سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

واٹس ایپ صارفین اپنا ڈیٹا فیس بک کے ساتھ شیئر کرنے پر مجبور

ٹوکیو: مشہور سوشل میڈیا ”فیس بک“ نے واٹس ایپ صارفین کا ڈیٹا حاصل کرنے کی تیاری شروع کر دی ہے اور قوی امکان ہے کہ آئندہ چند دنوں میں واٹس ایپ صارفین کو اپنا ڈیٹا فیس بک کے ساتھ شیئر کرنے پر مجبور کر دیا جائے جس کے باعث بہت سے صارفین مایوس نظر آ رہے ہیں۔ 2 سال قبل جب فیس بک نے واٹس ایپ کو خریدا تو بہت سے لوگوں کا خیال تھا کہ فیس بک اپنی میسنجر ایپلی کیشن کیلئے واٹس ایپ کو بند کر دے گا یا پھر ان دنوں سروسز کو ایک ہی سروس میںبدل دے گا تاہم ایسا نہ ہوا اور واٹس ایپ صارفین کے تمام خدشات دور ہو گئے لیکن اب ایسا لگتا ہے کہ واٹس ایپ نے اپنی پرائیویسی پالیسی میں تبدیلی کا فیصلہ کر لیا ہے جس کے تحت تمام صارفین کا ڈیٹا ان کے فیس بک اکاﺅنٹ کے ساتھ بھی شیئر کیا جائے گا۔ یعنی واٹس ایپ کے ہر صارف کا ڈیٹا اس کے فیس بک اکاﺅنٹ کیساتھ شیئر ہو گا اور ایسا کرنے کی وجہ واٹس ایپ کے استعمال کو بہتر بنانا بتایا جا رہا ہے۔ تاحال یہ آپشن واٹس ایپ صارفین کو مہیا نہیں کی گئی تاہم ایک ڈویلپر نے واٹس ایپ کے ”بیٹا“ ورژن میں یہ آپشن ڈھونڈ نکالی ہے اور اس کا سکرین شاٹ بھی اپ لوڈ کیا ہے۔

پاکستان کا پہلا شمسی ہوائی جہاز”شمسی ون”

لاہور : پاکستان کا پہلا شمسی ہوائی جہاز فضاءمیں اڑان بھرنے کے لئے تیار ہو گیا ہے اور اسے شمسی ون کا نام دیا گیا ہے میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان ایک جوہری ملک ہونے کے ساتھ ساتھ اب ٹیکنالوجی کے انقلاب کی جانب بھی رواں دواں ہے شمسی ہوائی جہاز کا یہ ماڈل یونیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی میں ڈیزائن کیا گیا ہے جہاں پر دو طلبہ عبدالمتین اور سید محمد جنید نے برسون سے اس آئیڈیا پر کام کیا ۔دونوں طلباء کا کہنا ہے کہ یہ تجربہ 100 فیصد کامیاب رہا اور یہ یقین ہے کہ سولر ایمپلس ( Impulse) کی طرح اصلی ہوائی بنایا جا سکتا ہے اس جہاز کو شمس ون کا نام دیا گیا ہے اور دن رات بغیر کسی ایندھن کے محو پرواز رہ سکتا ہے اور صرف بیٹری میں شمسی توانائی جمع کر کے پرواز کرے گا ۔

فیس بک کے بانی مارک زکربرگ کے زندگی کا ایک اور پہلو

فیس بک کے بانی مارک زکربرگ دنیا کے امیرترین افراد میں سے ایک ہیں مگر ان کے ملبوسات کی الماری دیکھ کر اس بات پر یقین کرنا مشکل ہوجائے گا۔

جی ہاں مارک زکربرگ نے پیر کو اپنے ملبوسات کی الماری کی ایک تصویر فیس بک پر شیئر کی اور ثابت کیا کہ یہ ارب پتی شخص محض ملتے جلتے رنگ کی ٹی شرٹس کو خریدنے اور پہننے کا عادی ہے۔

انسان کے سر کا ٹرانسپلانٹ 2017 تک ہوگا ممکن” چینی سائنس دان کادعوی”

بیجنگ:  طبی سائنس اگرچہ اس وقت تاریخ کے جدید ترین دور سے گزر رہی ہے اور ہر گزرتا لمحہ اس میں حیرت انگیز تبدیلیاں اور ایجادات لیکر آرہا ہے لیکن ابھی تک انسانی سر کے ٹرانسپلانٹ کا کوئی آپریشن سامنے نہیں آسکا تھا تاہم اب ایک چینی سائنس دان نے دعوی کیا ہے کہ اس نے بندر کے سر کا کامیاب ٹرانسپلانٹ کیا ہے اور وہ جلد انسان کے سر بھی ٹرانسپلانت کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔
چینی سائنس دان سرگیو کینا ویرو نے ایک سال قبل ہی اعلان کردیا تھا کہ ریڈھ کی ہڈی کے خرابی سے معذور ہوجانے والے افراد کو دوبارہ اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کے لیے وہ انسانی سر کا آپریشن کریں گے اور اس کے بعد سے انہوں نے شب وروز اس ہر جنوبی کوریا اور چین میں کام شروع کردیا اور اس کے لیے انہوں نے سب سے پہلے چوہے کا انتخاب کیا اور اس کے سر کا کامیاب آپریشن کیا اور چوہا ٹرانسپلانٹ کے 20 گھنٹے کے بعد ہی حرکت کرنے لگا۔ سرگئی نے اب ایک بندر کا کامیاب ہیڈ ٹرانسپلاتٹ کیا ہے جس کے بارے میں ان کا کہنا ہے کہ اس آپریشن کے دوران ڈونر اور مریض دونوں کے جسموں کو انتہائی کم درجہ حرارت پر رکھا جاتا ہے اور پھر انتہائی تیز چاقو سے چیر کرکاٹ لیا جاتا ہے اور اسے مریض کے سر پر لگا دیا جاتا ہے۔
سرگئی کا کہنا ہے کہ آپریشن کے دوران مریض کو 4 ماہ کے کوما میں رکھا جائے گا تاہم بندر کے سر کے ٹرانسپلانٹ میں انہیں بہت مختصر وقت کے لیے بے ہوش کیا گیا اور وہ بندر اب مکمل طور پر صحت مند ہے۔ سرگئی کی ٹیم کا کہنا ہے کہ سرجری کے دوران بندر کی ریڈھ کی ہڈی نہیں بلکہ صرف خون کی فراہمی کے نظام کو جوڑا گیا ہے جبکہ بندر کو 20 گھنٹوں کے لیے بے ہوش کیا گیا۔
کچھ سائنس دانوں نے سرگئی کی اس پیشرفت پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہے کہ اور کہا ہے کہ انہوں نے اس آپریشن کی تفصیلات نہیں پیش کیں تاہم اگر وہ اسے کسی سائنس میگزین میں شائع کردیں تو پھر اس میں دلچسپی لی جا سکتی ہے۔ ان سب تحفظات کے باوجود سرگئی نے انسان کے سر کے پہلے ٹرانسپلانٹ کے لیے دسمبر 2017 کی تاریخ مقرر کردی ہے اور دیکھنا یہ ہے کہ وہ اس میں کس حد تک کامیابی حاصل کرپاتے ہیں۔

چھپکلی کے ڈر اور خوف ہمیشہ ہمیشہ کے لیے ختم

ایمسٹر ڈیم: دنیا میں کروڑوں لوگ ایسے ہیں جو مختلف جانوروں سے انجانے خوف میں مبتلا رہتے ہیں ان جانوروں میں چھکلیاں بھی شامل ہیں لیکن اب سائنسدانوں نے ایسی دوائی تیارکرلی ہے جسے استعمال کرنے کے بعد لوگ چھپکلی کو ہاتھوں سے بھی پکڑ سکتے ہیں۔اس سلسلے کی نئی ریسرچ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ بعض مخصوص نوعیت کی جذباتی یادداشتوں کو محض تبدیل کرنا ہی ممکن نہیں بلکہ انھیں سرے سے ختم بھی کیا جا سکتا ہے۔ یہ کارنامہ ایمسٹرڈیم یونیورسٹی کی نفسیات کی پروفیسر میرل کائنڈت نے انجام دیا ہے۔ جن کی یہ تحقیق گزشتہ ماہ بائیلوجیکل سائیکاٹری جرنل میں شائع ہوئی ہے۔ انھوں نے ایک ایسی دوا تجویز کی ہے جسے مخصوص طریقے سے استعمال کر کے چھپکلی اور اس قسم کے ڈر اور خوف ہمیشہ ہمیشہ کے لیے ختم کیے جاسکتے ہیں۔

سنیپ چیٹ نے اب فیس بک میسنجر کے مدمقابل آنے کا فیصلہ کرلیا ہے

معروف ایپ سنیپ چیٹ نے اب فیس بک میسنجر کے مدمقابل آنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

سنیپ چیٹ میں لائیو ویڈیو کالز کا فیچر تو کچھ عرصے سے ہے تاہم انٹرفیس سے اس کے بارے میں معلوم نہیں ہوتا۔

مگر اب اس نے ویڈیو کالنگ، آڈیو کالنگ اور اسٹیکرز کے فیچرز کو اپنی چیٹ کے اندر توسیع دینے کا عمل شروع کردیا ہے۔

یہ چیٹ فیچر سنیپ چیٹ میں آپ کے کسی کانٹیکٹ کے نام پر کلک کرنے سے نظر آئے گا اور ابھی اس پر صرف تحریری یا تصاویر شیئر کرنے کے آپشنز موجود ہیں۔

اس فیچر کو چیٹ وی ٹو کا نام دیا گیا ہے اور اس کے اسکرین شاٹ ایک اینڈرائیڈ ڈیوائس پر نظر آئے ہیں۔

ان اسکرین شاٹس سے معلوم ہوتا ہے کہ سنیپ چیٹ کا نیا انٹرفیس فیس بک میسنجر جیسا ہوگا جس میں ہر فیچرز کے واضح بٹن جیسے فوٹو، آڈیو کالنگ، ویڈیو کالنگ اور اسٹیکر وغیرہ موجود ہیں۔

اسنیپ چیٹ کے صارفین کی تعداد 20 کروڑ سے زیادہ ہے جس میں سے 10 کروڑ روزانہ اس ایپ کو استعمال کرتے ہیں۔

اس کے ذریعے روزانہ 800 ملین تصاویر اور ویڈیوز کو ارسال کیا جاتا ہے اور یہ نوجوانوں کی پسندیدہ ایپ ہے۔

فیس بک میسنجر کے600 ملین سے زیادہ صارفین ہیں اور سنیپ چیٹ کی نظر ان نئے فیچرز کے ذریعے ان پر جمی ہوئی ہیں۔

ویڈیو کالنگ کے ذریعے وہ ان صارفین کو بھی اپنی جانب کھینچ سکے گی جو اسکائپ وغیرہ کا استعمال کرتے ہیں۔

ابھی یہ واضح نہیں کہ یہ نیا انٹرفیس کب تک عام استعمال کے دستیاب ہوگا مگر بہت جلد یہ آپ کے پاس ہوسکتا ہے۔

جاپان میں اسپائیڈر مین کی طرح جال پھینکنے والے آلے کی ویڈیو اب دنیا بھر میں مقبول ہورہی ہے

ٹوکیو: جاپان میں اسپائیڈر مین کی طرح جال پھینکنے والے آلے کی ویڈیو اب دنیا بھر میں مقبول ہورہی ہے جس میں ایک خاتون کو حملہ آور شخص پر ’اسپائیڈرمین‘ گن سے جال پھینکتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔اگرچہ جاپان میں خواتین پرحملوں اوراسٹریٹ کرائم کی شرح بہت کم ہے لیکن اس اہم ایجاد کے ذریعے حملہ آور شخص کو سیکنڈوں میں جال میں پھنسایا جاسکتا ہے۔ ویڈیو میں ایک خاتون کو بڑی ٹارچ جیسا آلہ استعمال کرتے دکھایا گیا ہے جو ننجا لباس پہنے ایک حملہ آورشخص پرٹیوب جیسی گن کے سرخ بٹن کو دباتی ہے تو اس پرایک جال لپکتا ہے اوروہ مضبوط جال میں کسی بے بس پرندے کی طرح پھنس جاتا ہے۔اس کے بعد وہ شخص اداکاری کے اندازمیں فرش پرگرجاتا ہے۔ ویڈیو کے ایک اورحصے میں گن سے نہ صرف جال نکلتا ہے بلکہ اس سے ایک تارجڑا رہتا ہے جس سے پکڑنے جانے والے شخص کو قابو کیا جاسکتا ہے۔ اسی طرح ویڈیو کے ایک حصے میں حملہ ا?ورکے پھنس جانے کے بعد اسے پولیس گرفتارکرلیتی ہے۔اس ویڈیو کے متعلق مزید معلومات نہیں مل سکی کیونکہ پہلی مرتبہ یہ ویڈیو فیس بک پر گائجنپوٹ نامی اکاو¿نٹ پر دیکھی گئی ہے اورمیڈیا پربھی اسی کا حوالہ دیا جارہا ہے۔ اسی ویڈیو میں ایک چھوٹی گن دکھائی گئی ہے جو کسی بدنیت پر تیزی سے رنگ پھینکتی ہے۔ اس کے علاوہ یہی گن کسی بھاگتی کار یا سواری پر نشانی کا رنگ پھینکنے کا کام بھی کرسکتی ہے

نیا منی آئی فون مارچ میں متعارف کرایا جائے گا

نیو یارک: ایپل سے متعلق اطلاعات دینے والے ایک بلاگ 9 ٹو 5 میک کے مطابق ‘ se ‘ سے مراد اسپیشل ایڈیشن ہے۔آئی فون فائیو ایس ای آئی فون سکس کے فیچرز کا حامل ہوگا جبکہ اس کی اسکرین کا سائز 4 انچ ہوگا۔یہ دیکھنے میں آئی فون فائیو ایس جیسا ہوگا مگر میٹالک سائیڈ ایجز کی بجائے اس میںآئی فون سکس سیریز جیسا گلاس ہوگا۔اس نئے آئی فون میں 8 میگا پکسلز کیمرہ ہوگا جبکہ آئی فون سکس ایس کے لائیو فوٹوز اور ایپل پے کے فیچرز بھی اس میں شامل ہوں گے۔اسی طرح پہلے سامنے آنے والی رپورٹس کے مطابق یہ فون اے نائن پروسیسر، 16 جی بی اسٹوریج اور 2 جی بی ریم کے ساتھ ہوسکتا ہے جس سے اندازہ ہوتا ہے کہ یہ آئی فون سکس ایس جتنا ہی طاقتور ہوگا۔یہ فون مختلف رنگوں کے ساتھ دستیاب ہوگا اور سب سے اہم بات یہ کہ سکس ایس کے مقابلے میں کافی سستا ہوگا۔یہ فون ایپل کے پلاسٹک سے بنے فائیو سی اسمارٹ فون کے متبادل کے طور پر تیار کیا جارہا ہے۔یہ نیا آئی فون مارچ میں متعارف کرایا جائے گا جبکہ اسے فروخت کے لیے مارچ کے آخر یا اپریل کے شروع میں پیش کیا جائے گا۔خیال رہے کہ ایپل کی جانب سے اپنا مرکزی آئی فون کا نیا ماڈل ستمبر کے مہینے میں متعارف کرایا جاتا ہے تاہم گزشتہ چند برسوں کے دوران چھوٹی اسکرین کے سستے ماڈلز بھی ترقی پذیر ممالک کو مدنظر رکھ کر تیار کیے گئے ہیں۔

Google Analytics Alternative