کھیل

سی بی کے تحت نئے نظام میں ڈومیسٹک کرکٹ اچھی ہورہی ہے، عابد علی

کراچی: قائد اعظم ٹرافی میں بلوچستان کے خلاف ڈبل سنچری جڑنے والے سندھ ٹیم کےعابد علی نے کہا ہے کہ 249 رنز کا بہترین انفرادی اسکور کرنے پر بہت خوش ہوں۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عابد علی نے کہا کہ ٹیم پلان پر عمل کیا اور اچھی کارکردگی رہی، سی بی کے تحت نئے نظام میں ڈومیسٹک کرکٹ اچھی  ہورہی ہے اور پروفیشنل کھلاڑی میدان میں ہیں۔

پاکستان کرکٹ ٹیم میں جگہ بنانے کی کوشش میں مصروف عابد علی نے کہا کہ میرا کام  پرفارمنس دینا ہے اب اچھا آغاز ملا ہے، کوشش کروں گاکہ کارکردگی برقرار رکھوں،کنڈیشن جیسی بھی ہو ہمیں اچھا کھیلنا ہے،میری خواہش یہی ہے کہ ہر فارمیٹ کی کرکٹ میں پاکستان کی نمائندگی کروں، کھیل کے ساتھ فٹنس پر بھرپور کام کررہا ہوں،سیزن کا آغاز اور نیا سسٹم بنا ہے، امید کرتا ہوں اچھی کرکٹ ہوگی۔

اپنا بیٹنگ نمبر طے کرلیا ہے کوشش ہوگی اپنے نمبر پر ہی کھیلوں، سرفراز احمد

کراچی: قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ اپنا نمبر سیٹ کرلیا ہے اب کوشش ہو گی کہ اپنے نمبر پر ہی کھیلوں۔

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ ہیڈکوچ مصباح الحق کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں مل جل کر کام کریں گے جب کہ بابر کے ساتھ بھی اچھے تعلقات ہیں وہ سلپ کی فیلڈ پر میرے ساتھ ہی ہوتے ہیں میری پوری کوشش ہوگی کہ سری لنکا کیخلاف اچھا کھیل پیش کریں۔

سرفراز احمد نے کہا کہ ورلڈ کپ کے دوران پی سی بی کے ساتھ اچھے تعلقات رہے ، پی سی بی اور کپتان میں کمیونکیشن اچھی ہونی چاہیے، کپتان کتنے ٹائم کیلیے ہونا چاہیے یہ پی سی بی کا فیصلہ ہے اور پی سی بی کا فیصلہ ہوگا کہ وہ جس کو بھی ٹیسٹ ٹیم کا کپتان بنائے۔

کپتان کا مزید کہنا تھا کہ عابد علی اور خرم منظور نے اچھا کھیل پیش کیا، میں نے اپنا نمبر بھی سیٹ کیا ہے کوشش ہو گی کہ اپنے نمبر پر ہی کھیلوں۔

پی سی بی کا دہرا معیار؛ محمد حسنین کو کیربیئن لیگ کے لئے فائنل تک چھٹی

لاہور: قائداعظم ٹرافی میں قومی کرکٹرز کی شمولیت کو یقینی بنانے کے دعوی دار پاکستان کرکٹ بورڈ کا دہرا معیار سامنے آگیا۔ بورڈ حکام ایک طرف ریجنل اور ڈیپارٹمنٹل کرکٹ ختم کرکے 6 صوبائی ٹیموں کے نظام کو متعارف کرواکر ملکی کرکٹ میں کوالٹی کرکٹ لانے کا دعوی کررہے ہیں تو دوسری طرف اپنے بنائے ہوئے قواعد کو پش پشت ڈال رہے ہیں۔

پی سی بی حکام نے موقف اختیار کیا تھا کہ قائد اعظم ٹرافی میں تمام کرکٹرز لازمی شرکت کریں گے لیکن حقیقت میں ایسا نہیں ہورہا۔ دسمبر 2018 میں ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لینے والے محمد حفیظ کا نام حیران کن طور پر سدرن پنجاب ٹیم میں شامل کیا گیا ، جس پر سابق کپتان نے بورڈ حکام کو یاد دلایا کہ وہ ریڈ بال کرکٹ چھوڑ چکے، اب ان کا قائد اعظم ٹرافی میں کھیلنا درست نہیں ہوگا، وہ چاہتے ہیں کہ ان کی جگہ کسی نوجوان کرکٹر کو موقع دیا جائے۔

اب ایسی ہی ایک اور مثال بھی سامنے آئی ہے، ورلڈکپ کے بعد 27 سالہ محمد عامر کو ریڈ بال فارمیٹ سے رخصت کی اجازت دینے والے بورڈ حکام نے ٹیسٹ کرکٹ کو خیرباد کہنے کے خواہش مند فاسٹ بولر وہاب ریاض کا ٹرافی میچوں میں شرکت کے بجائے آرام کرنے کا مطالبہ تسلیم کیا۔ دوسری جانب نوجوان فاسٹ بولر محمد حسنین کو لیگ کھیلنے کی کھلی اجازت دے کر اپنے ہی وضع کردہ قواعد کو مذاق بنادیا ہے۔

کراچی، لاہور اور ایبٹ آباد سینٹرز پر قائد اعظم ٹرافی میچوں کا آغاز ہوچکا ہے لیکن سندھ ٹیم کو نوجوان فاسٹ بولر محمد حسنین کی خدمات حاصل نہیں، جو اس وقت کیئربین پریمئرلیگ کھیلنے میں مصروف ہیں، حیدر آباد کے اسپیڈ اسٹار کو ملکی کرکٹ کا حصہ بنا کر اپنی خامیوں کو دور کرنے کا موقع فراہم کرنے کے بجائے پی سی بی حکام نے انہیں سی پی ایل کا پورے سیزن کھیلنے کا این او سی دے رکھاہے۔

ذرائِع کے مطابق پی سی بی حکام نے ابھی تک محمد حسنین کو قائد اعظم ٹرافی کے لیے واپس آنے کی کوئی ہدایت جاری نہیں کیں ، ان کو جاری کردہ این او سی کے تحت اگر ان کی ٹیم فائنل تک رسائی پانے میں کامیاب رہی تو وہ پھر وہ 12 اکتوبر تک لیگ میں شرکت کرسکتے ہیں۔ پاکستان میں فاسٹ بولر پہلے ہی ریڈ بال کرکٹ سے جان چھڑا کر لیگز کو ترجیح دے رہے ہیں ایسے میں نوجوان فاسٹ بولر کو خود لیگ کھیلنے کی کھلی اجازت دے کر بورڈ دوسرے بولرز کی بھی حوصلہ افزائی کررہا ہے ۔

پی سی بی ترجمان نے رابطہ کرنے پر محمد حسین کولیگ کے لیے پورے سیزن کے لیے این اوسی جاری ہونے کی تصدیق کی تاہم ان کا کہنا تھا کہ اگر سری لنکا کے خلاف سیریز میں ان کا نام ٹیم میں آتا ہے تو پھر ان کو واپس آنا پڑے گا۔

سری لنکا کیخلاف ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کیلیے سرفراز احمد کپتان برقرار

 اسلام آباد: پاکستان کرکٹ بورڈ نےسری لنکا کے خلاف سیریز کے لیے سرفراز احمد کو قومی کرکٹ ٹیم کا کپتان برقرار رکھنے کا اعلان کردیا۔

ہیڈکوچ مصباح الحق کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین پی سی بی نے سری لنکا کے خلاف ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی میچز کے لیے قومی ٹیم کے کپتان کا اعلان کیا،  ہوم سیریز کے لیے بورڈ اور کوچ نے سرفراز احمد پر بھرپور اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کپتان مقرر کیا ہے جب کہ ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی کے لیے بابر اعظم کو نائب کپتان بنایا گیا ہے۔

چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ سری لنکا کے خلاف سیریز کے لیےکپتان سرفراز احمد ہی رہیں گےجب کہ سری لنکا کے خلاف سیریز کے لیے ٹیم کا اعلان 23 ستمبر کو کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہمارافیصلہ واضع ہےکہ لنکا کےخلاف میچ پاکستان میں ہی ہوں گے، پوری امید ہے سری لنکن ٹیم پاکستان کا دورہ کرے گی جب کہ ٹیم مینجر کا فیصلہ ہو گیا اور ایک دو روز میں اعلان ہو گا۔

اس موقع پر ہیڈ کوچ مصباح الحق کاکہنا تھا کہ سرفراز احمد اور بابر اعظم کو مبارک باد دیتا ہوں، سرفراز احمد کی کپتانی میں ٹیم کی کارکردگی بری نہیں رہی،سرفراز احمد کی اپنی پرفارمنس اچھی رہی تو ٹیم اچھا کھیلے گی، سرفرازاپنےآپ کو انڈراسٹیمٹ نہ کرے مجھے اس کےساتھ مل کرکام کرناہے۔

سرفراز احمد کی قیادت میں قومی ٹیم 4 ٹیسٹ، 26 ایک روزہ اور 29 ٹی ٹونٹی میچز میں کامیابی حاصل کرچکی ہے، وہ  2017 سے تینوں فارمیٹ میں قومی کرکٹ ٹیم کی قیادت کررہے ہیں، بابر اعظم آئی سی سی ٹی ٹونٹی رینکنگ میں پہلے، ایک روزہ کرکٹ میں تیسرے اور ٹیسٹ میں 13ویں بہترین بیٹسمین ہیں۔

نہیں معلوم سری لنکا ٹیم کے پاکستان نہ آنے کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے، سرفراز احمد

کراچی: قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ پاکستان میں سیکورٹی کا کوئی ایشو نہیں اور سری لنکا ٹیم کو کہوں گا وہ یہاں آکر کھیلے۔

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سندھ کرکٹ ٹیم کے کپتان کرکٹر سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ ہماری ٹیم روزانہ پریکٹس کررہی ہے، ڈومیسٹک اسٹرکچر تبدیل ہوا ہے اس سسٹم کو وقت دینا ہوگا، اس سے مستقبل میں فائدہ ہوگا جب کہ جن کھلاڑیوں نے ریٹائرمنٹ کا فیصلہ کیا ہے ان کا ذاتی فیصلہ ہے اور اس بارے میں وہی بتاسکتے ہیں، ٹیسٹ کرکٹ مسلسل 5 دن ہوتی ہے یہ آسان نہیں ہوتی۔

سرفراز احمد نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے انٹرنیشل کرکٹ کی واپسی کیلیے بہت کوششیں کی ہیں، آئی سی سی اور دیگر ممالک کے بورڈز کو پاکستان کو سپورٹ کرنا چاہیے، ہم نے دوسرے ممالک کو سپورٹ کیا دوسرے ممالک بھی پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی واپسی کیلئے کردار ادا کریں۔

قومی ٹیم کے کپتان نے کہا کہ نہیں معلوم سری لنکا ٹیم کے پاکستان نہ آنے کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے مگر سری لنکا میں دہشتگردی کا بڑا واقعہ ہوا اس کے باوجود ہماری انڈر 19 ٹیم وہاں گئی اور اچھے کی امید ہےرکھنی چاہے امید ہے سری لنکا ٹیم کے ساتھ شیڈول کے مطابق ہو۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کبھی کبھار بال خراب ہو جاتا ہے کوکا بورا کا استعمال اچھا ہے۔

ٹیسٹ کپتان پر پی سی بی کا جو فیصلہ ہوگا منظور ہوگا، بابراعظم

بابراعظم کا کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کی ٹیسٹ کپتان پر پی سی بی کا جو فیصلہ ہو گا منظور ہو گا۔

قائد اعظم ٹرافی سینٹرل پنجاب کے کپتان بابر اعظم کی پریس کانفرنس میں بات کرتے ہوئے بابر اعظم نے کہا ہے کہ فرسٹ کلاس کا نیا سٹرکچر آیا ہے تمام کھلاڑی اس میں کھیلنے کے لئے بے تاب ہیں، امید ہے کہ پاکستان کرکٹ میں بہتری آئے گی، چار روزہ کرکٹ میں ایڈجسٹ ہونے کے لئے تھوڑا وقت لگے گا۔ سینئر کھلاڑیوں کے ہوتے کپتانی کرنے کا کوئی دباو نہیں ہوگا۔قومی ٹیم کی کپتانی کے حوالے سے بورڈ کا جو بھی فیصلہ ہو قبول ہوگا۔

وہاب ریاض کا طویل دورانیے کی کرکٹ سے آرام کا فیصلہ

لاہور:قومی ٹیم کے فاسٹ بولر وہاب ریاض غیر معینہ مدت تک کےلیے طویل دورانیے کی کرکٹ سے آرام کریں گے۔

پیسر ہفتہ کو شروع ہونے والی قائد اعظم ٹرافی سے دستبردار ہوگئے ہیں، ان کا کہنا ہے کہ فرسٹ کلاس کرکٹ سے غیر معینہ مدت تک کےلیے آرام کرنے کا فیصلہ کیا ہے، فیصلہ اپنی گزشتہ کارکردگی کو سامنے رکھ کر کیا ہے، محدود اوورز کی کرکٹ کھیلتا رہوں گا، اس دوران مجھے اپنی فٹنس جانچنے کا بھی موقع ملے گا،جب خود کو طویل دورانیئے کی کرکٹ کھیلنے کا اہل سمجھوں گا تو اپنی دستیابی ظاہر کر دوں گا۔

وہاب ریاض نے کہا کہ پی سی بی کی خواہش تھی کہ میں طویل دورانیئے کی کرکٹ جاری رکھوں، بورڈ کو اپنے فیصلے سے آگاہ کر دیا ہے،میرا موقف سمجھنے پر پی سی بی کا مشکور ہوں۔

پرفارمنس کے ساتھ فٹنس اور ڈسپلن ٹیم میں آنے کی واحد کنجی ہے، مصباح الحق

 لاہور: قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق کا کہنا ہے کہ کھلاڑیوں کے لئے پرفارمنس کے ساتھ فٹنس اور ڈسپلن قومی ٹیم میں آنے کی واحد کنجی ہے۔

قائد اعظم ٹرافی کے لیے ٹیموں کا کیمپس کا آغاز ہوگیا ہے جس کے پہلے مرحلے میں تمام کرکٹرز کے قذافی اسٹیڈیم میں فٹنس ٹیسٹ لیے گئے۔س کے بعد نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں سینٹرل پنجاب کے کیمپ میں قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق نے لیکچر دیا۔

مصباح الحق کا کہنا تھا کہ پرفارمنس کے ساتھ فٹنس اور ڈسپلن قومی ٹیم میں آنے کی واحد کنجی ہے، نئے سسٹم اور نئے طریقہ کار کے مطابق خود کو ڈھالیں۔ جس چیز کی بھی پریکٹس کریں اس کو پریکٹس برائے پریکٹس سمجھ کر نہ کریں بلکہ مکمل جان ماریں اور یہ ذہن میں رکھیں کہ میں نے اس خامی کو بہتر کرنا یے۔ یہ سوچ ہو گی تو پرفارمنس بھی بہتر ہوگی اور سب خوش بھی ہوں گے۔

ہیڈ کوچ نے واضح کیا کہ ٹیم کے دروازے سب کے لیے کھلے ہیں۔ جو فٹنس، ڈسپلن کے ساتھ کارکردگی میں سب سے آگے ہوگا وہ ہماری ترجیحات میں شامل ہوگا۔ مصباح نے کرکٹرز کو تلقین کی کہ محنت کو اہنی عادت بنالیں۔ کوئی مسئلہ ہوتو کوچز سے بات کریں اور مجھ سے رابطہ کریں۔

Google Analytics Alternative