سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

آنر کمپنی کی نئی اسمارٹ واچ متعارف

آنر کمپنی کی جانب سے لائٹ آپریٹنگ سسٹم کے تحت کام کرنے والی آنر واچ میجک اسمارٹ واچ متعارف کرا دی گئی ہے۔یہ ایک افورڈایبل اسمارٹ واچ ہے اور اس 1.2 انچ امولڈ ڈسپلے دیا گیا ہے۔ اس کی باڈی اسٹین لیس اسٹیل اور پلاسٹک سے بنی ہے۔واچ کی بیٹری 178 ملی ایمپیئر آورز کی ہے جو کہ ایک چارج کے بعد ہفتے تک کام کر سکتی ہے۔ اسمارٹ واچ میں ہارٹ ریٹ مونیٹر ، ہواوے پے اور ایڈوانس پوزیشننگ مثلاً جی پی ایس اور گیلیلیو شامل کیا گیا ہے۔ یہ واچ واٹرپروف ہے اور اسے پہن کر باآسانی سوئمنگ کی جاسکتی ہے۔ واچ کی قیمت 150 یورو ہے اور اسے کالے اور سنہرے رنگ میں فروخت کے لیے پیش کیا گیا ہے۔

سام سنگ کا پہلا فولڈ ایبل فون ایک ہفتے کی دوری پر؟

سام سنگ کے کاغذ کی طرح لچکدار ڈسپلے رکھنے والا فون طویل عرصے سے خبروں میں ہے اور اب آخرکار کمپنی نے آئندہ ہفتے اس کی پہلی جھلک پیش کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

آئندہ ہفتے سام سنگ کی ڈویلپر کانفرنس کے دوران جنوبی کورین کمپنی اپنے پہلے فولڈ ایبل اسمارٹ فون گلیکسی ایف یا جو بھی اس کا نام رکھا جائے گا، کی جھلک پیش کرکے بتائے گی کہ یہ لچکدار ڈسپلے کس طرح کام کرے گا۔

سام سنگ نے اس فون کے حوالے سے ایک پبلک ٹریڈمارک بھی رجسٹر کرایا ہے جس میں لچکدار ڈسپلے کے سام سنگ انفٹنی وی اسمارٹ فون ڈسپلے کا نام دیا گیا ہے اور اس کوڈ کو سمجھنا زیادہ مشکل نہیں۔

سب سے پہلی بات تو یہ ہے کہ انفٹنی ڈسپلے کو سام سنگ کی جانب سے بیزل لیس فلیگ شپ فونز گلیکسی ایس ایٹ، ایس نائن، نوٹ ایٹ اور نوٹ نائن کے لیے استعمال کیا گیا۔

فوٹو بشکریہ NIEUWEMOBIEL
فوٹو بشکریہ NIEUWEMOBIEL

دوسری بات یہ ہے کہ سام سنگ نے ڈویلپر کانفرنس کے لیے جس ویڈیو کو اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر شیئر کیا، اس میں پوری توجہ V کو پیش کرنے پر دی گئی ہے، یعنی ایسا فون جو فولڈ ہوسکتا ہے۔

۔

سام سنگ چاہتی ہے کہ صارفین دنیا کے پہلے یا دوسرے فولڈ ایبل اسمارٹ فون کی اسکرین کو انفٹنی وی کے نام سے جانیں۔

کمپنی کو توقع ہے کہ بیزل لیس ڈیزائن یقیناً اس وقت صارفین کو پسند آرہے ہیں مگر فولڈ ایبل فون ہر ایک کے دلوں کو چھو لے گا، جس کی اسکرین کسی ٹیبلیٹ جیسی ہوگی مگر فولڈ ہوکر وہ عام فون جیسا ہوجائے گا۔

ویسے یہ جان لیں کہ سام سنگ کا یہ فون اگلے سال متعارف ہوا بھی تو محدود تعداد میں ہوگا اور اس کی قیمت 2 ہزار ڈالرز تک ہونے کا امکان ہے۔

چھ کیمروں والا آنر کمپنی کا نیا فون متعارف کرا دیا

ہواوے کے سب برانڈ آنر کے جانب سے چھ کیمروں والا میجک 2 اسمارٹ فون متعارف کرا دیا گیا ہے۔اسمارٹ فون میں 6.4 انچ ایچ ڈی پلس او ایل ای ڈی ڈسپلے ،گلاس پروٹیکشن ، ہائی سلیکون کرن 970 پروسیسر ، 6/8 جی بی ریم اور 128/256 جی بی اسٹوریج دیا گیا ہے۔ فون کی سب سے اہم خاصیت اس کا کیمرہ سیٹ اپ ہے۔ فون کی پشت پر 16 میگا پکسل کا مین کیمرہ ، 24 میگاپکسل کا بلیک اینڈوائٹ مونوکروم سینسر اور 16 میگا پکسل کا الٹرا وائیڈ اینگل کیمرہ دیا گیا ہے۔فون کے فرنٹ پر 16 میگا پکسل کا سیلفی شوٹر اور 2 میگاپکسل کے دو ڈیپتھ سینسر دیے گئے ہیں۔ آئی آر فیس اسکینر اور انڈر ڈسپلے فنگر پرنٹ سکینر کو بھی اسمارٹ فون کا حصہ بنایا گیا ہے۔فون کی بیٹری 3400 ملی ایمپیئر آورز کی ہے اور اس میں فاسٹ چارجنگ سپورٹ بھی شامل ہے ۔ کمپنی کے دعوے کے مطابق فون 15 منٹ میں 50 فیصد اور آدھے گھنٹے میں 85 فیصد تک چارج ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔ فون کو کالے ، نیلے اور سرخ رنگ میں متعارف کرایا گیا ہے۔ 6/128 جی بی کے ساتھ فون کی قیمت 3799 یان ، 8/128 جی بی کے ساتھ فون کی قیمت 4299 یان اور 8/256 جی بی کے ساتھ فون کی قیمت 4799 یان ہے۔ فون کو پری آرڈر کیلئے پیش کردیا گیا ہے اور اس کی شپنگ 6 نومبر سے شروع ہوگی۔

دنیا کا پہلا فولڈ ایبل اسمارٹ فون صارفین کے لیے متعارف

دنیا کا پہلا فولڈ ایبل اسمارٹ فون فروخت کے لیے پیش کردیا گیا ہے اور اس طرح سام سنگ، ہیواوے اور دیگر کمپنیاں اس دوڑ میں پیچھے رہ گئی ہیں۔

امریکا سے تعلق رکھنے والی ایک چھوٹی کمپنی ‘رائل’ نے ‘فلیکس پائی’ نامی فون چینی دارالحکومت بیجنگ میں ایک ایونٹ کے دوران متعارف کراتے ہوئے کہا کہ یہ صارفین کے لیے دسمبر میں دستیاب ہوگا۔

یہ فون اسمارٹ فون اور ٹیبلیٹ کا امتزاج ہے۔

یعنی اس فون کا ڈسپلے اتنا بڑا ہے کہ ٹیبلیٹ جیسا لگتا ہے مگر اسے فولڈ کرنے کے بعد اسمارٹ فون کی شکل دے کر جیب میں رکھا جاسکتا ہے۔

اس فون میں 7.8 انچ کا ڈسپلے اوپن حالت میں ہوتا ہے جو کہ سام سنگ گلیکسی نوٹ 9 اور ایپل کے آئی فون ایکس ایس میکس سے بڑا ہے، جبکہ درمیان سے اسے فولڈ کرکے اس ڈیوائس میں 3 چھوٹی اسکرینیں سامنے آجاتی ہیں۔

کمپنی کا دعویٰ ہے کہ فلیکس پائی کی اسکرین ٹوٹ نہیں سکتی اور جانچ میں انتہائی پائیدار پائی گئی، اس کی اسکرین پر رنگوں کی مقدار بہت زیادہ دی گئی ہے جبکہ کنٹراسٹ، وائیڈ اینگل اور ہائی ریزولوشن پکچر کوالٹی اس کا حصہ ہے۔

اس اسمارٹ فون میں کوالکوم اسنیپ ڈراگون 8 سیریز ایس او سی پراسیسر، 8 جی بی ریم اور 256 جی بی اسٹوریج دی گئی ہے جس میں مائیکرو ایس ڈی کارڈ کی مدد سے 256 جی بی کا اضافہ کیا جاسکتا ہے۔

فوٹو بشکریہ رائل
فوٹو بشکریہ رائل

اس فون میں 16 اور 20 میگاپکسل کے 2 کیمرے آپٹیکل اسٹیبلائزیشن اور فلیش کے ساتھ دیئے گئے ہیں۔

فون مین فاسٹ چارجنگ کے لیے یو ایس بی ٹائپ سی پورٹ دی گئی ہے، 3800 ایم اے ایچ بیٹری، اینڈرائیڈ پائی آپریٹنگ سسٹم کا امتزاج کمپنی نے اپنے واٹر 1.0 سے کیا ہے۔

پہلے سوچا جارہا تھا کہ سام سنگ دنیا کا پہلا فولڈ ایبل فون متعارف کرائے گی اور اگلے ہفتے وہ اس کی پہلی جھلک بھی پیش کرنے والی ہے جبکہ آئندہ سال کے آغاز میں وہ باضابطہ طور پر متعارف کرایا جاسکتا ہے۔

فلیکس پائی فون کی قیمت چین میں 8 ہزار 999 یوآن اور 12 ہزار 999 یوآن رکھی گئی ہے۔

کیا ایسا منفرد ڈوئل اسکرین اسمارٹ فون کبھی دیکھا؟

اس وقت بیشتر کمپنیاں اسمارٹ فونز کے فرنٹ پر بیزل ختم کرنے کے لیے بیزل کا سہارا لے رہی ہیں مگر ایک چینی کمپنی نے اس کا ایک انتہائی منفرد حل ڈیوائس کے بیک پر ایک ڈسپلے کی شکل میں پیش کردیا ہے۔

نوبیا نامی کمپنی نے اپنا نیا فلیگ شپ فون ‘نوبیا ایکس’ متعارف کرایا ہے جو کہ اپنی طرز کا دنیا کا پہلا فون ہے جس کے فرنٹ پر 6.26 انچ کی ایچ ایچ ڈی پلس ایل سی ڈی اسکرین دی گئی ہے جو کہ لگ بھگ بیزل لیس ہے، جبکہ بیک پر 5.1 انچ کا او ایل ای ڈی ڈسپلے موجود ہے۔

کمپنی نے فون میں 2 ڈسپلے دے کر فرنٹ کیمرے کی ضرورت ہی ختم کردی ہے کیونکہ بیک پر موجود مین کیمرے ہی سیلفی لینے کا کام کریں گے۔

فوٹو بشکریہ نوبیا
فوٹو بشکریہ نوبیا

اور سب سے متاثرکن بات یہ ہے کہ بیک پر موجود ڈسپلے کو سوئچ آف کیا جائے تو رنگا رنگ گلاس بیک نمایاں ہوجاتی ہے، جس کا مظاہرہ آپ نیچے دیکھ سکتے ہیں۔

جیسا اوپر ذکر کیا جاچکا ہے کہ بیک ڈسپلے کا مقصد سیلفی لینے میں مدد دینا ہے اور اس کے لیے 16 میگا پکسل اور 24 میگا پکسل کیمرے دیئے گئے ہیں۔

کمپنی کا دعویٰ ہے کہ کیمرہ کا پورٹریٹ موڈ اے آئی ٹیکنالوجی سے چہرے کے فیچرز، عمر، جلد کی رنگت اور دیگر خصوصیات کا تجزیہ کرکے بہترین سیلفی لینے میں مدد دیتا ہے۔

فوٹو بشکریہ نوبیا
فوٹو بشکریہ نوبیا

ویسے سیلفی سے ہٹ کر بیک پر موجود او ایل ای ڈی ڈسپلے سے دیگر ایپس یا روزمرہ کے کام بھی ویسے کیے جاسکتے ہیں جیسے فرنٹ اسکرین پر کیے جاتے ہیں، جس کے لیے ڈیوائس کے دونوں اطراف پر فنگرپرنٹ ریڈر موجود ہیں جو اسکرینز سوئچ کرنے کا کام بھی کرتے ہیں۔

اسی طرح او ایل ای ڈی پینل میں ٹچ اسکرین کو گیمز کھیلتے ہوئے 2 اضافی بٹنز کے طور پر بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔

فوٹو بشکریہ نوبیا
فوٹو بشکریہ نوبیا

اس سے ہٹ کر فون میں 6 سے 8 جی بی ریم، 256 جی بی تک اسٹوریج، اسنیپ ڈراگون 845 پراسیسر اور 3800 ایم اے ایچ بیٹری دی گئی ہے۔

یہ ڈوئل نان سم سپورٹ والا فون ہے جس میں اینڈرائیڈ اوریو 8.1 آپریٹنگ سسٹم دیا گیا ہے۔

یہ فون فی الحال چین میں فروخت کے لیے پیش کیا گیا ہے اور اس کا سکس جی بی ریم اور 64 جی بی اسٹوریج والا ماڈل 470 ڈالرز (50 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) جبکہ 8 جی بی ریم اور 256 جی بی اسٹوریج والا ورژن 620 ڈالرز (70 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) میں دستیاب ہوگا۔

اسکینڈلز بھی ‘فیس بک’ کو پھیلنے سے روکنے میں ناکام

فیس بک کو گزشتہ 2 برسوں میں کافی مشکلات کا سامنا رہا ہے اور 2018 کے دوران تو کیمبرج اینالیٹیکا ڈیٹا اسکینڈ اور ہیکنگ کا بھی سامنا کرنا پڑا۔

جن کو دیکھ کر لگتا ہے کہ فیس بک اب زوال کی جانب گامزن ہے مگر ایسا تاثر درست نہیں، درحقیقت یہ کمپنی اب بھی پہلے کے مقابلے میں زیادہ آمدنی اور صارفین کو اپنی جانب متوجہ کررہی ہے۔

فیس بک کی جانب سے جاری تیسری سہ ماہی مالیاتی رپورٹ میں مارک زکربرگ نے انکشاف کیا کہ اس وقت فیس بک کی ایپس (فیس بک، مینسجر، واٹس ایپ اور انسٹاگرام) کو روزانہ 2 ارب سے زائد افراد استعمال کرتے ہیں۔

اسی طرح فیس بک کی ایپس کے ذریعے لوگ روزانہ 100 ارب میسجز ارسال کرتے ہیں جبکہ ایک ارب سے زائد اسٹوریز اپ لوڈ کی جاتی ہیں۔

فیس بک کے اپنے ماہانہ صارفین کی تعداد 2 ارب 27 کروڑ سے تجاوز کرگئی ہے جبکہ روزانہ ڈیڑھ ارب کے قریب افراد اس سماجی رابطے کی ویب سائٹ کو استعمال کرتے ہیں جوکہ گزشتہ سال کی اسی سہ ماہی کے مقابلے میں 10 فیصد زیادہ ہے جبکہ کمپنی نے اس سہ ماہی کے دوران 13 ارب ڈالرز سے زائد کمائے۔

مارک زکربرگ کا کہنا تھا کہ کسی بھی سوشل نیٹ ورک کے مقابلے میں لوگ میسنجر اور واٹس ایپ پر تصاویر، ویڈیوز اور لنکس شیئر کرتے ہیں اور ہمیں بیشتر ممالک میں سبقت حاصل ہے۔

مارک زکربرگ کا کہنا تھا کہ ہمارا سب سے بڑی مخالف میسجنگ ایپ (جو اتنی قریب بھی نہیں)، آئی فون کی ڈیفالٹ ٹیکسٹ ایپ آئی میسج ہے۔

فیس بک نے اسنیپ چیٹ کو لگ بھگ کچل کر رکھ دیا ہے۔

فیس بک نے اسنیپ چیٹ کے فیچر اسٹوریز کو اپنی تمام ایپس کا حصہ بنایا اور اب ایک ارب سے زائد افراد اسے استعمال کررہے ہیں جبکہ اسنیپ چیٹ کے روزانہ صارفین کی کل تعداد ہی 18 کروڑ ہے۔

مارک زکربرگ نے ویڈیو کے ذریعے یوٹیوب کو بھی پیچھے چھوڑنے کا عزم ظاہر کیا اور ان کا کہنا تھا کہ ہم نے وہ راز ڈھونڈ نکالا ہے جو کہ ویڈیو دیکھنے کے عمل کو مثبت تجربہ بنانے میں مدد دے گا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ فیس بک کے مارکیٹ پلیس فیچر کو اب 80 کروڑ افراد استعمال کررہے ہیں جبکہ ملازمت تلاش میں مدد دینے والے فیچر کی بدولت 10 لاکھ افراد ملازمتیں تلاش کرنے میں کامیاب رہے۔

فیس بک کے بانی کے مطابق ترقی یافتہ ممالک (امریکا اور یورپ) میں ہوسکتا ہے کہ فیس بک اب مزید آگے نہ بڑھ سکے مگر ترقی پذیر ممالک میں اب بھی آگے بڑھنے کی گنجائش موجود ہے۔

انہوں نے پرائیویٹ میسجنگ اور اسٹوریز کو کمپنی کا مستقبل قرار دیا۔

اب فرش اور دیوار کو ٹچ اسکرین میں بدلنا بہت آسان

بیجنگ: اگر آپ سمجھتے ہیں کہ ٹچ اسکرین صرف ٹیبلٹ اور اسمارٹ فون تک ہی محدود ہے تو اس خیال کو بدل لیجئے کیونکہ چینی کمپنی نے ایک آلہ تیار کیا ہے جو کسی بھی ہموار سطح کو ٹچ اسکرین میں تبدیل کردیتا ہے۔

اسے پپی کیوب کا نام دیا گیا ہے جو دیوار یا فرش پر ظاہر کرنے والی کسی بھی تصویر کے 10 مختلف پوائنٹس کو ٹچ اسکرین میں تبدیل کردیتا ہے۔ تقریباً ڈیڑھ کلوگرام وزنی پپی کیوب پروجیکٹر لیزر کے ذریعے کسی بھی سطح پر تصویر دکھاتا ہے۔ اس پر فرش کو چھوکر بچےاپنی پسندیدہ ایپس چلاسکتے ہیِں، ویڈیو دیکھ سکتے ہیں ۔ اس کے علاوہ اساتذہ پڑھاتے وقت بلیک بورڈ یا وائٹ بورڈ کو بھی ٹچ اسکرین بناسکتے ہیں۔

اس حیرت انگیز پروجیکٹر میں ایم اسٹار کواڈ کور پروسیسر ہے جو بہترین انداز میں ویڈیو ڈیکوڈنگ کرتا ہے ۔ اس میں 4 جی بی ریم اور 32 جی بی اسٹوریج ہے۔ لیکن اس کی خاص بات 0.3 انچ ڈی ایل پی لیزر ڈسپے ہے جو انتہائی شفاف لینس سے تصویر نشر کرتا ہے۔

پپی کیوب ہموار سطح پر فل ایچ ڈی، ٹو کے اور فورکے ویڈیو دکھاتا ہے۔ مناسب روشنی اور کنٹراسٹ کی وجہ سے ئی 100 فیصد این ٹی ایس سی رنگوں کو ظاہر کرتا ہے۔ اسکرین کو 100 انچ تک بڑھا کر لمبا کیا جاسکتا ہے۔ فوکس اور رنگوں کی تصحیح کے علاوہ روشنی میں کمی اور بیشی کے آپشن بھی موجود ہیں۔

پپی کیوب میں نصب 5000 ایم اے ایچ بیٹری ایک مرتبہ چارج ہونے پر 150 منٹ کے لیے قابلِ عمل ہے ۔ اس کے ساتھ دو عدد اسپیکرز بھی ہیں۔ تاہم اس کی قیمت 1500 ڈالر ہے۔

واٹس ایپ اسٹیٹس میں ہوگی اب اشتہارات کی بھرمار

دنیا کی مقبول ترین مسیجنگ اپلیکشن واٹس ایپ میں اشتہارات کے لیے خود کو تیار کرلیں۔

یہ بات واٹس ایپ کے نائب صدر کرس ڈینیئل نے کہی اور ان کا کہنا تھا کہ کمپنی اس سروس کے ذریعے پیسے کمانے کے لیے تیار ہے اور کاروباری اداروں کو اشتہارات چلانے کی سہولت فراہم کی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا ‘فیس بک واٹس ایپ سے آمدنی کے حصول کی تیاری کررہی ہے اور اس مقصد کے لیے ایپ کے اسٹیٹس سیکشن میں اشتہارات دکھائے جائیں گے’۔

انہوں نے بتایا کہ فیس بک واٹس ایپ فار بزنس ایپ سے بھی آمدنی کے حصول کا منصوبہ تیار کررہی ہے جو کہ فی الحال کاروباری اداروں کے لیے مفت ہے۔

فیس بک کی جانب سے کاروباری اداروں سے اس پلیٹ فارم میں اشتہارات دکھانے کے عوض فیس لی جائے گی اور یہ اشتہارات واٹس ایپ میں کمپنیوں کی پروفائل سے لنک ہوں گے۔

بھارت میں ایک کانفرنس کے دوران واٹس ایپ کے نائب صدر نے یہ انکشافات کیے، تاہم انہوں نے ایپ میں اشتہارات کی آمد کا وقت بتانے سے گریز کیا۔

مگر یہ رپورٹ پہلے ہی سامنے آچکی ہے کہ واٹس ایپ میں 2019 کے شروع میں اشتہارات دکھانے کا سلسلہ شروع ہونے والا ہے۔

ابھی یہ واضح نہیں کہ واٹس ایپ میں اشتہارات کس طرح کام کریں گے، یعنی صارفین کی دلچسپی کے مطابق انہیں ہدف بنایا جائے گا یا ایک اشتہار ہر صارف کے پاس شو ہوگا۔

خیال رہے کہ واٹس ایپ اپنے آغاز سے ہی اشتہارات سے پاک اپلیکشن ہے، تاہم 2014 میں فیس بک نے اسے 19 ارب ڈالرز کے عوض خریدا تو اس میں تبدیلیاں آنا شروع ہوگئیں۔

گزشتہ سال فیس بک چھوڑ دینے والے واٹس ایپ کے شریک بانی برائن ایکٹن نے گزشتہ ماہ میں کہا تھا کہ مارک زکربرگ شروع سے ہی واٹس ایپ میں ٹارگٹڈ اشتہارات کے ذریعے کمائی کے حصول کی منصوبہ بندی کرتے رہے ہیں۔

برائن ایکٹس کے مطابق اس طرح کے اشتہارات کی وجہ سے ہی انہوں نے کمپنی کو چھوڑنے کا فیصلہ کیا۔

Google Analytics Alternative