سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

ہواوے آنر 7 اے اسمارٹ فون متعارف کرا دیا

ہواوے کمپنی نے آنر 7 اے اسمارٹ فون متعارف کرا دیا ہے۔
یہ کمپنی کا انٹری لیول اسمارٹ فون ہے جس میں 5.7 انچ ڈسپلے ، اسنیپ ڈریگن 430 پروسیسر اور ڈوئل سم سپورٹ دی گئی ہے۔ اسمارٹ فون ‏کو 2 جی بی ریم کے ساتھ 32 جی بی اسٹوریج اور 3 جی بی ریم کے ساتھ 32 جی بی اسٹوریج کے دو آپشنز میں پیش کیا گیا ہے۔
فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں پشت پر 13 میگا پکسل اور 2 میگا پکسل کے دو کیمرے دیے گئے ہیں۔ فرنٹ پر ایل ای ڈی فلیش کے ساتھ 8 میگا پکسل کا شوٹر دیا گیا ہے جیسے فیس ان لاک کے لیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ فنگر پرنٹ سکینر کو بھی فون کا حصہ بنایا گیا ہے۔ اسمارٹ فون کی بیٹری 3000 ملی ایمپیئر آورز کی ہے۔ فون کو کالے ، سنہرے اور نیلے رنگ میں متعارف کرایا گیا ہے۔ 2 جی بی ریم کے ساتھ اسمارٹ فون کی قیمت 130 ڈالر جبکہ 3 جی بی ریم کے ساتھ فون کی قیمت 160 ڈالر ہے۔ اسمارٹ فون کو فروخت کے لیے پیش کر دیا گیا ہے۔

ایل جی جی 7 کی بنیادی تفصیلات سامنے آگئیں‎

ایل جی کمپنی جلد ہی ‏جی 7 اور جی 7 پلس اسمارٹ فون پیش کرنے جا رہی ہے۔
فون سے متعلق ابتدائی تفصیلات سامنے آگئی ہے جس کے مطابق جی 7 اسمارٹ فون میں 6 انچ ڈسپلے ، کلاسک میٹل ڈیزائن ، اسنیپ ڈریگن 845 پروسیسر ، 4 جی بی ریم اور 64 جی بی اسٹوریج دیا جائے گا۔
فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں پشت پر ڈوئل کیمرہ دیا جائے گا جس میں 16 میگا پکسل کے دو کیمرے شامل ہونگے۔ ہیڈ فون جیک کو بھی فون کا حصہ بنایا جائے گا۔ جی 7 پلس ‏میں 6 جی بی ریم کے ساتھ 128 جی بی اسٹوریج دیئے جانے کا امکان ہے۔فون کو رواں ماہ کے آخر تک متعارف کروایا جائے گا

روبوٹ مکڑی کاحیرت انگیز رفتار سے تعاقب

برلن …. جدید ٹیکنالوجی کا سفر جاری ہے اور آئے دن نت نئی چیزیں اس کے ذریعے تیار ہورہی ہیں اور ا ن تمام چیزوں میں سب سے نمایاں حیثیت روبوٹ ٹیکنالوجی کو حاصل ہے۔
اسی ٹیکنالوجی پر عمل کرتے ہوئے جرمن فرم فیسٹو نے جو پہلے بھی مختلف اقسام کے روبوٹس تیار کرچکی ہے اس بار ایک ہشت پاقسم کا مشینی روبوٹ تیار کیا ہے۔ جو نہ صرف عام مکڑیوں کی طرح چلتا ہے بلکہ بوقت ضرورت وہ اپنے آپ کو کسی گیندکی طرح گول بناکر حیرت انگیز تیز رفتاری کے ساتھ راستہ طے کرتا ہے اور اگر کسی کا تعاقب کررہا ہو تو یہ رفتار کچھ زیادہ ہوجاتی ہے۔ اس میں لگے ہوئی آٹو ٹانگیں کافی لچکدار ہیں جس کی وجہ سے وہ کئی رخ بدل کر چل سکتا ہے اور قلابازیاں کھانے میں بھی مدد گار ثابت ہوتی ہیں۔
جرمن فرم کا کہناہے کہ اس نے مراکش میں پائی جانے والی خاص قسم کی مکڑی کو دیکھ کر تیار کیا ہے۔ مراکش کی یہ مکڑی فلک فلیک کے طور پر جانی جاتی ہے۔ اور اسے اپنی ہئیت بدلنے ، قلابازیاں کھانے، لڑھکنے اور دوڑنے کا فن اچھی طرح آتا ہے۔
دیکھنے والوں کا کہناہے کہ اس مکڑی کو دیکھ کر حقیقت سے زیادہ خواب کا گمان ہوتاہے مگر یہ خواب نہیں حقیقت ہے۔ اس عجیب و غریب مشینی مکڑی کا نام بائیونک ویل باٹ رکھا گیا ہے۔ اسکی آٹھوں ٹانگیں کافی حد تک پراسرار ہیں۔ یہیں ٹانگیں ہیں جو اپنے دوڑنے اور ہئیت بدلنے میں سب سے زیادہ مدد گار ہوتی ہیں۔
فیسٹو کے سائنسدانوںکا کہنا ہے کہ فلک فلیک زیادہ تر صحرائی علاقوں میں پائی جاتی ہے۔ بظاہر یہ عام مکڑیوں جیسی ہیں مگر اسے قدرت نے صورت بدلنے کی جو صلاحیت دی ہے وہ اسے دوسری مکڑیوں سے ممتاز اور مختلف بناتی ہے۔ تاہم یہ بات طے ہے کہ اس قسم کی مکڑی کسی بھی لمحے اپنے دشمن کا بھرپور مقابلہ کرسکتی ہے۔ کمپنی کا یہ بھی دعویٰ ہے کہ کوئی شخص اسے چھیڑ کر بھاگنے کی کوشش کرے تو حماقت ہوگی کیونکہ یہ حیرت انگیز رفتار سے تعاقب کرکے اپنا انتقام لے لیتی ہے۔

اسنیپ چیٹ میں ویڈیو کال گروپ سمیت نئے فیچر متعارف

سوشل شیئرنگ ایپلی کیشن اسنیپ چیٹ کو گزشتہ چند ماہ سے اپنی ڈیزائن تبدیل کرنے پر جہاں شدید تنقید کا سامنا تھا۔

وہیں اب اس سوشل شیئرنگ ایپلی کیشن نے نئے فیچرز متعارف کرانے سے صارفین کی توجہ حاصل کرنا شروع کردیا ہے۔

خیال رہے کہ اسنیپ چیٹ کو ڈیزائن تبدیل کرنے پر معروف ماڈل کایلی جینر سمیت دیگر شوبز شخصیات نے تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

کایلی جینر کی اسنیپ چیٹ کے خلاف کی گئی صرف ایک ٹوئیٹ سے ہی کمپنی کو پاکستانی ایک کھرب 30 ارب روپے کا نقصان ہوا تھا۔

ڈیزائن کی تبدیلی کے بعد صارفین کی تنقید اور غصے کو کم کرنے کے لیے اب اسنیپ چیٹ نے نئے فیچرز متعارف کرانا شروع کردیے۔

اسنیپ چیٹ نے گروپ ویڈیو کال کا فیچر متعارف کرانے سمیت شیئر کی جانے والی پوسٹز میں دوستوں کو ٹیگ یا مینشن کرنے کا بھی فیچر متعارف کرادیا۔

اگرچہ پوسٹز میں دوستوں کو مینشن یا ٹیگ کرنے کے فیچر فیس بک اور اس کی سوشل شیئرنگ ایپلی کیشن انسٹاگرام میں پہلے سے ہی موجود تھے، تاہم اسنیپ چیٹ نے بھی اب انہیں متعارف کرادیا۔

اب اسنیپ چیٹ صارف ویڈیو کال گروپ میں ایک ساتھ 16 افراد کے ساتھ بات چیت کرسکتے ہیں۔

اس فیچر کو استعمال کرنا نہایت ہی آسان ہے، صارف کو پہلے ویڈیو آئکون میں جاکر ویڈیو چیٹ میں جانا پڑے گا، جہاں ابتدائی طور پر 3 سے 4 افراد کو گروپ کال یا چیٹ میں شامل کرکے مزید دوستوں کو دعوت دی جاسکتی ہے۔

یہی نہیں بلکہ اسنیپ چیٹ نے وائس کال گروپ میں افراد کی تعداد بڑھادی ہے، جس کے بعد اب کوئی بھی اسنیپ چیٹ صارف وائس کال میں بیک وقت 32 افراد کو شامل کرسکتا ہے۔

اسنیپ چیٹ نے کال گروپ اور چیٹ کے نئے فیچر متعارف کرانے سمیت پوسٹز میں دوستوں یا دیگر صارفین کو مینشن یا ٹیگ کرنے کا فیچر بھی متعارف کرادیا۔

اس فیچر کو بھی استعمال کرنا نہایت آسان ہے، اسنیپ چیٹ صارف کو ٹوئٹر کی طرح کسی بھی دوست کو پوسٹ ٹیگ کرتے وقت@ لکھنے کے بعد صارف کا نام لکھنا ہوگا۔

اسنیپ چیٹ کی جانب سے ڈیزائن کو تبدیل کرنے کے بعد نئے فیچرز کو متعارف کرائے جانے کے بعد اب خیال کیا جا رہا ہے کہ سوشل شیئرنگ ویب سائٹ مزید نئے فیچر متعارف کرائے گی۔

واضح رہے کہ اسنیپ چیٹ نے کال ویڈیو کا فیچر 2016 میں متعارف کرایا تھا۔

جرثومے فضا میں جمع ہوکر دوبارہ زمین پر آرہے ہیں، سائنس دان

اسپین: سائنس دانوں کی ایک بین الاقوامی ٹیم نے یہ دلچسپ انکشاف کیا ہے کہ زمینی فضا میں بڑی تعداد میں مختلف وائرس جمع ہورہے ہیں اور وہ آسمان سے زمین کی جانب گر بھی رہے ہیں۔

کینیڈا، امریکا اور اسپین کے سائنس دانوں نے کہا ہے کہ زمین فضا کی ایک پرت ٹروپوزفیئر میں وائرسوں کی بہتات ہے اور یہ مقام تمام موسمیاتی سرگرمیوں سے ماورا ہے جبکہ اسٹریٹوسفیئر سے نیچے جہاں جیٹ جہاز پرواز کرتے ہیں اور عین اسی جگہ وائرس ہزاروں کلومیٹر فاصلہ طے کرکے زمین پر اترتے رہتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق روزانہ یہاں ایک مربع میٹر رقبے پر اوسطاً 80 کروڑ وائرس جمع ہورہے ہیں۔

کینیڈا کی برٹش کولمبیا یونیورسٹی کے وائرولوجسٹ کرٹس سٹل کہتے ہیں کہ ایک براعظم کے وائرس اس طرح دوسرے براعظم تک پہنچ رہے ہیں،  یہ وائرس اور بیکٹیریا مٹی، گرد اور سمندری سطح کے ذریعے زمینی فضا کے بلند ترین مقام تک پہنچ رہے ہیں اور پھر دوبارہ زمین کا رخ کررہے ہیں۔

جامعہ غرناطہ اور سان ڈیاگو اسٹیٹ یونیورسٹی کے ماہرین نے دریافت کیا ہے کہ 2500 سے 3000 میٹر بلندی پر موجود فضائی سرحد پر یہ ننھے جرثومے جمع ہورہے ہیں اور اس عجیب و غریب عمل کو سمجھنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ اس کے لیے ماہرین نے اسپین کے سیرا نیواڈا کی پہاڑیوں کا انتخاب کیا ہے۔ وہاں ماہرین کو فی مربع میٹر، اربوں وائرس اور کروڑوں بیکٹیریا ملے ہیں تاہم بیکٹیریا کم اور وائرس زیادہ جمع ہورہے ہیں۔

غرناطہ یونیورسٹی کی ماہر ایسابیل ریش کہتی ہیں کہ بارش اور صحارا ریگستان کے ریتیلے طوفان کی وجہ سے یہ وائرس اور بیکٹیریا دوبارہ زمین کا رخ کرتے ہیں تاہم بارش اس عمل میں بہت مؤثر کردار ادا نہیں کرتی۔ ماہرین اس سمندری اسپرے کو بھی اس میں اہم کردار کے طور پر شمار کرتے ہیں۔

سمندری اسپرے ( سی اسپرے) اس مجموعی عمل کو کہتے ہیں جس میں سمندر کی سطح سے ذرات جنم لیتے ہیں اور بلبلوں کی صورت میں پھٹنے سے اوپر کی جانب پرواز کرتے ہیں۔ وائرس کسی نامیاتی ذرات پر سوار ہوکر بہت بلندی تک پہنچ رہے ہیں تاہم ماہرین ان وائرسوں کے نقصانات اور ممکنہ اثرات پر مزید تحقیق کریں گے۔

ایل جی جی 7 کی پہلی جھلک سامنے آگئی

معروف جنوبی کورین کمپنی ایل جی کے اسمارٹ فونز کے لیے 2018 ایک حیران کن سال ثابت ہونے والا ہے کیونکہ پہلے تو اس نے ہر سال کی طرح اس بار فلیگ شپ فون متعارف نہیں کرایا۔

ایل جی جی 7 (ممکنہ نام) اب جون میں پیش کیے جانے امکان ہے اور اب اس کی پہلی جھلک لیک ہوگئی ہے۔

آن لیک اینڈ مسٹر فون نامی یوٹیوب اکاﺅنٹ پر ممکنہ ایل جی جی 7 کی ویڈیو لیک کی گئی ہے۔

اور اسے دیکھ کر اندازہ ہوتا ہے کہ 2018 میں ایل جی کا فلیگ شپ فون اپنے ڈیزائن سے صارفین کو دنگ کرنے والا ہے۔

پہلے سے بہت کم بیزل، ڈوئل کیمرہ اور آئی فون ایکس جیسا نوچ اس فون کا حصہ نظر آتے ہیں، تاہم جی سکس کی طرح گلاس بیک اور میٹل فریم بھی اس کا حصہ ہے۔

اسی طرح ریگولر پاور بٹن دیگر ڈیوائسز کی طرح بیک کی بجائے سائیڈ پر دیا گیا ہے۔

دوسری جانب والیوم کنٹرول کے ساتھ ایک اضافی بٹن بھی نظر آرہا ہے جو کہ کیمرہ یا وائس اسسٹنٹ کے لیے ہوسکتا ہے، تاہم یقین سے کچھ کہنا ابھی مشکل ہے۔

اور ہاں ایل جی نے اس بار بھی ہیڈفون جیک کو برقرار رکھا ہے اور یہ جنوبی کورین کمپنی اپنے آڈیو فیچرز کے حوالے سے جانی جاتی ہے۔

تاہم ابھی یہ معلوم نہیں کہ گلیکسی ایس 9 کی طرح اسٹیریو ساﺅنڈ کے لیے ائیر پیس دیا گیا ہے یا مونو اسپیکر۔

گوگل اب سستا پکسل فون متعارف کرانے کے لیے تیار

گوگل کے پکسل اسمارٹ فونز کو بہترین اینڈرائیڈ ڈیوائس قرار دیا جاتا ہے اور اچھی خبر یہ ہے کہ اب یہ کمپنی پاکستان اور بھارت جیسے ممالک کے لیے اس کے سستے ورژن متعارف کرانے کا ارادہ رکھتی ہے۔

اکنامک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق گوگل رواں سال جولائی یا اگست میں ایک سستا پکسل فون متعارف کرانے کی منصوبہ بندی کررہا ہے۔

رپورٹ میں گوگل کے بھارت میں موجود 4 عہدیداران کے حوالے سے بتایا گیا کہ یہ نیا سستا پکسل فون مڈرینج فیچرز کے ساتھ ہوگا جو کہ ترقی پذیر ممالک جیسے بھارت یا پاکستان وغیرہ کے لیے تیار کیا جائے گا۔

اسی طرح ان عہدیداران کا کنا تھا کہ نیا فلیگ شپ پکسل فون ممکنہ طور پر پکسل تھری دیوالی کے موقع پر سامنے آسکتا ہے۔

گزشتہ سال بھی گوگل نے پکسل ٹو کو دیوالی کے موقع پر 19 اکتوبر کو پیش کیا تھا اور اب بار یہ تہوار 7 نومبر کو ہے۔

گوگل گزشتہ سال 39 لاکھ پکسل فون فروخت کرنے میں ہی کامیاب ہوسکا تھا حالانکہ ایپل یا سام سنگ وغیرہ ہفتہ بھر میں اتنی ڈیوائسز فروخت کردیتے ہیں۔

تاہم کمپنی کو توقع ہے کہ سستا پکسل فون ترقی پذیر ممالک میں متعارف کرانا اس کے اینڈرائیڈ اسمارٹ فونز کی فروخت بڑھانے میں مدد دے گا۔

سستے پکسل فون تیار کرنے کا ایک مقصد گوگل کا اینڈرائیڈ اور انٹرنیٹ کو ابھرتی مارکیٹس میں لانے کے ہدف کا حصہ ہے۔

گوگل پہلے ہی اوریو گو ایڈیشن کے ذریعے سستے اینڈرائیڈ فونز کی تیاری میں مختلف کمپنیوں کے ساتھ شراکت داری کررہا ہے، جس کے لیے سافٹ وئیر دیا جارہا ہے جبکہ اب ہارڈوئیر کو بھی شامل کردیا جائے گا۔

اس سستے فون کے حوالے سے تفصیلات اگلے ماہ گوگل کی آئی او ڈویلپر کانفرنس میں سامنے آنے کا امکان ہے۔

ویوو وائے 71 اسمارٹ فون کی تفصیلات سامنے آگئیں

ویوو کمپنی کے مڈ رینج اسمارٹ فونز میں ایک اور فون کا اضافہ ہونے جا رہا ہے۔
چینی ویب سائٹ کی جانب سے ویوو وائے 71 اسمارٹ فون کی تفصیلات جاری کردی گئی ہیں جس کے مطابق اس اسمارٹ فون میں 5.99 انچ ڈسپلے ، میٹل باڈی ، اسنیپ ڈریگن 425 پروسیسر ،اینڈرائیڈ اوریو آپریٹنگ سسٹم ، 3 جی بی ریم اور 32 جی بی اسٹوریج دیا جائے گا۔
فون کے کیمرہ سیٹ اپ میں 13 میگا پکسل کا بیک کیمرہ اور 5 میگا پکسل کا فرنٹ کیمرہ شامل ہو گا۔ فون کی بیٹری 3285 ملی ایمپئیر آورز ہونے کا امکان ہے۔ ہیڈ فون جیک کو بھی فون کا حصہ بنایا جائے گا۔ فون کو ممکنہ طور پر 5 اپریل کو متعارف کرایا جائے گا اور اس کی قیمت 175 ڈالر تک ہو گی۔
Google Analytics Alternative