سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

فیس بک کی جانب سے ”پروفیشنل ورڑن“ پیش کرنے کا اعلان

فیس بک کی جانب سے ”پروفیشنل ورڑن“ پیش کرنے کا اعلان کیا گیا ہے جسے اگلے چند ماہ میں ریلیز کردیا جائے گا جس میں 95 فیصد فیچرز فیس بک سے مشابہت رکھتے ہیں جب کہ اس میں کام کرنے کی جگہ پر تعاون اور رابطے پر خاص زور دیا گیا ہے تاکہ ا?فس میں کمپیوٹر کے ذریعے افراد باہمی طور پر کام کرسکیں۔فیس بک کے اس ورڑن میں فیڈز، لائکس اور چیٹ کی سروس بھی ویسی ہی ہوگی لیکن پروفائلز کو خاص رکھا گیا ہے تاہم فیس بک نے کام کی جگہ کے فیس بک کے لیے نئے سیکیورٹی ٹولز تیار کیے ہیں اور ا?فس میں موجود افراد اپنے عام پروفائلز کی جگہ ”پرفیشنلز یا پیشہ ورانہ پروفائلز“ استعمال کرسکیں گے جب کہ پروفیشنل فیس بک پر ”کینڈی کرش“ گیم نہیں کھیلا جاسکے گا۔اس کی بی ٹا سروس کا آغاز جنوری 2016 سے ہورہا ہے لیکن اس کا پروفائل بنانے کے لیے دعوت ( انویٹیشن) کی ضرورت ہوگی اور افراد کی بجائے کمپنیوں کو ترجیح دی جائے گی۔ فیس بک ترجمان کے مطابق کمپنیوں اور دفاتر کو ”پریمیئم“ سروس فراہم کی جائے گی جس کے لیے ماہانہ چند ڈالر وصول کیے جائیں گے۔واضح رہے کہ دنیا کی 300 بڑی کمپنیاں ا?فیشلی فیس بک کو کاروبار اور روابط کے لیے ا?فس میں استعمال کررہی ہیں جب کہ ایک ادارے نے اپنے 13 ہزار ملازمین کے لیے فیس بک کا پروفیشنل اکاو¿نٹ بنانے کا بھی اعلان کیا ہے۔

انسان نماصلاحیتوں والی مشین ایجاد ہو گئی

وقت کے ساتھ ساتھ ٹیکنالوجی میں بھی جدت آتی جا رہی ہے اور سائنسدانوں نے ایک ایسی مشین ایجاد کر لی ہے جو انسانوں کی طرح سیکھنے اور سمجھنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ سائنس جرنل میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق میسا چوسٹس انسٹی ٹیوٹ فار ٹیکنالوجی کے سائنسدانوں نے ایسی مشین ایجاد کی ہے جو انسانی صلاحیت پر قبضہ کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ سائسندانوں کا کہنا ہے کہ فی الحال یہ مشین انسانوں کی طرح ہاتھ سے لکھے گئے خط کو پڑھنے اور اسے یاد رکھنے کے صلاحیت رکھتی ہے لیکن عنقریب اس میں علامات کو سمجھنے والا سافٹ وئیر بھی نصب کیا جائے گا جس کے بعد یہ مشین انسانی تاثرات، ڈانس میں ہونے والی حرکات اور بولے ہوئے الفاط بھی سمجھ سکے گی۔ ایم آئی ٹی کے پروفیسر یوشاو¿ ٹینن باو¿م کہتے ہیں کہ وہ ایسی مشین یا روبوٹ بنانا چاہتے ہیں جو بچوں کی ذہنی صلاحیتوں کی طرح مظاہرہ کر سکے، جس طرح اسکول میں چھوٹی کلاس کے بچوں میں نئے تصورات جنم لیتے وہ نئی چیزیں سیکھنے کا عمل شروع کردیتے ہیں، ایسا ہی ان کی مشین بھی عملی مظاہرہ کر سکے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ مشین لرننگ پروگرام بروکلین پبلک لائبریری فریم ورک کی بنیاد پر بنائی گئی ہے اور اس مقصد کے لیے سادہ کمپیوٹر پروگرام بنائے گئے ہیں۔ ان پروگرامز کی مدد سے یہ مشین اپنے سابقہ سیکھی ہوئی چیزوں سے فائدہ اٹھاتی ہے جس سے اسے نئے تصورات سیکھنے میں اسے کم وقت درکار ہوتا ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ابتدائی تجربے کے طور پر اس مشین کو دنیا کی 50 زبانوں کے ہاتھ سے لکھے ہوئے 1600 سے زائد الفاظ دیئے گئے، فی الحال یہ مشین انسانی دماغ کا مقابلہ نہیں کر سکتی تاہم سائنسدانوں کو یقین ہے کہ مستقبل میں ایسا بھی ممکن ہو سکے گا۔

ٹوئٹر کی صارفین کو اہم وارننگ

فیس بک اور ٹوئٹر اکاونٹ کو ہیک کیے جانے کا سلسلہ اب بھی رکا نہیں اور ہیکرز مسلسل لوگوں کی معلومات ہیک کررہے ہیں لیکن اب یہ کام حکومتی سطح پر بھی ہونے لگا ہے اس لیے سوشل میڈیا ویب سائٹس ٹوئٹر نے خبردار کیا ہے کہ اس کے بعض صارفین کا ڈیٹا حکومتی سرکردگی میں کام کرنے والے ہیکرز ہیک کر سکتے ہیں۔ٹوئٹر کی جانب سے اپنے صارفین کو خبردار کیا گیا ہے کہ وہ اپنے اکاو¿نٹ محفوظ کرلیں کیونکہ ہوسکتا ہے کہ ان کا ڈیٹا حکومتی سرکردگی میں کام کرنے والے ہیکرز چوری کر سکتے ہیں۔ وارننگ میں مزید کہا گیا ہے کہ احتیاطی تدابیر کے طور ٹوئٹر اپنے صارفین کو متنبع کر رہا ہے کہ بعض صارفین کی معلومات کچھ حکومتی عناصر چوری کر سکتے ہیں جب کہ ان معلومات میں بالخصوص ای میل ایڈریس، آئی پی ایڈریس اور فون نمبر شامل ہیں۔ٹوئٹر کا کہنا ہے کہ ابھی تک ایسے کوئی ثبوت سامنے نہیں آئے کہ ان مخصوص صارفین میں سے کسی کا کوئی ڈیٹا چوری ہوا ہو تاہم اس مسئلے کی تفتیش کی جا رہی ہے۔ ٹائٹر کے مطابق ان کے پاس اس سلسلے مین مزید کوئی معلومات نہیں ہیں اور نہ ہی واضح ہے کہ کون سی حکومتوں کا اس کوشش کے پیچھے ہاتھ ہے۔واضح رہے کہ اکتوبر میں فیس بک نے بھی اپنے صارفین کو ایسی ہی وارننگ جاری کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ حکومتی حمایت یافتہ ہیکرز ان کا ڈیٹا چوری کر سکتے ہیں۔

آئی فون کی رفتار تیز کرنے کا آسان طریقہ

اسمارٹ اور آئی فون نے جہاں انٹرنیٹ کے حصول اور استعمال کو آسان بنا دیا ہے وہیں اس کا زیادہ استعمال موبائل فون کے عمل کو سست رفتاربنا دیتا ہے اور یہ ذہنی پریشانی کا باعث بن جاتا ہے لیکن ایک ایساآسان طریقہ بھی ہے جس سے اسمارٹ فون کی رفتار تیز ہوجائے گی۔آئی فون کے ایک ماہرصارف کے مطابق اس کے زیادہ استعمال سے اس کی میموری بھر جاتی ہے جو اس کی رفتار سست کردیتی ہے لیکن ذرا سی کوشش سے اس سے نجات حاصل کی جا سکتی ہے۔ اس کے لیے سب سے پہلے اپنے آئی فون کو ان لاک کریں تو اس پر ہوم اسکرین سامنے آجائے گی اسکرین کے خالی حصے پر کچھ دیر تک انگلی رکھیں یہاں تک کہ پاوور آف کا آپشن نمودار ہوجائے اب اپنی انگلی کو ہٹا لیں اور ہوم اسکرین کے بٹن پر 5 سیکنڈ تک انگلی جمائے رکھیں اور پھر اسے ہٹا لیں اس عمل سے حیرت انگیز طور پر آئی فون کی رفتار تیز ہو جائے گی۔آئی فون ماہر کا کہنا ہے کہ اس عمل سے موبائل فون کی ریم ریفریش ہوجاتی ہے جو آپ کے فون کے عمل کو سست بنانے والی ورکنگ میموری کو کلیئر کر کے اسے دوبارہ تیز رفتار بنا دیتی ہے۔ آئی فون ماہر کا دعویٰ ہے کہ انہوں نے اس عمل کے کئی تجربے کیے اور اور انہیں ہر بار کامیابی ملی۔

Google Analytics Alternative