کھیل

ڈالرز کا دیدار کیے بغیر بورڈ نے ملتان سلطانز کو میدان میں اتار دیا

کراچی: ڈالرز کا دیدار کیے بغیر بورڈ نے ملتان سلطانز کو میدان میں اتار دیا۔

گزشتہ برس ملتان سلطانز سے کنٹریکٹ ختم کرتے ہوئے ٹیم کے تمام حقوق پی سی بی نے اپنے پاس محفوظ کر لیے تھے، فرنچائز کی مالک کمپنی معاہدے کے تحت مالی ادائیگی نہیں کرسکی تھی، عبوری طور پر اسے’’چھٹی ٹیم‘‘ کا نام دیا گیا، اسلام آباد میں منعقدہ ڈرافٹ میں فرنچائز کیلیے کھلاڑیوں کا چناؤ خود بورڈ نے کیا،پھر فروخت کیلیے ٹینڈرز کا عمل شروع ہوا، پی سی بی نے بولی کیلیے فرنچائز کی بنیادی قیمت 52 لاکھ ڈالر سالانہ مقرر کی تھی۔

پی ٹی آئی رہنما جہانگیر ترین کے بیٹے علی ترین گذشتہ برس دسمبر میں 6.35ملین ڈالرز سالانہ کے عوض 7سال کیلیے ملکیت حاصل کرنے میں کامیاب رہے، بعد میں انھوں نے فرنچائز کا نام ملتان سلطانز ہی برقرار رکھنے کا اعلان کیا، شعیب ملک کی زیرقیادت ٹیم 10میں سے صرف3 میچز جیت کر 6 ٹیموں میں پانچویں نمبر پر رہی۔

ذرائع نے انکشاف کیا کہ ملتان سلطانز سے فرنچائز فیس لیے بغیر ہی  بورڈ نے  اسے رواں برس ایونٹ میں شرکت کی اجازت دی،17مارچ کو فائنل کا انعقاد ہوا تھا، یوں چار ماہ سے زائد وقت گذر چکا مگر تاحال ملتان نے کوئی ادائیگی نہیں کی۔

دوسری جانب دیگر فرنچائزز کو پی سی بی نے ابھی سے اگلے ایڈیشن کی بینک گارنٹی جمع کرانے کیلیے خطوط بھیجنے شروع کر دیے ہیں۔اس سے قبل بھی جو فرنچائز ذرا بھی ادائیگی میں تاخیر کرے حکام اس کے ساتھ سختی سے پیش آتے تھے، مگر ارباب اختیار سے قریب سمجھی جانے والی 2 ٹیموں نے ہمیشہ ادائیگیوں میں تاخیر برتی، ایک کا تو چیک بھی باؤنس ہو چکا مگر کوئی کارروائی نہیں کی گئی،اب خصوصی سلوک پانے والی فرنچائزز میں ملتان سلطانز کا بھی اضافہ ہو چکا ہے۔

اس حوالے سے پیر کو رابطے پر پی سی بی کے ترجمان نے اگلے روز جواب دینے کا کہا، منگل کو بار بار یاددہانی پر تھوڑی دیر بعد جواب کا کہا جاتا، سینئرز سے مشاورت کی بات بھی ہوئی، رات گئے صرف 2سطور کا جواب موصول ہوا کہ ’’ملتان سلطانز فرنچائز کی جانب سے معاہدے پر عمل درآمد ہورہا ہے‘‘ دیگر سوالات کہ ’’کیا ملتان سلطانز نے بغیر ادائیگی ایونٹ میں حصہ لیا، فرنچائز کو کس وجہ سے یہ اجازت ملی، کب تک اسے ادائیگی کا وقت دیا گیا ہے، کیا اگلے ایڈیشن کی بینک گارنٹی فرنچائز کی جانب سے جمع کرائی جائے گی، ان میں سے کسی کا بھی جواب نہیں دیا گیا، ذرائع نے بتایا کہ بورڈ نے ملتان کو 31 جولائی تک ادائیگی کا وقت دیا ہوا تھا۔

ادھر ملتان سلطانز کے اونر علی ترین نے پیراور منگل دونوں روز میسجز دیکھنے کے باوجود جواب دینے سے گریز کیا اور کالز بھی وصول نہیں کیں، جنرل منیجر حیدر اظہر نے پیر کو رابطے پر موقف دینے کا یقین دلایا مگر منگل تک ان کاکوئی جواب موصول نہیں ہوا۔

شعیب اور حفیظ سمیت 5 کھلاڑیوں کو سینٹرل کنٹریکٹ نہ ملنے کا امکان

لاہور: شعیب ملک اور محمد حفیظ سمیت  4 سے 5 معروف کرکٹرز کو سینٹرل کنٹریکٹ کی فہرست سے ڈراپ کیے جانے کا امکان ہے۔

قومی کرکٹرز کو سال  2019-20کے لیے سالانہ سینٹرل کنٹریکٹ دینے کے حوالے سے پی سی بی کے بڑے جمعرات کو سر جوڑ کر بیٹھیں گے ،ذرائع کے مطابق شعیب ملک اور محمد حفیظ سمیت  4 سے 5معروف کرکٹرز کو سینٹرل کنٹریکٹ کی فہرست سے ڈراپ کیاجاسکتا ہے تاہم حتمی فیصلہ شرکا اجلاس میں کریں گے۔

ذرائع کے مطابق کھلاڑیوں کی تنخواہوں اور میچ فیس میں 20 فیصد اضافہ کرنے پر اتفاق  ہوچکا ہے، صرف  ٹیسٹ ٹیم میں ملک کی نمائندگی کرنے والوں کی میچ فیس میں زیادہ اضافے پر بھی تبادلہ خیال ہوگا۔

ایم ڈی وسیم خان کی سرابرہی میں مدثر نذر، ہارون رشید اور ذاکر خان کے ساتھ ہیڈ کوچ مکی آرتھر بھی مجوزہ کھلاڑیوں کی فہرست پر مشاورت کریں گے۔ آرتھر کا پی سی بی سے معاہدہ 15 اگست تک ہے جس میں اب مزید توسیع  کیےجانے کا قوی امکان ہے۔ سال 2018 اور 19 کے لیے 33 کھلاڑی اے، بی، سی، ڈی اور ای کیٹگری میں ماہانہ تنخواہ لیتے رہے ہیں۔ گزشتہ برس تنخواہ پانے والے بہت ایسے کھلاڑی بھی تھے جو ٹیم کی بہت کم نمائندگی کر پائے یا بالکل ہی نہیں کھیلے۔

پی سی بی  نے اب اس تعداد کو کم کرکے 15 سے 20 کے درمیان محدود کرنے کا فیصلہ کیاہے، اجلاس میں اس بات کا تعین بھی کیا جائے گا کہ کتنے اور کن کھلاڑیوں کو اس لسٹ میں شامل کیاجائے۔

ذرائع کے مطابق تینوں یا پھر 3 فارمیٹ میں قومی ٹیم کا مستقل حصہ بننے والوں کو ترجیح دی جائے گی، جو لڑکے فہرست میں جگہ نہیں پاسکیں گے وہ مجوزہ ڈومیسٹک کرکٹ میں صوبائی ٹیموں کی جانب سے کنٹریکٹ پانے کے اہل ہوں گے۔ نئی سلیکشن کمیٹی تشکیل دیے جانے پر سلیکٹرز کی سفارش پر اس فہرست میں 2 سے 3 مزید کھلاڑیوں کو جگہ دی جاسکے گی۔

اجلاس میں مشاورت کے لیے جس فہرست کو تیار کیا گیا ہے اس میں بابر اعظم، سرفراز احمد، اظہرعلی، محمد حفیظ، فہیم اشرف، اسد شفیق، حسن علی، محمد عامر، فخر زمان، شاداب خان، محمد عباس، حارث سہیل، وہاب ریاض، جنید خان، امام الحق، عثمان خان شنواری، شان مسعود، عماد وسیم، آصف علی، محمد رضوان، عابد علی اور شاہین شاہ آفریدی ہیں۔ مشاورت کے بعد اس فہرست کو مزید کم کرکے انہیں مختلف کیٹگریز میں تقسیم کرکے فہرست کو فائنل کیےجانے کا امکان ہے۔

سعید اجمل نے قومی ٹیم کے بولنگ کوچ بننے میں دلچسپی ظاہر کردی

لاہور: سابق ٹیسٹ کرکٹر سعید اجمل نے قومی ٹیم کے بولنگ کوچ بننےمیں بھی دلچسپی ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان ٹیم کے لیے میری خدمات حاضر ہیں۔ خواہش ہے کہ اپنے تجربے سے قومی ٹیم کی کامیابیوں میں بطور کوچ بھی کردار ادا کرسکوں۔

35 ٹیسٹ میچوں میں 178، 113 ایک روزہ میچوں میں 184 رہی اور 64 ٹی ٹوئنٹی مقابلوں میں 85 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھانے والے 41 سالہ سعید اجمل نے ایکسپریس نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انگلینڈ اور پی سی بی کے لیول ٹو کوچنگ کورس پاس کرچکا ہوں، اب اپریل میں لیول تھری کورس میں شرکت کروں گا۔ ان دنوں اپنی اکیڈمی میں 200 زیادہ بچوں کی کوچنگ کررہاہوں۔ میری رائے میں قومی ٹیم کے لیے ملکی کوچز زیادہ بہتر ثابت ہوسکتےہیں۔

قومی ٹیم کے کپتان کی تبدیلی کے سوال پر سعید اجمل کا موقف تھا کہ اگر کپتان کی تبدیلی ضرور ہے تو پھر میرے نزدیک ٹیسٹ اور ون ڈے کے لیے بابر اعظم بہترین چوائس ہوسکتے ہیں، کپتان بناتے وقت صرف پرفارمنس کو ذہن میں رکھنا چاہیے، اس وقت بابر اعظم واحد کھلاڑی ہیں جو تینوں فارمیٹ میں شاندار پرفارمنس دے رہے ہیں، اگر کپتان پرفارمر ہوگا تو دوسرے لڑکوں کوبھی تحریک ملے گی کہ وہ بھی اچھے کھیل کا مظاہرہ کریں گے۔ یہ نہیں سوچنا چاہیے کہ کون انگلش زیادہ اچھی بولتا ہے، فٹ بال سمیت کئی کھیلوں میں کھلاڑی اپنی مادری زبان میں بات کرتے ہیں،وقت کے ساتھ انسان سب سیکھ جاتاہے۔

سعید اجمل نے ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کے آغاز کو سراہتے ہوئے اسے ٹیسٹ کرکٹ کے لیے بہترین قدم قرار دیا، ان کی رائے میں لوگ ٹیسٹ کرکٹ سے دور ہوتے جارہے تھے، خاص طورپر پر ایشیائی ممالک میں کھیل کو فروغ ملے گا اور نوجوانوں کی اس میں دلچسپی بھی بڑھے گی۔ انہوں نے محمدعامر کے ٹیسٹ کرکٹ کو خیرباد کہنے کے پاکستان کے لیے جھٹکا قرار دیتے ہوئے کہا اتنی جلدی ایک اہم باولر کی محرومی سے ٹیم کی پرفارمنس متاثر ہوگی۔

فاسٹ بولر حسن علی بھارتی لڑکی کو دل دے بیٹھے

لاہور: شعیب ملک کے بعد ایک اور پاکستانی کرکٹر کے  بھارت کا داماد بننے کا امکان ہے۔

فاسٹ بولر حسن علی ہریانہ کی لڑکی کو دل دے بیٹھے ہیں۔ ذرائع کےمطابق رشتہ طے کرنے کے لیے دونوں خاندانوں میں باقاعدہ رابطہ ہوا

بھارتی لڑکی ایک ایئر لائن میں فلائٹ انجینئر ہے۔ ہاں ہونے پر شادی دبئی  میں اگست کے تیسرے ہفتے ہوسکتی ہے۔ دوسری جانب  فاسٹ بولر حسن علی کا موقف ہے کہ  بات چیت ضرور چل رہی ہے لیکن ابھی  کچھ طے نہیں ہوا۔

واضح رہے کہ حسن علی سے پہلے شعیب ملک کی شادی بھارتی ٹینس کھلاڑی ثانیہ مرزا سے ہوچکی ہے۔

دولت مشترکہ گیمز 2022 میں شوٹنگ ایونٹ نہ ہونے پر بھارت کی بائیکاٹ کی دھمکی

بھارت کی جانب سے دولت مشترکہ گیمز 2022 میں شرکت نہ کرنے کا معاملہ اس وقت مزید شدت اختیار کرگیا جب بھارت کی وزارت کھیل سے ان مقابلوں میں شرکت نہ کرنے کی درخواست کردی۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق انگلینڈ کے شہر برمنگھم میں ہونے والے دولت مشترکہ گیمز 2022 سے شوٹنگ ایونٹ کو نکالنے کے معاملے پر بھارت نے گیمز میں شرکت نہ کرنے کی دھمکی دی تھی۔

خیال رہے کہ دولت مشترکہ گیمز میں شوٹنگ ایونٹ 1966 سے ہر سال منعقد ہوتا رہا ہے تاہم اس سال سہولیات نہ ہونے پر اسے 2022 میں ہونے والے مقابلوں میں شامل نہیں کیا جائے گا۔

اس فیصلے کا اعلان گزشتہ برس ہوا تھا، تاہم بھارتی شوٹنگ فیڈریشن کی جانب سے کھیلوں کی بائیکاٹ کی تجویز پیش کی گئی تھی۔

بائیکاٹ کے حوالے سے انڈین اولمپک ایسوسی ایشن (آئی او اے) کے صدر نریندر بترا نے وزیر کھیل کرن ریجیجو کو خط لکھ کر ملاقات کی خواہش کا اظہار کیا ہے جہاں وہ اپنے فیصلے سے اپنی وزارت کو آگاہ کر سکیں گے۔

نریندر بترا نے لکھا کہ ہم دولت مشترکہ گیمز 2022 میں حصہ لے کر اپنا احتجاج ریکارڈ کروائیں گے۔

اپنے خط میں ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اس کا مشاہدہ کر رہے ہیں کہ کھیل کے جس حصے میں بھارت اپنی گرفت مضبوط کرلیتا ہے اور اچھی کارکردگی دکھاتا ہے تو اس کے قوانین ہی تبدیل کر دیے جاتے ہیں۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ‘ہمیں لگتا ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ اب ہم سخت سوالات کریں اور سخت موقف اختیار کریں۔

واضح رہے کہ آئی او اے کے صدر نریندر بترا اس وقت انٹرنیشنل ہاکی فیڈریشن (ایف آئی ایچ) کے صدر بھی ہیں۔

خیال رہے کہ بھارت نے گزشتہ برس ہونے والے دولت مشترکہ گیمز میں 16 گولڈ میڈلز حاصل کرکے میڈل فہرست میں تیسرے نمبر پر رہا تھا جس میں سے اس نے 7 گولڈ میڈلز شوٹنگ ایونٹ میں حاصل کیے تھے۔

نریندر بترا نے خدشہ ظاہر کیا کہ اگر شوٹنگ کا ایونٹ منعقد نہیں ہوتا تو بھارت 2022 کے مقابلوں میں 5ویں سے 8ویں نمبر پر ہوگا۔

اس کے ساتھ ساتھ بھارتی اولمپک ایسوسی ایشن نے کامن ویلتھ گیمز فیڈریشن (سی جی ایف) کے روانڈا میں ہونے والے جنرل اسمبلی اجلاس میں بھی شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

انضمام الحق اور سرفراز احمد بھی کرکٹ کمیٹی اجلاس میں طلب

چیف سلیکٹر انضمام الحق اور کپتان سرفراز احمد کو بھی کرکٹ کمیٹی اجلاس میں طلب کرلیا گیا۔

چیف سلیکٹر انضمام الحق اور کپتان سرفراز احمد بھی شرکا کمیٹی کو بریفینگ دینے کے ساتھ  آئندہ کے لیے تجاویز دیں گے۔ ذرائع کے مطابق مکی آرتھر کے معاہدے میں اگلے برس ستمبر، اکتوبر کے ٹی ٹوئنٹی تک ورلڈکپ معاہدے میں توسیع دی جاسکتی ہے اور سرفراز احمد کو ٹی ٹوئٹی کرکٹ ٹیم کا کپتان برقرار رکھا جاسکتا ہے۔

ٹیسٹ اور ون ڈے کے لیے نیا کپتان سامنے آسکتا ہے،اس عہدے کے لیے شان مسعود، اسد شفیق اور عماد وسیم میں سے کسی ایک  کی لاٹری نکل سکتی ہے۔ نئی سلیکشن کمیٹی بھی تشکیل دی جائے گی۔ بورڈ حکام کا موقف ہے کہ گرانٹ فلاور اپنے معاملات نمٹانے کے لیے آئِے ہیں، نئی ٹیم انتظامیہ اور سلیکشن کمیٹی  کے بارے میں کرکٹ کمیٹی اپنی سفارشات تیار کرکے دیے گی، جس کے بعد چیئرمین اہم فیصلوں کی منظوری دیں گے۔

شاہد آفریدی نئی ٹی 10 لیگ کے برانڈ ایمبیسیڈر مقرر

کرکٹ لیگز کی تعداد میں اب ایک اور لیگ کا اضافہ ہوگیا۔

شارجہ کے بعد اب قطر میں بھی 10، 10 اوورز کی کرکٹ لیگ ہو ا کرے گی، سابق کپتان شاہد آفریدی کو اس کا برانڈ ایمبیسیڈر مقرر کیا گیا ہے۔ سوشل میڈیا پر شاہد آفریدی نے اس لیگ کی  10 نمبر کی اپنی شرٹ شیئر کرتے ہوئے کہا کہ  مجھے یہ بتاکربہت خوشی ہورہی ہے کہ قطر پریمیئرلیگ کی انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے منظوری دے  دی ہے۔

شاہد آفریدی نے کہا کہ قطر میں مقابلوں سے نہ صرف یہاں کھیل کو فروغ دینے میں مدد ملے گی بلکہ قطر میں سیاحت بھی بڑھے گی۔ شاہد آفریدی نے کرکٹ لیگ کے آرگنائزر کو لیگ کی منظوری ملنے پر مبارک باد  دیتےہوئےنیک خواہشات کا اظہار کیا ہے۔

مکی آرتھر قومی ٹیم کی کارکردگی پر پی سی بی رپورٹ پیش کریں گے

قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر اور بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور لاہور پہنچ گئے.

دونوں کوچز غیر ملکی پرواز کے ذریعے نیشنل کرکٹ اکیڈمی پہنچے، مکی آرتھر اور گرانٹ فلاور ورلڈکپ سمیت قومی ٹیم کی تین سالہ  کارکردگی پر پی سی بی حکام کو اپنی رپورٹ پیش کریں گے، ایم ڈی وسیم خان کی سربراہی میں پاکستانی ٹیم کے مستقبل کا فیصلہ کرنے کے لیے دواگست کو کرکٹ کمیٹی کا اجلاس لاہور میں رکھاگیاہے جس میں ٹیم انتظامیہ ،سلیکشن کمیٹی اور کپتان کے حوالے سے سفارشات تیار کرکے بورڈ سربراہ کے حوالے کی جائیں گے۔

مکی آرتھر اور گرانٹ فلاور کا معاہدہ ورلڈکپ تک تھا، جس کے بعد بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور نے پہلے ہی بورڈ مزید ذمہ داریاں نبھانے سے معذرت کر رکھی ہے تاہم ہیڈکوچ نے مزید کام کرنے کی خواہش کا اظہارکیا ہے۔

Google Analytics Alternative