سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

انسٹاگرام نے بھی ایک ارب صارفین کا سنگ میل طے کرلیا

انسٹاگرام فیس بک کی ایک اور ایسی ایپ بن گئی ہے جس نے ایک ارب ماہانہ صارفین کے سنگ میل کو طے کرلیا ہے۔

20 جون کو انسٹاگرام کی جانب سے اعلان کیا گیا کہ اس کے ماہانہ صارفین کی تعداد ایک ارب سے تجاوز کرگئی ہے جو کہ ستمبر 2017 میں 80 کروڑ تھی۔

اور اس اعلان نے فیس بک کے بانی مارک زکربرگ کے اثاثوں میں چند منٹوں میں ایک ارب 70 کروڑ ڈالرز (2 کھرب پاکستانی روپے سے زائد) کا اضافہ کردیا، جس کی وجہ فیس بک اسٹاک کی قیمتوں میں 2.3 فیصد اضافہ بنا۔

اس موقع پر انسٹاگرام نے اپنی ایک اور نئی ایپ آئی جی ٹی وی (کریٹیرز کے لیے طویل ویڈیوز کا ہب) بھی متعارف کرایا، جس کے ذریعے صارفین مستقبل میں پیسے بھی کما سکیں گے۔

تاہم یہ ایپ انسٹاگرام میں زیادہ متحرک رہنے والوں کے لیے اپنے فالورز کا بیس بنانے میں زیادہ مدد دے گی، جبکہ ایک گھنٹہ طویل ویڈیو بھی انسٹاگرام پر اپ لوڈ کرنا ممکن ہوجائے گا۔

2018 کی پہلی سہ ماہی کے دوران انسٹاگرام کی حریف اپلیکشن اسنیپ چیٹ کے صارفین کی شرح نمو محض 2.13 رہی جس کے اب مجموعی طور پر 19 کروڑ سے زائد صارفین ہیں۔

اس کے مقابلے میں فیس بک صارفین کی ماہانہ شرح نمو 3.14 فیصد رہی اور مجموعی صارفین 2 ارب 19 کروڑ سے تجاوز کرگئے، جبکہ انسٹاگرام میں اس سہ ماہی کے دوران نئے صارفین کی شرح 5 فیصد رہی۔

اس وقت انسٹاگرام کے ذریعے فیس بک نے 2018 میں 5.48 ارب ڈالرز کمائے ہیں، جو کہ گزشتہ سال کے مقابلے میں 70 فیصد زیادہ ہیں۔ فیس بک کی مرکزی ایپ کے علاوہ اس کمپنی کی دیگر اپلیکشنز میسنجر (ایک ارب 30 کروڑ) اور واٹس ایپ (ڈیڑھ ارب) کے صارفین بھی ایک ارب سے زائد ہیں۔

پرائیویسی کے حوالے سے تحفظات کے باوجود یہ بات واضح ہے کہ لوگوں کو فیس بک کی ایپس سے محبت ہے، خصوصاً انسٹاگرام کو کچھ زیادہ ہی پسند کیا جارہا ہے۔

ایل جی ایکس 5 (2018) اسمارٹ فون کا نیا ماڈل متعارف کرا دیا

ایل جی کمپنی نے اپنے ایکس 5 اسمارٹ فون کا نیا ماڈل متعارف کرا دیا ہے۔

فون میں 5.5 انچ ایچ ڈی ڈسپلے ، اینڈرائیڈ اوریو آپریٹنگ سسٹم ، اوکٹا کور میڈیا ٹیک پروسیسر ، 2 جی بی ریم اور 32 جی بی اسٹوریج دیا گیا ہے۔ اسٹوریج کو ایس ڈی کارڈ کی مدد سے بڑھایا جا سکتا ہے۔ فون میں ایل ای ڈی فلیش کے ساتھ 13 میگاپکسل کا بیک کیمرہ اور سافٹ ایل ای ڈی فلیش کے ساتھ 5 میگا پکسل کا فرنٹ کیمرہ دیا گیا ہے۔

کنیکٹیویٹی کے لیے فون میں فورجی ، وائی فائی ، بلیوٹوتھ ، ہیڈ فون جیک ، جی پی ایس اور مائیکرو یو ایس بی سپورٹ دی گئی ہے۔ سیکورٹی کے لئے فون کی پشت پر فنگر پرنٹ سنسر کو جگہ دی گئی ہے۔ اسمارٹ فون کی بیٹری 4500 ملی ایمپیئر آورز کی ہے اور اس میں فاسٹ چارجنگ سپورٹ بھی شامل ہے ۔ فون کی قیمت 22400 ہندوستانی روپے ہے اور اسے نیلے رنگ میں پیش کیا گیا ہے۔

یہ دنگ کردینے والا اسمارٹ فون پسند کریں گے؟

چینی کمپنی اوپو نے اپنا فلیگ شپ فون فائنڈ ایکس متعارف کرا دیا ہے اور یہ دیگر کمپنیوں کو شرمندہ کرنے کے لیے کافی ہے۔

اوپو فائنڈ ایکس کو پیرس میں ایک ایونٹ کے دوران متعارف کرایا گیا۔

اور یہ دنیا کا پہلا فون ہے جس کے فرنٹ پر 93.8 فیصد حصے پر صرف اسکرین ہی دی گئی ہے، یعنی حقیقی معنوں میں بیزل لیس فون ہے۔

اس طرح اوپو نے ویوو نیکس کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے جس کے 91 فیصد حصے پر ڈسپلے دیا گیا ہے۔

اوپو کے فون کے آگے اور پیچھے کورننگ گوریلا گلاس 5 دیا گیا ہے۔

فون کو بیزل لیس بنانے کے لیے کمپنی نے منفرد حکمت عملی اختیار کی ہے اور اس نے فون کے اوپری حصے میں سلائیڈر دیا ہے، جس سے فرنٹ کیمرہ اوپر آتا ہے جبکہ بیک کیمرے بھی سلائیڈر اوپر کرنے پر ہی نظر آتے ہیں۔

کمپنی کا دعویٰ ہے کہ آدھے سیکنڈ میں فرنٹ اور بیک کیمروں کو اوپن یا کلوز کیا جاسکتا ہے جبکہ سلائیڈر میں ہی متعدد سنسز دیئے گئے ہیں جو فیس ان لاک سسٹم سے بھی لیس ہے۔

یہ فون 6.4 انچ کے او ایل ای ڈی کے فل ایچ ڈی پلس ڈسپلے کے ساتھ ہے جبکہ کوالکوم اسنیپ ڈراگون 845 پراسیسر، 8 جی بی ریم، 256 سے 512 جی بی اسٹوریج کے آپشن بھی دیئے گئے ہیں۔

اس کے بیک پر 16 اور 20 میگا پکسل والے کیمرے دیئے گئے ہیں اور اے آئی ٹیکنالوجی کو تصاویر لینے میں استعمال کیا جاسکے گا۔

اسی طرح فرنٹ پر بھی اے آئی ٹیکنالوجی سے لیس 25 میگا پکسل کیمرہ ہے جبکہ آئی فون ایکس جیسی تھری ڈی ایموجی سپورٹ بھی دی گئی ہے۔

اس میں 3730 ایم اے ایچ بیٹری ہے اور کمپنی کے بقول 5 منٹ چارج کرکے 2 گھنٹے تک لگاتار بات کی جاسکتی ہے۔

مگر اس سے بھی بڑھ کر اوپو کا دعویٰ ہے کہ محض 35 منٹ میں بیٹری کو صفر سے 100 فیصد تک چارج کرنا ممکن ہے۔

اس میں ہیڈفون جیک موجود نہیں بلکہ ایک یو ایس بی ٹائپ سی پورٹ دی گئی ہے جبکہ اینڈرائیڈ اوریو 8.1 آپریٹنگ سسٹم کا کمپنی نے اپنے کلر او ایس 5.1 سے امتزاج کیا ہے۔

فی الحال کمپنی نے اس کی قیمت کا اعلان نہیں کیا۔

فٹ بال ورلڈ کپ کے موقع پر فیس بک کے خصوصی فیچر

فٹ بال کا 21 واں عالمی کپ روس میں جاری ہے، جس میں ہر روز نئے ریکارڈ بن اور ٹوٹ رہے ہیں۔

جہاں فٹ بال ورلڈ کپ کے سحر میں دنیا بھر کے لوگ اور میڈیا جکڑ ہوا ہے، وہیں اس حوالے سے سوشل میڈیا بھی کسی سے پیچھے نہیں ہے۔

فٹ بال ورلڈ کپ کے دوران لوگوں کو زیادہ سے زیادہ سوشل میڈیا استعمال کرنے میں مصروف رکھنے کی غرض سے دنیا کی سب سے بڑی سوشل ویب سائٹ فیس بک نے خصوصی نئے فیچر متعارف کرادیے، جو یقیناً صارفین کی دلچسپی کا باعث بنیں گے۔

فیس بک نے فٹ بال ورلڈ کپ 2018 کے لیے صارفین کی دلچسپی کو بڑھانے کے لیے خصوصی فیچر متعارف کراتے ہوئے نیوز فیڈ میں چند چھوٹی موٹی تبدیلیاں کی ہیں، جن سے زیادہ تر صارفین بے خبر ہیں۔

—اسکرین شاٹ
—اسکرین شاٹ

فیس بک نے فٹ بال کپ کا حصہ بننے والی 32 ٹیموں میں سے کسی بھی من پسند ٹیم کا پروفائل فریم بنانے کا فیچر متعارف کراتے ہوئے اس کو اپنے نیوز فیڈ میں شامل کرلیا ہے، جس سے صارفین کسی بھی وقت اپنی من پسند ٹیم کے کلر اور جھنڈے کے ساتھ اپنی پروفائل تصویر اپڈیٹ کر سکیں گے۔

یہ فیچر صارفین کو اپنی نیوز فیڈ بار میں سب سے اوپر نظر آئے گا، تاہم بعض صارفین کی نیوز فیڈ میں اگر یہ فیچر نظر نہیں آ رہا تو کوئی مسئلہ نہیں، جلد ہی یہ فیچر انہیں ان کی نیوز فیڈ میں نظر آجائے گا۔

اس فیچر پر کلک کرتے ہی صارفین اپنی پسندیدہ ٹیم کے فریم کے ساتھ اپنی پروفائل تصویر اپڈیٹ کرسکیں گے۔

اسی طرح فیس بک نے فٹ بال کپ کے دوران صارفین کو اپنی پسندیدہ ٹیم کی جانب سے گول کرنے کا اینیمیٹڈ اور گرافکس جشن منانے کا موقع فراہم کیا ہے۔

—اسکرین شاٹ
—اسکرین شاٹ

اس فیچر کے ذریعے صارف کی جانب سے کسی بھی پوسٹ پر انگریزی میں گول لفظ لکھے جانے کے بعد پہلے وہ لفظ ہرے رنگ میں تبدیل ہوجائے گا، جس کے بعد اسکرین پر اینیمیٹڈ فٹ بال ہوا میں اڑتی نظر آئیں گی۔

اس فیچر کو استعمال کرتے وقت صارف کو انگریزی میں ’Gooal, Gool, Gooaal, Gooaaal لکھنا ہوگا، جس کے بعد کمنٹ والی پوسٹ پر اینیمیشن اور گرافکس کی صورت میں فٹ بال نظر آنے سمیت جشن منانے کی جھلکیاں بھی نظر آئیں گی۔

اسی طرح فیس بک نے کسی بھی فٹ بال میچ کے دوران ویڈیو ریکارڈنگ کے لیے بھی خصوصی فیچر متعارف کرائے ہیں۔

اس فیچر کے ذریعے کوئی بھی صارف کسی بھی میچ کے دوران ویڈیو ریکارڈنگ کرکے میسینجر یا فیس بک پر اسے شیئر کرے گا تو کیمرے پر خصوصی افیکٹس، اینیمیشن اور گرافکس کے آپشن نظر آئیں گے۔

اس فیچر کے ذریعے صارف کسی بھی میچ کی ریکارڈ کی گئی ویڈیو کو ویڈیو گیم کی طرح بھی تبدیل کرسکتا ہے، جب کہ کسی بھی ٹیم کے کھلاڑی کا کارٹون بھی بناسکتا ہے۔

—اسکرین شاٹ
—اسکرین شاٹ

گوگل آپ کی شخصیت کے کون کونسے راز جانتا ہے؟

نیویارک :ویسے تو سب پریشان رہتے ہیں کہ گوگل یا فیس بک صارفین کے ذاتی ڈیٹا کو کس حد تک اپنے پاس محفوظ کرتے ہیں ، کیا آپ بھی اس حوالے سے فکرمند ہیں؟ تو گوگل کی جانب سے اس حوالے سے ایڈ سیٹنگز کو تبدیل کیا گیا ہے جس میں صارفین اپنی مرضی سے ردوبدل کرسکتے ہیں۔

یہاں آپ جان سکتے ہیں کہ گوگل کے خیال میں آپ کے سامنے کس طرح کے اشتہارات کو دکھانا زیادہ فائدہ مند ثابت ہوسکتا ہے ، نیچے دیئے گئے لنک پر کلک کرنے پر ایڈ پرسنلائزیشن پیج پر چلے جائیں گے۔

تو نیچے متعدد ٹیب ہوں گے جن میں گوگل کے خیال میں آپ کو دلچسپی ہوسکتی ہے جن میں سے کچھ ٹھیک ہوں گے کچھ گوگل سوشل میڈیا یا دیگر عوامل کی بناءپر وہاں دکھاتا ہے، حالانکہ بیشتر سے اس شخص کو دلچسپی نہیں ہوتی۔

اس ری ڈیزائن ایڈ سیٹنگز سے آپ ان کیٹیگریز کو ٹرن آف کرسکتے ہیں جن کے اشتہارات آپ دیکھنا نہیں چاہتے یا چاہیں تو گوگل ایڈ پرسنلائزیشن کو بھی ٹرن آف کردیں۔

ایسا کرنے پر گوگل کی جانب سے آپ کو خبردار کیا جائے گا کہ اشتہارات تو اب بھی آپ کو نظر آئیں گے مگر اب ہوسکتا ہے کہ وہ آپ کے لیے زیادہ مفید نہ ہوں۔

موٹورولا ون پاور اسمارٹ فون کی تفصیلات لیک

موٹورولا کمپنی جلد موٹورولا ون پاور اسمارٹ فون پیش کرنے جا رہی ہے۔

فون سے متعلق لیکس سامنے آنا شروع ہوگئی ہیں جس کے مطابق اس اسمارٹ فون میں اینڈرائیڈ اوریو آپریٹنگ سسٹم ، 6.2 انچ ایچ ڈی پلس ڈسپلے ، قال کوم اسنیپ ڈریگن 636 پروسیسر ، 4 جی بی ریم اور 64 جی بی اسٹوریج دیا جائے گا۔فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں پشت پر بارہ میگاپکسل اور 5 میگا پکسل کے دو کیمرے دیے جائیں گے۔فون کا فرنٹ کیمرہ 8 میگا پکسل کا ہوگا۔ اسمارٹ فون کے بیٹری 3780 ملی ایمپیئر آورز کی ہوگی۔ فون کی قیمت اور لانچنگ سے متعلق کوئی اعلان سامنے نہیں آیا ہے۔

فیس بک پر نیا فیچر متعارف

دنیا کی سب سے بڑی سوشل ویب سائٹ فیس بک نے صارفین کو زیادہ سے زیادہ اپنے دوستوں، اہل خانہ اور رشتہ داروں کی پوسٹس سے جوڑ کر رکھنے کی غرض سے ایک نیا فیچر متعارف کرادیا۔

اگرچہ فیس بک نے اسی کام کے غرض سے پہلے ہی ماضی میں شیئر کی گئی پوسٹس کو دیکھنے کے لیے ’آن دس ڈے‘ نامی فیچر متعارف کرا رکھا ہے۔

تاہم اب فیس بک نے اسی فیچر سے ملتا جلتا ایک اور فیچر’میموریز‘ کے نام سے متعارف کرادیا۔

فیس بک کا یہ فیچر اگرچہ گزشتہ ایک سال سے صارفین کو کبھی کبھی اپنے ہوم پیچ پر نظر آتا تھا یا پھر ہر سہ ماہی یا ہر ماہ کے آخر میں فیس بک کی جانب سے اس فیچر کو صارفین کے ساتھ شیئر کیا جاتا تھا۔

تاہم اب اسے صارفین کی نیوز فیڈ میں ’آن دس ڈے‘ کی طرح فکس کردیا گیا ہے، اب صارف کسی وقت بھی اس فیچر کو کلک کرکے اپنی میموریز دیکھ سکیں گے۔

فوری طور پر اس فیچر کو تمام صارفین کے فیس بک پر شامل نہیں کیا گیا، تاہم جلد ہی یہ فیچر تمام صارفین کو اپنی نیوز فیڈ میں نظر آنے لگے گا۔

کمپنی کے مطابق اس فیچر کو متعارف کرانے کا مقصد صارفین کو زیادہ سے زیادہ اپنی ذات اور اہل خانہ سے متعلق چیزوں سے جوڑنا ہے۔

یہ فیچر تقریبا ’آن دس ڈے‘ جیسا ہی ہے، تاہم اس نئے فیچر کے ذریعے سوشل ویب سائٹ صارفین کو ماضی میں پوسٹ کی گئی ایسی مثبت پوسٹس تک رسائی دینے کی کوشش کرے گی، جو صارفین کی توجہ حاصل کرنے میں اہم کردار ادا کرسکیں۔

ڈنمارک میں چمگادڑ دوست اسٹریٹ لائٹس کی تنصیب

کوپن ہیگن: ڈنمارک کے ایک شہر زیودوک نائیکوپ میں عوام نے ایسی اسٹریٹ لائٹس نصب کی ہیں جو چمگادڑوں کی حرکات پر اثر انداز نہیں ہوتیں اور عام روشنیوں کے برخلاف یہ روشنیاں جانور دوست بھی ہیں۔

ایک سال قبل فلپس کمپنی نے ڈنمارک کے ایک سروے میں کہا تھا کہ خاص طور پر تیار کردہ سرخ ایل ای ڈی لائٹس چمگادڑوں کے برتاؤ اور اڑان پر کوئی منفی اثر نہیں ڈالتیں اور انہیں ان روشنیوں سے کوئی مشکل پیش نہیں آتی۔

چمگادڑوں کی کئی اقسام مکمل اندھیرے پر انحصار کرتی ہیں وہ سڑک پر پیلی سوڈیم روشنیوں اور سفید ایل ای ڈی سے دور بھاگتی ہیں۔ اس طرح انہیں اڑنے اور شکار کرنے میں مشکلات کا سامنا ہوتا ہے۔ دوسری جانب چھوٹے کیڑے روشنیوں کے گرد جمع رہتے ہیں اور چمگادڑیں وہاں سے دور رہتے ہوئے بھوکی رہتی ہیں اور ان کی آبادی بھی کم ہوسکتی ہے۔ چمگادڑوں کی آبادی کم ہونے سے قدرتی توازن متاثر ہوسکتا ہے اور یوں کیڑے مکوڑوں کی تعداد توقع سے بھی بڑھ جاتی ہے۔

اس نازک توازن کو مدنظر رکھتے ہوئے فلپس کمپنی نے 2017ء میں ایک تجربہ کیا تھا جو ہالینڈ کی مشہور جامعات کے تعاون سے انجام دیا گیا۔ اس میں کھمبوں مپر سفید، سرخ اور سبز ایل ای ڈی روشنیاں لگائی گئی تھیں۔ تینوں رنگوں کی روشنیاں اسی شدت پر تھیں جو ملک میں استعمال ہورہی ہیں۔

معلوم ہوا کہ چمگا دڑوں کو سرخ روشنیوں سے کوئی فرق نہیں پڑا اور وہ معمول کے تحت پرواز کرتی رہیں جبکہ سبز اور سفید روشنیوں سے انہیں تکلیف ہوئی۔ اس طرح سرخ روشنی کی طول موج (ویولینتھ) سے ان جانوروں کو کوئی الجھن نہیں ہوئی۔

زیودوک نائیکوپ کا علاقہ نایاب چمگادڑوں کا مسکن ہے جن کی بقا ماحولیاتی توازن کے لیے بہت ضروری ہے اور اسی بنا پر اب یہاں ماحول دوست سرخ روشنیاں لگائی گئی ہیں۔ اب 89 ہاؤس سسٹین ایبل ہاؤسنگ کے نام سے اس پروجیکٹ کا آغاز ہوچکا ہے۔

Google Analytics Alternative