سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

فیس بک نے نوعمر صارفین کےلیے ڈیجیٹل لائبریری پیش کردی

کیلیفورنیا: فیس بک نے نوعمر صارفین کےلیے مفت ڈجیٹل لائبریری قائم کردی ہے جس میں انٹرنیٹ سیکیورٹی، انٹرنیٹ پرائیویسی اور فیس بک پر صحتمندانہ دوستی اور روابط پر اسباق اور ویڈیوز رکھی گئی ہیں۔

پہلے مرحلے میں 18 اسباق انگریزی میں موجود ہیں جنہیں بہت جلد دنیا کی 45 مختلف زبانوں میں ترجمہ کیا جائے گا۔ اسے فیس بک کی ’یڈجیٹل لٹریسی لائبریری‘ کا نام دیا گیا ہے۔ لیکن حیرت انگیز طور پر اس میں جعلی خبروں اور افواہوں کے تدارک کےلیے کوئی رہنمائی شامل نہیں جس کے تحت فیس بک پر روسی پروپیگنڈا کرکے 2016 کے امریکی صدارتی انتخابات پر اثر ڈالا گیا تھا۔

فیس بک اس نئی سہولت سے نوعمر صارفین کو انٹرنیٹ کا استعمال ذمے داری کے ساتھ سکھانا چاہتا ہے۔ فیس بک نے کہا ہے کہ اس لائبریری کا مقصد دنیا بھر میں موجود 83 کروڑ نوعمر بچوں اور نوجوانوں کو ڈیجیٹل خواندگی، اس کے اصول اور حفاظتی اقدامات سے آگاہ کرنا ہے۔

لائبریری کے اسباق میں سوشل میڈیا کی خوفناک عادت، آن لائن بدتمیزی، پرائیویسی اور آن لائن سیکیورٹی جیسے امور پر رہنمائی فراہم کی گئی ہے۔ فیس بک نے ہارورڈ یونیورسٹی میں واقع برکمان کلائن سینٹر کی ٹیم کی مدد سے یہ ڈیجیٹل لائبریری بنائی ہے۔

ان اسباق کو مفت میں ڈاؤن لوڈ کرکے اسکولوں اور گھروں میں پڑھا جاسکتا ہے۔ فیس بک کے مطابق اس کی تیاری میں نوعمر لڑکے لڑکیوں سے مدد لی گئی ہے اور اسے پانچ زمروں میں تقسیم کیا گیا ہے جن میں پرائیویسی، شناخت، مثبت برتاؤ، سیکیورٹی اور کمیونٹی سے وابستگی شامل ہے۔

سام سنگ نے 512 جی بی اسٹوریج والے نوٹ 9 کی خود تصدیق کردی

گزشتہ چند ماہ کے دوران مختلف ٹیزر اور لیکس سے لوگوں کو کافی حد تک اندازہ ہوچکا ہے کہ سام سنگ کا نیا فلیگ شپ فون گلیکسی نوٹ 9 کیسا ہوگا۔

مگر اب گلیکسی نوٹ 9 کی آفیشل تصویر اور پروموشنل ویڈیو بھی لیک ہوگئی ہے اور یہ کسی اور نے نہیں بلکہ سام سنگ نے خود لیک کی ہے۔

سام سنگ نے ممکنہ طور پر غلطی سے اپنی ویب سائٹ پر گلیکسی نوٹ 9 کی تصویر اور اپنے یوٹیوب پیج پر ویڈیو پوسٹ کردی اور احساس ہوتے ہی فوری ڈیلیٹ بھی کردی۔

تصویر تو بنیادی طور پر پری آرڈر کا پوسٹر تھا جو وقت سے پہلے ہی پوسٹ ہوگیا اور انٹرنیٹ صارفین نے ڈیلیٹ ہونے سے پہلے اس کے اسکرین شاٹ بھی لے لیے۔

اس پوسٹر کے مطابق سام سنگ نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ اس کمپنی کا اب تک کا سب سے طاقتور فون ہے۔

اس پوسٹر میں فون کی بیک کو ہی دکھایا گیا ہے مگر پھر بھی بہت کچھ دیکھا جاسکتا ہے۔

اس میں ایس پین اسٹائلوس موجود ہے جبکہ یو ایس بی سی کنکٹر، ہیڈ فون جیک، ڈوئل کیمرہ، فلیش اور فنگر پرنٹ سنسر دیکھا جاسکتا ہے۔

اس تصویر سے ان افواہوں کی بھی تصدیق ہوتی ہے کہ نوٹ 9 کا ڈیزائن گزشتہ سال کے نوٹ 8 جیسا ہی ہے، بس ایک فرق واضح ہے، فنگر پرنٹ سنسر کیمروں کے نیچے سینٹر میں موجود ہے۔

جہاں تک ویڈیو کی بات ہے تو اس سے بھی اس افواہ کی تصدیق ہوتی ہے کہ یہ سام سنگ کا پہلا فون ہوگا جس میں 512 جی بی اسٹوریج دی جارہی ہے جسے مائیکرو ایس ڈی کارڈ کی مدد سے ایک ٹی بی تک بڑھایا جاسکتا ہے۔

تاہم تصویر یا ویڈیو میں 8 جی بی ریم کی افواہ کی تصدیق نہیں ہوئی جبکہ ایس پین میں بلیوٹوتھ کنکٹیویٹی کا ذکر بھی نہیں۔

خیال رہے کہ سام سنگ کی جانب سے گلیکسی نوٹ 9 کو 6 دن بعد یعنی 9 اگست کو ایک ایونٹ کے دوران متعارف کرایا جائے گا۔

کینن کمپنی نے پاکٹ سائز کیمرا متعارف کرادیا

کینن کمپنی نے پاکٹ سائز پاؤر شوٹ ایس ایکس 740 ایچ ایس کیمرہ متعارف کرادیا ہے۔

یہ کیمرہ خصوصی طور پر ولاگرز کیلئے ڈیزائن کیا گیا ہے تاکہ وہ اس سے اپنے اسمارٹ فون کی نسبت زیادہ بہتر تصاویر اور ویڈیوز بنا سکیں۔ کیمرے میں 20.3 میگا پکسل کا سنسر اور 24-960 ایم ایم کا لینس دیا گیا ہے جس سے تصاویر کو چالیس گنا تک زوم کیا جا سکتا ہے۔ یہ کیمرہ فور کے ویڈیو بھی ریکارڈ کر سکتا ہے اس طرح یہ پاور شوٹ سیریز کا پہلا کیمرہ ہے جو فور کی ویڈیو ریکارڈ کرنے کی اہلیت رکھتا ہے۔ کیمرے کی ایل سی ڈی 3 انچ کی ہے جو 180ڈگری پر گھوم سکتی ہے۔ کمپنی کے تازہ ترین امیج پروسیسر کو بھی اس ڈیوائس کا حصہ بنایا گیا ہے جس سے ہائی ریزولوشن ویڈیو ریکارڈنگ کی جاسکتی ہے۔ڈیوائس میں وائی فائی اور بلیو ٹوتھ کنکٹیویٹی بھی دی گئی ہے۔پاور شوٹ کیمرے کو کالے اور سلور رنگ میں پیش کیا گیا ہے۔کیمرے کی قیمت 400 ڈالر ہے اور اسے اگست کے آخر میں فروخت کے لیے پیش کیا جائے گا۔

5 جی ٹیکنالوجی سے لیس ‘پہلا’ اسمارٹ فون متعارف

موٹرولا نے دنیا کے پہلے ‘ 5 جی’ فون موٹو زی تھری کو متعارف کرا دیا ہے۔

جی ہاں موٹرولا نے فائیو جی کے شعبے میں تمام کمپنیوں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے اور اس کا کہنا ہے کہ موٹو زی تھری پہلا فون ہے جو کہ فائیو جی موٹو موڈیولر کی بدولت 5 جی نیٹ ورک کے لیے اپ گریڈ ہوسکے گا۔

اس حوالے سے بات کرنے سے پہلے اس فون کے بنیادی فیچرز جان لیں جو کہ موٹو زی تھری پلے کی طرح گلاس اور میٹل باڈی کے ساتھ ہے، جس میں 6 انچ کی بڑی امولیڈ اسکرین دی گئی ہے جس میں اوپر اور نیچے بیزل کی شرح کچھ کم کردی گئی ہے۔

فوٹو بشکریہ موٹرولا
فوٹو بشکریہ موٹرولا

اس کے بیک پر آپ 12، بارہ میگا پکسل کے 2 کیمرے دریافت کرسکیں گے جبکہ فرنٹ پر 8 میگا پکسل کیمرہ سیلفی کے لیے دیا گیا ہے۔

اس میں فنگر پرنٹ ریڈر سائیڈ پر موجود ہے جبکہ کمپنی نے بیٹری کا سائز تو نہیں بتایا مگر اس کا کہنا ہے کہ یہ پورا دن بآسانی چل سکے گی۔

موٹو زی تھری میں کوالکوم اسنیپ ڈراگون 835 پراسیسر دیا گیا ہے جبکہ 4 جی بی ریم اور 64 جی بی اسٹوریج دی گئی ہے۔

فوٹو بشکریہ موٹرولا
فوٹو بشکریہ موٹرولا

ہیڈفون جیک تو اس میں موجود نہیں مگر ڈونگل کنورٹر کو اس مقصد کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے۔

اب بات کرتے ہیں فائیو جی موٹو موڈیولر کی، جو کہ اس فون کو ویرائزن کے فائیو جی نیٹ ورک سے کنکٹ کرسکے گا، تاہم یہ موٹو موڈ 2019 کے آغاز میں دستیاب ہوگا۔

موٹرولا کے مطابق فائیو جی موٹو موڈ کی بدولت اس فون کی ڈیٹا اسپیڈ 5 جی بی فی سیکنڈ تک پہنچ جائے گی یعنی ایک منٹ میں 60 فل ایچ ڈی فلمیں (اگر 4.84 جی بی کی ہوں) ڈاﺅن لوڈ کرنا ممکن ہوجائے گا۔

یہ موڈیولر اٹیچ منٹ فرنٹ، سائیڈ اور بیک پر موجود 4 ملی میٹر ویو موڈیولز پر نصب کی جائے گی تاکہ فائیو جی نیٹ ورک سے کنکٹ ہوسکے۔

یہ بھی پڑھیں : 5 جی زندگی میں کیسے انقلاب برپا کرے گی؟

فائیو جی نیٹ ورک پر بلاتعطل فور کے لائیو اسٹریم اور رئیل ٹائم وی آر کا تجربہ ممکن ہوگا مگر بیٹری پاور جلد ختم ہوگی، اسی لیے فائیو جی موٹو موڈ کے اندر 2000 ایم اے ایچ بیٹری بھی دی جائے گی۔

فوٹو بشکریہ موٹرولا
فوٹو بشکریہ موٹرولا

ویسے موٹو زی تھری فون حقیقی معنوں میں فائیو جی فون نہیں کیونکہ یہ ٹیکنالوجی اس کے اندر موجود نہیں ہوگی تاہم موڈیولر کی مہربانی سے اسے اس تیزترین نیٹ ورک چلنے والے پہلے فون کا اعزاز ضرور مل گیا ہے۔

اس فون کی قیمت 480 ڈالرز (50 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) ہوگی اور یہ 16 اگست کو مختلف مقامات پر فروخت کے لیے پیش کیا جائے گا، تاہم فائیو جی موڈیولر کی قیمت کا فی الحال اعلان نہیں کیا گیا۔

ایپل دنیا کی پہلی ٹریلین ڈالر کمپنی بننے میں کامیاب

ایپل کے آئی فونز کو دنیا کی سب سے بہترین اسمارٹ ڈیوائسز مانا جاتا ہے مگر اب اس کمپنی نے ایک بہت بڑا اعزاز بھی اپنے نام کرلیا ہے۔

ٹیکنالوجی کی دنیا کا یہ بڑا نام دنیا کی پہلی ٹریلین ڈالرز (10 کھرب) یا پاکستانی 1224 کھرب مالیت کی پہلی کمپنی بن گئی ہے۔

اس طرح ایپل نے گوگل، مائیکرو سافٹ اور آمیزون جیسی کمپنیوں کو شکست دے کر یہ تاریخی سنگ میل اپنے نام کیا ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ ایپل اس وقت ٹریلین ڈالر کمپنی بنی جب گزشتہ روز ہی چینی کمپنی ہیواوے نے ایپل کو پیچھے چھوڑ کر دنیا کی دوسری سب سے زیادہ اسمارٹ فون فروخت والی کمپنی کا اعزاز اپنے نام کیا۔

گزشتہ روز سہ ماہی رپورٹ میں اچھے نتائج نے ایپل کے حصص کی مالیت میں 5 فیصد اضافہ کردیا جو کہ جمعرات کو بھی دیکھنے میں آیا۔

دنیا کی پہلی ٹریلین کمپنی کے سنگ میل کو چھونے کے لیے ایپل کو فی حصص مالیت 207.05 ڈالرز تک پہنچانا تھی تاکہ یہ اعزاز اپنے نام کرسکیں۔

اگرچہ ضروری نہیں کہ ایپل کا ٹریلین ڈالر کمپنی کا اعزاز کچھ منٹ ہی برقرار رہا کیونکہ حصص کی مالیت میں کچھ کمی دیکھنے میں آئی تاہم یہ سنگ میل پھر بھی اس کے پاس رہے گا کہ وہ دنیا کی پہلی ایسی کمپنی بنی۔

ویسے پہلے کہا جارہا تھا کہ حصص کی مالیت 203.45 ڈالرز تک پہنچنے پر ہی ایپل ٹریلین ڈالر کمپنی بن جائے گی مگر دوبارہ تخمینہ لگانے پر مالیت کی قیمت میں اضافہ کیا گیا۔

اس وقت 4 ارب 82 کروڑ 99 لاکھ 26 ہزار حصص مارکیٹ میں گردش کررہے ہیں تو 207.05 ڈالر جادوئی ہندسے کو چھونے کے لیے ضروری تھا۔

اس سے پہلے کہا جارہا تھا کہ آمیزون یہ اعزاز پہلے پانے میں کامیاب ہوگی تاہم وہ 879 ارب ڈالرز کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہ گئی۔

برمودا ٹرائی اینگل کا ‘راز’ ایک مرتبہ پھر دریافت کرنے کا دعویٰ

سائنسدانوں نے دنیا کے پراسرار ترین خطے سمجھے جانے والے برمودا ٹرائی اینگل کا راز ایک بار پھر ‘دریافت’ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

خیال رہے کہ فلوریڈا، برمودا اور پیورٹو ریکو کے سمندری خطے کی تکون کو برمودا ٹرائی اینگل کا نام دیا گیا ہے جہاں دہائیوں سے بحری جہاز اور طیارے پراسرار طور پر غائب ہونے کی رپورٹس سامنے آتی رہی ہیں اور ان کا ملبہ بھی تلاش نہیں کیا جاسکا۔

برسوں سے سائنسدان اور دیگر حلقے ہر طرح کے نظریات پیش کرتے رہے ہیں تاکہ وہاں ‘پراسرار گمشدگیوں’ کی وضاحت کی جاسکے۔

درحقیقت سائنسدانوں نے کہا ہے کہ پیورٹو ریکو، فلوریڈا اور برمودا کے درمیان واقع اس سمندری تکون کا اسرار وہاں کی 100 فٹ بلند تیز لہروں میں چھپا ہے۔

برطانیہ کی ساﺅتھ ہیمپٹن یونیورسٹی کی تحقیقی ٹیم کا ماننا ہے کہ برمودا ٹرائی اینگل کے اسرار کی وضاحت تند و تیز لہروں سے ممکن ہے۔

محققین نے اس مقصد کے لیے طوفانی لہروں کو لیبارٹری میں بنایا جو کہ بہت طاقتور اور خطرناک تھی، جبکہ ان کی اونچائی 100 فٹ تک تھی۔

اس قسم کی لہروں کو سائنسدان اکثر شدید طوفانی لہریں قرار دیتے ہیں۔

تحقیقی ٹیم نے ایک بحری جہاز یو ایس ایس سائیکلوپ کا ماڈل تیار کیا تھا، یہ وہ جہاز تھا جو 1918 میں برمودا ٹرائی اینگل میں 300 افراد کے ساتھ گم ہوگیا تھا۔

542 فٹ کے اس جہاز کا ملبہ کبھی نہیں مل سکا اور نہ ہی عملے اور مسافروں کے بارے میں کچھ معلوم ہوسکا۔

تحقیقی ٹیم کے مطابق اس تکون میں 3 مختلف اطراف سے شدید طوفان آسکتے ہیں جو کہ کسی بہت بڑی لہر کو بنانے کے لیے بہترین ماحول فراہم کرتا ہے۔

ان کا ماننا ہے کہ اس طرح کی لہر کسی بڑے بحری جہاز کو بھی ڈبو سکتی ہے، جیسا لیبارٹری میں آزمائش کے دوران اس کی کامیاب آزمائش بھی کی گئی۔

اس سے قبل امریکی سائنسدانوں نے یہ خیال ظاہر کیا تھا کہ اس خطے کے اوپر پھیلے شش پہلو بادل ممکنہ طور پر بحری جہازوں اور طیاروں کی گمشدگی کا باعث بنتے ہیں۔

کولوراڈو یونیورسٹی کے ماہرین کی تحقیق میں بتایا گیا کہ یہ شش پہلو بادل 65 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی ہوائیں پیدا کرتے ہیں جو ‘ہوائی بم’ کی طرح کام کرتے ہوئے بحری جہازوں کو غرق اور طیاروں کو گرا دیتی ہیں۔

مگر کسی بھی تحقیق میں اب تک اس سوال کا جواب سامنے نہیں آسکا کہ اگر بادل یا لہر جہازوں اور طیاروں کی تباہی کا باعث بنتے ہیں تو ان کا ملبہ کہاں جاتا ہے، کیونکہ ایک رپورٹ کے مطابق ہر سال اس خطے میں اوسطاً چار طیارے اور 20 بحری جہاز گم ہوجاتے ہیں۔

ایل جی سگنیچر ایڈیشن 2018 ، مہنگا ترین فون بہترین خصوصیات

ایل جی کمپنی نے سگنیچر ایڈیشن 2018 اسمارٹ فون متعارف کرا دیا ہے۔

یہ کمپنی کے پچھلے سال دسمبر میں متعارف ہونے والے فون کا نیا ماڈل ہے۔فون میں ڈوئل کیمرہ سیٹ اپ اور سلیک ڈیزائن دیا گیا ہے۔ صارفین چاہیں تو فون کے پشت پر اپنا نام بھی کندہ کروا سکتے ہیں۔اسمارٹ فون میں میٹل ایج اور زرکونیم کریمک بیک دی گئی ہے۔ فون کے اوپر اور نیچے کی جانب معمولی بیزل کو شامل کیا گیا ہے۔فنگر پرنٹ سینسر کو فون کی پشت پر جگہ دی گئی ہے۔ہیڈ فون جیک کو فون کے اوپرلے ایج پر شامل کیا گیا ہے۔ والیم بٹن فون کے بائیں جانب دیے گئے ہیں۔ فون میں اینڈرائیڈ اوریو آپریٹنگ سسٹم ، 6 انچ ڈسپلے ، گوریلا گلاس پروٹیکشن ، قال کان اسنیپ ڈریگن 845 پروسیسر اور 6 جی بی ریم دیا گیا ہے۔ فون کا انٹرنل اسٹوریج 256 جی بی ہے جسے ایس ڈی کارڈ کی مدد سے 2 ٹی بی تک بڑھایا جا سکتا ہے۔ فون کے کیمرہ ڈپارٹمنٹ پر نظر دوڑائی جائے تو پشت پر ایل ای ڈی فلیش کے ساتھ 16 میگا پکسل کے دو کیمرے او فرنٹ پر 8 میگا پکسل کا کیمرہ دیا گیا ہے۔ سمارٹ فون کی بیٹری 3300 ملی ایمپیئر آورز کی ہے اور اس میں کوئیک چارج ، فاسٹ چارجنگ اور وائرلیس چارجنگ سپورٹ بھی شامل ہے۔ فون واٹر اور ڈسٹ ریزسٹنٹ بھی ہے۔ فون کی قیمت 1790 ڈالر ہے اور اسے پری آرڈر کے لیے پیش کر دیا گیا ہے۔ فون کی فروخت 13 اگست سے شروع ہوگی۔ اسمارٹ فون کے ساتھ ایچ 9 آئی ہیڈفون مفت دیئے جائیں گے۔

دنیا کا پہلا ہولوگرافک ڈسپلے والا اسمارٹ فون لانچ کے لیے تیار

گزشتہ سال ریڈ نامی کیمرہ کمپنی نے دنیا کے پہلے ہولوگرافک اسمارٹ فون ہائیڈروجن ون کو متعارف کرانے کا اعلان کیا تھا اور اب امریکا کے فیڈرل کمیونیکشن کمیشن (ایف سی سی) نے اس کی منظوری دے دی ہے، جس کا مطلب ہے کہ اب وہ لانچ کے لیے تیار ہے۔

دنیا کے پہلے ہولوگرافک ڈسپلے والا یہ فون پہلے 2018 کی پہلی سہ ماہی کے دوران پیش کیا جانا تھا مگر بعد ازاں یہ تاریخ ‘موسم گرما’ تک بڑھا دی گئی، تاہم ابھی کسی واضح تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا۔

تاہم کمپنی کی جانب سے اس فون کے حوالے سے ایف سی سی میں جمع کرائی گئی تفصیلات سامنے آئی ہیں، جن سے اس ڈیوائس کے کچھ دلچسپ فیچرز سامنے آئے ہیں۔

یہ فون 4 کیمروں (2 فرنٹ اور 2 بیک) کے ساتھ ہوگا، ڈوئل سم ٹرے اور 4510 کی بڑی بیٹری بھی اس کا حصہ ہوگی۔

اس فون سب سے حیرت انگیز فیچر اس کی اسکرین ہی ہے جس میں روایتی 2 ڈی مواد کے ساتھ اسٹیریو تھری ڈی مواد اور ہولوگرافک فور ویو یا فور وی مواد بغیر کسی خاص چشمے کے دیکھنا ممکن ہوگا۔

اس فون کے ساتھ موڈیولر بھی ہوں گے جن میں سے ایک ہائی کوالٹی موشن اور اسٹل تصاویر کھیچنے میں مدد دے گا۔

یہ فون ممکنہ طور پر کوالکوم اسنیپ ڈراگون 835 یا 845 پراسیسر کے ساتھ ہوگا جبکہ ہیڈ فون جیک بھی دیا جائے گا۔

اس فون کا ڈسپلے میں 5.7 انچ کے دیگر فونز کے مقابلے میں کچھ بڑا اور معمولی موٹا ہوگا۔

اس میں دی جانے والی فور وی ٹیکنالوجی ہی درحقیقت اس فون کو دیگر کے مقابلے میں منفرد بناتی ہے جس کی مدد سے یہ ڈیوائس ٹو ڈی میڈیا، تھری ڈی اسٹریو، اگیومینٹڈ رئیلٹی، ورچوئل رئیلٹی اور مکسڈ رئیلٹی وغیرہ کو اضافہ گلاسز یا ہیڈسیٹ کے بغر ہینڈل کرسکے گی۔

کمپنی نے ابھی تک وضاحت نہیں کی کہ یہ فیچر کیسے کام کرے گا۔

ہائیڈروجن ون چند مہنگے ترین اسمارٹ فونز میں سے ایک ہوگا، جس کے پری آرڈرز تو اب بند ہیں مگر جب وہ اوپن تھے تو اس کا المونیم ورژن 1295 ڈالرز جبکہ ٹائیٹینیم ورژن 1595ڈالرز کا تھا۔

5.7 انچ کی ہائیڈروجن ہولوگرافک ڈسپلے اکیومنٹ رئیلٹی، ورچوئل رئیلٹی اور مکسڈ رئیلٹی ٹیکنالوجی کو بھی سپورٹ کرتا ہے۔

Google Analytics Alternative