کھیل

شرجیل پر میچ فکسنگ کا الزام درست نہیں، محمد یوسف

کرکٹر محمد یوسف کہتے ہیں کہ شرجیل خان پر میچ فکسنگ کا الزام درست نہیں،اگردوبال کاسوال ہےتو شرجیل پرالزام درست نہیں معاملہ یہیں ختم کردیا جائے، شرجیل خان نے دونوں بال ٹھیک کھیلی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شرجیل کا دو گیندیں ڈاٹ کھیلنا مشکوک نہیں، میرٹ پر ایسا کھیلا،میرا خیال ہے کیس میں کچھ نہیں، اسے ختم کردینا چاہیے ۔

انہوں نے کہاکہ فضول میں پاکستان کی بدنامی ہورہی ہے، اگر کسی نے بھی کچھ کیا ہے تو اس کے ثبوت میڈیا کے سامنے آنے چاہئیں۔

محمد یوسف نے مزید کہا کہ ہم تو سن رہے ہیں کہ ٹھوس ثبوت ہیں ، ایسا ہے تو سب کے سامنے رکھیں ،کرکٹ بورڈ بہتر بتاسکتا ہے کہ اس کے پاس ٹھوس ثبوت کیا ہیں ،اگر ثبوت نہیں ہیں توکیس ختم کردینا چاہیے ۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ انگلینڈ میں تین کرکٹرز کو سزا ہوئی تھی،اگر الزامات کے ثبوت نہیں تو معاملہ ختم کریں، دنیا کے سامنے مذاق نہ بنائیں۔

شرجیل خان کے وکیل کا کہنا ہے کہ محمد یوسف نے ہماری طرف سے پیش ہوکرگواہی دی ہے۔

پاک بھارت سیریز کیلیے بورڈز میٹنگ نتیجہ خیز ثابت نہ ہو سکی

دبئی: پاک بھارت سیریز کے حوالے سے دونوں ممالک کے کرکٹ بورڈ حکام میں ہونے والی ملاقات نتیجہ خیز ثابت نہ ہوسکی۔

پاک بھارت سیریز کے حوالے سے پی سی بی اور بی سی سی آئی حکام میں ہونے والی ملاقات نتیجہ خیز ثابت نہ ہوسکی جب کہ میٹنگ کے بعد کسی نے میڈیا سے کوئی گفتگو نہیں کی، پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے جاری کی گئی پریس ریلیز کے مطابق ملاقات کے دوران دونوں ممالک کی جانب سے اپنے اپنے مؤقف کو دہرایا گیا جب کہ میٹنگ کے نتیجے سے حکام اپنے اپنے بورڈز کو آگاہ کریں گے۔

واضح رہے کہ پاکستان نے معاہدہ کے مطابق باہمی سیریز نہ کھیلنے پر بھارتی بورڈ سے ہرجانہ ادا کرنے کا مطالبہ کر رکھا ہے، سیریز نہ کھیلنے اور ہرجانہ ادا نہ کرنے کی صورت میں پی سی بی معاملہ آئی سی سی میں لے کرجائے گا۔ دوسری جانب بھارتی وزیر کھیل موجودہ حالات میں باہمی سیریز کے انعقاد سے ہی انکاری ہیں، انہوں نے اس حوالے بھارتی کرکٹ بورڈ کے کسی بھی اقدام کو حکومتی اجازت سے مشروط کردیا ہے۔

بھارت اس معاملے پر بھی ”بغل میں چھری اور منہ میں رام رام“ والی پالیسی اپنائے ہوئے ہے۔ ایک طرف تو حکام کو پاکستان بورڈ کے ساتھ میٹنگ کیلئے بھیجا جارہا ہے تو دوسری جانب سرے سے باہمی سیریز کھیلنے سے ہی انکار کیا جا رہا ہے۔ بھارت کی اس چال کا مقصد پی سی بی کو ہرجانہ ادا کرنے سے بچنا ہوسکتا ہے۔

ایجبسٹن کرکٹ گراونڈ: سب کچھ بدل چکا ہے!

یہ 2004 کی بات ہے، جب میں انگلینڈ پہلی بار آیا تھا. اس وقت چوتھی آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں ٹیم پاکستان نے انضمام الحق کی قیادت میں ایجبسٹن کرکٹ گراونڈ ہر کینیا اور بھارت کے خلاف فتح حاصل کی تھی۔

واروکشائر کاونٹی کے ہوم گراونڈ پر اب تقریباً 25ہزار شائقین کے بیٹھنے کی گنجائش ہے۔ 13سال پہلے یہاں چھوٹا سا میڈیا بکس ہوا کرتا تھا، لیکن اب اس گراونڈ میں نئی استقبالیہ عمارت تعمیر ہو چکی ہے۔ گراونڈ میں نیا میڈیا بکس بھی بنایا گیا ہے جس میں سو سے زیادہ صحافیوں کے بیٹھنے کی گنجائش موجود ہے۔

برمنگھم، انگلینڈ کا دوسرا بڑا شہر ہے ،یہاں بڑی تعداد میں پاکستانی بھی رہتے ہیں۔

اب برمنگھم میں آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں ٹیم پاکستان کا بھارت سے تیسرا مقابلہ ہوگا۔ 19ستمبر 2004ء کو یہاں پر پاکستان نے آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں بھارت کو تین وکٹ سے زیر کیاتھا لیکن 15 جون 2013ء کو آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی کے میچ میں مصباح الحق کی قیادت میں کھیلنے والی پاکستانی ٹیم کو بھارت نے 8وکٹ سے شکست دی تھی۔

یہاں پر17 جون 1999ء کو ساتویں ورلڈ کپ کا دوسرا سیمی فائنل بھی کھیلا گیا تھا، آسڑیلیا کے 213رنز کے جواب میں جنوبی افریقا 50ویں اوور کی چوتھی گیند پر 213رنز پر آوٹ ہوئی تھی اور ٹائی میچ کے سبب آسڑیلیا کی ٹیم فائنل میں پہنچ گئی تھی۔

ایجبسٹن کے اسی گراونڈ پر 1994ءمیں ویسٹ انڈیز کے برائن لارا نے واروکشائر کے لئے کھیلتے ہوئے ڈرھم کے خلاف 501 رنز ناٹ آوٹ کی اننگز کھیلی تھی، جو آج بھی فرسٹ کلاس کرکٹ میں سب سے بڑی انفرادی اننگز کا آج بھی ریکارڈ ہے۔

انگلینڈ کے اس اہم گراؤنڈ پر ٹیسٹ کرکٹ کھیلے جانے کی تاریخ بھی سو سال سے زائد پرانی ہے اور یہاں پہلا ٹیسٹ 1902ء میں انگلینڈ اور آسڑیلیا کے درمیان کھیلا گیا تھا۔

عمر اکمل لندن سے لاہورپہنچ گئے

لاہور ایئر پورٹ پر انہوں نے میڈیا سے بات نہیں کی اور اپنے والد کے ہمراہ گھر روانہ ہوگئے۔

گزشتہ ہفتے چیف سیلکٹر انضمام الحق کی جانب سے عمر اکمل کو فٹنس ٹیسٹ میں فیل ہوجانے کے باعث لندن سے واپس پاکستان بھیجنے کا اعلان کیا گیا تھا ۔

ہیڈ کوچ مکی آرتھر بھی عمر اکمل کے غیر سنجیدہ رویے کے باعث ان سےسخت نالاں تھے اور برمنگھم کے کیمپ میں کوچ نے عمر اکمل کو بیٹنگ بھی نہیں کروائی تھی ۔

چیمیئنز ٹرافی میں عمر اکمل کی جگہ حارث سہیل پاکستان ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔

سیریز نہ کھیلنے پر بھارت تلافی کرے، نجم سیٹھی

پی سی بی کے چیئرمین شہریارخان کا کہنا ہے کہ بھارت کےساتھ سیریز کھیلنے کے معاہدے پر قائم ہیں جبکہ نجم سیٹھی نے کہا ہے کہ ہمارا مطالبہ ہے بھارت ہماری تلافی کرے ۔

چیئرمین پی سی بی شہریارخان نے دبئی روانگی سے قبل لاہورایئرپورٹ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بھارت سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ وہ پاکستان کےساتھ کرکٹ کھیلے ، بھارت نے معاہدے کے باوجود پاکستان سے کوئی میچ نہیں کھیلا جبکہ ہم معاہدے پر قائم ہیں ۔

چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ بھارت کے انکار کی وجوہات پر آج دبئی میں انڈین کرکٹ بورڈ سے بات چیت ہوگی چیئرمین پی ایس ایل نجم سیٹھی اور سبحان احمد بھی ان کے ہمراہ ہیں ۔

نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ بھارتی کرکٹ بورڈ سے آج کی میٹنگ ناکام رہی تو اس کےبعد ایک اورمیٹنگ ہوگی ، ہم مطالبہ کریں گے کہ بھارت ہماری تلافی کرے۔

ڈیوائن براوو کا نیا گانا، شاہد آفریدی سے ملاقات کا احوال بھی شامل

نئی دہلی: ویسٹ انڈین آل راؤنڈر ڈیوائن براوو کے گانے کی نئی ویڈیو بھی منظرعام پر آگئی، جس میں انھوں نے پاکستانی اسٹار شاہد خان آفریدی سے اپنی ملاقات کا احوال بھی گیت میں پیش کیا۔

براوو نے افغان کرکٹر راشد خان سے ملنے کی کہانی بھی شاعری میں بیان کی، ڈیوائن براوو  ماضی میں ورلڈ کپ 2015 کے موقع پر ’چیمپئن چیمپئن‘ گاکر بھی خاصے مشہور ہوئے تھے۔ انھوں نے ’ چلو چلو‘ اور ’ ٹرپ ابھی باقی ہے‘ نامی گیت بھی گائے ہیں۔

نئے گیت میں وہ بھارتی کپتان ویرات کوہلی سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ اپنے پیشرو دھونی کو واٹس اپ کریں، گیت کی شروعات سری لنکا سے ہوتی ہے، جہاں وہ اپنے دوست کمار سنگاکارا کو بلاتے ہیں، وہ پھر اپنے دوست مہیلا جے وردنے کو کال کرتے ہیں، اسی طرح گیت میں دیگر کرکٹرز بھی شریک ہوتے چلے جاتے ہیں۔

باکسر عامر خان کی مانچسٹر حملے کی شدید الفاظ میں مذمت

عامر خان نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ دہشت گرد حملے کرنے کے بجائے رول ماڈل بننے کی کوشش کریں۔ انھوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ انھیں ڈر ہے کہ دہشت گردی کے واقعات مسلمانوں کے لیے کہیں مشکلات نہ پیدا کردیں ۔

برطانوی باکسر نے کہا کہ مانچسٹر کے لیے یہ دکھ کی گھڑی ہے، میں بے گناہ لوگوں کے قتل کی سختی سے مذمت کرتا ہوں ۔

بیجنگ :پاکستان ،افغانستان اور چین کے عملی تعاون پر مذاکرات

پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان کے مطابق چین، افغانستان، پاکستان پرمشتمل سہ فریقی فورم کو باقاعدہ فورم بنانے پر اتفاق کیا گیا، تینوں فریقوں نے تعاون کے سلسلے میں عملی اقدامات پر بھی اتفاق کیا۔

مذاکرات میںتینوں فریقیں نے سی پیک کو سراہا اور ون بیلٹ ون روڈ کے تحت عملی تعاون سے باہمی فائدے کے اقدامات پر اتفاق کیا ۔

ترجمان دفتر خارجہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ پاکستان اورچین افغانستان کے ساتھ اس کی ضروریات کے مطابق تعاون کریں گے، افغانستان سے انفراسٹرکچر ، زراعت ، توانائی شعبوں میں تعاون کیا جائے گا ۔

Google Analytics Alternative