سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی

شاٹ گن کے ذریعے ڈرون طیارے تباہ کرنے والا لڑاکا ڈرون تیار

ماسکو: روس نے کلاشنکوف ڈرون طیارے کے بعد قریب مار کرنے والی شاٹ گن سے لیس ڈرون طیارہ ایجاد کرلیا ہے جو فضا میں اپنے شکار کو قریب سے نشانہ بنا سکتا ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق روسی اسلحہ ساز کمپنی ’الماز اینٹے‘ نے کلاشنکوف ڈرون طیارے کے بعد ایسا ڈرون طیارہ متعارف کرایا ہے جس میں شاٹ گن نصب ہے اور یہ فضا میں کسی طیارے کی طرح پرواز کرتے ہوئے دشمن ملک کے ڈرون کو فائرنگ کرکے تباہ کرنے کی اہلیت رکھتا ہے۔

Drown 2

ماسکو ایوی ایشن انسٹی ٹیوٹ کے طلبا کی جانب سے ڈیزائن کردہ اس ڈرون میں طیارے کی طرح دو پر دم موجود ہیں، اس کے درمیانے حصے میں 10 راؤنڈ والی Vepr-12  خود کار شاٹ گن نصب کی گئی ہے۔ یہ کان کنی، زراعت اور شکار کے لیے استعمال ہونے والے ڈرون کی طرز پر بنایا گیا ہے۔

Drown 3

اسلحہ ساز کمپنی الماز اینٹے روس کی وزارت دفاع کے لیے بھی کام کرتی ہے اور یہ ڈرون روس کے لیے تیار کیا گیا ہے۔ روسی وزارت دفاع کی ویب سائٹ پر طیارہ نما شاٹ گن سے لیس اس ڈرون کی پرواز بھرنے اور اپنے ہدف کو شکار بنانے کی ویڈیو بھی شیئر کی گئی ہے۔ آپ اس حیرت انگیز ایجاد کی کارکردگی سے انگشت بدنداں رہ جائیں گے۔

جی میل کی 15 ویں سالگرہ پر گوگل کا صارفین کے لیے بڑا تحفہ

یکم اپریل 2004 کو گوگل نے اپنی ای میل سروس جی میل کو متعارف کرایا تھا اور آج اس کو 15 سال مکمل ہوگئے ہیں جو اس کمپنی کامیاب ترین پراڈکٹس میں سے ایک ہے، جس کے ماہانہ صارفین کی تعداد ڈیڑھ ارب سے تجاوز کرچکی ہے۔

جی میل کی 15 ویں سالگرہ کے موقع پر گوگل نے اس ای میل سروس میں اس فیچر کو متعارف کرانے کا اعلان کیا ہے جس کا انتظار صارفین برسوں سے کررہے ہیں۔

گوگل کی جانب سے چند نئے اور کارآمد جی میل فیچرز کا اعلان کیا ہے۔

ایک فیچر تو اسمارٹ کمپوز کو مزید بہتر بنانے کے حوالے سے ہے جو اس ای میل سروس کو صارف کے انداز تحریر کے مطابق ای میل تحریر کرنے میں مدد دے گا۔

تاہم گوگل نے اس فیچر کی زیادہ تفصیلات بیان نہیں کیں مگر اس کا کہنا تھا کہ اسمارٹ کمپوز مخصوص افراد کو کی جانے والی ای میلز کی تحریر کے انداز کو یاد رکھے گا۔

مگر سب سے اہم فیچر جی میل میں پہلی بار شیڈول ای میل کی سہولت دینا ہے۔

اس مقصد کے لیے سینڈ بٹن کے آگے ایک ایرو ہوگا جس پر کلک کرنے پر ای میل کو مخصوص وقت کے لیے شیڈول کرنا ممکن ہوگا۔

ابھی جی میل میں تھرڈ پارٹی ایپس کی مدد سے شیڈول ای میل کرنا ممکن ہے مگر گوگل کی جانب سے براہ راست یہ سہولت فراہم کرنا یقیناً زیادہ بہتر ہوگا۔

فوٹو بشکریہ گوگل
فوٹو بشکریہ گوگل

گوگل کے مطابق اسمارٹ کمپوز میں کی جانے والی اپ ڈیٹ تمام اینڈرائیڈ ڈیوائسز میں دستیاب ہے جبکہ آئی او ایس سپورٹ جلد پیش کی جائے گی۔

جہاں تک جی میل میں ای میل شیڈول کا فیچر ہے جو جلد تمام صارفین کو دستیاب ہوگا، جس میں چند ہفتے بھی لگ سکتے ہیں۔

پیوڈی پائی شکست تسلیم کرتے ہی پھر نمبرون پوزیشن پر قابض

کافی عرصے سے گوگل کی ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ یوٹیوب پر سوئیڈن سے تعلق رکھنے والے فیلکس اروید الف کجیلبرگ المعروف پیو ڈی پائی اور بھارتی کمپنی ٹی سیریز کے درمیان نمبرون سبسکرائبر بننے کی جنگ ہورہی ہے۔

اور گزشتہ چند دن کے دوران ٹی سیریز نے سوئیڈش یوٹیوبر کو پیچھے دھکیل کر نمبرون پوزیشن پر قبضہ جمایا مگر پوزیشن برقرار رکھنے میں ناکام رہی۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ پیوڈی پائی نے بھی ٹی سیریز کے مقابلے میں شکست کو تسلیم کرلیا تھا مگر اس کے ساتھ ساتھ ٹی سیریز پر ایک حملہ بھی کرتے ہوئے پورے بھارت کو تنقید کا نشانہ بنایا ، جس کے بعد وہ ایک بار پھر سبسکرائبر کی جنگ میں آگے نکل گئے۔

اتوار کو ایک ویڈیو پوسٹ کرکے پیو ڈی پائی نے اپنے حریف چینیل کو مبارکباد دیتے ہوئے بھارت میں غربت، ذات پات کے نظام کی جانب بھی اشارہ کیا۔

اپنی ویڈیو میں پیو ڈی پائی نے ٹی سیریز پر الزام عائد کیا کہ وہ چوری شدہ یا پائریٹ گانے فروخت کررہی ہے جبکہ انہوں نے ایک مضمون کا حوالہ بھی دیا کہ ٹی سیریز کے سربراہ بھوشن کمار پر ٹیکس چوری کے الزامات کے تھت تحقیقیات کی جارہی ہے۔

پیو ڈی پائی نے کہا ‘ بھارتی دماغی طور پر کمزور ہیں جبکہ وہاں بہت زیادہ غربت اور ذات پات کا نظام موجود ہے’۔

ان کا کہنا تھا ‘بھارت نے یوٹیوب کے مسئلے کو تو حل کرلیا، اب اسے ذات پات کے نظام کو بھی ٹھیک کرنا چاہئے، ہوسکتا ہے کہ یہ تمام اشتہارات وہ پھیلتی غربت کو دور کردیں’۔

یہ جنگ گزشتہ سال اکتوبر میں شروع ہوئی تھی اور حیران کن طور پر 2018 کے آغاز میں ٹی سیریز کے سبسکرائبر محض 3 کروڑ تھے جن میں گزشتہ سال کی آخری ششماہی میں بہت تیزی سے اضافہ ہوا۔

اس وقت ٹی سیریز کے سبسکرائبرز کی تعداد 9 کروڑ 21 لاکھ 79 ہزارسے زائد ہیں جبکہ پیو ڈی پائی کے سبسکرائبرز کی تعداد 9 کروڑ 22 لاکھ 15 ہزار سے زائد ہے اور دونوں کے درمیان 30 ہزار سے زائد کا فرق ہے۔

فیس بک پر مختلف پوسٹس آپ کو کیوں نظر آتی ہیں؟

کیا آپ نے کبھی سوچا کہ فیس بک پر آپ کے نیوزفیڈ پر کسی کی پوسٹ کیوں نظر آتی ہے اور کچھ پیچز کی کیوں نہیں؟

درحقیقت فیس بک نیوز فیڈ کا الگورتھم کس طرح کام کرتا ہے وہ سمجھ سے باہر ہے کیونکہ وہ ہر وقت بدلتا رہتا ہے۔

مثال کے طور پر کسی اگر آپ اپنے نیوزفیڈ پر کچھ دن اسکرولنگ کرتے ہوئے پوسٹس کو ذہن میں رکھیں تو کبھی بھی مطابقت نظر نہیں آئے گی اور الگورتھم کچھ پراسرار انداز سے کام کررہا ہوگا۔

مگر اب فیس بک اسے بدلنا چاہتا ہے اور کمپنی نے اعلان کیا ہے کہ بہت جلد صارفین کے لیے وائے ایم آئی سینگ دس پوسٹ کو متعارف کرانے والی ہے، جس میں یہ وضاحت کی جائے گی کہ کسی دوست، گروپ یا پیج کی پوسٹ آپ کے نیوزفیڈ پر کیوں نظر آتی ہے۔

یہ 2014 کے ایک فیچر وائے ایم آئی سینگ دس ایڈ جیسا ہیے جو بالکل اسی طرح کام کرتا ہے مگر وہ اشتہارات تک محدود ہے۔

فیس بک کے پراڈکٹ منیجر رامیا شترومن کی جانب سے جاری بیان کے مطابق یہ پہلی بار ہے کہ ہم وہ معلومات صارفین کو فراہم کررہے ہیں کہ ہم ایپ میں رینکنگ کس طرح مرتب کرتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ آپ نیوزفیڈ پر پوسٹس اور اشتہارات پر کلک کرکے جان سکیں گے کہ وہ آپ کو کیوں نظر آرہے ہیں اور اپنی مرضی کے مطابق نیوزفیڈ کو پرسنلائز بھی کرسکیں گے۔

فیس بک کے ایک ترجمان نے بتایا کہ یہ فیچر رواں ہفتے کے دوران تمام صارفین کے لیے متعارف کرانے کا سلسلہ شروع ہوگا اور مئی کے وسط تک یہ سب کو دستیاب ہوگا۔

یہ فیچر آپ کو بتائے گا کہ کونسا ڈیٹا کسی پوسٹ کو آپ کی پوسٹ کا حصہ بننے پر مجبور کرتا ہے۔

ویسے کسی صارف کی پوسٹس کو لائیک کرنا اور مختلف میڈیم جیسے ویڈیو، تصاویر یا ٹیکسٹ انگیج منٹ پوسٹ کو نیوزفیڈ پر ٹاپ پر لاتی ہیں۔

فیس بک کے مطابق نئے فیچر میں صارفین کمپنی کو یہ بتاسکیں گے کہ وہ اپنی نیوزفیڈ پر پوسٹس کے لیے کیا معیار چاہتے ہیں اور پوسٹس کی درجہ بندی کیا ہونی چاہئے۔

یوٹیوب کا مولانا طارق جمیل کیلئے اعزاز

دنیا کی مقبول ترین ویڈیو اسٹریمنگ و شیئرنگ ویب سائٹ یوٹیوب نے عالمی شہرت یافتہ عالم دین مولانا طارق جمیل کو منفرد اعزاز سے نواز دیا۔

مولانا طارق جمیل ایک معروف پاکستانی مبلغ اور عالم دین ہیں اور دنیا بھر میں وہ دین کی دعوت و تبلیغ کی وجہ سے شہرت رکھتے ہیں، ان کی انہی تبلیغ کی کوششوں کے باعث کئی گلوکار، اداکار اور کھلاڑیوں کی زندگیوں میں تبدیلی دیکھنے میں آئی ہے۔

جہاں معروف عالم دین کی کاوشوں کا اعتراف دنیا بھر میں کیا جاتا ہے وہیں اب سرچ انجن گوگل کی ذیلی کمپنی یوٹیوب نے بھی ان کی خدمات کو تسلیم کرلیا اور انہیں یوٹیوب کے مخصوص ’گولڈن پلے بٹن‘ کے ایوارڈ سے نوازا ہے۔

یوٹیوب کی جانب سے یہ بٹن ان کی ویب سائٹ پر موجود ’طارق جمیل آفیشل‘ چینل پر ایک ملین (10 لاکھ) سے زائد سبسکرائبر ہونے کے اعزاز میں دیا گیا ہے جبکہ اس وقت چینل پر سبسکرائبر کی تعداد 13 لاکھ سے زائد ہے۔

ویڈیو اسٹریمنگ ویب سائٹ کی جانب سے کسی چینل کو اس بٹن سے نوازنا ایک انعام کے ساتھ ساتھ اس بات کا اعتراف بھی ہوتا ہے کہ اسے سب سے زیادہ مشہور چینلز میں شامل کیا گیا ہے۔

مولانا طارق جمیل کے چینل کو دیے گئے اس اعزازی بٹن کو خود مولانا طارق جمیل نے کھولا اور اس کی ویڈیو بھی شیئر کی۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ مولانا طارق جمیل گولڈن پلے بٹن کو ’ان باکس‘ کرتے ہوئے اپنے تمام چاہنے والوں کو سلام پیش کرتے ہیں۔

یوٹیوب کی جانب سے بھیجے گئے اس گولڈن اعزازی بٹن پر مولانا طارق جمیل کے چینل ’طارق جمیل آفیشل‘ کا نام تحریر ہے اور وہ اسے دکھا رہے ہیں۔

ویڈیو کے دوران وہ کہتے ہیں کہ طارق جمیل آفیشل چینل پر سامعین اور ناظرین سے وقتاً فوقتاً بات کرتا رہوں گا اور مختلف بیانات کے کلپس بھی اپ لوڈ ہوتی رہیں گی۔

تاہم اس موقع پر مولانا طارق جمیل نے ایک وضاحت کی کہ مجھ سے بہت سی ایسی غیر ذمہ دارانہ باتیں منسوب ہوتی رہتی ہیں حالانکہ میں اس سے بری الذمہ ہوں اور ایسی باتوں کو مجھ سے منسوب نہ کیا جائے۔

یوٹیوب پلے بٹنز کیا ہیں؟

دنیا کی مشہور یہ ویڈیو ویب سائٹ اپنے پلیٹ فارم کو استعمال کرنے اور اس پر مواد ڈالنے والے افراد کی خدمات کو تسلیم کرتی ہے اور انہیں مختلف بٹنز سے نوازتی ہے۔

یوٹیوب پلے بٹنز، یوٹیوب کرئیٹر ریوارڈ کا ایک حصہ ہے جو اس بات کا اعتراف ہے کہ آپ کا چینل یوٹیوب پر کافی مشہور ہے۔

یہ یوٹیوب ایوارڈ سے مختلف ہوتا ہے، تاہم یہ اس بات کو تسلیم کرتا ہے کہ ویڈیو ویب سائٹ پر آپ کے چینلز کی ویڈیوز کا معیار بہترین ہے اور لوگ آپ کے چینلز کو پسند کرتے ہیں۔

یوٹیوب کی جانب سے یہ ریوارڈ چینل کے سبسکرائبر کی تعداد پر انحصار کرتا ہے لیکن یہ یوٹیوب کا صوابدیدی اختیار ہے کہ وہ کسے اس ایوارڈ سے نوازے، اس سلسلے میں ایوارڈ دینے سے قبل چینل کا باقاعدہ جائزہ لیا جاتا ہے اور اس بات کو یقینی بنایا جاتا ہے کہ چینل نے یوٹیوب کمیونٹی گائیڈ لائنز پر عمل درآمد کیا یا نہیں، اسی طرح یوٹیوب یہ اختیار بھی رکھتا ہے کہ وہ کسی بھی کرئیٹر کے ریوارڈ سے انکار کردے۔

ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ یوٹیوب کی جانب سے اس پلے بٹن کے مجموعی طور پر 4 کٹیگری سلور، گولڈن، ڈائمنڈ اور کسٹم ہیں، جن میں سے 3مختلف ہیں جبکہ ایک 2 مرتبہ پیش کیا جاتا ہے، تاہم ہر ٹرافی کا سائز مختلف ہوتا ہے اور سبسکرائبر کے حساب سے بٹن کے سائز میں تبدیلی ہوتی ہے۔

سلور پلے بٹن: یوٹیوب پر جب کوئی چینل ایک لاکھ سبسکرائبر کی حد کو عبور کرتا ہے تو وہ سلور کٹیگری میں شامل ہوجاتا ہے اور ویب سائٹ کی جانب سے چینل کا نام تحریر کرکے کرئیٹر کو وہ بٹن دیا جاتا ہے۔

گولڈن پلے بٹن: اس ایوارڈ کو حاصل کرنے کے لیے یوٹیوب پر چینل کے سبسکرائبر کی حد 10 لاکھ سے تجاوز کرنی چاہیے، جس کے بات آپ یوٹیوب کی اس کیٹیگری میں شامل ہوتے ہیں، جس میں آپ کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے آپ کے چینل کے نام کے ساتھ گولڈن پلے بٹن دیا جاتا ہے۔

ڈائمنڈ پلے بٹن: یوٹیوب کے اس اعزاز کو حاصل کرنا ہر کسی کے بس کی بات نہیں، اس کے لیے ویب سائٹ پر چینل کے ایک کروڑ سے زائد سبسکرائبر ہونا ضروری ہیں جبکہ اب تک صرف دنیا بھر میں 374 چینلز ہی اس تعداد تک پہنچ چکے ہیں۔

کسٹم پلے بٹن: یہ ایوارڈ یوٹیوب کا سب سے بڑا ایوارڈ ہے جو 5 کروڑ سبسکرائبر کی تعداد کو حد کرنے کے بعد دیا جاتا ہے، اس منفرد ایوارڈ کے حصول کےلیے اب تک صرف 3 چینل ایسے ہیں جو یوٹیوب کی بتائی گئی حد کو عبور کر چکے ہیں۔

سام سنگ گلیکسی اے سیریز کا سستا فون اب پاکستان میں دستیاب

سام سنگ نے رواں ماہ اپنا فلیگ شپ فون گلیکسی ایس 10 پاکستان میں متعارف کرایاجبکہ اس کے بعد اے سیریز کے 2 فونز بھی فروخت کے لیے پیش کیے۔

جی ایس ایم ایرینا کی ایک رپورٹ کے مطابق اب جنوبی کورین کمپنی نے خاموشی سے اے سیریز کا سستا فون گلیکسی اے 10 پاکستان میں متعارف کرا دیا ہے، جس کو سب سے پہلے فروری میں پیش کیا گیا تھا۔

گلیکسی اے 10 میں کمپنی کا اپنا تیار کردہ ایکسینوس 7884 ایس او سی پراسیسر دیا گیا ہے۔

6.2 انچ کے ایچ ڈی پلس انفٹنی وی ڈسپلے میں بیزل کو کافی حد تک کم کیا گیا ہے جبکہ 2 جی بی ریم اور 32 جی بی اسٹوریج دی گئی ہے جس کو مائیکرو ایس ڈی کارڈ سے 512 جی بی تک بڑھایا جاسکتا ہے۔

اس کے بیک پر 13 میگا پکسل کیمرا دیا گیا ہے جبکہ 5 میگا پکسل سیلفی کیمرا واٹر ڈراپ نوچ میں چھپا ہوا ہے۔

اس فون میں 3400 ایم اے ایچ بیٹری موجود ہے جبکہ اینڈرائیڈ پائی آپریٹنگ سسٹم کا امتزاج کمپنی نے اپنے ون یو آئی سے کیا ہے۔

یہ فون بلیو، ریڈ اور گرے رنگوں میں دستیاب ہوگا۔

پاکستان میں اس فون کو 21 ہزار 500 روپے میں فروخت کے لیے پیش کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل گلیکسی 30 کو پاکستان میں 40 ہزار جبکہ گلیکسی اے 50 کو 52 ہزار روپے میں فروخت کے لیے پیش کیا گیا تھا۔

’سائبر سیکیورٹی اور ڈیٹا پرائیویسی بینکوں کو درپیش نئے چیلنجز ہیں‘

بینکنگ اور مالیاتی نظام کے ماہرین کا کہنا ہے کہ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ٹیکنالوجی کی ترقی نے مالی خدمات کے منظر نامے کو تبدیل کردیا ہے اور ان اختراعات کے نتیجے میں سائبر سیکیورٹی مسائل، سوشل میڈیا، ڈیٹا پرائیویسی اور تھرڈ پارٹی جیسے خطرات تیزی سے ابھر کر سامنے آ رہے ہیں۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے سارک فنانس کے زیر اہتمام ’اندرونی آڈٹ: مرکزی بینکوں کو درپیش ابھرتے ہوئے چیلنجز اور موثر روایات‘ کے موضوع پر 27 سے 29مارچ تک انسٹیٹیوٹ آف بینکنگ اینڈ فنانس، اسلام آباد میں سیمینار کا انعقاد کیا گیا۔

اس سیمینار میں پاکستان کے علاوہ سارک کے مرکزی بینکوں کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔

اسٹیٹ بینک کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر جناب قاسم نواز نے سیمینار سے افتتاحی خطاب میں کہا کہ چند سال قبل تک بینکوں کی جدت پسندی میں کاروباری عمل کی ری انجینئرنگ کو مرکزی حیثیت حاصل تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ تاہم وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ٹیکنالوجی کی ترقی نے مالی خدمات کے منظرنامے کو مزید تبدیل کردیا ہے جبکہ ان اختراعات کے باعث نئے چیلنجز بھی سامنے آ رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اسٹیٹ بینک بورڈ اور سینئر مینجمنٹ کو اپنے اندرونی آپریشنز کو بدلتے ہوئے حالات سے ہم آہنگ کرنے اور ضابطہ کاری کے ماحول میں مالی شعبے میں اختراع کو فروغ دینے کی اہمیت کا احساس ہے۔

تقریب کے کلیدی مقرر ہوررسٹ سائمن نے دنیا بھر میں کاروباری اداروں کو درپیش ٹیکنالوجی کے خطرات کا تذکرہ کیا اور ادارے میں خطرے کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ بورڈ سینئر مینجمنٹ اور ملازمین کو خطرے کے انتظام کا ایک فعال طریقہ کار وضع کرنا چاہیے۔

پرائس واٹر کوپر کے سینئر منیجر زعیم بن عالم نے سیمینار سے خطاب میں سائبر سیکیورٹی، سوشل میڈیا، ڈیٹا پرائیویسی اور تھرڈ پارٹی کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے آڈیٹر کا نقطہ نظر پیش کیا کہ کنٹرولز پر بات چیت کر کے ان خطرات سے کس طرح نمٹا جا سکتا ہے۔

اسٹیٹ بینک کے شعبہ نظام ادائیگی کے ڈائریکٹر سید سہیل جواد نے اپنے خطاب میں اندرونی آڈٹ کے تناظر میں ڈیجیٹل ادائیگیوں، ان کی اہمیت، ارتقا، ضابطہ کاروں کے لیے نت نئی ٹیکنالوجیز کے فوائد، ابھرتے ہوئے خطرات اور مناسب ردعمل سے آگاہ کیا۔

اس کے علاوہ سارک کے مرکزی بینکوں کے مندوبین نے بھی سامعین کی معلومات کے لیے مقالے پیش کیے۔

واٹس ایپ میں فنگر پرنٹ اور نائٹ موڈ کا اضافہ جلد متوقع

سان فرانسسكو: واٹس ایپ کے مداحوں کے لیے خوش خبری ہے کہ اس ایپ نے اب کئی تبدیلیاں کرتے ہوئے اپنے مداحوں کو دوبارہ حیران کرنے کی ٹھانی ہے جس کے تحت رات کو مسیجنگ اور رابطوں کے لیے نائٹ موڈ اور فنگر پرنٹ سے کھلنے اور بند ہونے کی سہولت بھی پیش کی جارہی ہے۔

واٹس ایپ نے اینڈروئڈ فون کے لیے نیا بی ٹا ورژن کئی جدت کے ساتھ پیش کردیا ہے۔ اب واٹس ایپ بی ٹا 2.19.83 ورژن  میں فنگر پرنٹ کی تصدیق اور رات میں استعمال کرنے والا نائٹ موڈ متعارف کروایا گیا ہے جسے کچھ لوگ استعمال کربھی رہے ہیں لیکن جلد ہی اسے پوری دنیا کے لیے ریلیز کیا جائے گا۔

اس ماہ کے اوائل میں فیس بک میسنجر نے نائٹ موڈ کا آپشن پیش کردیا تھا اور اب عین یہی فیچر واٹس ایپ پر بھی جلد پیش کیا جائے گا۔ مختلف ایپس اور

سافٹ ویئر کے بی ٹا ورژن پر نظر رکھنے والی ویب سائٹ WABetaInfo  نے بعض اسکرین شاٹ پر شائع کیے ہیں جن میں ’ڈارک موڈ‘ بھی شامل ہے۔

اسکرین شاٹ دیکھ کر اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ ڈارک موڈ ایپ کی ظاہری کیفیت کو مکمل طور پر تبدیل کردیتا ہے تاہم یہ صرف آپ کی آنکھوں کے لیے ہے ناکہ اس موڈ سے فون کی بیٹری کی کچھ بچت ہوسکے گی۔

دوسری جانب فنگر پرنٹ سے تصدیق کرنے والا ایک نظام بھی پیش کیا جارہا ہے جو ٹائم آؤٹ آپشن دیتا ہے جس کی مدت ایک منٹ، دس منٹ اور تیس منٹ ہے تاہم یاد رہے کہ یہ بی ٹا ورژن ہے جسے چند لوگ ہی استعمال کررہے ہیں۔ ان کی آرا کی روشنی میں واٹس ایپ کمپنی نئے ورژن کو بہتر سے بہتر بنائے گی اور جلد ہی اسے پوری دنیا کے لیے پیش کردیا جائے گا۔

Google Analytics Alternative