کھیل

نو آموز آئی لینڈرز کا خوف پاکستان کے اعصاب پر سوار

لاہور: نوآموز آئی لینڈرز کا خوف پاکستان کے اعصاب پر سوار ہوگیا، پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ میں غیر متوقع شکست کھانے والے گرین شرٹس کو سیریز بچانے کے لالے پڑگئے، آج کے مقابلے میں کامیابی کیلیے اپنی غلطیوں کو سدھارنا ہوگا۔

پاکستان نے کراچی میں پہلا ون ڈے میچ بارش کی نذر ہونے کے بعد اگلے دونوں مقابلوں میں کامیابی حاصل کی لیکن بیشتر تجربہ کارکھلاڑیوں کی عدم موجودگی میں بھی نوآموز سری لنکن ٹیم نے غیر متوقع طور پر ڈٹ کر مقابلہ کیا، پہلے میچ میں چھٹی وکٹ کیلیے 177کی شراکت نے میزبان بولرز کی ناک میں دم کیا، دوسرے مقابلے میں بھی مہمان بیٹسمین 300کے قریب ہدف دینے میں کامیاب ہوئے جس کے حصول کیلیے پاکستانی بیٹنگ لائن کو کافی محنت کرنا پڑی۔

ٹی ٹوئنٹی میں عالمی نمبر ون ہونے کی وجہ سے پاکستان کو لاہور میں ہونے والی سیریز میں فیورٹ سمجھا جارہا تھا، شائقین اور مبصرین سب یکطرفہ مقابلے کی توقع کر رہے تھے لیکن آئی لینڈرز نے تینوں شعبوں میں بہترکارکردگی پیش کرتے ہوئے فتح سمیٹی، ہفتہ کو کھیلے جانے والے اس میچ میں پاکستان کے بولرز اننگز کی ابتدا میں سری لنکن بیٹسمینوں پر دباؤ برقرار رکھنے میں قطعی طور پر ناکام ہوئے، دنوشکا گونا تھلاکا کی جارحانہ ففٹی نے مہمان ٹیم کو اچھی بنیاد فراہم کی۔

بعدازاں محمد حسنین کی ہیٹ ٹرک کے باوجود آئی لینڈرز قابل قدر مجموعہ حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے، پاکستان کی بیٹنگ لائن اننگز میں کسی موقع پر بھی حریف کیلیے خطرہ بنتی نظر نہیں آئی، قومی ٹیم میں کم بیک کرنے والے احمد شہزاد اور عمر اکمل نے سخت مایوس کیا، بابر اعظم کی جلد رخصتی نے بھی پاکستان کی فتح کے امکانات کم کردیے، سری لنکن بولرز نے کنڈیشنز کا بہترین استعمال کرتے ہوئے عالمی نمبر ون ٹیم کو حیران اور پریشان کیا۔

دوسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں شکست کے ساتھ سیریز بھی گرین شرٹس کے ہاتھ سے نکل جائے گی، تیسرے میچ کو بے مقصد ہونے اور اور اپنی ساکھ کو بچانے کیلیے پاکستان کو سخت محنت کرنا پڑے گی، بولر کو ابتدا سے اننگز کے اختتام تک اپنی لائن اور لینتھ برقرار رکھتے ہوئے حریف ٹیم کے نوآموز لیکن باصلاحیت بیٹسمینوں کو بڑے اسٹروکس کھیلے سے روکنا ہوگا، دوسری جانب پاکستانی بیٹنگ لائن کو بھی دباؤ سے نکلنے کا سخت چیلنج درپیش ہے۔

کپتان سرفراز احمد نے پہلے میچ میں شکست کے بعد پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ ناکامی کے باوجود کھلاڑیوں کو موقع دینے کے حق میں ہیں،کپتان کی جانب سے عندیہ دیے جانے کے بعد پلیئنگ الیون میں بڑی تبدیلیوں کا زیادہ امکان نہیں اگر دوسرا موقع ملتا ہے تو کم بیک پر پرفارم نہ کرپانے والے احمد شہزاد اور عمراکمل سخت دباؤمیں ہوں گے، پاکستان کی امیدوں کا مرکز بابر اعظم ہوں گے، سرفراز احمد نے بھی 24 رنز ضرور بنائے لیکن اس دوران بھی وہ فارم کے متلاشی نظر آئے۔

تینوں آل راؤنڈرز عماد وسیم، شاداب خان اور فہیم اشرف کو بیٹنگ اور بولنگ دونوں میں اعتماد بحال کرنا ہوگا، محمد عامر کو بھی اپنے تجربے کا بہترین استعمال کرتے ہوئے ٹیم کیلیے کارکردگی دکھانا ہوگی، اپنی پیس پاور کی بدولت محمد حسنین ایک بار پھر امیدوں کا مرکز ہوں گے۔

اتوار کو دونوں ٹیموں نے قذافی اسٹیڈیم میں پریکٹس کرتے ہوئے اپنی صلاحیتوں کو نکھارنے کا سلسلہ جاری رکھا، سری لنکن ٹیم نے فٹبال کھیلتے ہوئے اچھا وارم اپ کرنے بعد بیٹنگ اور بولنگ پریکٹس پر بھی بھرپور توجہ دی۔رات کو 7 بجے اسٹیڈیم آمد کے بعد پاکستان ٹیم نے بھی وارم اپ کے بعد نیٹ پریکٹس کا آغاز کیا۔

ہیڈ کوچ و چیف سلیکٹر مصباح الحق نے بیٹسمینوں کا فٹ ورک بہتر بنانے پر توجہ مرکوز رکھی، اونچے اسٹروکس کھیلتے ہوئے سامنے آنے والی خامیوں کی بھی نشاندہی کی، ایک الگ نیٹ میں اسپنرز کی گیندوں پر پریکٹس کا سلسلہ بھی جاری رہا، وقار یونس نے بولرز کی لائن لینتھ بہتر بنانے کیلیے کام کیا، اوس کے پیش نظر بولنگ کوچ نے بالٹی قریب رکھتے ہوئے بولرز کو پانی سے بھیگی گیندیں کروانے کی مشق کروائی۔

 

جتنی بھی تنقید ہو کھلاڑیوں کو مناسب کھیلنے کا موقع دوں گا، ہیڈکوچ

لاہور: قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق نے کہا ہے کہ مجھ پر جتنی بھی تنقید ہو کھلاڑیوں کو مناسب کھیلنے کا موقع دوں گا۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مصبا ح الحق نے تسلیم کیا کہ ہم نے اچھی کرکٹ نہیں کھیلی، پہلے ٹی 20 میچ کے ابتدائی چھ اوورز میں ہماری بیٹنگ اور بالنگ فلاپ ہوئی، ہم نے غلطیاں کی ہیں اور سری لنکن نے اچھی کرکٹ کھیلی ہے فیلڈنگ کراچی میں اچھی نہیں تھی لیکن کل بہتر فیلڈنگ ہوئی ہے۔

مصبا ح الحق نے کہا کہ سری لنکا جب آئی تھی تو لوگ  کہہ رہے تھے سب نئے پلیئر کھلا دیں، ہم بڑے کلیئر ہیں کس کھلاڑی کو کھیلانا ہےاور کوشش کریں گے کہ نئے کھلاڑیوں کو زیادہ موقع ملے۔احمد شہزاد اور عمر اکمل کی واپسی سے متعلق ہیڈکوچ نے کہا کہ عمر اکمل سے متعلق کہا جارہا تھا کہ اس کو چانس نہیں مل رہا جب کہ احمد شہزاد کی پی ایس ایل میں کارکردگی بہت اچھی تھی، احمد شہزاد کی طرح جتنے بھی کھلاڑی ہیں سب کے ساتھ انصاف کرنا چاہئے، کھلاڑی کو مناسب مواقع دینے کے بعد ڈراپ کرنا چاہئے، جتنی بھی تنقید ہو کھلاڑیوں کو مناسب کھیلنے کا موقع دوں گا۔

وسیم اکرم سری لنکنزکوسوئنگ کا سبق پڑھائیں گے

کولمبو: وسیم اکرم اب سری لنکن بولرز کو سوئنگ کا سبق پڑھائیں گے، آئی لینڈ بورڈ کی جانب سے پاکستان کے سابق اسٹار کی خدمات حاصل کیے جانے کا امکان ہے۔

سابق پاکستانی اسٹار فاسٹ بولر وسیم اکرم کی جانب سے سری لنکن پیسرز کو سوئنگ بولنگ کے اسرارورموز سکھائے جانے کا امکان ہے، بورڈ ان کی خدمات حاصل کرنے پر سنجیدگی سے غور کرنے لگا، جلد ہی باقاعدہ بات چیت شروع ہونے کا بھی امکان ہے، اگر اس حوالے سے کوئی ڈیل ہوئی تو پھر وسیم مختصر وقت کیلیے سری لنکا کے کوچز اور سینئر کھلاڑیوں کے ساتھ سیشن کریں گے۔

وہ پہلے ہی اس حوالے سے دلچسپی ظاہر کرتے ہوئے واضح کرچکے کہ اگر ایس ایل سی اپنے پیس بولنگ ڈپارٹمنٹ میں بہتری کیلیے ان کی خدمات حاصل کرنا چاہتا ہے تو وہ بھی اس کیلیے تیار ہیں۔  سری لنکا کے موجودہ فاسٹ بولرز کی کارکردگی زیادہ اچھی نہیں، خاص طور پر وہ اس وقت اچھا پرفارم کرنے میں ناکام رہتے ہیں جب اشد ضرورت ہوتی ہے۔

سری لنکا اگلے ورلڈ کپ اور ٹیسٹ چیمپئن شپ کے تناظر میں بہترین کھلاڑی تیار کرنا چاہتا ہے، اسی لیے وسیم اکرم کے ساتھ انگلش پاور ہٹنگ کوچ جولین ووڈکی بھی خدمات حاصل کرنے کا خواہاں ہے، وہ ہارڈ ہٹرز کی تکنیک کو بہتر بنانے میں کافی مہارت رکھتے ہیں، ان سے بھی بات چیت کا عمل جلد شروع کیے جانے کا امکان ہے۔

 

عمر اکمل سب سے زیادہ صفر پرآؤٹ ہونے والے پاکستانی بیٹسمین بن گئے

لاہور: عمر اکمل پاکستان کی جانب سے سب سے زیادہ مرتبہ صفر پرآؤٹ ہونے والے بیٹسمین بن گئے۔

سری لنکا سے لاہور میں پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ کے دوران انھوں نے فاسٹ بولر نوان پردیپ کی پہلی ہی گیند پر وکٹ گنوا دی،83ویں میچ میں یہ نواں موقع تھا جب وہ کھاتہ نہ کھول پائے،ان سے قبل سابق کپتان شاہد خان آفریدی 99 میچز میں 8 مرتبہ صفر پر آؤٹ ہوئے تھے۔

پہلے ٹی ٹوئنٹی میں سری لنکا نے پاکستان کو شکست دیدی

لاہور: پہلے ٹی ٹوئنٹی میں سری لنکا نے پاکستان کو 64 رنز سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز میں ایک-صفر کی برتری حاصل کرلی۔

قذافی اسٹیڈیم لاہور میں کھیلے گئے میچ میں سری لنکا کے 166 رنز کے تعاقب میں  گرین شرٹس کے بلے بازوں کے ہاتھ پاؤں پھول گئے، کم تجربہ کار ٹیم کے سامنے قومی ٹیم کی بیٹنگ لائن ریت کی دیوار ثابت ہوئی اور پوری ٹیم 101 رنز پر پویلین لوٹ گئی۔

ہدف کے تعاقب میں گرین شرٹس نے بیٹنگ کا آغاز کیا تو ٹاپ آرڈر ناکام ہوگیا، پانچویں اوور میں گرین شرٹس کے 3 مستند کھلاڑی صرف 22 کے مجموعے پر پویلین لوٹ گئے، طویل عرصے بعد ٹیم میں واپس آنے والے احمد شہزاد اور عمر اکمل ایک بار پھر شائقین کو مایوس کر گئے، احمد شہزاد 4 اور عمر اکمل صفر پر چلتے بنے جب کہ بابر اعظم 13 رنز پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

چوتھی وکٹ پر کپتان سرفراز احمد اور افتخار احمد نے 46 رنز جوڑ کر کچھ مزاحمت کی  لیکن ٹیم کو مکمل تباہی سے نہ بچا سکے، آؤٹ آف فارم سرفرا ز احمد اس بار بھی کوئی کارنامہ سرانجام نہ دے سکے اور 24 رنز بنا کر چلتے بنے جب کہ افتخار احمد 25 رنز بنا کر ٹاؤ اسکورر رہے۔

پاکستان کے آخری پانچ کھلاڑی صرف اسکور میں صرف 25 رنز کا ہی اضافہ کرسکے، آصف علی 6، عماد وسیم 7، فہیم اشرف 8، شاداب خان 6 اور محمد عامر ایک اسکور پر چلتے بنے۔سری لنکا کی جانب سے اوڈانا اور پرادیپ نے 3،3 جب کہ ڈی سلوا نے 2 اور راجیتھا نے ایک وکٹ حاصل کی۔

قبل ازیں قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کو ترجیح دیتے ہوئے مہمان ٹیم کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔ مہمان ٹیم کے اوپنرز نے جارحانہ بیٹنگ کرتے ہوئے 84 رنز کا آغاز فراہم کیا، گناتھلاکا نے 38 گیندوں پر 57 رنز بنائے، ان کی باری میں 8 چوکے اور ایک چھکا شامل تھا، دوسری وکٹ پر راجاپکسایا اور فرنینڈو نے 36 رنز جوڑے ، فرنینڈو 33 رنز بنا کر رن آؤٹ ہوئے جب کہ تیسری وکٹ راجاپکسایا کی صورت میں گری جو 32 رنز بنا کر حسینین کی گیند پر ایلبی ڈبلیو ہوئے۔

انیسویں اوور میں 153 کے مجموعے پر محمد حسنین نے مسلسل دو گیندوں پر شاناکا اور جایاسوریا کی وکٹیں حاصل کرکے رنز کی رفتار کو بریک لگا دی اور آئی لینڈرز کو مقررہ اوورز میں 5 وکٹوں پر 165 رنز پر اکتفا کرنا پڑا جب کہ اوڈانا 5 اور ڈی سلوا 7 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

گرین شرٹس کی جانب سے محمد حسنین سب سے کامیاب بولر قرار پائے جنہوں نے 3 وکٹیں حاصل کیں جب کہ شاداب خان کے حصے میں ایک وکٹ آئی۔

اسپیڈ اسٹار محمد حسنین ہیٹ ٹرک کرنے والے کم عمر ترین بولر بن گئے

لاہور: پاکستان کے ابھرتے ہوئے اسٹار پیسر محمد حسنین انٹرنیشنل کرکٹ میں ہیٹ ٹرک کرنے والے سب سے نوجوان کھلاڑی بن گئے۔

19 سالہ فاسٹ بولر نے یہ کارنامہ سری لنکا کے خلاف  پہلے ٹی ٹوئنٹی میں  سر انجام دیا، محمد حسنین نے  اننگز کے 16 ویں کی آخری گیند پر راجا پکسایا کو چلتے کیا تو اپنے اگلے اوور کی ابتدائی دو گیندوں پر دو کھلاڑیوں کو آؤ ٹ کرک ہیٹ ٹرک مکمل کی۔

نوجوان بولر نے اپنے 4 اوورز کے کوٹے میں 37 رنز کے عوض 3 وکٹیں حاصل کیں اور وہ اس میچ میں قومی ٹیم کی جانب سے سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے بولر بھی قرار پائے۔

محمد حسنین آج ٹی ٹوئنٹی کیریئر کا دوسرا میچ کھیل رہے تھے ،انہوں نے ٹی ٹوئنٹی ڈیبیو رواں سال 5 مئی کو انگلینڈ کے خلاف کارڈف کے میدان پر کیا تھا۔

ہمارے پاس ایسے کھلاڑی ہیں جو اکیلے میچ جتواسکتے ہیں، سرفراز احمدc

لاہور: قومی کپتان سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں کوئی بھی ٹیم کمزور نہیں ہوتی،شکست کے باوجودقومی ٹیم اگلے میچ میں کم بیک کرے گی،ہمارے پاس ایسے کھلاڑی موجود ہیں جو اکیلے بھی میچ جتواسکتے ہیں،شائقین کو آئندہ  بھی بہترین میچز دیکھنے کو ملیں گے۔

سری لنکا کے ہاتھوں شکست کے بعد قذافی اسٹیڈیم میں پریس کانفرنس میں سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ آئی لینڈرز کے لیے آج کا دن اچھا جبکہ ہمارا برا تھا ،پہلے بھی کہہ چکا ہوں ٹی ٹونٹی ٹیم میں کوئی ٹیم آسان نہیں،سری لنکن ٹیم نے ہم سے باؤلنگ میں  بہترین کارکردگی دکھائی۔

کپتان کا کہنا تھا کہ عمر اکمل اور احمد شہزاد نے ماضی میں اچھا کھیلا ہے، امید ہے اگلے میچوں میں دونوں کھلاڑی اچھا کھیلیں گے،ہمارے پاس ایسے کھلاڑی ہیں جو اگلے میچوں میں ٹیم کو جتوا سکتے ہیں،احمد شہزاد کو بطور اوپنر کھلانا تھا جس وجہ سے فخر زمان کو ریسٹ کرایا،جو لڑکے ٹیم میں کھلائے ہیں ان کو پورا موقع دیا جائے گا،شاداب ایسا باؤلر ہے جس نے ماضی میں اچھا کھیلا۔

سرفراز احمد نے عمر اکمل اور احمد شہزاد سے امیدیں باندھ لیں

لاہور: پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ سری لنکن ٹیم کو آسان نہیں لیں گے بلکہ بھرپور تیاریوں کے ساتھ میدان میں اتریں گے اور سیریز اپنے نام کرنے کی کوشش کریں گے۔

قذافی سٹیڈیم لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی طرز کی کرکٹ میں کسی بھی ٹیم کو آسان نہیں لیا جاسکتا، چاہے وہ آٹھویں نمبرکی ٹیم ہو یا نمبر ون، آئی لینڈرز نے ایک روزہ سیریز کےدوران عمدہ کم بیک کیا اور بعض مواقوں پر گرین شرٹس  کو ٹف ٹائم  بھی دیا۔

انہوں نے کہا کہ آگے جاکر پاکستانی ٹیم نے ٹی ٹوئنٹی مقابلوں میں زیادہ شرکت کرنی ہے ان میچز میں عوامی توقعات پر پورا اترنے کے لیے  تین چار کھلاڑیوں کا دوبارہ کم بیک بھی ہوا ہے، احمد شہزاد اور عمر اکمل کو ٹیم میں واپس آنے پر مبارکباد دیتا ہوں، دونوں ایسے کھلاڑی ہیں جو اپنی کارکردگی سے پاکستانی ٹیم کو جتوا سکتے ہیں، میں ان سے اچھی کارکردگی کی امید رکھتا ہوں۔

سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ کوشش ہوگی کہ ورلڈ کپ سے قبل تمام کھلاڑیوں کے ان کے نمبروں پر آزمایا لیا جائے۔  ایک سوال پر  ان کا کہنا تھا کہ مقابلے رات کو ہونے کی وجہ سے وکٹ پر اوس موجود ہوگی جس کی وجہ سے ٹاس کا کردار بڑا اہم ہوگا ۔

کپتان سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ سکیورٹی کی وجہ سے شائقین کو مشکلات پیش آسکتی ہیں لیکن سوچنے محسوس کرنے کی بات یہ ہے کہ یہ حفاظتی انتظامات ہمارے ہی لئے ہیں، یہ وقت گزر گیا تو آگے حالات بہت زیادہ بہتر ہو جائیں گے، میری شائقین کرکٹ سے درخواست ہے کہ وہ بڑی تعداد میں اسٹیڈیم کا رخ کریں اور دونوں ٹیموں کو بھرپور سپورٹ کریں۔ایک سوال پر سرفراز احمد نے کہا کہ سیریز کے دوران میں چوتھے نمبر پر بیٹنگ کروں گا۔

Google Analytics Alternative