سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

چین میں سائنسدانوں نے موت کے بعد کے حالات کا اندازہ لگایا

بیجنگ: چین میں سائنسدانوں نے ایسا ڈیتھ سِمولیٹر تیار کیا ہے جس میں موت اور اس کے بعد کے حالات کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔

موت ایک حقیقت ہے، مگر مرنے کے بعد انسان کے ساتھ کیا ہوتا ہے؟ یہ جاننے کے لیے چین میں اب خصوصی طور پر تیار کئے گئے ڈیتھ سِمولیٹر کے ذریعے موت جیسی ابدی حقیقت پر مبنی مناظر دکھائے جاتے ہیں۔

ڈیتھ سِمولیٹر میں حصہ لینے افراد کو ایک تاریک کمرے میں رکھا جاتا ہے جہاں انہیں ایک مخصوص اسٹریچر پر لٹایا جاتا ہے اور ان کے اردگرد شعلے برساتی جیسی سکرین دکھائی جاتی ہے۔

ڈیتھ سِمولیٹرز تیار کرنے والے سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اس تجربے کا مقصد لوگوں میں زندگی کے حوالے سے آگاہی دینا ہے۔

فیس بک کی نیوز فیڈ پر آپ کو بے تحاشہ پوسٹس ملیں گی جس سے فیس بک پریشان

فیس بک کی نیوز فیڈ پر آپ کو بے تحاشہ پوسٹس، لائیو ویڈیوز، ویب لنکس اور تصاویر سمیت دیگر شیئر مواد نظر آسکتا ہے، مگر کیا آپ کو یاد ہے کہ یہ سوشل نیٹ ورک درحقیقت لوگوں کے اسٹیٹس اپ ڈیٹس کے لیے متعارف کرایا گیا تھا؟

جی ہاں ایک رپورٹ کے مطابق فیس بک میں ذاتی مواد کی شیئرنگ کی شرح میں نمایاں کمی دیکھنے میں آئی ہے اور اس چیز نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ کو فکرمند کردیا ہے۔

2014 کے وسط سے 2015 کے آخر تک فیس بک پر مجموعی شیئرنگ کی شرح میں 5.5 فیصد کی کمی دیکھنے میں آئی ہے خصوصاً پرسنل اپ ڈیٹس کی شرح میں 21 فیصد کمی ہوئی۔

جب پرسنل اپ ڈیٹس کی بات کی جاتی ہے تو اس کا مطلب ہے اپنے خیالات کا اظہار، روزمرہ کی سرگرمیاں اور اپنی ذات سے متعلق دیگر مواد ہے۔

پرسنل پوسٹس کی شرح میں رواں سال بھی اب تک 15 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

فیس بک کی انتظامیہ نے اس سے پریشان ہوکر پرسنل شیئرز کو بڑھانے کے لیے اپنی ٹیم کو ہدایات جاری کی ہیں، جس کے لیے دوستوں کے اسٹیٹس اپ ڈیٹس آپ کی نیوز فیڈ پر نمایاں پوزیشن پر لانا جیسے اقدام بھی شامل ہیں۔

فیس بک کو پریشانی اس لیے لاحق ہے کہ اس وقت متعدد سوشل نیٹ ورکس موجود ہیں، خاص طور پر سنیپ چیٹ اور واٹس ایپ نے لوگوں کی توجہ اپنی جانب زیادہ مرکوز کرا رکھی ہے (واٹس ایپ فیس بک کی ہی ملکیت میں ہے مگر خودمختار کام کرتی ہے)۔

ویسے تو پرسنل پوسٹس میں کمی کا مطلب فیس بک کا اختتام نہیں مگر یہ دیکھنا دلچسپی سے خالی نہیں ہوگا کہ فیس بک لوگوں کو اپنی ذاتی معلومات شیئر کرنے کے لیے کیا اقدامات کرتی ہے۔

اپنے موبائل فون اور لیپ ٹاپ کی رفتار کریں تیز

پاکستان میں سمارٹ فون تیزی سے مقبول ہو رہا ہے۔ پاکستانی نئی نسل میں اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم والے سمارٹ فون زیادہ مقبول ہیں۔ مگر مسئلہ یہ ہے کہ ہر مہینے ایسے سمارٹ فون سامنے آ جاتے ہیں جن کے پروسیسر زیادہ طاقتور ہوتے ہیں۔ چناں چہ ان کی رفتار بھی زیادہ ہوتی ہے۔ یوں پرانا فون سست رفتار لگنے لگتا ہے۔ اگر آپ کے پرانے اینڈرائیڈ فون کو بھی یہی مسئلہ درپیش ہے تو ایک اچھی خبر سنئیے۔ وہ یہ کہ ہر سمارٹ فون میں کچھ ایسی خفیہ سیٹنگز اور ایپلی کشنز موجود ہوتی ہیں جن کی مدد سے آپ چند سیکنڈ میں اپنے فون کی رفتار میں نمایاں اضافہ کرسکتے ہیں۔ اس ضمن میں ایک اپلیکشن بھی آپ کے اینڈرائیڈ سمارٹ فون کی رفتار بڑھانے میں اہم کردار ادا کرسکتی ہے۔اس کا نام کروم ہے۔یہ گوگل کا تیارکردہ براو¿زر ہے۔یہ نیٹ پر ڈیٹا کو ”پچاس فیصد“تک کمپریس کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔چناں چہ فون پر ویب سائٹس تیزی سے کھلتی ہیں۔بعض اوقات زیادہ ایپس انسٹال کرنے سے بھی فون سست ہو جاتا ہے۔ آپ خاص طور پہ فیس بک ایپ ڈیلیٹ کرکے بھی رفتار بہتر بناسکتے ہیں۔ اسمارٹ فون کی رفتار پرگرافکس بھی اثر انداز ہوتے ہیں۔ اسمارٹ فونوں میں ٹرانزیشنز اور انیمیشنز (Transitions & Animations)کا استعمال بہت ہوتا ہے مگروہ فون کی رفتار کم کر دیتے ہیں۔اس امر سے بچنے کے لیے اینڈرائیڈ فون میں ایک خفیہ ڈویلپر آپشن مینیو موجود ہے۔اس کے ذریعے اینیمیشن پلے کرنے کی رفتار کو کنٹرول کرنا ممکن ہے۔ اگر آپ ان کی رفتار دوگنا بڑھا دیں تو فون بھی پہلے سے زیادہ تیز ہوجاتا ہے۔ یہ کام کرنے کے لیے فون کی سیٹنگز میں جاکر نیچے موجود About phone کے ا?پشن پر کلک کیجیے۔اس کے بعد Build number پر کلک کریں اور یہ عمل 7 بار دہرائیں۔اب بیک بٹن پریس کریں تو آپ کے سامنے نیا ڈویلپر آپشن مینیو آجائے گا جو About phone کے اوپر ہوگا۔اس مینیو کے اندر جاکر نیچے اسکرول کریں اور ان سیٹنگز کو تلاش کیجیے

کون زیادہ ذہین ہے مرد یا عورتیں،ماہرین نے بتا دیا

انسانی ذہانت اور یادداشت کا لیول ہر ایک انسان میں مختلف ہوتا ہے اور اسی طرح مردوں اور عورتوں میں بھی ذہانت کا عنصر الگ الگ لیول رکھتا ہے لیکن ایک نئی تحقیق میں انکشاف ہوا ہے کہ مردوں میں ذہانت اور یادداشت عورتوں کے مقابلے میں زیادہ تیزی سے ختم ہوتی ہے جب کہ خواتین زیادہ عمر میں بھی بہتر یادداشت کا مظاہرہ کرتی ہیں۔امریکا کے نیشنل انسٹیٹیوٹ آن ایجنگ بالٹی مور میں ہونے والی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ 10 سال کی تحقیق کے دوران کئی ٹیسٹ لیے گئے جس میں ذہانت کے تمام ٹیسٹ میں خواتین نے مردوں کے مقابلے میں بہتر کارگردگی کا مظاہرہ کیا اسی طرح مردوں کی علم و فہم کی صلاحیتیں عورتوں کے مقابلے میں عمر بڑھنے کے ساتھ تیزی سے ختم ہوتی ہیں۔ محققین کا کہنا ہے کہ معاشرے میں گہری تبدیلیاں جیسے صحت کی بہتری اور معاشی خوش حالی بھی عورت کی ذہانت کو قائم رکھنے میں مدد گار ہوتی ہے۔ اس سے قبل کی گئی دیگر تحقیق میں بھی کہا گیا تھا کہ عمربڑھنے کے ساتھ انسانی دماغ میں ہونے والی تبدیلیوں کی رفتار عورتوں میں کم ہوتی ہے۔اس تحقیق کے دوران انسٹیٹیوٹ نے 1979 سے لے کر 2013 کے درمیان مختلف اوقات میں 2 ہزار سے زائد مرد و خواتین کی زندگیوں کا مطالعہ کیا جس میں 50 سال سے لے کر 96 سال تک کی عمر کے افراد شامل تھے۔ اس تحقیق کے 9 سال کے دوران تحقیق میں شامل افراد کی یادداشت، توجہ، ذہنی لچک اور بول چال کی صلاحیتوں کا جائزہ لیا گیا جس سے سائنس دان اس نتیجے پر پہنچے کہ ان میں موجود خواتین کی یاداشت مردوں کے مقابلے میں بڑھاپے میں بھی زیادہ بہتر کام کرتی رہی جب کہ مردوں میں یادداشت تیزی سے کم ہوئی

فیس بک پر لائیو ویڈیوز دیکھنے کا طریقہ

فیس بک نے گزشتہ دنوں یوٹیوب پر ایک بھرپور حملہ کرتے ہوئے اپنی موبائل ایپ میں لائیو اور ریکارڈ ویڈیوز کے لیے ایک خصوصی ہب متعارف کرادیا۔

ویڈیو ٹیب نامی یہ ہب فیس بک ایپ میں نیوی گیشن بار میں میسنجر کے لیے مختص سینٹر اسپاٹ کی جگہ لے گا اور اس طرح فیس بک مختلف کیٹیگریز کی بنیاد پر ویڈیوز دریافت کرنے کا ذریعہ بن جائے گی۔

اس کی بدولت ہر صارف کسی بھی وقت آن لائن لائیو ویڈیو براڈ کاسٹ کرسکتا ہے اور ایسا فیس بک جیسے کسی بھی بڑے پلیٹ فارم میں پہلی دفعہ ہونے والا ہے۔

اس نئے فارمیٹ کو استعمال کرنے کا طریقہ سیکھ لینا آپ کے ضرور فائدہ مند ہوگا۔

آئی فون یا اینڈرائیڈ موبائل ڈیوائسز میں فیس بک ایپ کو اپن کریں اور اسٹیٹس بار کو اوپن کریں جیسے کسی نئی پوسٹ کو کرتے ہوئے کرتے ہیں۔ اب نیچے دائیں جانب کونے پر آپ کو انسان جیسا آئیکون نظر آئے گا یہ لائیو بٹن ہے (اگر وہاں ابھی نہیں تو کچھ دن تک اپ ڈیٹ ہوجائے گا)، اس پر کلک کریں اور آپ کے پاس لائیو اسٹریم کے لیے تیار ہوجائیں، آپ چاہیں تو یہ اسٹریم فیس بک پر ہر ایک کو دکھا سکتے ہیں، چاہیں تو دوستوں یا خود تک مھدود رکھیں۔ اس کا انحصار اس بات پر ہوگا کہ آپ کی آخری پوسٹ میں کونسی آڈنیس کو سلیکٹ کررکھا ہے تو اسٹریمنگ سے پہلے یہ ضرور چیک کرلیں، آپ لائیو ویڈو کی تیاری کے دوران اس کی وضاحت بھی تحریر کرسکتے ہیں۔

ایک بار اسٹریم شروع ہوجائے گی تو دیگر فیس بک صارفین بھی رئیل ٹائم میں اس پر کمنٹ کرسکیں گے، اگر آپ ویڈیو کو پبلک کرسکتے ہین تو کمنٹ کو کنٹرول کرسکتے ہیں جس کے لیے ایپ میں مور بٹن پر کلک کریں اور پھر سیٹنگز پھر اکاﺅنٹ سیٹنگر اور پھر فالورز میں چلے جائیں۔ جہاں آپ سلیکٹ کرسکتے ہیں کہ ویڈیوز پر کمنٹ کون کرے یعنی دوست یا پبلک وغیرہ۔

فیس بک نے کامیاب لائیو اسٹریم کے لیے پیشکش بھی کی ہے، اسٹریم کے دوران آپ کو فالو کرنے والے افراد کو ہر بار نوٹیفکیشن جائے گا جب آپ لائیو جائیں گے، طویل براڈکاسٹ کے زیادہ دیکھنے والے ہوتے ہیں اور فیس بک کی تجویز ہے کہ کم از کم پانچ منٹ تک ویڈیو کی اسٹریمنگ کریں۔

فیس بک نے لائیو اسٹریم گروپس اور ایونٹس کے لیے بھی فراہم کی ہے تو کسی تقریب کی فوٹیج شیئر کرنا بھی آسان ہے یا کسی بھی موقع کی لائیو ویڈو اپنے فیس بک گروپ پر چلائی جاسکتی ہے۔

روبوٹ کی شکل میں ڈھل جانے والا جدید ٹیبلٹ تیار

چینی اور امریکی کمپنی نے مشترکہ طور پر ایک کھلونا ٹیبلٹ تیار کیا ہے جواصل میں روبوٹ کی شکل میں ایک ٹیبلٹ ہے اور اس کی قیمت صرف 20 ڈالر ہے۔چین اور امریکی کمپنی نے ساتھ مل کر ساو¿نڈ ویوو نامی روایتی روبوٹ کےنام پر ایک ٹیبلٹ روبوٹ بنایا ہے جو کھل کر ایکشن فگر کی طرح ایک روبوٹ بن جاتا ہے، یہ دھاتی کیس میں بند پتلا سا ٹیبلٹ ہے لیکن اصل میں ٹیبلٹ نہیں بلکہ صرف ایک کھلونا ہے۔روبوٹ کو کراو¿ڈ فنڈنگ کے تحت تیار کیا گیا ہے جس کا اسپیشل ایڈیشن 6 اپریل کو فروخت کے لیے پیش کیا جارہا ہے۔ روبوٹ بند ہوکر 7 ملی میٹر موٹے ٹیبلٹ سے 30 مراحل میں روبوٹ بن جاتا ہے۔ ٹرانسفارمر روبوٹ کےشوقین صرف 2 ہزار روپے میں اسے خرید سکتے ہیں، پہلے مرحلے میں اسے چین میں فروخت کے لئے پیش کیا جائے گا۔چینی کمپنی نے اسے اپنے مشہور ٹیبلٹ ایم آئی پیڈ ٹو کی جسامت کے لحاظ سے تیار کیا ہے جسے کمپنی کی چھٹی سالگرہ کے موقع پر بطورِ خاص ڈیزائن کیا گیا ہے۔

آئی فون 7 کے لیے حیرت انگیز ٹیکنالوجی متعارف

ایپل اپنے نئے آئی فون سیون کو پتلا اور ہلکا رکھنے کے لیے ایک نئی ٹیکنالوجی کا استعمال کرے گی۔

ایک رپورٹ کے مطابق اس ٹیکنالوجی کو ‘ فن آﺅٹ پیکجنگ’ کا نام دیا گیا ہے اور اس کی مدد سے بیٹری لائف کے ساتھ ساتھ سیلولر سگنل کو بھی مضبوط رکھنے میں مدد ملے گی۔

اس ٹیکنالوجی کو ابھی کوئی اور اسمارٹ فون کمپنی استعمال نہیں کررہی اور اس طرح آئی فون کو دیگر پر سبقت حاصل ہوسکتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق یہ ٹیکنالوجی مخصوص چپس کو زیادہ طاقتور اور موثر بنادیتی ہے جبکہ ان کا حجم بھی مختصر رہتا ہے جس کی مدد سے ایپل کو آئی فون سیون کو پتلا رکھ کر زیادہ طاقتور بنانے میں مدد ملے گی۔

چپس کا سائز چھوٹا رکھنے سے بڑی بیٹری کے لیے جگہ بنے گی اور اس طرح بیٹری لائف میں بہتری آئے گی۔

ایپل نے یہ ٹیکنالوجی جاپانی سپلائرز سے حاصل کی ہے۔

خیال رہے کہ آئی فون سیون میں ہیڈ فون جیک ختم ہونے سمیت متعدد تبدیلیوں کا امکان ہے جبکہ یہ بھی کہا جارہا ہے کہ آئی فون سیون پلس میں 2 رئیر کیمرے ہوں گے۔

اسی طرح ایپل انسائیڈر نامی بلاگ نے دعویٰ کیا ہے کہ آئی فون سیون 3.5 ایم ایم سرکولر ہیڈ فون جیک اور راﺅنڈ ہوم بٹن کے بغیر ہوگا اور یہ ایپل کی پہلی ڈیوائس ہوگی جس میں یہ 2 تبدیلیاں کی جارہی ہیں۔

یوٹوب کے خلاف فیس بک نے اہم فیچر متعارف کروا دیا

فیس بک نے آخرکار یوٹیوب پر ایک بھرپور حملہ کرتے ہوئے اپنی موبائل ایپ میں لائیو اور ریکارڈ ویڈیوز کے لیے ایک خصوصی ہب متعارف کرادیا۔ویڈیو ٹیب نامی یہ ہب فیس بک ایپ میں نیوی گیشن بار میں میسنجر کے لیے مختص سینٹر اسپاٹ کی جگہ لے گا اور اس طرح فیس بک مختلف کیٹیگریز کی بنیاد پر ویڈیوز دریافت کرنے کا ذریعہ بن جائے گی۔ویڈیو ہب پر بنیادی طور پر فیس بک کے لائیو براڈ کا غلبہ ہے جسے آنے والے ہفتوں میں آئی او ایس اور اینڈرائیڈ صارفین کے لیے جاری کردیاجائے گا۔اس ویڈیو ہب کے ذریعے صارفین گروپس جیسے اپنے خاندان یا دوستوں کی ایسی لائیو ویڈیوز دیکھ سکیں گے جو کسی مخصوص دلچسپی کی کیٹیگری کا حصہ ہوں گی۔اسی طرح ایونٹس کی لائیو ویڈیوز، فیس بک ری ایکشنز کے ذریعے کمنٹس،فائیو کلر فلٹرز، وائرل انوئیٹس، لائیو میپ، سنیپ چیٹ اسٹائل کی ڈوڈلنگ تاکہ براڈکاسٹر لائیو ویڈیوز کے اوپر خاکے بناسکے اور دیگر فیچرز بھی اس کا حصہ ہوں گے۔اس اپ گریڈ کے ذریعے فیس بک نے ایک طرف یوٹیوب جبکہ دوسری جانب ٹوئٹر کی زیرملکیت اپنی حریف ایپ Periscope کو آڑے ہاتھوں لیا ہے اور اسے توقع ہے کہ زیادہ پرلطف ہونے کے باعث صارفین اس کے ویڈیو ٹیب کو ترجیح دیں۔فیس بک نے لائیو ویڈیوز کے فیچر کو گزشتہ سال معروف شخصیات کے ذریعے آزمانا شروع کیا تھا اور دسمبر میں عام صارفین تک پہنچانا شروع کیا تھا۔ابھی فیس بک کو Periscope کے مقابلے میں مشکل کا سامنا ہے اور اب وہ اسے میسنجر کی جگہ دے کر مقبول بنانا چاہتی ہے اور اس فیچر مین صارفین کو بس ایک کیمرے کی ضرورت ہے جس کے ذریعے وہ بہت کچھ لائیو نشر کرسکیں گے۔اسی طرح ریکارڈ ویڈیوز کو دیکھنا فیس بک صارفین کے لیے اپنی ایپ پر ہی یوٹیوب جیسا تجربہ ہوگا جس کی دنیا کی مقبول ترین سماجی رابطے کی ویب سائٹ کو توقع ہے اور اس طرح وہ سوشل میڈیا کا ایک اور محاذ سر کرلے گی۔فیس بک کے بانی مارک زکربرگ کے مطابق یہ بالکل ٹی وی کیمرے کی طرح ہے جو آپ کی جیب میں ہے، ہر ایک جس کے پاس اسمارٹ فون ہو اس کے پاس کچھ بھی دنیا کے سامنے براڈ کاسٹ کرنے کی طاقت ہے اور اس سے لوگوں کے لیے ایک دوسرے کے قریب آنے کے نئے مواقعے پیدا ہوں گے

Google Analytics Alternative