کھیل

تشارا پریرا پاکستان کے خلاف ون ڈے سیریز نہیں کھیلیں گے

سری لنکا کے تشارا پریرا پاکستان کے خلاف ون ڈے سیریز نہیں کھیلیں گے

۔پاکستان سری لنکا ون ڈے میچز 27 ، 29 ستمبر اور 2 اکتوبر کو کراچی میں کھیلے جائیں گے جب کہ ٹی ٹونٹی میچز 5،7،9، اکتوبر کو لاہور میں شیڈول ہیں تاہم سری لنکن آل راؤنڈر تشارا پریرا دورہ پاکستان کے لیے دستیاب نہیں ہوں گے۔

اطلاعات کے مطابق ستمبر کے دوسرے ہفتے میں  پاکستان کا دورہ کرنے والی سری لنکن  ٹیم کا اعلان متوقع ہے جس کے لیے بورڈ کرکٹرز سے رضامندی لینے میں مصروف ہے تاہم تشارا پریرا نے دورہ پاکستان کے بجاے کیربئین پریمئیر لیگ کو ترحیح دی۔

واضح رہے تشارا پریرا  اس سے پہلے بھی پاکستان آنے کے حوالے سے ہچکچاہٹ کا شکار تھے۔

 

 

پی سی بی کے نئے ڈومیسٹک کرکٹ اسٹرکچر کا افتتاح

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے نئے آئین کے تحت 20-2019 کے ڈومیسٹک کرکٹ اسٹرکچر کی رونمائی کردی، جہاں 6 ٹیموں کے علاوہ میچوں میں کوکابورا گیند استعمال کرنے کا بھی اعلان کردیا گیا۔

لاہور میں چیئرمین پی سی بی احسان مانی، چیف ایگزیکٹو وسیم خان اور دیگر نے ڈومیسٹک کرکٹ کے نئے اسٹرکچر کی تقریب میں شرکت کی۔

پی سی بی کی جانب سے جاری بیان کے مطابق نئے اسٹرکچر سے فرسٹ کلاس کرکٹ میں بہتری آئے گی جس کے نتیجے میں عالمی سطح پر کامیابیوں کے حصول میں مدد ملے گی۔

بورڈ کا کہنا تھا کہ ‘نئے اسٹرکچر میں کلب کرکٹ کو اہمیت دی گئی ہے جس سے کرکٹ کھیلنے کے لیے ایک بہترین ماحول کی فراہمی کے ساتھ ساتھ اعلیٰ کارکردگی دکھانے والے کھلاڑیوں کو انعامات سے نوازا جائے گا’۔

بیان میں کہا گیا کہ ‘نئے اسٹرکچر میں سابق کھلاڑیوں اور کوالیفائیڈ کوچز کو روزگار کے مواقع فراہم کیے جائیں گے، جس سے قومی اور بین الاقوامی کرکٹ کے معیار میں پائے جانے والے فرق کو کم کرنے میں مدد ملے گی’۔

خیال رہے کہ وفاقی حکومت نے پی سی بی کے نئے آئین کی منظوری 9 اگست کو دی تھی جس کے تحت 16 ریجنز کو 6 ایسوسی ایشنز میں ضم کردیا گیا تھا۔

بورڈ کے اعلامیے کے مطابق ‘نئے اور باصلاحیت نوجوان کھلاڑیوں کے لیے ڈومیسٹک اسٹرکچر کو 3 مختلف درجوں میں تقسیم کیا گیا ہے’۔

پی سی بی نے نوجوان کھلاڑیوں کے حوالے سے کہا کہ ‘پہلے درجے میں 90 سٹی کرکٹ ایسوسی ایشنز، اسکول اور کلب کرکٹ کا انعقاد کریں گی جس کے بعد ہر سٹی کرکٹ ایسوسی ایشن اپنی اپنی کرکٹ ٹیمیں تیار کرے گی’۔

دوسرے درجے میں ‘سٹی کرکٹ ٹیمیں اپنی متعلقہ کرکٹ ایسوسی ایشن کے تحت انٹرا سٹی مقابلوں میں شرکت کریں گی، تیسرے درجے میں انٹرا سٹی کرکٹ مقابلوں میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے کھلاڑیوں کو متعلقہ ایسوسی ایشن میں شامل کیا جائے گا’۔

نئے ڈومیسٹک نظام کے تحت کھلاڑیوں کو معیاری کرکٹ اور کھیل میں جدت لانے کے ضروری ہنر سکھانے کے لیے ملک بھر میں 6 ہائی پرمارمنس سینٹرز قائم کردیے جائیں گے۔

پی سی بی نے ‘نئے ڈومیسٹک کرکٹ اسٹرکچر میں کھلاڑیوں کی مراعات میں اضافہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ہر ایسوسی ایشن میں 32 کھلاریوں کو سالانہ ڈومیسٹک کنٹریکٹ دیا جائے گا’۔

ڈومیسٹک کنٹریکٹ کے حامل کھلاڑی ‘ایسوسی ایشن کے لیے فرسٹ کلاس، نان فرسٹ کلاس، لسٹ اے اور ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کھیلیں گے تاہم یہ کھلاڑی پی سی بی کے سینٹرل کنٹریکٹ کا حصہ نہیں ہوں گے’۔

کرکٹ ایسوسی ایشنز کو اجازت دی گئی ہے کہ وہ کنٹرکٹ میں شامل کھلاڑیوں کے علاوہ کسی بھی کھلاڑی کو میچ کا معاوضہ ادا کرکے ٹیم میں شامل کرسکتی ہیں۔

نئے ڈومیسٹک اسٹرکچر کے تحت قومی کرکٹ سیزن 14 ستمبر سے پریمیئر کرکٹ ٹورنامنٹ اور قائداعظم ٹرافی سے ہوگا۔

ڈومیسٹک ٹورنامنٹس

قائداعظم ٹرافی کا آغاز 14 ستمبر سے ہوگا اور 13 دسمبر تک جاری رہے گا جو 4 روزہ فرسٹ کلاس ٹورنامنٹ ہوگا تاہم فائنل میچ 5 روز پر مشتمل ہوگا۔

قومی انڈر-19 کرکٹ ٹورنامنٹ کے تین روزہ اور ایک روزہ مقابلے ہوں گے جو یکم اکتوبر سے 12 نومبر تک جاری رہیں گے۔

3 روز پر مشتمل میچوں کی قائداعظم ٹرافی 14 ستمبر سے 29 نومبر تک ہوگی جس کافائنل 4 روزہ ہوگا۔

قومی ٹی ٹوئنٹی کپ کا آغاز 13 اکتوبر کو ہوگا اور فائنل 24 اکتوبر کو کھیلا جائے گا جس کے لیے فرسٹ الیون کے میچز فیصل آباد اور سیکنڈ الیون کے میچز کراچی میں ہوں گے۔

پاکستان کپ کے نام سے ایک روزہ ٹورنامنٹ ہوگا جو فرسٹ اور سیکنڈ الیون کے تحت ہوگا جس کے مقابلے 29 مارچ سے 27 اپریل تک جاری رہیں گے۔

کوکابورا گیند

پی سی بی نے ڈومیسٹک کرکٹ میں کوکابورا گیند استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے کھلاڑیوں کو بین الاقوامی کرکٹ کی تیاری میں مدد ملے گی۔

بورڈ نے ڈومیسٹیک کرکٹ میں بہتری کے لیے آئندہ سیزن سے قبل کھیل کی سہولیات، پچز، آؤٹ فیلڈ، ڈریسنگ رومز، میڈیا اور براڈ کاسٹنگ کے معیار کو بھی اپ گریڈ کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

پی سی بی کے بیان کے مطابق کراچی، لاہور، ملتان، راولپنڈی اور کوئٹہ کے اسٹیڈیمز کی اپ گریڈیشن کے لیے 2 ارب روہے مختص کیے گئے ہیں۔

نئے سسٹم سے ہماری کرکٹ میں بہتری ضرور آئے گی، چیئرمین پی سی بی

لاہور: چیئرمین پی سی بی احسان مانی کا کہنا ہے کہ ہمارے سسٹم میں بہتری آنے میں وقت لگےگا لیکن پرامید ہوں نئے سسٹم سے ہماری کرکٹ میں بہتری ضرور آئے گی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں پروفیشنل ازم کا معیار دوسرے ملکوں سے بہت کم ہے، ہم ایک دن بہت اچھا پرفارم کرتے ہیں پھر دوسرے ہی دن بہت ہی برا کھیل جاتے ہیں، ہمیں ایسے پروفیشنل کرکٹرز چاہیے جو کسی بھی کنڈیشنز میں بہترین کھیل پیش کرسکیں، آسٹریلوی کرکٹرز ہر طرح کی کنڈیشنر میں بہترین کھیل اس لئے پیش کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں کیونکہ ان کا سسٹم  بہت اچھا ہے۔

چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ کتنے دکھ اور افسوس کا مقام ہے کہ مصباح الحق اور یونس خان کی ریٹائرمنٹ کے بعد  ہمیں ان کا متبادل کوئی اچھا پلیئر نہیں مل رہا۔ احسان مانی نے کہا کہ ہمیں کوانٹیٹی نہیں بلکہ کوالٹی کرکٹ چاہیے، ہمارے سسٹم میں بہتری آنے میں وقت لگے گا لیکن  پر امید ہوں کہ نئے سسٹم سے ہماری کرکٹ میں بہتری ضرور آئے گی

بنگلہ دیش ویمن کرکٹ ٹیم کے دورہ پاکستان کے شیڈول کا اعلان

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے اعلان کیا ہے کہ بنگلہ دیش ویمن کرکٹ ٹیم 3 ٹی ٹوئنٹی اور 2 ایک روزہ میچز پر مشتمل سیریز کھیلنے کے لیے اکتوبر میں پاکستان آئے گی۔

اس حوالے سے جاری پی سی بی کے اعلامیے کے مطابق 26 اکتوبر سے 4 نومبر تک جاری رہنے والی اس سیریز میں شرکت کے لیے مہمان ٹیم 23 اکتوبر کو لاہور پہنچے گی اور 2 ہفتوں تک پاکستان میں قیام کرے گی۔

پاکستان اور بنگلہ دیش ویمن ٹیم کے درمیان کھیلے جانے والی اس سیریز کے تمام میچز لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں ہوں گے۔

ٹی ٹوئنٹی سیریز کا پہلا میچ 26، دوسرا 28 اور تیسرا 30 اکتوبر کو کھیلا جائے گا جبکہ ایک روزہ میچز کی سیریز کا آغاز 2 نومبر کو ہوگا اور یہ 4 نومبر تک جاری رہے گا۔

خیال رہے کہ گزشتہ 4 برس کے دوران بنگلہ دیش ویمن کرکٹ ٹیم کا یہ دوسرا دورہ پاکستان ہے، مہمان ٹیم کی آمد ملک میں بین الاقوامی کرکٹ کی مکمل بحالی کے لیے پی سی بی کی کاوشوں کا نتیجہ ہے۔

اس سے قبل بنگلہ دیش ویمن کرکٹ ٹیم نے 2015 میں پاکستان کا دورہ کیا تھا، جس میں 2 ٹی ٹوئنٹی اور 2 ایک روزہ میچز کھیلے گئے تھے۔

اعلامیے میں بتایا گیا کہ سری لنکا کی مینز کرکٹ ٹیم بھی ایک روزہ میچز اور ٹی ٹوئنٹی پر مشتمل سیریز کھیلنے کے لیے آئندہ ماہ پاکستان کا دورہ کرے گی۔

یاد رہے کہ قومی ویمن کرکٹ ٹیم نے گزشتہ برس 4 ٹی ٹوئنٹی اور ایک ون ڈے انٹرنیشنل کھیلنے کے لیے بنگلہ دیش کا دورہ کیا تھا، اس دورے میں پاکستانی ویمن کرکٹ ٹیم نے ٹی ٹوئنٹی سیریز میں 0-3 سے کلین سوئپ کیا تھا جبکہ ایک روزہ میچ میں بنگلہ دیش کو فتح حاصل ہوئی تھی۔

میچز کا شیڈول

26 اکتوبر: پہلا ٹی ٹوئنٹی میچ، قذافی اسٹیڈیم لاہور

28 اکتوبر: دوسرا ٹی ٹوئنٹی میچ، قذافی اسٹیڈیم لاہور

30 اکتوبر: تیسرا ٹی ٹوئنٹی میچ، قذافی اسٹیڈیم لاہور

2 نومبر: پہلا ایک روزہ میچ، قذافی اسٹیڈیم لاہور

4 نومبر: دوسرا ایک روزہ میچ، قذافی اسٹیڈیم لاہور

اوپنر فخرزمان بھی پری سیزن کیمپ سے باہر ہوگئے

لاہور: شاہین شاہ آفریدی کے بعد اوپنر فخرزمان بھی پری سیزن کیمپ سے باہر ہوگئے ہیں، ڈاکٹرز نے انہیں ایک ہفتے تک کرکٹ کی سرگرمیوں میں حصہ لینے سے روک دیاہے۔

کیمپ کے پہلے مرحلےمیں فٹنس ٹیسٹ دینےکے بعد فخرزمان کے دائیں گھٹنے میں تکلیف شروع ہوئی تھی۔جس کے بعد انہوں نے سکلز ورک مرحلےمیں شامل نہیں ہوئے تھے۔ ان کی پہلی ایم آر آئی رپورٹ اتنی واضح نہیں تھی، جس کے بعد دوسراباران کا تفصیلی معائنہ کرایاگیاجس کی رپورٹ کے مطابق اوپنر کو ایک ہفتے کا آرام تجویز کیاگیاہے، پی سی بی میڈیکل پینل نے ان کی رپورٹ کو سامنے رکھتے ہوئے فخرزمان کے ری ہیب کا پروگرام تربیت دے دیاہے۔

ذرائع کےمطابق  فخرزمان  سری لنکا کے خلاف سیریز کے لیے باقاعدہ اعلان کردہ کیمپ تک مکمل فٹ ہوجائیں گے۔

کوچز کا تقرر، ’’فکسڈ میچ‘‘ کے خدشات بڑھنے لگے

لاہور: کوچز کے تقرر میں ’’فکسڈ میچ‘‘ کے خدشات بڑھنے لگے جب کہ 5 رکنی پینل نے فیورٹ مصباح الحق کے ساتھ محسن خان اور ڈین جونز کا بھی انٹرویو کرلیا۔

پی سی بی نے ہیڈ کوچ اور معاون اسٹاف کا انتخاب کرنے کیلیے چیف ایگزیکٹیو وسیم خان،ڈائریکٹر انٹرنیشنل کرکٹ ذاکر خان، رکن گورننگ بورڈ اسد علی خان، سابق کپتان انتخاب عالم اور سابق کرکٹرو کمنٹیٹر بازید خان پر مشتمل 5 رکنی پینل تشکیل دیا تھا،پہلے مرحلے میں ہیڈ کوچ اور بولنگ کوچ کیلیے انٹرویوز مکمل کرنے کے بعد اگلے مرحلے میں بیٹنگ و اسٹرینتھ اینڈ کنڈیشننگ کوچز کے معاملے کو دیکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔

ہیڈ کوچ کیلیے مضبوط امیدوار مصباح الحق کا گذشتہ روز انٹرویو ہوگیا، سابق ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر محسن خان نے بھی اس عہدے کیلیے اپنی اہلیت ثابت کرنا چاہی، قذافی اسٹیڈیم آمد پر میڈیا کے نمائندوں کو دیکھ کرانھوں نے صرف اتنا کہا کہ دعا کریں اللہ عزت دے، ڈین جونز سے ویڈیو لنک کے ذریعے بات کرتے ہوئے ان کی سوچ کے زاویے جاننے کی کوشش ہوئی۔

ذرائع کے مطابق گذشتہ روز صرف ایک غیر ملکی ڈین جونز کا انٹرویو ہوا ہے، مزید 2 کے جمعے کو ہوں گے، بولنگ کوچ کے امیدوار وقار یونس نے بھی پینل کو اپنے پلان سے آگاہ کیا،انٹرویو کے بعد انھوں نے میڈیا سے بات کرنے سے اجتناب برتااور تیزی سے گاڑی میں بیٹھ کر چلے گئے، محمد اکرم اور جلال الدین بھی اس عہدے کی آس لگائے بیٹھے تھے۔

یاسر عرفات نے بھی بولنگ کوچ کیلیے امیدوار کے طور پر اپنا نام درج کرایا تھا، آل راؤنڈر نے لیول تھری کوچنگ کورس کررکھا ہے، محمد اکرم نے وقار یونس کو فیورٹ دیکھتے ہوئے درخواست واپس لے لی اور اس دوڑ سے باہر ہوگئے، جلال الدین کا نام شارٹ لسٹ ہی نہیں کیا گیا۔

یاد رہے کہ بیٹنگ کوچ کیلیے محمد وسیم اور فیصل اقبال نے بھی درخواست جمع کرائی ہے، اس کا فیصلہ دوسرے مرحلے کے انٹرویوز میں ہونا ہے، ذرائع سے یہ اطلاعات بھی سامنے آئی ہیں کہ اگر مصباح الحق کو ہیڈکوچ بنایا گیا تو کسی بیٹنگ کوچ کا تقرر نہ کرنے کا بھی فیصلہ کیا جا سکتا ہے۔ یہ ذمہ داری بھی سابق کپتان خود ہی نبھا سکتے ہیں، یوں اس پوسٹ کیلیے درخواست دینے والے فیصل اقبال اور محمد وسیم کے ارمان ٹھنڈے پڑ جائیں گے۔

واضح رہے کہ ورلڈکپ میں ٹیم کی ناقص کارکردگی کے بعد پی سی بی نے ہیڈکوچ مکی آرتھر سمیت سپورٹنگ اسٹاف کے معاہدوں میں توسیع نہیں کی تھی، نئی تقرریوں کیلیے اشتہار جاری کیا گیا مگر غیرملکی کوچز میں کوئی بڑا نام سامنے نہ آنے پر مصباح الحق پر اعتماد کا فیصلہ ہوا، البتہ ان سے مالی معاملات اور پی ایس ایل میں کوچنگ سمیت بعض امور پر بات چیت اب بھی جاری ہے۔c

ٹوکیو اولمپکس2020 ہاکی میں پاک بھارت ٹاکرے کا امکان روشن

لاہور: آئندہ سال ٹوکیو میں ہونے والے اولمپکس میں پاکستان اور بھارت کی ہاکی ٹیموں کا میچ ہونے کا قوی امکان ہے۔

میگا ایونٹ میں عالمی رینکنگ میں نمبر ایک، دو اور تین کی ٹیموں کو 12ویں سے 14ویں پوزیشن کے حامل سائیڈز کے مقابل ہونا ہے، بھارتی ٹیم اس وقت پانچویں اور پاکستان 12ویں نمبر پر ہے،بلو شرٹس کے ستمبر میں جن ٹیموں کیساتھ اوشیانا کپ کے میچز شیڈول ہیں، ان کو دیکھتے ہوئے رینکنگ میں تیسری پوزیشن تک پہنچنے کا امکان ہے،اس صورت میں پاکستان کیساتھ ٹاکرا بھی ممکن ہوجائے گا۔

ایف آئی ایچ کے مطابق اولمپکس کیلیے ڈراز 9ستمبر کو ہوں گے جن میں اس وقت کی رینکنگ کو دیکھتے ہوئے شیڈول طے ہوجائے گا۔

شاہین آفریدی ڈینگی بخار کا شکار ہو کر پری سیزن کیمپ سے باہر ہوگئے

لاہور میں جاری پری سیزن کیمپ میں دو اہم کھلاڑی فٹنس مسائل  سے دوچار ہوگئے۔

فاسٹ بولر شاہین شاہ آفریدی ڈینگی بخار میں مبتلا ہونے کے بعد پری سیزن کیمپ سےباہر ہوگئے ہیں، انہیں تین روز سے بخار تھا، جس پر ان کا مقامی اسپتال میں چیک اپ کرایا گیاتو رپورٹ میں ڈینگی بخار کی نشاندہی ہوئی۔شاہین آفریدی اب فیروز پور روڈ پر واقع اسپتال میں زیر علاج ہیں۔

ذرائع کےمطابق وہ تین ہفتے تک کرکٹ کی سرگرمیوں سے دور رہیں گے۔ شاہین آفریدی کےمتبادل کا ابھی اعلان نہیں کیا گیا، ستمبر کے پہلے ہفتے تک جاری رہنےو الے پری سیزن کیمپ میں  اوپنر فخرزمان بھی گھٹنے کی انجری کا شکار ہوگئے ہیں۔انجری کے باعث فخر زمان نے تاحال کیمپ میں نیٹ پریکٹس کا آغاز نہیں کیا۔

پی سی بی ترجمان کےمطابق گذشتہ روز فخر زمان کے دائیں گھٹنے کا ایم آر آئی اسکین کروایا گیا۔فخر زمان کی ایم آر آئی رپورٹ پی سی بی میڈیکل ایڈوائزری پینل کو موصول ہوگئی ہیں۔پینل کی سفارشات کی روشنی میں فخر زمان کی کیمپ میں آئندہ شرکت کا فیصلہ کیا جائے گا۔

Google Analytics Alternative