کھیل

اسلام آباد یونائیٹڈ کی پی ایس ایل 2018 میں پہلی فتح

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے تیسرے ایڈیشن کے چھٹے میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ نے ملتان سلطانز کو 5 وکٹوں سے شکست دے کر رواں ٹورنامنٹ میں اپنی پہلی فتح حاصل کرلی۔

دبئی میں کھیلے گئے میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ کے کپتان رومان رئیس نے ٹاس جیت کر ملتان سلطانز کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔

ملتان سلطانز کی جانب سے کمار سنگاکارا اور احمد شہزاد نے پہلی وکٹ کی شراکت میں صرف 8 رنز بنائے اور سنگاکارا انفرادی طور پر 6 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جس کے بعد براوو بھی صرف 6 رنز کا اضافہ کرسکے جبکہ صہیب مقصود ایک مرتبہ پھر ناکام ہوئے اور 19 کے مجموعی اسکور پر پویلین سدھار گئے۔

احمد شہزاد نے کپتان شعیب ملک کے ساتھ اسکور کو 31 رنز تک پہنچایا اور اسٹیون فن کا نشانہ بن گئے جس کے بعد شعیب ملک اور کیرون پولارڈ نے ایک مشکل وقت میں ٹیم کو کچھ سنبھالا اور اسکور کو آگے بڑھایا لیکن ٹیم کو ایک بڑے ہدف تک پہنچانے میں ناکام ہوئے۔

کیرون پولارڈ آؤٹ ہونے والے اگلے بلے باز تھے جو 85 کے اسکور پر 28 رنز بنا کر ہم وطن آندرے رسل کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

شعیب ملک نے 35 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے تو سلطانز کا اسکور 95 رنز تھا جس کے بعد ایک بڑے اسکور کی امید دم توڑ گئی اور دیگر بلےباز مسلسل آؤٹ ہوتے رہے۔

سہیل تنویر 9، سیف بدر 8، عمران طاہر اور محمد عرفان 2،2 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ جنید خان نے آؤٹ ہوئے بغیر 2 رنز بنائے۔

ملتان سلطانز کی پوری ٹیم آخری اوور میں 113 رنز بنا کر آؤٹ ہوئی۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی جانب سے کپتان رومان رئیس نے سب سے زیادہ تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا، محمد سمیع اور آندرے رسل نے دو، دو وکٹیں حاصل کیں۔

ایک آسان ہدف کے تعاقب میں اسلام آباد یونائیٹڈ کو صفر پر ہی پہلا نقصان برداشت کرنا پڑا جب لیوک رانچی آؤٹ ہوئے جس کے بعد صاحبزادہ فرحان نے اسکور کو 37 رنز تک پہنچانے میں اہم کردار ادا کرنے کے بعد آؤٹ ہوئے جنھوں نے 9 رنز بنائے تھے۔

چیڈ والٹن نے 28 رنز بنا کر ٹیم کو جیت کے لیے اہم کردار ادا کیا، آصف علی 11 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ آندرے رسل صفر پر ہی آؤٹ ہوئے۔

حسین طلعت اور فہیم اشرف نے پانچویں وکٹ میں ناقابل شکست شراکت قائم کرتے ہوئے ٹیم کو 5 وکٹوں سے فتح دلا دی۔

حسین طلعت 48 اور فہیم اشرف 12 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

ملتان سلطانز کی جانب سے عمران طاہر نے بہترین باؤلنگ کی اور 3 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا، محمد عرفان اور جنید خان کے حصے میں ایک، ایک وکٹ آئی۔

یاد رہے کہ اسلام آباد یونائیٹڈ کے لیے یہ رواں ٹورنامنٹ کی پہلی فتح ہے جبکہ ملتان سلطانز نے اپنے ابتدائی دونوں میچوں میں عمدہ کھیل پیش کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی تھی۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کو اپنے پہلے میچ میں پشاور زلمی کے خلاف شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

قبل ازیں ملتان سلطانز کی ٹیم اپنی جیت کے تسلسل کو برقرار رکھنے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی ٹیم کو پہلے میچ میں کپتان مصباح الحق کی کمی شدت محسوس ہوئی تھی جو انجری کے سبب میچ میں شرکت نہیں کر سکے تھے، تاہم وہ اس میچ میں بھی حصہ نہ لے سکے، ان کی جگہ فاسٹ باؤلر رومان رئیس نے کپتانی کے فرائض انجام دیے۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کے کپتان مصباح الحق ہیمسٹرنگ انجری کا شکار

دبئی:  پی ایس ایل کے چوتھے میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ کپتان مصباح الحق کی خدمات سے محروم رہی، ہمیسٹرنگ انجری کا شکار ہونے کی وجہ سینئر بیٹسمین کو آرام کا مشورہ دیا گیا، پشاور زلمی کیخلاف میچ میں ٹیم کی قیادت نوجوان رومان رئیس نے کی۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق مصباح الحق کو انجری سے نجات حاصل کرنے کیلیے آرام کا مشورہ دیا گیا ہے، امید ہے کہ مصباح الحق  مکمل فٹنس حاصل کر کے اگلے میچ میں میدان میں اتر سکیں گے۔

دوسری جانب پشاور نے گزشتہ میچ میں متاثر کن کارکردگی نہ پیش کرنے والے حماد اعظم کی جگہ عمید آصف کو شامل کیا، پیسر نے شاندار بولنگ کرتے ہوئے ابتدا میں ہی اسلام آباد یونائیٹڈ کی کمر توڑ دی۔یاد رہے کہ عمید آصف کو انجرڈ حسن علی کے کور کے طور پر پشاور سکواڈ میں شامل کیا گیا،انھوں نے ملنے والے موقع سے بھرپور فائدہ اٹھاکر پی ایس ایل میں اپنا ڈیبیو یادگار بنالیا۔

لاہور قلندرز پھر ناکام، گلیڈی ایٹرز کی نو وکٹ سے فتح

پاکستان سپر لیگ کے پانچویں میچ میں باؤلرز کے بعد بلے بازوں کی بھی عمدہ کارکردگی کی بدولت کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے لاہور قلندرز کو یکطرفہ مقابلے کے بعد نو وکٹوں سے شکست دے ایونٹ میں پہلی کامیابی اپنے نام کر لی۔

دبئی میں کھیلے جا رہے میچ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی دعوت پر پہلے بیٹنگ کرنے والی لاہور قلندرز کو اوپنرز سنیل نارائن اور برینڈن میک کولم نے 3.3 اوورز میں ٹیم کو 46 رنز کا شاندار آغاز فراہم کیا لیکن ایک غیر ضروری شاٹ نے نارائن کی اننگز کا خاتمہ کردیا۔

تاہم اس عمدہ آغاز اور بہترین رن ریٹ کے باوجود لاہور قلندرز کے بلے بازوں نے غیر ذمے دارانہ شاٹ کھیلنے کا سلسلہ جاری رکھا اور 60 کے اسکور پر فخر زمان اور میک کولم دونوں ہی پویلین لوٹ گئے۔

کیمرون ڈیلپورٹ جارحانہ موڈ میں نظر آئے اور دو چھکے لگانے کے بعد تیسرے کی کوشش میں انور علی کو کیچ دے بیٹھے۔

‘ینگ اینڈ ٹیلنٹڈ’ عمر اکمل ایک مرتبہ پھر قابل ذکر کارکردگی دکھانے میں ناکام رہے اور ایک ایسے موقع پر جب ٹیم کو ان کی سب سے زیادہ ضرورت تھی، وہ صرف ایل بی ڈبلیو قرار پائے جبکہ ریویو لے کر ٹیم کو اس سہولت سے بھی محروم کردیا۔

عمر اکمل کے آؤٹ ہونے کے بعد بقیہ وکٹیں بھی خزاں رسیدہ پتوں کی مانند گرتی رہیں جس کے سبب ٹیم کی رنز بنانے کی رفتار سست پڑ گئی اور وہ مقررہ اوورز میں نو وکٹ کے نقصان پر 119 رنز ہی بنا سکی۔

لاہور قلندرز کی جانب سے میک کولم 30، نارائن 28 اور سہیل اختر 20 رنز بنا کر نمایاں بلے باز رہے جبکہ ٹیم کے چھ کھلاڑی ڈبل فیگر میں بھی داخل نہ ہو سکے۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی جانب سے جوفرا آرچر تین وکٹیں لے کر سب سے کامیاب باؤلر رہے جبکہ محمد نواز نے دو وکٹیں حاصل کیں۔

ہدف کے تعاقب میں کوئٹہ کے اوپنرز شین واٹسن اور اسد شفیق نے اپنی ٹیم کو بہترین آغاز فراہم کیا خصوصاً واٹسن کا انداز خاصا جارحانہ تھا جنہوں نے 42 گیندوں پر پانچ چھکوں اور پانچ چوکوں کی مدد سے 66 رنز بنائے۔

لاہور قلندرز کو میچ میں واحد کامیابی اس وقت ملی جب سنیل نارائن نے واٹسن کی وکٹیں بکھیر دیں لیکن اس وقت تک بہت دیر ہو چکی تھی۔

اس کے بعد اسد شفیق اور عمر امین نے مزید کوئی وکٹ نہ گرنے دی اور 14ویں اوور میں ٹیم کو فتح سے ہمکنار کرا دیا، اسد نے تین چھکوں کی مدد سے 38 جبکہ عمر امین نے 13 رنز بنائے۔

محمد نواز کو عمدہ باؤلنگ پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

واضح رہے کہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور لاہور قلندرز دونوں ہی ٹیموں کو اپنے پہلے میچ میں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

میچ کیلئے دونوں ٹیمیں ان کھلاڑیوں پر مشتمل تھیں۔c

عمید آصف کی تباہ کن باؤلنگ، پشاور زلمی کی پہلی فتح

عمید آصف کے عمدہ باؤلنگ اسپیل کی بدولت پشاور زلمی نے اسلام آباد یونائیٹڈ کو شکست دے کر ایونٹ میں پہلی فتح حاصل کر لی۔

دبئی میں کھیلے گئے میچ میں پشاور زلمی نے اپنی اننگز کا آغاز کیا تو اوپنرز کامران اکمل اور تمیم اقبال نے اپنی ٹیم کو 69 رنز کا عمدہ آغاز فراہم کیا خصوصاً کامران اکمل کا انداز جارحانہ تھا جنہوں نے تین چھکوں اور سات چوکوں مدد سے 32 گیندوں پر 53 رنز کی اننگز کھیلی تاہم سمیت پٹیل نے وکٹ کیپر بلے باز کی اننگز کا خاتمہ کردیا۔

اس کے بعد تمیم اقبال کا ساتھ دینے ڈیوین اسمتھ آئے اور دونوں کھلاڑیوں نے ایک اور عمدہ شراکت قائم کرتے ہوئے دوسری وکٹ کیلئے 52 رنز جوڑ کر اسکور 121 تک پہنچا دیا۔

اس موقع پر اسلام آباد یونائیٹڈ کے باؤلرز نے عمدہ باؤلنگ کا مظاہرہ کیا اور محض 15 رنز کے فرق سے تمیم اور اسمتھ کے ساتھ ساتھ ڈیرن سیمی کی وکٹ حاصل کر کے پشاور زلمی کے بڑے اسکور کے خواب کو چکنا چور کردیا، تمیم نے 39 اور اسمتھ نے 30 رنز بنائے۔

اختتامی اوورز میں محمد حفیظ نے چند ہاتھ دکھا کر ٹیم کا 200 رنز تک پہنچانے کی کوشش کی لیکن وہ بھی اس کوشش میں کامیاب نہ ہو سکے اور پشاور زلمی نے مقررہ اوورز میں چھ وکٹ کے نقصان پر 176 رنز ہی بنا سکی، حفیظ نے 22 گیندوں پر 31 رنز کی اننگز کھیلی۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی جانب سے فہیم اشرف دو وکٹیں لے کر سب سے کامیاب باؤلر رہے جبکہ رومان رئیس، آندرے رسل، محمد سمیع اور سمیت پٹیل نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی اننگز کا آغاز کسی ڈراؤنے خواب سے کم نہ تھا اور عمید آصف نے شاندار باؤلنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے صرف 25 رنز پر چار کھلاڑیوں کو آؤٹ کر کے میچ کو یکطرفہ بنا دیا، لیوک رونچی تین، چیڈوک والٹن 11، آصف علی سات اور حسین طلعت دو رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

افتخار احمد اور سمیت پٹیل نے اسکور 45 تک پہنچایا ہی تھا کہ کرس جورڈن نے افتخار کی اننگز کے آگے فل اسٹاپ لگا دیا۔

بڑھتے ہوئے رن ریٹ کے سبب اسلام آباد کے بلے بازوں پر دباؤ بڑھتا گیا اور نوجوان اسپنر ابتسام شیخ نے اس کا بھرپور فائدہ اٹھاتے اپنے تین اوورز میں یکے بعد دیگرے شاداب خان، آندرے رسل اور سمیت پٹیل جیسے آل راؤنڈرز کو آؤٹ کر کے اسلام آباد کی میچ میں واپسی کی رہی سہی امید بھی ختم کردی۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی جانب سے فہیم اشرف نے ناقابل شکست 54 رنز کی اننگز کھیل کر مزاحمت کی لیکن ان کی یہ کاوش بھی ٹیم کو شکست سے نہ بچا سکی۔

یونائیٹڈ کی ٹیم مقررہ اورور میں نو وکٹ کے نقصان پر 142 رنز ہی بنا سکی اور یوں پشاور زلمی نے 34 رنز سے کامیابی حاصل کر کے ایونٹ میں پلی فتح حاصل کر لی۔

پشاور زلمی کی جانب سے عمید آصف چار وکٹیں لے کر سب سے کامیاب باؤلر رہے جبکہ ابتسام بھی تین وکٹیں لینے میں کامیاب رہے۔

اس سے قبل پاکستان سُپر لیگ (پی ایس ایل) کے چوتھے میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ نے پشاور زلمی کے خلاف ٹاس جیت کر پہلے باؤلنگ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

اسلام آباد یونائیٹد کے کپتان مصباح الحق میچ میں شرکت نہیں کر رہے جبکہ ان کی جگہ نوجوان فاسٹ باؤلر رومان رئیس کپتانی کے فرائض انجام دے رہے ہیں۔

پشاور زلمی میں کپتان ڈیرن سیمی، تمیم اقبال، کامران اکمل، محمد حفیظ، ڈوین اسمتھ، حارث سہیل، امید آصف، وہاب ریاض، ابتسام شیخ، کرس جورڈن اور محمد اصغر شامل ہیں۔

اسلا آباد یونائیٹڈ کی کپتانی رومان رئیس کر رہے ہیں جبکہ دیگر کھلاڑیوں میں لوک رونچی، چیڈوک والٹن، آصف علی، افتخار احمد، حسین طلعت، سمت پٹیل، اندرے رسل، شاداب خان، فہیم اشرف اور محمد سمیع شامل ہیں۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کا ایونٹ میں یہ پہلا میچ ہے جبکہ پشاور زلمی کا دوسرا میچ ہے۔

دفاعی چیمپیئن پشاور زلمی کو ایونٹ کے پہلے میچ میں ملتان سلطانز کے ہاتھوں 7 وکٹوں سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

واضح رہے کہ اسلام آباد پی ایس ایل کے پہلے ایونٹ کا فاتح ہے۔

پی ایس ایل: اسلام آباد یونائیٹڈ کے کپتان مصباح پہلا میچ کیوں نہیں کھیلے؟

پاکستان سپر لیگ(پی ایس ایل) کے چوتھے میچ میں دو سابقہ چیمپیئن ٹیمیں اسلام آباد یونائیٹڈ اور پشاور زلمی مدمقابل ہیں جہاں اسلام آباد کی ٹیم کی قیادت نوجوان رومان رئیس کر رہے ہیں۔

دبئی میں کھیلے جا رہے ایونٹ کے چوتھے میچ میں دونوں ٹیموں کے کپتان ٹاس کیلئے میدان میں اترے تو تمام تماشائیوں کو یہ دیکھ کر شدید دھچکا لگا کہ ٹیم کی قیادت مصباح الحق کی جگہ رومان رئیس کر رہے ہیں۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق اسلام آباد کے کپتان مصباح الحق انجری کا شکار ہیں اور انہیں انجری سے نجات حاصل کرنے کیلئے آرام کا مشورہ دیا گیا ہے تاکہ وہ مکمل فٹنس حاصل کر کے میچ میں شرکت کر سکیں۔

اسلام آباد یونائیٹڈ نے میچ کیلئے نوجوان رومان رئیس کو قیادت کی ذمے داریاں سونپی ہیں جو پہلی مرتبہ یونائیٹڈ کی قیادت کر رہے ہیں۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کو امید ہے کہ مصباح الحق اگلے میچ سے مکمل فٹنس حاصل کر کے جلد میدان میں اتر سکیں گے۔

سوشل میڈیا پر کرکٹ سے زیادہ نیلم منیر کے چرچے

دبئی: سوشل میڈیا پر پی ایس ایل تھری میں کرکٹ سے زیادہ ملتان سلطان کی خوبصورت سپورٹر اداکارہ نیلم منیر کے چرچے ہیں۔

پی ایس ایل تھری میں شوبز انڈسٹری سے تعلق رکھنے والے فنکاروں  خاص طور پر اداکاراؤں کی شمولیت نے کرکٹ کے اس کھیل کو گلیمر سے بھرپور بنادیا ہے اور شائقین بھی کرکٹ سے زیادہ پی ایس ایل ٹیموں کو سپورٹ کرنے والی اداکاراؤں پر توجہ دے رہے ہیں جب کہ پاکستان ڈرامہ انڈسٹری کی خوبرو اداکارہ اور ملتان سلطان کی سپورٹر نیلم منیر نے اپنی اداؤں اور خوبصورتی سے پورے سوشل میڈیا کو اپنا دیوانہ بنالیا ہے۔

گزشتہ روز پشاور زلمی اور ملتان سلطان کے درمیان سنسنی خیز مقابلے کے بعد یہ معرکہ ملتان سلطان کی ٹیم نے جیت لیا۔ نیلم منیر اس موقع پر اپنی ٹیم کو سپورٹ کرنے کے لیے گراؤنڈ میں موجود تھیں۔ تاہم صورتحال اس وقت دلچسپ ہوگئی جب گراؤنڈ میں موجود لوگ کرکٹ سے زیادہ نیلم منیر پر توجہ دینے لگے۔

ویسے تو کل کی جیت ملتان سلطان کی ٹیم کے حصے میں آئی لیکن میچ کے دوران نیلم منیر کے تاثرات لوگوں کی توجہ کا مرکز بنے رہے، کسی شخص نے نیلم منیر کی تصویر لے کر سوشل میڈیا پر ڈال دی جس میں وہ تھوڑی پریشان نظر آرہی ہیں جب کہ نیلم کے پریشانی سے بھرپور چہرے پر دلچسپ تبصرہ کرتے ہوئے لکھا اس میچ کے فاتح کیمرہ مین ہیں جنہوں نے نیلم کی اتنی خوبصورت تصویر لی۔

ایک اور صارف نے پی ایس ایل دیکھنے کی وجہ کرکٹ کو نہیں بلکہ نیلم منیر اور اداکارہ سعدیہ خان کو قراردیا۔

ایک صارف نے نیلم منیر اوررمیز راجا کی تصویر شیئر کرتے ہوئے دلچسپ تبصرہ کرتے ہوئے لکھا اصل کرکٹ تو رمیز راجہ کھیل گیا۔

یہاں تک کہ نیلم منیر کے ہاتھ میں پہنی گئی گھڑی تک کو لوگوں نے نوٹس کیا۔

ایک صارف نے نیلم کی میچ کے دوران لی گئی ایک خوبصورت تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا یہ نیلم آج کچھ زیادہ ہی نیلم نیلم لگ رہی ہے۔

نیلم منیر اپنی ٹیم کی جیت کے بعد خوشگوار انداز میں گراؤنڈ میں موجود دیگر لوگوں کے ہمراہ تصاویر کھینچواتی نظر آئیں۔

جیت کے بعد نیلم منیر کا ایک خوبصورت انداز۔

ملتان سلطانز نے لاہور قلندرز کو بھی شکست دیدی

دبئی: پی ایس ایل تھری کے تیسرے میچ میں ملتان سلطانز نے لاہور قلندرز کو 43 رنز سے شکست دیدی۔

دبئی میں کھیلے گئے پاکستان سپر لیگ تھری کے تیسرے میچ میں ملتان سلطانز نے لاہور قلندرز کو 43 رنز سے شکست دیدی ہے، ملتان سلطانز نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے لاہور قلندرز کے خلاف 179 رنز بنائے، ہدف کے تعاقب میں لاہور قلندرز کی جانب سے اننگز کا آغاز فخرزمان اور سنیل نارائن نے کیا، لاہور قلندرز کی اوپننگ شراکت زیادہ دیر تک قائم نہ رہ سکی اور پہلی وکٹ 32 رنز پر گرگئی جب کہ کچھ ہی دیر بعد برنڈن مک کولم بغیر کوئی رن بنائے پویلین واپس لوٹ گئے۔

برنڈن مک کولم کے آؤٹ ہونے کے بعد فخر زمان اور عمر اکمل نے ٹیم کو سنبھالا اور اسکور آگے بڑہایا تاہم عمر اکمل 31 رنز بنانے کے بعد 105 کے مجموعی اسکور پر آؤٹ ہوگئے، فخر زمان نے 49 رنز بنائے اور پولارڈ کی گیند پر احمد شہزاد کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے جب کہ سہیل اختر نے 21 رنز بنائے اور 133 کے مجموعی اسکور پر آؤٹ ہوگئے۔

بعد میں آنے والے کھلاڑیوں میں سے کوئی بھی خاص کارکردگی کا مظاہرہ نہ کرسکا اور لاہور قلندرز کی پوری ٹیم 17.2 اوورز میں 136 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی۔ لاہور قلندرز کی جانب سے فخر زمان نے 49، عمر اکمل نے 31 اور سنیل نارائن نے 26 رنز بنائے۔

اس سے قبل لاہور قلندرز نے ملتان سلطانز کے خلاف ٹاس جیت کر بولنگ کا فیصلہ کیا تو ملتان سلطانز کی جانب سے اننگز کا آغاز کمار سنگاکارا اور احمد شہزاد نے کیا، دونوں اوپنرز نے اننگز کا آغاز انتہائی پراعتماد اور جارحانہ انداز میں کیا اور 88 رنز کی اوپننگ شراکت قائم کی تاہم احمد شہزاد 38 رنز بناکر آؤٹ ہوگئے جب کہ ون ڈاؤن آنے والے صہیب مقصود صرف 4 رنز بناکر یاسر شاہ کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔

کمار سنگاکارا نے ایک بار پھر شانداز کھیل کا مظاہرہ کیا اور پی ایس ایل کے تیسرے ایڈیشن میں اپنی دوسری نصف سنچری اسکور کی، سنگاکارا نے 44 گیندوں پر 63 رنز بنائے اور آؤٹ ہوگئے، کپتان شعیب ملک نے بھی 28 گیندوں پر 48 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلی تاہم وہ رن آؤٹ ہوگئے اور نصف سنچری مکمل نہ کرسکے۔ ملتان سلطانز نے لاہور قلندرز کے خلاف مقررہ اوورز میں 5 وکٹوں کے نقصان پر 179 رنز بنائے۔

واضح رہے کہ  گزشتہ روز دبئی میں پی ایس ایل تھری کا رنگا رنگ آغاز ہوا تھا جس کے پہلے میچ میں ملتان سلطانز نے دفاعی چیمپئن پشاور زلمی کو شکست دے دی تھی۔

پی ایس ایل: عامر کے بعد جنید خان کی ہیٹ ٹرک

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 2018 کے تیسرے میچ میں ملتان سلطانز کے جنید خان نے لاہور قلندرز کے خلاف ہیٹ ٹرک کر کے ٹیم کی کامیابی میں اہم کردار ادا کیا۔

پی ایس ایل کے تیسرے ایڈیشن کے دبئی میں کھیلے گئے میچ میں فخر زمان کے 49 رنز کی بدولت لاہور قلندرز کی پوزیشن مستحکم تھی، تاہم پھر 132 کے مجموعی اسکور پر ان کے آؤٹ ہونے کے بعد ان کی وکٹیں خزاں کے موسم میں درخت کے پتوں کی طرح گرنا شروع ہوگئیں۔

لاہور قلندرز کو شکست کی طرف دھکیلنے میں جنید خان نے بھی اہم کردار کیا اور ان کی تین گیندوں پر تین وکٹوں نے لاہور کی شکست کو یقینی بنادیا۔

جنید خان نے یاسر شاہ، کیمرون ڈیلپورٹ اور رضا حسن کو آؤٹ کرکے پاکستان سپر لیگ کی تاریخ کی دوسری ہیٹ ٹرک کی۔

لاہور قلندرز کی آخری سات وکٹیں صرف 4 رنز کے فرق سے گریں اور میچ میں اسے 43 رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

واضح رہے کہ پی ایس ایل کے پہلے ایڈیشن میں لاہور قلندرز کے خلاف ہی کراچی کنگز کے محمد عامر نے بھی ہیٹ ٹرک کی تھی۔

Google Analytics Alternative