سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

کیا موٹرولا کا پہلا فولڈ ایبل فون ایسا ہوگا؟

موٹرولا کا پہلا فولڈ ایبل فون ممکنہ طور پر رواں ماہ کے آخر میں متعارف کرایا جارہا ہے جو ماضی کے آئیکونک موبائل ریزر کا اپ ڈیٹ ورژن ہوگا۔

یہ اس کمپنی کا پہلا فلیگ شپ فون ہوگا جو کہ لچکدار ڈسپلے سے لیس ہوگا مگر اب تک یہ معلوم نہیں تھا کہ اس کا ڈیزائن کیسا ہوگا یا ممکنہ طور پر کیسا نظر آئے گا۔

مگر اب اس کا کانسیپٹ ڈیزائن سامنے آیا ہے جو ایک ڈیزائنر نے اس فون کی پیٹنٹ تصاویر کو دیکھ کر تیار کیا ہے۔

اس کانسیپٹ ڈیزائن سے اندازہ ہوتا ہے کہ موٹرولا ریزر 2019 پہلے کے مقابلے میں زیادہ چوکور ڈیزائن کا حامل ہوگا، جبکہ فون کو اوپن کرنے پر لچکدار ڈسپلے سامنے آئے گا جو کہ اوپر سے نیچے تک پھیلا ہوا ہوگا۔

اس فولڈ ایبل اسکرین میں 19:8 ایسپیکٹ ریشو دیا جائے گا جبکہ ایک نوچ بھی اسکرین کے اوپر نظر آرہا ہے۔

اس کا اوپری حصہ سنگل کیمرے اور سیکنڈری اسکرین سے لیس ہوگا، جو کہ ممکنہ طور پر صارفین کو الرٹس سے آگاہ کرے گی جیسا ماضی کے فون میں دیکھنے میں آیا تھا۔

اس کانسیپٹ ڈیزائن میں والیوم اور پاور بٹن دیکھنے میں نہیں آئے۔

فوٹو بشکریہ یانکو ڈیزائن
فوٹو بشکریہ یانکو ڈیزائن

اس نئے موٹرولا ریزر کے فیچرز کے حوالے سے تو زیادہ تفصیلات سامنے نہیں آئی ہیں مگر گزشتہ ماہ وال اسٹریٹ جرنل کی رپورٹ میں اسے فلیگ شپ ڈیوائس قرار دیا گیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق یہ فون اگلے ماہ امریکا میں فروخت کے لیے پیش کیے جانے کا امکان ہے جبکہ اس کی قیمت 15 سو ڈالرز تک ہوسکتی ہے۔

وال اسٹریٹ جرنل کے مطابق موٹرولا کی ملکیت رکھنے والی کمپنی لیناوو کو توقع ہے کہ 2 لاکھ نئے ریزر فون فروخت ہوسکتے ہیں جو کہ ڈیڑھ ہزار ڈالرز والے فون کے لیے کافی بڑی سوچ ہے۔

مگر خیال رہے کہ ریزر وی تھری جب متعارف کرایا گیا تھا تو دنیا بھر میں اس کے 130 ملین یونٹ فروخت ہوئے تھے۔

سام سنگ گلیکسی ایس 10 کے لیے خطرہ ثابت ہونے والااسمارٹ فون

یہ کہنا غلط نہیں ہوگا کہ اب لوگ اسمارٹ فونز کی خریداری کیمرے کا معیار مدنظر رکھ کر کرتے ہیں اور چند برسوں کے دوران اس شعبے میں بہت زیادہ جدت دیکھنے میں آئی ہے۔

درحقیقت اس میدان میں پہلے آئی فون کو قائد سمجھا جاتا تھا مگر پھر گوگل اور سام سنگ نے آئی فونز سے یہ اعزاز چھین لیا، یہاں تکہ گوگل پکسل فونز میں نائٹ شائٹ فیچر کے ساتھ ایپل کی کم روشنی میں تصویر لینے کی صلاحیت باعث شرم محسوس ہوتی ہے۔

مگر اب ایک اور کمپنی موبائل فوٹوگرافی میں دیگر کے لیے خطرہ بن کر ابھری ہے اور اس کا نیا فلیگ شپ فون کیمروں کے حوالے سے چونکا دینے والا ثابت ہوسکتا ہے۔

گزشتہ سال اس کمپنی ہواوے کے دونوں فلیگ شپ فونز کو بہترین کیمرا فونز قرار دیا گیا اور وہ آئی فونز اور گلیکسی فونز کو پیچھے چھوڑنے میں کامیاب رہے۔

سام سنگ کی طرح ہواوے بھی ہر سال 2 فلیگ شپ فونز متعارف کراتی ہے جن میں سے سال کی پہلی ششماہی میں پی سیریز جبکہ دوسری ششماہی میں میٹ سیریز کا نیا فون سامنے آتا ہے۔

ہواوے کا پی سیریز کے نئے فونز رواں ماہ متعارف کرائے جانے کا امکان ہے۔

چینی سوشل میڈیا سائٹ ویبو میں ہواوے پی 30 پرو کی تصویر لیک ہوکر سامنے آئی جسے بعد میں ڈیلیٹ کردیا گیا مگر اس کے اسکرین شاٹ لوگوں نے محفوظ کرلیے۔

ہواوے پی 20 پرو دنیا کا پہلا 3 بیک کیمروں پر مشتمل فون تھا جس کا معیار بھی بہترین ثابت ہوا جبکہ میٹ 20 پرو اس سے بھی زیادہ بہتر ثابت ہوا۔

اگر پی 30 پرو کی یہ تصویر درست ثابت ہوئی تو اس سے عندیہ ملتا ہے کہ کمپنی اب پہلی بار 4 بیک کیمرے متعارف کرانے والی ہے۔

اسی طرح یہ بھی معلوم ہوتا ہے کہ ان کا ڈیزائن کافی مختلف ہوگا یعنی 3 کیمرے ایک قطار میں جبکہ چوتھا الگ موجود ہوگا۔

اس سے پہلے سامنے آنے والی لیکس کے مطابق پی 30 پرو نوچ ڈسپلے سے لیس ہوگا جس میں 38 میگا پکسل کا طاقتور سیلفی کیمرا بھی موجود ہوگا۔

اس میں کمپنی کا اپنا کیرین 980 پراسیسر موجود ہوگا جبکہ 8 جی بی ریم اور 128 جی بی اسٹوریج دیئے جانے کا بھی امکان ہے۔

یہ فون 25 فروری سے بارسلونا میں شروع ہونے والی موبائل ورلڈ کانگریس کے موقع پر متعارف کرائے جانے کا امکان ہے۔

اب واٹس ایپ کو فیس اور ٹچ آئی ڈی سے لاک، ان لاک کیا جاسکتا ہے

کیلیفورنیا: اب فون کے  بایومیٹرک سیکیورٹی فیچرز کو چہرے (فیس) اور ٹچ آپشن کے ذریعے کھولا اور بند کیا جاسکتا ہے۔ فی الحال یہ آپشن آئی فون کے ایسے ماڈلوں کے لیے دستیاب ہے جو آئی او ایس استعمال کرتے ہیں۔

نائن ٹو فائیو نامی ویب سائٹ نے سب سے پہلے اس کی خبر دی ہے جو واٹس ایپ کے ورژن  2.19.20 میں موجود ہے۔ اکاؤنٹ سینٹنگز میں جاکر پرائیویسی مینو میں تبدیلی کرکے اسے استعمال کیا جاسکتا ہے۔ اس طرح کھلے ہوئے فون کے باوجود بھی لوگ آپ کے ویٹس ایپ کو کھولنے سے قاصر رہیں گے۔

تاہم نوٹفیکیشنز سیٹنگ میں آپ کو محتاط رہنا ہوگا کیونکہ اسے تبدیل کئے بغیر بھی واٹس ایپ لاک ہونے کے باوجود کوئی بھی میسج پڑھ سکتا ہے اور اس کا جواب بھی دے سکتا ہے۔ اسی طرح ایپ کو ان لاک کیے بغیر کال وصول بھی کی جاسکتی ہے۔

اگرچہ یہ فیچر ابھی آئی فون کے سافٹ ویئر آئی او ایس کے لیے دستیاب ہے لیکن واٹس ایپ نے اشارہ دیا ہے کہ جلد ہی اینڈروئڈ کے لیے بھی یہ سہولت دستیاب ہوگی۔

سام سنگ کی نئی اسمارٹ واچ متعارف ہونے کے لیے تیار

سام سنگ کی جانب سے رواں ماہ نیا فلیگ شپ فون گلیکسی ایس 10 متعارف کرایا جارہا ہے مگر اس کے ساتھ ساتھ یہ جنوبی کورین کمپنی ایک نئی اسمارٹ واچ گلیکسی واچ اسپورٹ بھی پیش کرنے والی ہے۔

سام سنگ کافی عرصے سے اسمارٹ واچ مارکیٹ میں ایپل اور دیگر کا مقابلہ کرنے کی کوشش کررہی ہے تاہم اب تک اس کی کوئی گھڑی لوگوں کو زیادہ پسند نہیں آسکی۔

مگر کمپنی کو توقع ہے کہ نئی گلیکسی واچ اسپورٹ سے یہ صورتحال بدل جائے گی۔

سام سنگ کی نئی اسمارٹ واچ کی تصویر لیک ہوکر سامنے آئی ہے جو ڈیزائن کے لحاظ سے تو واقعی پہلے سے بہتر نظر آتی ہے۔

اس ڈیوائس میں خم ڈسپلے دیا گیا ہے جبکہ روٹیٹنگ بیزل غائب ہیں جو پہلے دیکھنے آچکے ہیں۔

اس کے سائیڈ میں 2 بٹن ہیں جو کہ ممکنہ طور پر اسے استعمال کرنے کے لیے دیئے گئے ہیں۔

اس گھڑی میں کمپنی کا اپنا ٹیزن آپریٹنگ سسٹم دیا جائے گا اور چونکہ بیزل نہیں تو نیوی گیشن میں کچھ تبدیلیوں کا امکان ہے۔

یہ ممکنہ طور پر سام سنگ کی پہلی اسمارٹ واچ ہے جس میں نیا بیکسبی ریمائنڈر فیچر دیا جائے گا۔

اس میں موجود سنسرز نیند پر نظر رکھے، قدم گننے، جسمانی سرگرمیوں کا ٹریکر، دل کی دھڑکن کا مانیٹر اور جی پی ایس وغیرہ کا کام کریں گے۔

تاہم اس میں ایپل واچ 4 میں موجود ایک بہترین فیچر ای سی جی کی موجودگی کا امکان نہیں۔

یہ نئی اسمارٹ واچ گلیکسی ایس 10 کے ساتھ موبائل ورلڈ کانگریس سے قبل متعارف کرائے جانے کا امکان ہے۔

سعودی عرب اور یو اے ای کی مشترکہ ڈیجیٹل کرنسی متعارف

سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات اولین ایشیائی ممالک بن گئے ہیں جو مشترکہ طور پر اپنی سرکاری ورچوئل کرنسی متعارف کرا رہے ہیں۔

ویسے تو حکومتی زیرسرپرستی کرپٹو یا ڈیجیٹل کرنسی کا خیال نیا نہیں لیکن وینزویلا 2018 میں پیٹرو نامی ورچوئل کرنسی متعارف کرا چکا ہے تاکہ ملک کے مالی حالات کو بہتر کر سکے۔

مگر اب سعودی عرب اور یو اے ای نے مل کر اپنی طرز کی منفرد ڈیجیٹل کرنسی متعارف کرائی ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق یہ کرنسی دونوں ممالک میں کام کرسکے گی۔

یہ دونوں ممالک قریبی اتحادی اور دنیا کے امیر ترین ممالک میں سے ایک ہیں اور انہوں نے اپنی ڈیجیٹل کرنسی کی آزمائش بھی شروع کردی ہے۔

اس مقصد کے لیے پائلٹ پروگرام میں دیکھا جائے گا کہ بلاک چین ٹیکنالوجی سرحد پار ٹرانزیکشن کا عمل کس حد تک کم لاگت پر ممکن بناسکے گی۔

اس پروگرام سے دونوں ممالک کو یہ جاننے کا بھی موقع ملے گا کہ سرکاری کرپٹو کرنسی کس حد تک مالیاتی پالیسیوں پر اثرانداز ہوتی ہے۔

سعودی عرب اور یو اے ای نے اس منصوبے کا اعلان سات نکاتی تعاون منصوبے کے تحت کیا ہے جس کا مقصد دونوں ممالک کے تعلقات کو مضبوط بنانا ہے۔

فی الحال یہ ڈیجیٹل کرنسی سرحد پار ادائیگیوں تک محدود ہے، جس تک مرکزی اور مقامی بینکوں کو رسائی حاصل ہوگی۔

یہ ابھی واضح نہیں کہ عام افراد بھی اس کرنسی کی خریداری کرسکیں گے یا نہیں۔

دونوں ممالک کی جانب سے جاری بیان کے مطابق ‘ سرحد پار ڈیجیٹل کرنسی آزمائشی مرحلے میں بینکوں تک محدود ہوگی تاکہ یہ سمجھنے میں مدد مل سکے کہ بلاک چین ٹیکنالوجی سرحد پار ادائیگیوں میں کس حد تک اثرانداز اور سہولیات فراہم کرتی ہے۔ یہ کرنسی مرکزی اور مقامی بینکوں کے ڈیٹابیس پر انحصار کرے گی جو دونوں ممالک ایک دوسرے کو فراہم کریں گے، اس کا مقصد صارفین کے مفادات کو تحفظ، ٹیکنالوجی کا معیار طے کرنا اور سائبر سیکیورٹی کے خطرات کا تعین کرنا ہے، اس منصوبے کا ایک اور مقصد مالیاتی پالیسیوں پر ایک مرکزی کرنسی کے اثرات کا تعین کرنا بھی ہے’

مستقبل میں اس طرح کی ڈیجیٹل کرنسی متعارف کرانے کے منصوبے کئی ممالک نے بنارکھے ہیں۔

روس نے بھی کچھ عرصے قبل انکشاف کیا تھا کہ اس کا مرکزی بینک برازیل، بھارت، چین اور ای ای یو ممالک سے ایک کرپٹو کرنسی کے امکانات پر بات کررہا ہے جو کہ ان ممالک میں کام کرسکے گی۔

دنیا کی طاقتور ترین بیٹری والا اسمارٹ فون

 ایسا اسمارٹ فون لینا کون پسند نہیں کرے گا، جو ایک بار چارج کیے جانے کے بعد کئی دن بلکہ ایک ہفتے تک چل سکے؟ تو ایک امریکی کمپنی ایسی ہی ڈیوائس متعارف کرانے والی ہے جو کئی دن تک ایک چارج پر چلے سکے گی۔

بیٹریاں بنانے کے حوالے سے مشہور کمپنی انرجائزر نے گزشتہ دنوں ٹوئٹر پر اعلان کیا کہ وہ موبائل ورلڈ کانگریس کے موقع پر 26 نئے فون متعارف کرانے والی ہے جن میں 18000 ایم اے ایچ بیٹری اور فولڈ ایبل ڈسپلے والے اسمارٹ فونز بھی شامل ہوں گے۔

نائن ٹو فائیو گوگل کے مطابق یہ کمپنی اپنے فونز 4 سیریز پاور میکس، الٹی میٹ، انرجی اور ہارڈ کیس میں متعارف کرائے گی۔

18000 ایم اے ایچ بیٹری والا فون متوقع طور پر پاور میکس رینج کا حصہ ہوگا جبکہ الٹی میٹ رینج میں پوپ اپ کیمروں والے اسمارٹ فونز ہوسکتے ہیں۔

انرجی اور ہارڈ کیس سیریز میں بجٹ اسمارٹ فونز متعارف کرائے جائیں گے۔

18000 ایم اے ایچ بیٹری سے لیس فون کتنا طاقتور ہوگا، اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ اس وقت دستیاب ڈوجی نامی کمپنی کا ایس 80 اسمارٹ فون 10800 ایم اے ایچ بیٹری کے ساتھ ہے۔

اس کمپنی کا دعویٰ ہے کہ اس فون سے لگاتار 76 گھنٹے ویڈیو ، 136 گھنٹے تک بات کی جاسکتی ہے جبکہ اسٹینڈ بائی میں یہ 1308 گھنٹے یا لگ بھگ 55 دن تک کام کرسکتا ہے۔

عام استعمال کی صورت میں بھی یہ فون 10 دن سے زیادہ چل سکتا ہے۔

تو اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ 18000 ایم اے ایچ بیٹری والا فون کم از کم بھی 15 دن تو چل ہی جائے گا۔

اس کمپنی کا فلیگ شپ فون یو 260 ایس پوپ میں ہیلیو پی 70 پراسیسر، سکس جی بی ریم اور 128 جی بی اسٹوریج دیئے جانے کا امکان ہے جبکہ 3200 ایم اے ایچ بیٹری اور فنگرپرنٹ سنسر بھی ہوگا۔

یہ تمام فون 25 فروری سے اسپین کے شہر بارسلونا میں شروع ہونے والی موبائل ورلڈ کانگریس کے موقع پر متعارف کرائے جائیں گے۔

دنیا کا پہلا 52 میگا پکسل کیمرے سے لیس اسمارٹ فون

اگر تو آپ اسمارٹ فون کیمرے کی وجہ سے لینا پسند کرتے ہیں تو اچھی خبر یہ ہے کہ اب دنیا کا پہلا 50 میگا پکسل سنسر سے لیس فون جلد سامنے آنے والا ہے۔

ابھی کسی فون میں سب سے زیادہ میگا پکسل کا ریکارڈ شیاﺅمی اور ہواوے کے فونز کے پاس ہے جن میں 48 میگا پکسل مین کیمرہ استعمال ہورہا ہے۔

مگر ایک نئی لیک میں یہ دعویٰ سامنے آیا ہے کہ سونی کا نیا فلیگ شپ فون ایکسپیریا ایکس زی 4 دنیا کا پہلا فون ہے جس میں 52 میگا پکسل کیمرہ دیا جارہا ہے۔

درحقیقت یہ اس کمپنی کا پہلا فون ہوگا جس میں 3 بیک کیمروں کا سیٹ اپ دیا جارہا ہے جو کہ عمودی ڈیزائن میں دیا جائے گا۔

لیک تصویر کے مطابق 52 میگا پکسل کیمرہ درمیان میں موجود ہوگا جو کہ ایف 1.6 آپرچر سے لیس ہوگا۔

اس سے ہٹ کر 16 میگا پکسل کا ٹیلی فوٹو لینس ایف 2.6 آپرچر کے ساتھ جبکہ تیسرا 0.3 میگا پکسل ٹائم آف فلائٹ کیمرہ ہوگا جس میں ایف 1.4 آپرچر ہوگا۔

ٹی او ایف کیمرہ ممکنہ طور پر فاصلے کو جانچنے کے لیے استعمال ہوگا جبکہ اگیومینٹڈ رئیلٹی فیچرز کے لیے بھی اہم کردار ادا کرے گا۔

پرائمری اور سیکنڈری کیمرے ہائی ریزولوشن تصاویر میں مدد دیں گے جبکہ ٹی او ایف سنسر آٹو فوکس اور تھری ڈی اسکیننگ کا بھی کام کرے گا۔

اوپو آر 17 میں ٹی او ایف سنسر موجود ہے جبکہ ایل کی جانب سے رواں سال نئے آئی فونز میں اسے متعارف کرائے جانے کا امکان ہے۔

اس سے قبل سامنے آنے والی لیکس کے مطابق ایکسپیریا ایکس زی 4 میں 6.5 انچ کا کیو ایچ ڈی پلس او ایل ای ڈی ڈسپلے دیئے جانے کا امکان ہے جبکہ اسنیپ ڈراگون 855 پراسیسر، سکس جی بی ریم، 128 جی بی اسٹوریج اور 4400 ایم اے ایچ بیٹری نمایاں فیچرز ہوسکتے ہیں۔

یہ فون رواں ماہ کے آخر میں بارسلونا میں شیڈول موبائل ورلڈ کانگریس کے موقع پر متعارف کرائے جانے کا امکان ہے۔

واٹس ایپ میں اپنے پیغامات دوسروں سے دور رکھنا اب بہت آسان

واٹس ایپ میں صارفین کے پیغامات کو محفوظ رکھنے کے لیے فیس آئی ڈی یا ٹچ آئی ڈی سپورٹ کا فیچر متعارف کرادیا گیا ہے۔

یعنی اس سپورٹ کے بعد صارفین چہرے کی شناخت یا ٹچ آئی ڈی سے اپنی ڈیوائسز پر واٹس ایپ اپلیکشن اوپن کرسکیں گے جبکہ ان کے علاوہ کوئی اور اسے اوپن کرکے پیغامات نہیں دیکھ سکے گا۔

تاہم یہ فیچر آئی او ایس صارفین کے لیے متعارف کرایا گیا ہے جس سے آئی فون ایکس، آئی فون ایکس ایس، آئی فون ایکس ایس میکس اور آئی فون ایکس آر کے صارفین فیس آئی ڈی سے جبکہ دیگر آئی فون ماڈلز میں ٹچ آئی ڈی سے اس سے فائدہ اٹھانا ممکن ہوگا۔

اس نئے فیچر کو قابل استعمال بنانے کے لیے آئی فون کی سیٹنگز میں جاکر اکاﺅنٹس اور پھر پرائیویسی پر کلک کریں اور اسکرین لاک ان ایبل کریں۔

اسکرین لاک ان ایبل ہونے پر واٹس ایپ ہر بار اوپن کرنے پر ٹچ آئی ڈی یا فیس آئی ڈی کو استعمال کرنا ہوگا۔

صارفین کے سامنے چند آپشن بھی ہوں گے جیسے فوری واٹس ایپ ان لاک کرنا، ایک منٹ بعد، 15 منٹ بعد یا ایک گھنٹے بعد کے آپشن بھی ہوں گے۔

ان میں سے کسی کا انتخاب کرنے کے بعد جب آپ واٹس ایپ کو ٹچ آئی ڈی یا فیس آئی ڈی سے ان لاک کریں گے تو یہ اپلیکشن اتنی دیر بعد ہی اوپن ہوگی۔

اگر ٹچ آئی ڈی یا فیس آئی ڈی صارفین کی شناخت کرنے میں ناکام رہے تو ایپ تک رسائی کے لیے پاس کوڈ کا سہارا لینا ہوگا۔

واٹس ایپ میں اس فیچر کی آزمائش گزشتہ سال شروع ہوئی تھی اور ابھی بھی یہ آزمائشی مراحل سے ہی گزر رہی ہے جس کا حتمی ورژن کچھ عرصے میں متعارف ہوگا۔

واٹس ایپ کی جانب سے اسی طرح کے فیچر اینڈرائیڈ صارفین کے لیے متعارف کرانے پر بھی کام ہورہا ہے جس میں فنگرپرنٹ اسکینر کی مدد سے اپلیکشن اوپن کی جاسکے گی۔

یہ فیچر فنگرپرنٹ سنسر سے لیس ایسے اسمارٹ فونز میں استعمال ہوسکے گا جس میں اینڈرائیڈ 6 مارش میلو یا اس کے بعد کے ورژن ہوں گے۔

تاہم یہ فیچر کب تک سامےن آئے گا، فی الحال اس پر کچھ کہنا مشکل ہے۔

Google Analytics Alternative