کھیل

پی سی بی نے 6 صوبائی ایسوسی ایشنز کی ٹیموں کے کپتانوں کا انتخاب کرلیا

لاہور: پی سی بی نے 6 صوبائی ایسوسی ایشنز کی ٹیموں کے کپتانوں کا انتخاب کرلیا جن کا باقاعدہ اعلان آج متوقع ہے۔
ذرائع کےمطابق سندھ ٹیم کی قیادت سرفراز احمد کریں گے۔ سدرن پنجاب کی قیادت حارث سہیل کو سونپی گئی ہے۔ امام الحق کو بلوچستان ٹیم کی قیادت کا تاج پہنایا گیا ہے۔

خیبر پختونخوا محمد رضوان کی قیادت میں میدان میں اترے گی جب کہ سینٹرل پنجاب کے لیے بابراعظم کی قائدانہ صلاحیتوں پر بھروسہ کرنےکا فیصلہ کیا گیا ہے۔ لیگ اسپنر شاداب خان کو ناردرن ایسوسی ایشن کی ٹیم کا کپتان مقرر کیا گیا ہے۔
پی سی بی کے نئے ڈومیسٹک سیزن کا آغاز 14 ستمبر سے ہورہا ہے، جس میں ہوم اینڈ اوے کی بنیاد پر 31 میچز کھیلے جائیں گے۔

راشد لطیف، ندیم خان اور مصباح الحق پر مشتمل کمیٹی نے ایسوسی ایشنز کی ٹیموں کا چناؤ کیا ہے، ان تینوں سابق کرکٹرز نے کپتان اور کوچز کی سفارشات بھی تیار کرکے بورڈ کےحوالے کی ہیں۔

نوید اکرم چیمہ کو ایک بار پھر کرکٹ ٹیم کا مینجر مقرر کیے جانے کا امکان

سینئر بیورو کریٹ نوید اکرم چیمہ ایک بارپھر قومی ٹیم کے مینجر کے عہدے کے لیے فیورٹ امیدوار  کے طورپر سامنے آگئے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے سربراہ احسان مانی کی منظوری کے بعد ان کی تقرری کا جلد باقاعدہ اعلان متوقع ہے۔ ا س عہدے کے لیے  دو معروف سابق کرکٹرز نے بھی  امیدیں وابستہ کررکھی تھیں لیکن ذرائع کے مطابق  نوید اکرم چیمہ اس دوڑ میں سب سے آگے ہیں ، بورڈ کے ساتھ معاملات طے ہونے پر ان کا انتخاب یقینی دکھائی دے رہا ہے۔

سری لنکا کے خلاف سیریز  کے لیے مینجر، ہیڈکوچ سمیت دوسرے کوچنگ اسٹاف کے نام کا  باقاعدہ اعلان  چیئرمین پی سی بی کی جانب سے منظوری ملنے پر ایک سے دو روز میں کسی بھی وقت سامنے آسکتا ہے۔  ایک سال پہلے فیڈرل پبلک سروس کمیشن کے چیئرمین  کےعہدے سے ریٹائرمنٹ لینے والے نویداکرم چیمہ اس سے پہلے  دوبار قومی ٹیم  کے ساتھ بطور  مینجر ذمہ داریاں نبھانے کا تجربہ رکھتے ہیں۔ ایک سخت گیر اور ڈسپلن پر مکمل پاسداری کرنے والے مینجر کے طورپر ان کی شہرت ہے۔

نوید اکرم چیمہ چیف سیکرٹری پنجاب، چف سیکرٹری اسپورٹس پنجاب کے طورپر بھی خدمات انجام دے چکے ہیں۔ نوید اکرم چیمہ سری لنکا کے خلاف سیریز سے اپنی ذمہ داریان سنبھال سکتے ہیں، اطلاعات کے مطابق  ٹیم کے ڈسپلن کو بہتر بنانے اور کسی ناخوشگوارواقعہ سے بچنے کے لیے پی سی بی حکام کی اکثریت نوید اکرم چیمہ کی تقرری کے حق میں ہے ۔

یو ایس اوپن: دفاعی چیمپئن نواک جوکووچ انجری کا شکار ہوکر ٹائٹل سے دستبردار

یو ایس اوپن کے میچ کے دوران انجری کا شکار ہونے والے نواک جوکووچ ایونٹ سے باہر ہوگئے جبکہ اس کے ساتھ ہی وہ اپنے ٹائٹل سے بھی دستبردار ہوگئے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق عالمی نمبر ایک سربیا کے نواک جوکووچ سوئٹزرلینڈ کے اسٹن واورینکا کے خلاف میچ ادھورا چھوڑ کر چلے گئے تھے۔

سربیا کے نواک جوکووچ میچ کے ابتدائی 2 سیٹ 4-6 اور 5-7 سے اپنے نام کر چکے تھے جبکہ آخری سیٹ میں بھی انہیں 1-2 سے برتری حاصل تھی تاہم وہ اچانک کندھے کی انجری کا شکار ہوگئے۔

انجری شدید ہونے کی وجہ سے دفاعی چیمپئن میچ سے دستبردار ہوگئے اس کے ساتھ ہی وہ اپنے ٹائٹل سے بھی دستبردار ہوگئے ہیں۔

اپنی انجری سے متعلق نواک جوکووچ کا کہنا تھا کہ ’کسی بھی انجری کی وجہ سے زندگی نہیں رکتی، وہ چلتی رہتی ہے‘۔

خیال رہے کہ سربیئن اسٹار کو یو ایس اوپن کے آغاز سے ہی کندھے میں تکلیف کا سامنا رہا ہے جس نے اب تک کے میچز میں انہیں بہت پریشان کیا۔

نواک جوکووچ کا کہنا تھا کہ ’چند ہفتوں سے اس تکلیف کا سامنا ہے، کبھی اس میں کمی آجاتی ہے اور کبھی شدید درد کا سامنا رہتاہے تاہم ایسے میں درد کو فوری ختم کرنے کے لیے مخلتف ادویات اور طریقہ کار بھی استعمال کیے‘۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے عالمی نمبر ایک ٹینس اسٹار نے کہا کہ کبھی کھبار یہ طریقہ کار کارآمد ہوتے تھے جبکہ کبھی ان سے کوئی فائدہ نہیں ہوتا تھا، تاہم اس کا احساس اس وقت ہی ہوتا تھا جب آپ کو یہ محسوس ہوجائے کہ اب آپ میں ٹینس گیند کو ہٹ کرنے کی ہمت نہیں ہے‘۔

تاہم سربیئن اسٹار نے اپنی انجری کی نوعیت کے حوالے سے بات کرنے سے انکار کردیا، جس کی وجہ سے انہیں دوسرے راؤنڈ میں جوان اگنیشیو کے خلاف میچ میں تکلیف کا سامنا بھی کرنا پڑا تھا۔

نواک جوکووچ کا کہنا تھا کہ ’میں آپ لوگوں کو بتا چکا ہوں کہ میں دستبردار ہوگیا ہوں، انجری میرے بائیں کندھے میں ہوئی ہے، میرے پاس اس سے زیادہ بات کرنے کے لیے کچھ بھی نہیں ہے‘۔

تین مرتبہ یو ایس اوپن کا ٹائٹل اپنے نام کرنے والے نواک جوکووچ نے ایک مرتبہ پھر کہا کہ ’میں اپنی انجری کے بارے میں بات نہیں کرنا چاہتا‘۔

سوئٹزر لینڈ کے حریف کے ساتھ مقابلے سے قبل انہیں ادویات دی گئی تھیں، تاہم دوران میچ انہیں مزید تکلیف کا سامنا کرنا پڑا جس کی وجہ سے وہ گرینڈ سلام ٹورنامنٹ سے دستبردار ہوگئے۔

نواک جوکووچ کا کہنا تھا کہ یہ ان کے لیے بہت ہی مایوس کن ہے کیونکہ نہ تو وہ پہلے شخص ہیں جو انجری کا شکار ہوکر کسی بھی اسپورٹس کے اتنے بڑے ایونٹ سے باہر ہوئے ہیں اور نہ ہی آخری شخص ہیں۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ میں ٹینس کورٹ سے باہر ہوگیا ہوں، بس اس وجہ سے مجھے بہت زیادہ تکلیف ہوئی ہے، تاہم میں جانتا ہوں کہ زندگی اسی طرح چلتی رہتی ہے۔

خیال رہے کہ نواک جوکووچ اس سے قبل رواں برس آسٹریلین اوپن اور ومبلڈن ٹائٹل جیت چکے ہیں جبکہ مجموعی طور پر 16 گرینڈ سلام ٹائٹل اپنے نام کر چکے ہیں۔

آصف علی اور وہاب ریاض کیریبیئن پریمیئر لیگ میں شرکت کیلیے روانہ نہ ہوسکے

این او سی ملنے کے باوجود آصف علی اور وہاب ریاض کیریبیئن پریمیئر لیگ میں شرکت کے لیے ویسٹ انڈیز روانہ نہیں  ہوسکے۔

لاہور میں جاری پری سیزن تربیتی کیمپ میں شامل بیٹسمین آصف علی کو آج روانہ ہونا تھا لیکن وہ قذافی اسٹیڈیم میں جاری دوروزہ پریکٹس میچ کھیل رہے ہیں، پی سی بی ذرائع کے مطابق آصف علی کو 10 ستمبر تک کیریبیئن پریمیئر لیگ کے مقابلوں میں شرکت کی اجازت دے دی گئی تھی، ان کی ویسٹ انڈیز روانگی میں تاخیر ذاتی وجوہات کی بنا پر ہوئی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے پیسر وہاب ریاض کو بھی کیربیئن پریمیئر لیگ کے لئے این او سی جاری کر دیا ہے – ذرائع کے مطابق پیسر نے اجازت نامہ ملنے کے باوجود ابھی تک لیگ کا حصہ بننے کا حتمی فیصلہ نہیں کیا اور وہ لاہور میں جاری پری سیزن کیمپ میں اپنی ٹریننگ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ مزید معلوم ہوا ہے کہ پی سی بی کی طرف سے آصف علی شاداب خان ، شعیب ملک، محمد حفیظ سمیت پانچ دیگر پلیئرز کو این او سی پہلے ہی جاری کیا جا چکا ہے۔

پی سی بی نے ڈومیسٹک ٹورنامنٹس کی انعامی رقوم میں 233 فیصد اضافہ کر دیا

پاکستان کرکٹ بورڈ نے نئے ڈومیسٹک اسٹرکچر کے تحت قومی سطح پر کھیلے جانے والے ٹورنامنٹس کی انعامی رقوم میں 233 فیصد تک اضافہ کر دیا۔

پی سی بی کے ترجمان کے مطابق پی سی بی ڈومیسٹک سیزن 2019-20 پر ایک ارب روپے سے زائد خرچ کرے گا اور پورے سیزن میں ایک کھلاڑی کو سالانہ 20 لاکھ روپے کی آمدن ہو گی جب کہ ڈومیسٹک سنٹرل کنٹریکٹ یافتہ کھلاڑی سالانہ 6 لاکھ روپے تنخواہ وصول کرے گا۔

پاکستانی کرکٹ بورڈ نے قائداعظم ٹرافی کی انعامی رقم میں 233 فیصد، پاکستان کپ ون ڈے ٹورنامنٹ کی انعافی رقم میں 150 فیصد اور ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹس کی انعامی رقم میں 100 فیصد اضافہ کیا ہے

قائداعظم ٹرافی کی میچ فیس 50 سے بڑھا کر 75 ہزار روپے مقرر کر دی گئی ہے جب کہ پاکستان کپ اور ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ کی میچ فیس 40 ہزار روپے مقرر کی گئی ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ ڈومیسٹک سیزن کے دوران کھلاڑی تھری اور فور اسٹار ہوٹل میں رہائش اختیار کریں گے اور بین الصوبائی سفر کے لیے کھلاڑی ہوائی جہاز کا استعمال کریں گے۔

چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان کا کہنا ہے کہ کھلاڑیوں کو طویل عرصہ ان کے جائز حق سے محروم رکھنا افسوسناک تھا، نیا ڈومیسٹک اسٹرکچر کھلاڑیوں کا معیار زندگی بہتر کرے گا۔

خیال رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے ڈومیسٹک اسٹرکچر تبدیل کر کے 16 ریجنز کو 6 ایسوسی ایشنز میں ضم کر دیا ہے۔ نئے نظام کے تحت قائداعظم ٹرافی کا پہلا مرحلہ 14 ستمبر سے 8 اکتوبر اور دوسرا مرحلہ 28 اکتوبر سے 13 دسمبر تک جاری رہے گا۔ قومی انڈر 19 کرکٹ ٹورنامنٹ یکم اکتوبر سے 12 نومبر تک جاری رہے گا۔

تشارا پریرا پاکستان کے خلاف ون ڈے سیریز نہیں کھیلیں گے

سری لنکا کے تشارا پریرا پاکستان کے خلاف ون ڈے سیریز نہیں کھیلیں گے

۔پاکستان سری لنکا ون ڈے میچز 27 ، 29 ستمبر اور 2 اکتوبر کو کراچی میں کھیلے جائیں گے جب کہ ٹی ٹونٹی میچز 5،7،9، اکتوبر کو لاہور میں شیڈول ہیں تاہم سری لنکن آل راؤنڈر تشارا پریرا دورہ پاکستان کے لیے دستیاب نہیں ہوں گے۔

اطلاعات کے مطابق ستمبر کے دوسرے ہفتے میں  پاکستان کا دورہ کرنے والی سری لنکن  ٹیم کا اعلان متوقع ہے جس کے لیے بورڈ کرکٹرز سے رضامندی لینے میں مصروف ہے تاہم تشارا پریرا نے دورہ پاکستان کے بجاے کیربئین پریمئیر لیگ کو ترحیح دی۔

واضح رہے تشارا پریرا  اس سے پہلے بھی پاکستان آنے کے حوالے سے ہچکچاہٹ کا شکار تھے۔

 

 

پی سی بی کے نئے ڈومیسٹک کرکٹ اسٹرکچر کا افتتاح

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے نئے آئین کے تحت 20-2019 کے ڈومیسٹک کرکٹ اسٹرکچر کی رونمائی کردی، جہاں 6 ٹیموں کے علاوہ میچوں میں کوکابورا گیند استعمال کرنے کا بھی اعلان کردیا گیا۔

لاہور میں چیئرمین پی سی بی احسان مانی، چیف ایگزیکٹو وسیم خان اور دیگر نے ڈومیسٹک کرکٹ کے نئے اسٹرکچر کی تقریب میں شرکت کی۔

پی سی بی کی جانب سے جاری بیان کے مطابق نئے اسٹرکچر سے فرسٹ کلاس کرکٹ میں بہتری آئے گی جس کے نتیجے میں عالمی سطح پر کامیابیوں کے حصول میں مدد ملے گی۔

بورڈ کا کہنا تھا کہ ‘نئے اسٹرکچر میں کلب کرکٹ کو اہمیت دی گئی ہے جس سے کرکٹ کھیلنے کے لیے ایک بہترین ماحول کی فراہمی کے ساتھ ساتھ اعلیٰ کارکردگی دکھانے والے کھلاڑیوں کو انعامات سے نوازا جائے گا’۔

بیان میں کہا گیا کہ ‘نئے اسٹرکچر میں سابق کھلاڑیوں اور کوالیفائیڈ کوچز کو روزگار کے مواقع فراہم کیے جائیں گے، جس سے قومی اور بین الاقوامی کرکٹ کے معیار میں پائے جانے والے فرق کو کم کرنے میں مدد ملے گی’۔

خیال رہے کہ وفاقی حکومت نے پی سی بی کے نئے آئین کی منظوری 9 اگست کو دی تھی جس کے تحت 16 ریجنز کو 6 ایسوسی ایشنز میں ضم کردیا گیا تھا۔

بورڈ کے اعلامیے کے مطابق ‘نئے اور باصلاحیت نوجوان کھلاڑیوں کے لیے ڈومیسٹک اسٹرکچر کو 3 مختلف درجوں میں تقسیم کیا گیا ہے’۔

پی سی بی نے نوجوان کھلاڑیوں کے حوالے سے کہا کہ ‘پہلے درجے میں 90 سٹی کرکٹ ایسوسی ایشنز، اسکول اور کلب کرکٹ کا انعقاد کریں گی جس کے بعد ہر سٹی کرکٹ ایسوسی ایشن اپنی اپنی کرکٹ ٹیمیں تیار کرے گی’۔

دوسرے درجے میں ‘سٹی کرکٹ ٹیمیں اپنی متعلقہ کرکٹ ایسوسی ایشن کے تحت انٹرا سٹی مقابلوں میں شرکت کریں گی، تیسرے درجے میں انٹرا سٹی کرکٹ مقابلوں میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے کھلاڑیوں کو متعلقہ ایسوسی ایشن میں شامل کیا جائے گا’۔

نئے ڈومیسٹک نظام کے تحت کھلاڑیوں کو معیاری کرکٹ اور کھیل میں جدت لانے کے ضروری ہنر سکھانے کے لیے ملک بھر میں 6 ہائی پرمارمنس سینٹرز قائم کردیے جائیں گے۔

پی سی بی نے ‘نئے ڈومیسٹک کرکٹ اسٹرکچر میں کھلاڑیوں کی مراعات میں اضافہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ہر ایسوسی ایشن میں 32 کھلاریوں کو سالانہ ڈومیسٹک کنٹریکٹ دیا جائے گا’۔

ڈومیسٹک کنٹریکٹ کے حامل کھلاڑی ‘ایسوسی ایشن کے لیے فرسٹ کلاس، نان فرسٹ کلاس، لسٹ اے اور ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کھیلیں گے تاہم یہ کھلاڑی پی سی بی کے سینٹرل کنٹریکٹ کا حصہ نہیں ہوں گے’۔

کرکٹ ایسوسی ایشنز کو اجازت دی گئی ہے کہ وہ کنٹرکٹ میں شامل کھلاڑیوں کے علاوہ کسی بھی کھلاڑی کو میچ کا معاوضہ ادا کرکے ٹیم میں شامل کرسکتی ہیں۔

نئے ڈومیسٹک اسٹرکچر کے تحت قومی کرکٹ سیزن 14 ستمبر سے پریمیئر کرکٹ ٹورنامنٹ اور قائداعظم ٹرافی سے ہوگا۔

ڈومیسٹک ٹورنامنٹس

قائداعظم ٹرافی کا آغاز 14 ستمبر سے ہوگا اور 13 دسمبر تک جاری رہے گا جو 4 روزہ فرسٹ کلاس ٹورنامنٹ ہوگا تاہم فائنل میچ 5 روز پر مشتمل ہوگا۔

قومی انڈر-19 کرکٹ ٹورنامنٹ کے تین روزہ اور ایک روزہ مقابلے ہوں گے جو یکم اکتوبر سے 12 نومبر تک جاری رہیں گے۔

3 روز پر مشتمل میچوں کی قائداعظم ٹرافی 14 ستمبر سے 29 نومبر تک ہوگی جس کافائنل 4 روزہ ہوگا۔

قومی ٹی ٹوئنٹی کپ کا آغاز 13 اکتوبر کو ہوگا اور فائنل 24 اکتوبر کو کھیلا جائے گا جس کے لیے فرسٹ الیون کے میچز فیصل آباد اور سیکنڈ الیون کے میچز کراچی میں ہوں گے۔

پاکستان کپ کے نام سے ایک روزہ ٹورنامنٹ ہوگا جو فرسٹ اور سیکنڈ الیون کے تحت ہوگا جس کے مقابلے 29 مارچ سے 27 اپریل تک جاری رہیں گے۔

کوکابورا گیند

پی سی بی نے ڈومیسٹک کرکٹ میں کوکابورا گیند استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے کھلاڑیوں کو بین الاقوامی کرکٹ کی تیاری میں مدد ملے گی۔

بورڈ نے ڈومیسٹیک کرکٹ میں بہتری کے لیے آئندہ سیزن سے قبل کھیل کی سہولیات، پچز، آؤٹ فیلڈ، ڈریسنگ رومز، میڈیا اور براڈ کاسٹنگ کے معیار کو بھی اپ گریڈ کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

پی سی بی کے بیان کے مطابق کراچی، لاہور، ملتان، راولپنڈی اور کوئٹہ کے اسٹیڈیمز کی اپ گریڈیشن کے لیے 2 ارب روہے مختص کیے گئے ہیں۔

نئے سسٹم سے ہماری کرکٹ میں بہتری ضرور آئے گی، چیئرمین پی سی بی

لاہور: چیئرمین پی سی بی احسان مانی کا کہنا ہے کہ ہمارے سسٹم میں بہتری آنے میں وقت لگےگا لیکن پرامید ہوں نئے سسٹم سے ہماری کرکٹ میں بہتری ضرور آئے گی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں پروفیشنل ازم کا معیار دوسرے ملکوں سے بہت کم ہے، ہم ایک دن بہت اچھا پرفارم کرتے ہیں پھر دوسرے ہی دن بہت ہی برا کھیل جاتے ہیں، ہمیں ایسے پروفیشنل کرکٹرز چاہیے جو کسی بھی کنڈیشنز میں بہترین کھیل پیش کرسکیں، آسٹریلوی کرکٹرز ہر طرح کی کنڈیشنر میں بہترین کھیل اس لئے پیش کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں کیونکہ ان کا سسٹم  بہت اچھا ہے۔

چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ کتنے دکھ اور افسوس کا مقام ہے کہ مصباح الحق اور یونس خان کی ریٹائرمنٹ کے بعد  ہمیں ان کا متبادل کوئی اچھا پلیئر نہیں مل رہا۔ احسان مانی نے کہا کہ ہمیں کوانٹیٹی نہیں بلکہ کوالٹی کرکٹ چاہیے، ہمارے سسٹم میں بہتری آنے میں وقت لگے گا لیکن  پر امید ہوں کہ نئے سسٹم سے ہماری کرکٹ میں بہتری ضرور آئے گی

Google Analytics Alternative