریں گے اور یوزر انگیجمنٹ بڑھ جائے گی۔

اس طرح اشتہارات بھی زیادہ مل سکیں گے اور اس مشکل وقت میں کمپنی کی آمدنی میں مزید اضافہ ہوگا۔

اور جیسا اوپر درج کیا جاچکا ہے کہ کسی بھی سماجی رابطے کی ویب سائٹ کے مقابلے میں فیس بک صارفین کی تعداد سب سے زیادہ ہے تو تمام ایپس کو اکھٹا کرکے یہ کمپنی براہ راست ایپل کے آئی میسج اور گوگل میسجنگ سروسز کا مقابلہ کرسکے گی۔

سام سنگ گلیکسی اے 9 پرو پیش کردیا گیا

سام سنگ کا نیا فلیگ شپ فون گلیکسی ایس 10 (3 یا 4 مختلف ماڈلز) میں آئندہ ماہ متعارف کرایا جائے گا مگر اس سے پہلے جنوبی کورین کمپنی نے خاموشی سے ایک اور اسمارٹ فون پیش کردیا ہے۔

گزشتہ سال کی آخری سہ ماہی میں سام سنگ نے اپنے پہلے 4 کیمروں والے اسمارٹ فون گلیکسی اے 9 کو متعارف کرایا تھا اور اب جنوبی کوریا میں گلیکسی اے 9 پرو پیش کردیا ہے جس میں انفٹنی او ڈسپلے دیا گیا ہے۔

انفٹنی او ڈسپلے تو گلیکسی ایس 10 کے فونز میں دیا جائے گا جبکہ کسی ایک ورژن میں 4 بیک کیمرے بھی دیئے جائیں گے۔

ویسے سام سنگ نے انفٹنی او ڈسپلے والا پہلا فون گزشتہ ماہ گلیکسی اے 8 کی شکل میں متعارف کرایا تھا اور بیزل کو کم از کم کرنے کا بہترین حل پیش کیا۔

اب یہ اس طرح کے ڈسپلے سے لیس اس کمپنی کا دوسرا فون ہے جو ایس 10 سیریز سے پہلے سامنے آیا ہے۔

گلیکسی اے نائن پرو — فوٹو بشکریہ سام سنگ
گلیکسی اے نائن پرو — فوٹو بشکریہ سام سنگ

گلیکسی اے 9 پرو میں فرنٹ پر 24 میگا پکسل پنچ ہول کیمرہ دیا گیا ہے جبکہ اوپری اور نچلے حصے میں بیزل انتہائی کم ہے۔

اس کے بیک پر 3 کیمروں کا سیٹ اپ دیا گیا ہے جس میں سے ایک 24 میگا پکسل کا مین کیمرہ ہے، دوسرا 10 میگا پکسل ٹیلی فوٹو لینس 2 ایکس زوم کے ساتھ جبکہ تیسرا 5 میگا پکسل سنسر ڈیپتھ آف فیلڈ (زیادہ تفصیلات دکھانے) کے لیے دیا گیا ہے۔

فون کے اندر 6 جی بی ریم، 128 جی بی اسٹوریج اور 3400 ایم اے ایچ بیٹری دی گئی ہے، پراسیسر ممکنہ طور پر اسنیپ ڈراگون 710 ہے۔

اس فون کو اگلے ماہ کوریا میں 533 ڈالرز (74 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) میں فروخت کے لیے پیش کیا جائے گا۔

‘مستقبل’ کا وہ فون جو آپ آج خرید سکتے ہیں

مستقبل کے فون سے ملیں جسے اب آپ آج ہی استعمال کرسکتے ہیں کیونکہ ایسا مانا جارہا ہے کہ مستقبل میں اکثر اسمارٹ فونز میں یہی ٹرینڈ نظر آنے والا ہے۔

چینی کمپنی میزو نے اپنا نیا فلیگ شپ فون زیرو گزشتہ دنوں متعارف کرایا تھا جو کہ اپنی طرز کا منفرد فون ہے۔

کمپنی کا دعویٰ ہے کہ یہ ‘حقیقی معنوں میں وائرلیس اسمارٹ فون’ ہے جس میں کوئی پورٹ، وائر یا ہول نہیں۔

جی ہاں واقعی میزو زیرو میں کوئی پورٹ یا سوراخ نہیں، یہاں تک کہ اسپیکر کے لیے بھی نہیں، یہی وجہ ہے کہ اس فون میں ایم ساﺅنڈ 2.0 نامی ٹیکنالوجی دی گئی ہے جس کی بدولت آواز اسکرین سے ہی خارج ہوتی ہے۔

فوٹو بشکریہ میزو
فوٹو بشکریہ میزو

5.99 انچ کے او ایل ای ڈی ڈسپلے والے اس فون میں فنگرپرنٹ اسکینر اسکرین کے اندر ہی دیا گیا ہے جبکہ سیلفی کیمرہ چہرہ شناخت کرنے کا کام بھی کرتا ہے۔

فوٹو بشکریہ میزو
فوٹو بشکریہ میزو

اور چونکہ اس میں کوئی پورٹ نہیں تو اسے وائرلیس چارجنگ سے ہی چارج کیا جاسکتا ہے اور کمپنی نے اس کے لیے سپرفاسٹ وائرلیس چارجنگ سپورٹ فراہم کی ہے۔

فوٹو بشکریہ میزو
فوٹو بشکریہ میزو

یہ فون آئی پی 68 ریٹنگ کے ساتھ واٹر اور ڈسٹ ریزیزٹنٹ ہے، یعنی آئی فون ایکس ایس (10 ایس) اور سام سنگ گلیکسی ایس 9 کی طرح، جو 2 میٹر پانی میں آدھے گھنٹے تک ڈوب کر بھی محفوظ رہ سکتا ہے، مگر یہ مکمل واٹر پروف نہیں۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ اس میں کوئی پورٹ تو نہیں مگر 2 ننھے سوراخ ضرور ہیں، ایک مائیکرو فون کے لیے اور دوسرا ہارڈ ریسٹنگ کے لیے۔

اور اگر آپ سوچ رہے ہیں کہ جب کوئی پورٹ نہیں تو سم کارڈ کہاں جائے گا تو کمپنی نے روایتی سم کارڈ ٹرے کی جگہ ایمیڈڈ سم کارڈ کو دی ہے یا ای سم ٹیکنالوجی استعمال کی جائے گی، جو کہ روایتی سم کارڈ کی ضرورت ہی ختم کردیتی ہے۔

فوٹو بشکریہ میزو
فوٹو بشکریہ میزو

یہ فون چونکہ چین میں متعارف کرایا گیا ہے تو وہاں کی موبائل کمپنیوں کو ای سم ٹیکنالوجیز کی تیاری کا مشورہ دیا گیا ہے۔

فوٹو بشکریہ میزو
فوٹو بشکریہ میزو

اس فون میں کوئی بٹن بھی بلکہ سائید میں ورچوئل بٹنز دیئے گئے ہیں جن کی بدولت آپ کو فون آن یا آف کرنے یا والیوم ایڈجسٹ کرنے پر وائبریشن محسوس ہوگی۔

فوٹو بشکریہ میزو
فوٹو بشکریہ میزو

اس فون میں اسنیپ ڈراگون 845 پراسیسر اور بلیوٹوتھ 5.0 دیئے گئے ہیں تاہم کیمرہ سسٹم کے بارے میں کمپنی نے فی الحال تفصیلات بیان نہیں کیں، کیونکہ ابھی اس کی قیمت اور فروخت کی تاریخ کا اعلان نہیں ہوا تو اس بارے میں تفصیلات اگلے ماہ موبائل ورلڈ کانگریس میں سامنے آنے کا امکان ہے۔

اگلے ماہ متعدد 5 جی اسمارٹ فونز متعارف کرائے جانے کا امکان

موبائل فون کی دنیا کا سب سے بڑا ایونٹ 25 فروری کو اسپین کے شہر بارسلونا میں شروع ہورہا ہے جس میں فولڈ ایبل فونز اور ہول پنچ کیمروں کے ساتھ اس بار کئی فائیو جی ڈیوائسز بھی متعارف ہونے والی ہیں۔

اور یہ صرف انتہائی تیز رفتار انٹرنیٹ کی بات نہیں بلکہ فائیو جی فونز ہیں۔

ایل جی اور ہیواوے کی جانب سے موبائل ورلڈ کانگریس میں 5 جی فونز متعارف کرانے کا اعلان کیا گیا ہے۔

ایل جی کی جانب سے جمعرات کو جاری بیان میں بتایا گیا کہ دیگر ڈیوائسز کے ساتھ ساتھ یہ جنوبی کورین کمپنی اپنا پہلا فائیو جی اسمارٹ فون بھی موبائل ورلڈ کانگریس میں متعارف کرائے گی۔

فوٹو بشکریہ ایل جی
فوٹو بشکریہ ایل جی

یہ واضح نہیں کہ یہ اس کا فلیگ شپ فون ایل جی 8 کا کوئی ورژن ہوگا جو کہ اسی ایونٹ میں متعارف کرائے جانے کا امکان ہے یا کوئی مختلف ڈیوائس۔

ایل جی جی 8 میں کوالکوم اسنیپ ڈراگون 855 پراسیسر، 4000 ایم اے ایچ بیٹری اور ویپر چیمبر کولنگ سسٹم دیا گیا ہے جو کہ فون کو روایتی سسٹمز کے مقابلے میں ٹھنڈا رکھنے میں زیادہ مدد دیتا ہے۔

خیال رہے کہ ایل جی نے گزشتہ روز ایک ٹیزر ویڈیو میں ایک نئے اور ٹچ لیس ڈیوائس کا عندیہ بھی دیا تھا جس کی کوئی تفصیل بیان نہیں کی گئی۔

دوسری جانب ہیواوے کی جانب سے بھی ایک فائیو جی فون متعارف کرانے کا اعلان کیا گیا ہے جو کہ اس کمپنی کا پہلا فولڈ ایبل اسمارٹ فون بھی ہوگا۔

اس فون کے بارے میں کوئی تفصیل ابھی سامنے نہیں آئی مگر ممکنہ طور پر یہ ہیواوے پی 30 پرو سے مختلف ڈیوائس ہوگی جو کہ موبائل ورلڈ کانگریس یا اس کے فوری بعد سامنے آسکتا ہے۔

سام سنگ اور شیاﺅمی کی جانب سے فولڈ ایبل فونز بھی متعارف کرائے جائیں گے تو یہ دیکھنا دلچسپی سے خالی نہیں ہوگا کہ ہیواوے ان کے مقابلے میں کیا نئی چیز پیش کرتا ہے۔

ہیواوے کے اس فون میں بالونگ 5000 فائیو جی چپ دی جائے گی جو کہ 4.6 جی بی پی ایس یا 6.5 جی بی پی ایس ڈاﺅن لوڈ اسپیڈ کی حامل ہوسکتی ہے مگر اس کا انحصار اسپیکٹرم پر ہوگا۔

سام سنگ کی جانب سے بھی گلیکسی ایس 10 کا ایک فائیو جی ورژن متعارف کرائے جانے کا امکان ہے مگر یہ واضح نہیں کہ موبائل ورلڈ کانگریس سے قبل 20 فروری کو ہونے والے ایونٹ میں سامنے آئے گا یا بعد میں کسی وقت۔

ون پلس اور اوپو کی جانب سے بھی فائیو جی فونز کی تفصیلات سامنے آنے کا امکان ہے مگر ان کی تفصیلات بھی ابھی تک سامنے نہیں آسکی ہیں۔

ایل جی ٹچ اسکرین ٹیکنالوجی کو ‘الوداع’ کہنے کے لیے تیار

کیا آپ کسی ایسے اسمارٹ فون کا تصور کرسکتے ہیں جس میں ٹچ اسکرین کی جگہ اسے استعمال کرنا کچھ فاصلے سے ہاتھ کو حرکت دینے سے ممکن ہوجائے؟

اگر نہیں تو ایل جی نے ایسا اسمارٹ فون متعارف کرانے کا فیصلہ کرلیا ہے اور کہا ہے ‘گڈبائے ٹچ’۔

ایل جی کی جانب سے اگلے ماہ موبائل ورلڈ کانگریس کے موقع پر ایک ڈیوائس متعارف کرائی جارہی ہے جو کہ ٹچ اسکرین کی بجائے جیسچر سے کنٹرول کی جاسکے گی۔

کم از کم کمپنی کی جانب سے جاری ٹیزر ویڈیو سے کچھ ایسا ہی عندیہ ملتا ہے۔

یہ پہلا موقع نہیں کہ ایل جی نے کسی ڈیوائس میں جیسچر کنٹرول دیئے ہوں، 2013 میں بھی ایک ایل جی ٹی وی تجرباتی طور پر متعارف کرایا گیا تھا جس میں صارفین ہاتھوں اور انگلیوں کی حرکت سے اسکرین کرسر کو استعمال کرسکتے تھے۔

ابھی یہ واضح نہیں کہ ایل جی اگلے ماہ کس قسم کی ڈیوائس پیش کرے گی مگر امکان یہی ہے کہ وہ اسمارٹ فون ہی ہوگا۔

گڈ بائے ٹچ سلوگن سے بھی یہی اندازہ ہوتا ہے کہ ایل جی کسی اسمارٹ فون کی بات کررہی ہے کیونکہ ٹچ کنٹرول کا زیادہ تر استعمال ایسے ہی ڈیوائسز میں ہوتا ہے۔

اب یہ دیکھنا ہوگا کہ یہ ڈیوائس وی 40 کا اپ ڈیٹ ورژن ہوگا یا ایل جی جی 8۔

ایل جی کی جانب سے یہ فون یا ڈیوائس 24 فروری کو ایک ایونٹ کے دوران متعارف کرائی جائے گی۔

کچھ عرصے قبل گوگل نے ایسا پیٹنٹ رجسٹر کرایا تھا جس میں راڈار بیسڈ موشن سنسر استعمال کیے جائیں گے، یہ سنسر صارفین کو برقی ڈیوائسز ہاتھوں کی حرکت سے استعمال کرنے کی سہولت فراہم کریں گے۔

دنیا کا پہلا فائیو جی بٹن لیس کانسیپٹ اسمارٹ فون

دنیا کا پہلا آفیشل 5 جی اسمارٹ فون متعارف کرا دیا گیا ہے جو کہ چینی کمپنی ویوو کا تیار کردہ ہے۔

ویوو ایپکس 2019 کانسیپٹ اسمارٹ فون گزشتہ سال کے ایپکس 2018 کا اپ ڈیٹ ورژن ہے اور پہلا فائیو جی فون ہونے کے ساتھ ساتھ اس کی خاص بات اس میں کسی قسم کا بٹن نہ ہونا ہے۔

ویسے تو موٹرولا کو پہلا 5 جی اسمارٹ فون متعارف کرانے کا اعزاز حاصل ہے مگر بنیادی طور پر وہ فورجی فون ہے جسے موڈیول کے ذریعے فائیو جی پر اپ گریڈ کرنا ممکن ہوگا مگر تاحال وہ ٹیکنالوجی صارفین کے لیے دستیاب نہیں۔

فوٹو بشکریہ ویوو
فوٹو بشکریہ ویوو

ویوو کا یہ کانسیپٹ فون ہوسکتا ہے کہ اس شکل میں صارفین کے لیے دستیاب نہ ہو مگر یہ کمپنی اسے اگلے ماہ موبائل ورلڈ کانگریس میں لے کر جانے والی ہے جہاں اس کے دیگر فیچرز کی تفصیلات سامنے آئیں گی۔

گزشتہ سال کی طرح ایپکس فون کی طرح میں اسکرین ٹو باڈی ریشو حیران کن حد تک کم ہے اور بیزل نہ ہونے کے برابر ہیں۔

اس میں کوئی بٹن یا پورٹ بھی نہیں یعنی ہیڈفون جیک تو غائب ہے ہی اس کے ساتھ ساتھ یو ایس بی سی پورٹ بھی نہیں اور اس کی چارجنگ بیک پر نصب مقناطیسی کنکٹر سے ممکن ہوگا، جسے ڈیٹا ٹرانسفر کے لیے بھی استعمال کیا جائے گا۔

فوٹو بشکریہ ویوو
فوٹو بشکریہ ویوو

ویوو کا کوئی فون آج تک وائرلیس چارجنگ فیچر کے ساتھ نہیں آیا اور ایپکس 2019 کے لیے بھی کمپنی نے پالیسی تبدیل نہیں کی۔

اس فون میں کوالکوم کا ایکس 50 فائیو جی موڈیم استعمال کیا گیا ہے اور کمپنی کا کہنا ہے کہ ایک نئی تیکنیک کے ذریعے مدربورڈ اسپیس کو 20 فیصد بڑھایا گیا ہے تاکہ فائیو جی کے لیے ضروری پرزوں کی جگہ بن سکے اور ڈیزائن بھی متاثر نہ ہو۔

اس فون میں کوالکوم اسنیپ ڈراگون 855 پراسیسر، 256 جی بی اسٹوریج اور 12 جی بی ریم دی گئی ہے۔

فوٹو بشکریہ ویوو
فوٹو بشکریہ ویوو

اس فون کے بیک پر ڈوئل کیمرہ سیٹ اپ ہے تاہم کمپنی نے اس کی تفصیلات فراہم نہیں کیں مگر فرنٹ پر کوئی کیمرہ نہیں۔

اس فون کا ایک اور خاص فیچر ان ڈسپلے فنگرپرنٹ سنسر کے لیے مختص جگہ کو بڑھانا ہے اور کمپنی کا دعویٰ ہے لگ بھگ پوری اسکرین پر فنگرپرنٹ اسکیننگ ممکن ہے۔

ایک اور ٹیکنالوجی باڈی ساﺅنڈ کاسٹنگ ہے جس سے اسکرین ہی اسپیکر کا کام کرسکے گی اور گرل کی ضرورت ختم ہوگئی ہے، تاہم نچلے حصے میں مائیکروفون کے لیے جگہ موجود ہے۔

یوٹیوب پر 2018 میں کونسے اشتہارات پاکستانیوں کے پسندیدہ رہے؟

گوگل کی ویڈیو شیئرنگ سائٹ یوٹیوب پاکستان کی مقبول ترین ویب سائٹس میں سے ایک ہے جہاں وہ بہت زیادہ وقت گزارنا پسند کرتے ہیں مگر کیا اس پلیٹ فارم کو اشتہارات دیکھنے کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے؟

کم از کم گوگل کی جانب سے جاری فہرست سے تو ایسا ہی لگتا ہے جس میں 2018 میں پاکستانی صارفین کی جانب سے سب سے زیادہ دیکھے جانے والے 10 اشتہارات اور برانڈ مواد کا انتخاب ان کی مقبولیت یا پروموشن کی بنیاد پرکیا گیا۔

گوگل کی جانب جاری بیان میں آئی پی ایس او ایس ریسرچ کے حوالے سے دعویٰ کیا گیا کہ یوٹیوب پاکستانی عوام میں نمبر 1 آن لائن ویڈیو اسٹریمنگ پلیٹ فارم ہے جبکہ ایک اور تحقیقاتی ادارے،کنٹار ٹی این ایسکے مطابق ہر ماہ 73 فیصد آن لائن پاکستانی یوٹیوب دیکھتے ہیں۔

یوٹیوب میں 2018 میں سب سے زیادہ دیکھے جانے والے اشتہارات نیچے دیکھے جاسکتے ہیں۔

10۔ فن مٹی سے پنجاب کے رنگ (والنٹ میڈیا)

9۔ کوک اینڈ میوزک ٹی وی سی (اسٹار کام/اوگلوی اینڈ ماتھر)

8۔ پیپسی بیٹل آف دی برانڈز سیزن 3 (مائنڈ شیئر/ ساچی اینڈ ساچی)

7۔ علی نور اور زیب بنگش کی آوازوں کے ساتھ نیسلے سیریلیک لوری کہانی چندا ماما (میکسز اوگلوی اینڈ ماتھر)

6۔ ایرئیل: اوہو نہیں ہوو ہوو (اسٹار کام/ایڈکام)

5۔ ڈاکٹر لائف بوائے ورسز جراثیم قسط نمبر 4 (مائنڈ شیئر/ لووی اینڈ رﺅف)

4۔ شان بریانی ون بریانی ون فیملی (میڈیا کام/ اوگلوی اینڈ ماتھر)

3۔ پیک فرینز کیک اپ (گروپ ایم/ اوگلوی اینڈ ماتھر)

2۔ گوٹو ڈاٹ کام کا اشتہار کیا پاکستان بھارت پر بازی لے جائے گا (اولیو ڈیجیٹل)

1۔ سرف ایکسل رمضان 2018 ایک نیکی روزانہ (مائنڈ شیئر/ لووی ایند رﺅف)

دنیا کا پہلا ‘ڈبل فولڈ ایبل’ اسمارٹ فون سامنے آگیا

سام سنگ کا پہلا فولڈ ایبل فون باضابطہ طور پر اگلے ماہ متعارف کرایا جارہا ہے مگر ایسا لگتا ہے کہ اس کا جادو چینی کمپنی شیاﺅمی نے توڑنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

جی ہاں یہ کمپنی ‘دنیا کا پہلا ڈبل فولڈنگ فون’ متعارف کرانے والی ہے۔

ویسے تو شیاﺅمی کے فولڈ ایبل فون کی پہلی جھلک رواں ماہ کے شروع میں سامنے آئی تھی جو کہ کافی دنگ کردینے والی تھی۔

مگر اب شیاﺅمی کے صدر لین بن نے اس کی تصدیق ایک مختصر ویڈیو میں کردی ہے۔

51 سیکنڈ کی یہ ویڈیو چینی سوشل میڈیا سائٹ ویبو میں پوسٹ ہوئی اور اس فولڈایبل فون کو شیاﺅمی ڈوئل فلیکس یا می فلیکس کا نام دیا گیا ہے۔

یہ فون مکمل اوپن ہونے پر ایک چوکور شکل کے ٹیبلیٹ جیسا لگتا ہے جس میں شیاﺅمی کا آپریٹنگ سسٹم موجود ہے، مگر اسے دائیں اور بائیں جانب سے موڑ کر فون کی شکل دی جاسکتی ہے۔

شیاﺅمی کے صدر نے پوسٹ میں بھی فولڈایبل فون کا اعلان کرتے ہوئے کہا ‘ہم دنیا کا پہلا ڈبل فولڈنگ فون بنارہے ہیں جو کہ ٹیبلیٹ اور موبائل فون کا تجربہ فراہم کرے گا’۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر اس فون کو کامیابی ملی تو پھر ہم مستقبل میں بڑے پیمانے پر اس کی پروڈکشن کریں گے۔

رواں ماہ کے شروع میں بھی شیاﺅمی کے اس فولڈنگ فون سے ملتے جلتے فون کی ویڈیو منظرعام پر آئی تھی جو کہ ٹوئٹر صارف ایون بلاس نے شیئر کی تھی۔

شیاﺅمی کی جانب سے پہلا فولڈایبل فون ممکنہ طور پر اگلے ماہ بارسلونا میں شیڈول موبائل ورلڈ کانگریس کے موقع پر متعارف کرایا جاسکتا ہے۔

اس کمپنی کا ایونٹ 24 فروری کو ہوگا جس میں فائیو جی اسمارٹ فون بھی پیش کیے جانے کا امکان ہے۔

خیال رہے کہ موبائل ورلڈ کانگریس کے موقع پر شیائومی اور سام سنگ کے ساتھ ساتھ موٹرولا کی جانب سے بھی فولڈ ایبل فون متعارف کرائے جانے کا امکان ہے۔

اسی طرح ایل جی بھی ایک مختلف قسم کے فولڈ ایبل فون کو متعارف کرانے کا ارادہ رکھتی ہے۔

Google Analytics Alternative