کھیل

میسی، رونالڈو کی اجارہ داری ختم، موڈرچ ’بیلن ڈی اور‘ لے اڑے

سال کے بہترین فٹبالر کے ایوارڈ بیلن ڈی اور میں کروشیا کے لوکا موڈرچ نے نئی تاریخ رقم کرتے ہوئے یہ ایوارڈ جیت کر دس سال بعد رونالڈو اور میسی کو اس ایوارڈ سے محروم کردیا۔

2008 سے 2017 تک مسلسل دس سال تک سال کے بہترین فٹبال کا سب سے قیمتی ایوارڈ ’بیلن ڈی اور‘ پرتگال کے کرسٹیانو رونالڈو یا ارجنٹینا کے لیونل میسی سوا کوئی اور نہ جیت سکا اور دونوں کھلاڑیوں نے 5، 5 مرتبہ یہ ایوارڈ اپنے نام کیا۔

تاہم عالمی کپ کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ جیتنے والے کروشیا کے لوکا موڈرچ نے اس جمود کو توڑتے ہوئے بیلن ڈی اور جیتنے کا اعزاز حاصل کر لیا۔

کروشیا کے لوکا موڈرچ بیلن ڈی اور جیتنے کے بعد ٹرافی کے ہمراہ موجود ہیں— فوٹو: اے ایف پی
کروشیا کے لوکا موڈرچ بیلن ڈی اور جیتنے کے بعد ٹرافی کے ہمراہ موجود ہیں— فوٹو: اے ایف پی

رونالڈو اور میسی سے قبل بیلن ڈی اور جیتنے والے آخری فٹبالر برازیل کے کاکا تھے جنہوں نے 2007 میں یہ ایوارڈ اپنے نام کیا تھا۔

موڈرچ نے رواں سال منعقدہ ورلڈ کپ میں عمدہ کھیل پیش کرتے ہوئے کروشیا کو تاریخ میں پہلی مرتبہ ایونٹ کے فائنل میں پہنچا دیا تھا جہاں ان کی ٹیم کو فرانس کے ہاتھوں شکست ہوئی تھی۔

اس کے ساتھ ساتھ وہ لگاتار تیسری مرتبہ چیمپیئنز لیگ جیتنے والی ریال میڈرڈ کی ٹیم کے بھی اہم رکن تھے جس کی وجہ سے ان کو ایوارڈ کے لیے سب سے مظبوط امیدوار تصور کیا جا رہا تھا۔

اس ایوارڈ کے لیے موڈرچ کے سب سے بڑے حریف رونالڈو تھے جنہوں نے ریال میڈرڈ کو چیمپیئنز لیگ جتوانے میں اہم کردار ادا کیا لیکن ان کے ملک پرتگال کی ٹیم عالمی کپ میں کچھ خاص پیش نہ کر سکی اور اس وجہ سے وہ دوسرے نمبر پر رہے۔

بہترین نوجوان کھلاڑی ایوارڈ فرانس کے کائلیان ایمباپے نے اپنے نام کیا— فوٹو: اے ایف پی
بہترین نوجوان کھلاڑی ایوارڈ فرانس کے کائلیان ایمباپے نے اپنے نام کیا— فوٹو: اے ایف پی

فرانس کے اینٹوئن گریز مین تیسرے، ان کے ہم وطن کائلیان ایمباپے چوتھے اور ارجنٹائن کے لیونل میسی پانچویں نمبر پر رہے۔

موڈرچ نے ایوارڈ ان تمام کھلاڑیوں کے نام کیا جو گزشتہ دس سال میں میسی اور رونالڈو کی اجارہ داری کے دوران یہ ایوارڈ جیتنے سے محروم رہے۔

تاہم فرانس کے کوچ ڈائیڈیئر ڈیشیمپ نے کہا کہ یہ ایوارڈ کسی فرانس کے کھلاڑی کو جیتنا چاہیے تھا۔

انہوں نے کہا کہ فرانس کے کھلاڑی یہ ایوارڈ جیتنے کے مستحق تھے کیونکہ ناصرف انہوں نے اپنے ملک کے لیے عالمی کپ جیتا بلکہ اپنے کلب کے لیے بہترین خدمات انجام دیں۔

بہترین نوجوان کھلاڑی کی ریمونڈ کوپا ٹرافی فرانس کے 19سالہ کائلیا ایمباپے جیتنے میں کامیاب رہے جنہوں نے عالمی کپ کے فائنل میں گول اسکور کیا تھا۔

ناروے کی ایدا ہرد برگ سال کی بہترین وومن فٹبالر قرار پائیں— فوٹو: اے ایف پی
ناروے کی ایدا ہرد برگ سال کی بہترین وومن فٹبالر قرار پائیں— فوٹو: اے ایف پی

فرانس کا فٹبال میگزین 1956 سے بیلن ڈی اور کا اعلان کر رہا ہے اور یہ فٹبال کی دنیا میں سب سے اہم اور قیمتی ایوارڈ تصور کیا جاتا ہے۔

اس سال تاریخ میں پہلی مرتبہ خواتین فٹبالرز کو بھی یہ ایوارڈ دینے کا اعلان کیا گیا اور اپنے کلب کے لیے تین مرتبہ چیمپیئنز لیگ جیتنے والی ناروے کی 23 سالہ ایدا ہرد برگ یہ ایوارڈ جیتنے میں کامیاب رہیں جنہوں نے گزشتہ سیزن میں فرانسیسی کلب لایون کے لیے کھیلتے ہوئے ریکارڈ 15گول اسکور کیے تھے۔

محمد حفیظ نے ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا

پاکستان کرکٹ ٹیم کے تجربہ کار آل راؤنڈر محمد حفیظ نے مستقل ناقص فارم کے سبب ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا۔

غیرقانونی باؤلنگ ایکشن اور خراب فارم کے باعث محمد حفیظ کا کیریئر خصوصاً ٹیسٹ کرکٹ میں انہیں مسائل کا سامنا رہا اور حالیہ عرصے میں وہ وقتاً فوقتاً ٹیم سے ڈراپ ہوتے رہے۔

ان کے باؤلنگ ایکشن پر ماضی میں تین مرتبہ پابندی لگی لیکن وہ ہر مرتبہ اپنا ایکشن کلیئر کرانے میں کامیاب رہے البتہ بیٹنگ میں غیرمستقل مزاجی ان کی ٹیم میں تواتر کے ساتھ سلیکشن کی راہ میں حائل ہوتی رہی اور اسی وجہ سے انہیں متعدد حلقوں خصوصاً سابق کرکٹرز کی جانب سے تنقید کا سامنا بھی رہا۔

پروفیسر کے نام سے مشہور حفیظ کی گزشتہ ماہ آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے ذریعے قومی ٹیم میں دوبارہ واپسی ہوئی اور انہوں نے سنچری اسکور کر کے سلیکٹرز کے انتخاب کو درست ثابت کر دکھایا تھا۔

لیکن اس کے بعد سے انہیں مسلسل مشکلات کا سامنا تھا اور آخری 7 ٹیسٹ اننگز میں صرف 66رنز بنائے اور نیوزی لینڈ کے خلاف ابوظہبی میں جاری سیریز کے آخری ٹیسٹ میچ کی پہلی اننگز میں بھی بغیر کوئی رن بنائے پویلین لوٹ گئے تھے۔

نیوزی لینڈ کے خلاف ابوظہبی میں جاری ٹیسٹ میچ حفیظ کے کیریئر کا آخری ٹیسٹ میچ ہے اور میچ کی دوسری اننگز میں اچھا اسکور کر کے ان کے پاس ٹیسٹ کرکٹ کا یادگار انداز میں اختتام کرنے کا نادر موقع ہے۔

محمد حفیظ نے 55 ٹیسٹ میچوں کی 104 اننگز میں 10سنچریوں اور 12 نصف سنچریوں کی مدد سے 3ہزار 644 رنز بنائے جبکہ اس کے علاوہ 53وکٹیں بھی حاصل کیں۔

یاد رہے کہ ایشیا کپ کے اسکواڈ سے ڈراپ کیے جانے کے بعد بھی محمد حفیظ نے ریٹائرمنٹ کا فیصلہ کر لیا تھا لیکن پھر ارباب اختیار اور سینئر کھلاڑیوں کے مشورے پر انہوں نے فیصلہ تبدیل کرتے ہوئے کھیل سے کنارہ کش نہ ہونے کا فیصلہ کیا۔

حفیظ نے ابھی صرف ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا ہے اور وہ ون ڈے اور ٹیسٹ کرکٹ میں قومی ٹیم کی نمائندگی کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔

پاکستان کی عمدہ باؤلنگ، نیوزی لینڈ 229رنز پر 7وکٹوں سے محروم

ابوظہبی: پاکستان نے باؤلرز کی شاندار کارکردگی کی بدولت نیوزی لینڈ کے خلاف تیسرے ٹیسٹ میچ میں اپنی پوزیشن مستحکم کر لی ہے اور میچ کے پہلےدن نیوزی لینڈ کو 229 رنز 7وکٹوں سے محروم کردیا ہے۔۔

شیخ زید اسٹیڈیم میں جاری اس میچ میں ٹاس جیتنے کے بعد نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیمسن نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

پاکستانی باؤلر خصوصاً یاسر شاہ نے ایک مرتبہ پھر عمدہ باؤلنگ کرتے ہوئے اننگز کی ابتدا سے ہی نیوزی لینڈ کو دباؤ میں رکھا اور کھل کر کھیلنے موقع نہ دیا۔

کیریئر کا پہلا ٹیسٹ میچ کھیل کر ڈیبیو کرنے والے شاہین آفریدی نے 24 کے مجموعے پر ٹام لیتھ کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ کر کے پاکستان کو پہلی کامیابی دلائی۔

نیوزی لینڈ کا اسکور 70 رنز پر پہنچا تو کھانے کے وقفے سے یاسر شاہ نے شاندار اسپیل کرتے ہوئے یکے بعد دیگرے تین وکٹیں حاصل کر کے مہمان ٹیم کو مشکلات سے دوچار کردیا۔

یاسر نے جیت روال کو 45 رنز بنانے کے بعد ایل بی ڈبلیو آؤٹ کردیا، جبکہ اگلی ہی گیند پر روس ٹیلر کو بھی چلتا کیا۔

یاسر شاہ نے 72 کے مجموعی اسکور پر ہینری نکولس کو بولڈ کیا تو نیوزی لینڈ کی ٹیم 4 وکٹوں سے محروم ہو چکی تھی جس کے بعد کپتان کین ولیمسن اور بی جے واٹلنگ نے کریز سنبھالی۔

نیوزی لینڈ کے بلے باز روس ٹیلر کے باؤلڈ ہونے کے بعد وکٹ کی جانب دیکھ رہے ہیں— فوٹو: اے ایف پی
نیوزی لینڈ کے بلے باز روس ٹیلر کے باؤلڈ ہونے کے بعد وکٹ کی جانب دیکھ رہے ہیں— فوٹو: اے ایف پی

دونوں بلے بازوں نے عمدہ کھیل پیش کرتے ہوئے 104رنز کی شراکت قائم کر کے نیوزی لینڈ کو مکممل تباہی سے بچا لیا۔

اس شراکت کے قیام میں پاکستانی فیلڈر نے بھی عمدہ کھیل پیش کیا جنہوں نے 9 کے انفرادی اسکور پر بی جے واٹلنگ کا کیچ کیچ چھوڑ کر نیوزی لینڈ کم اسکور پر آؤٹ کرنے کا نادر موقع گنوا دیا۔

اس شراکت کا خاتمہ اس وقت ہوا جب 176 کے اسکور پر کیوی کپتان 89 رنز کی شاندار اننگز کھیلنے کے بعد حسن علی کی ریورس سوئنگ کا شکار بنے۔

اس کے بعد کولن ڈی گرینڈ ہوم کی وکٹ پر آمد ہوئی جنہوں نے واٹلنگ کے ساتھ مل کر ٹیم کی ڈصبل سنچری مکمل کرائی لیکن بلال آصف نے آل راؤنڈر کی اننگز کا خاتمہ کردیا۔

پاکستان کو 7ویں کامیابی کے لیے بھی زیادہ انتظار نہ کرنا پڑا اور بلال نے ایک اور کامیابی حاصل کرتے ہوئے ٹم ساؤدھی کو پویلین واپسی پر مجبور کردیا۔

جب میچ کے پہلے دن کا کھیل ختم ہوا تو نیوزی لینڈ نے 7 وکٹوں کے نقصان پر 229رنز بنائے تھے، واٹلنگ 42 اور ولیم سومر ویل 12رنز پر کھیل رہے ہیں۔

ٹاس

ادھر پاکستانی کپتان سرفراز احمد پر میچ اور سیریز جیتنے کے لیے پُر عزم دکھائی دے رہے ہیں اور ان کا کہنا تھا کہ ان کے باؤلر اچھی فارم میں ہے اور وہ کیوی ٹیم پر دباؤ بڑھانے کی کوشش کریں گے۔

پاکستان کی جانب سے شاہین آفریدی ڈیبیو کر رہے ہیں جبکہ نیوزی لینڈ کی جانب سے ول سمرویلے ڈیبیو کر رہے ہیں۔

سرفراز احمد کی قیادت میں امام الحق، محمد حفیظ، اظہر علی، حارث سہیل، اسد شفیق، بابر اعظم، سرفراز احمد، بلال آصف، یاسر شاہ اور حسن علی پر مشتمل ٹیم ابوظہبی کے میدان میں اتر گئی۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم کی قیادت کین ولیمسن کر رہے ہیں جبکہ جیت راول، ٹام لیتھم، روس ٹیلر، ہینری نکلس، بی جے واٹلنگ، کولن ڈی گرینڈ ہوم، ول سمرویلے، ٹم ساؤتھی اعجاز پٹیل اور ٹرینٹ بولٹ ٹیم کا حصہ ہیں۔

خیال رہے کہ سیریز کے پہلے میچ میں نیوزی لینڈ نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد اعجاز پٹیل کی شاندار باؤلنگ کے نتیجے میں پاکستان کو 4 رنز سے شکست سے دوچار کیا تھا۔

دوسرے ٹیسٹ میچ میں پاکستان کے یاسر شاہ کیوی بلے بازوں پر قہر بن کر برسے اور میچ میں 14 وکٹیں لے کر پاکستان کو اننگز اور 16 رنز سے کامیابی دلوا کر سیریز ایک ایک سے برابر کردی تھی۔

آئی سی سی ٹیسٹ رینکنگ میں یاسر شاہ کی ترقی

دبئی: انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی نئی ٹیسٹ رینکنگ میں یاسر شاہ مزید ایک درجہ ترقی کرتے ہوئے نویں پوزیشن پر آگئے ہیں۔ 

آئی سی سی کی ویب سائٹ پر جاری کردہ اعداد وشمار کے مطابق قومی کرکٹ ٹیم کے لیگ اسپنر یاسر شاہ نیوزی لینڈ کے خلاف دبئی ٹیسٹ میں 14 وکٹیں حاصل کرنے کے بعد ٹاپ 10 میں جگہ بنانے میں کامیاب ہوئے تھے، اب تیسرے ٹیسٹ کے پہلے روز ہی شاندار کارکردگی سے ایک درجہ مزید چھلانک لگاتے ہوئے نویں پوزیشن پر آگئے ہیں۔

ٹیسٹ بولرز کی رینکنگ میں جنوبی افریقا کے کگیسو ربادا پہلے نمبر پر موجود ہیں جب کہ انگلینڈ کے جیمز اینڈرسن دوسرے اور پاکستان کے محمد عباس تیسری پوزیشن پر براجمان ہیں۔

نیوزی لینڈ کے خلاف تیسرے ٹیسٹ کیلئے تیار ہیں: سرفراز احمد

ابوظہبی: قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ نیوزی لینڈ کے خلاف تیسرے ٹیسٹ میں عمدہ کارکردگی کے لئے تیار ہیں اور شاہین آفریدی کیویز کے خلاف ڈیبیو کریں گے۔

ابوظہبی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سرفراز احمد نے کہا کہ شیخ زید کرکٹ اسٹیڈیم کا تیسرا ٹیسٹ ہمارے لئے اہمیت کا حامل ہے اور ہمیں اس بات کا اندازہ ہے کہ نیوزی لینڈ کی ٹیم مشکل حریف ہے تاہم دبئی ٹیسٹ کی جیت نے ہمارا حوصلہ بلند کیا ہے۔

سرفراز احمد نے کہا کہ ابوظہبی میں ٹاس جیتے تو پہلے بیٹنگ کو ترجیح دیں گے، دراصل ایشیا میں ٹاس جیت کر ٹیمیں پہلے بیٹنگ کو ہی ترجیح دیتی ہیں اور ہم بھی ایسا ہی سوچتے ہیں۔

کپتان نے لیگ اسپنر یاسر شاہ پر بھرپور اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان کی بولنگ ہماری جیت کے لئے اہمیت کی حامل ہوگی۔

ٹیم میں تبدیلیوں کے حوالے سے سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ محمد عباس کی جگہ شاہین آفریدی کو ٹیم میں شامل کیا گیا ہے البتہ فہیم اشرف کو 12 کھلاڑیوں میں شامل رکھا ہے تاہم بلال آصف یا فہیم اشرف میں سے کسی ایک کے انتخاب کا فیصلہ ہونا باقی ہے۔

ٹیسٹ کرکٹ میں بحیثیت وکٹ کیپر 148 کیچ لینے والے سرفراز احمد نے کہا کہ وکٹ کیپنگ ان کی جاب ہے، ٹیسٹ کرکٹ میں ضرور وہ 150 کیچ سے دو شکار دور ہیں، تاہم ٹیم کے لئے بہترین وکٹ کیپنگ ہمیشہ ان کی اولین ترجیح رہی ہے۔

یاد رہے کہ ابوظہبی ٹیسٹ کے لئے 12 رکنی قومی ٹیم محمد حفیظ، امام الحق، اظہر علی، بابراعظم، اسد شفیق، حارث سہیل، کپتان سرفراز احمد، حسن علی، یاسر شاہ، بلال آصف، شاہین شاہ آفریدی اور فہیم اشرف پر مشتمل ہے۔

یاسر شاہ کی بولنگ کا توڑ کرنے کیلیے کیویز نے سرجوڑ لیے

ابوظبی: تیسرے ٹیسٹ میں یاسر شاہ کی بولنگ کا توڑ کرنے کیلیے کیویز نے سر جوڑ لیے۔

دبئی ٹیسٹ میں یاسر شاہ نے 14 وکٹیں لے کر پاکستان کی کامیابی میں کلیدی کردار ادا کیا تھا، جس سے سیریز فی الحال 1-1 سے برابر ہوچکی، تیسرا اور آخری میچ پیر سے ابوظبی میں شروع ہوگا،اس میں کامیابی کیلیے کیوی بیٹسمین اور کوچنگ اسٹاف سرجوڑ کر پلاننگ میں مصروف ہے، خاص طور پر لیگ اسپنر پر قابو پانے کی حکمت عملی تیار ہورہی ہے۔

مہمان بیٹسمین ٹام لیتھم نے کہاکہ ہم یاسر شاہ کے خلاف بہتر پلان کی تیاری میں مصروف ہیں،امید ہے کہ بیٹنگ کے دوران ہم اس پر سختی سے کاربند رہتے ہوئے بڑی اننگز کھیلیں گے، ہمارے بیٹسمین لمبے دورانیہ تک بیٹنگ کرنے اور اسکور بورڈ پر بڑا مجموعہ سجانے کی صلاحیت رکھتے ہیں، بولرز بھی ان کنڈیشنز میں اچھی بولنگ کررہے ہیں۔ پہلے ٹیسٹ میں اننگز کی شرمناک شکست کے باوجود لیتھم ٹیم کے کم بیک کیلیے پُراعتماد ہیں۔

ٹام لیتھم نے کہاکہ جب سے ہم یو اے ای میں آئے اچھی کرکٹ کھیلنے میں مصروف ہیں، البتہ دبئی میں پہلی اننگز کے وہ 45 منٹ دیوانگی سے بھرپور تھے جس میں پوری ٹیم 90 رنز پر آؤٹ ہوگئی،البتہ دوسری باری میں عمدہ بیٹنگ سے ہمارا اعتماد بحال ہوچکا، وہاں ہم نے 300 سے زائد رنز بنائے جو ہمارے لیے بہت ہی زیادہ اہمیت رکھتے ہیں، ٹیم کے لیے یہ بھی ضروری ہے کہ ہم اس اننگز کی مثبت چیزوں کو لے کر آگے بڑھیں،مجھے پورا یقین ہے کہ ہم سیریز جیت سکتے ہیں۔

یاد رہے کہ نیوزی لینڈ نے پہلا ٹیسٹ صرف 4 رنز سے اپنے نام کیا تھا۔

 

پی ایس ایل کی چھٹی ٹیم کیلیے رسہ کشی شروع

کراچی: پی ایس ایل کی چھٹی ٹیم کیلیے رسہ کشی شروع ہو گئی تاہم اب تک 16 امیدوار میدان میں آ چکے ہیں۔

پی سی بی نے گزشتہ دنوں واجبات کی عدم ادائیگی پر ملتان سلطانز کا معاہدہ ختم کر دیا تھا، ڈرافٹ میں پلیئرز کا انتخاب بورڈ کی نگرانی میں ہوا، گزشتہ دنوں نئی فرنچائز کیلیے ٹینڈر بھی جاری کر دیا ہے۔

اس حوالے سے نمائندہ ’’ایکسپریس‘‘ کے ساتھ خصوصی بات چیت میں چیئرمین بورڈ احسان مانی نے کہا کہ پی ایس ایل کی چھٹی ٹیم خریدنے میں اب تک16 پارٹیز نے دلچسپی دکھائی ہے، ہم اس ریسپانس سے بیحد خوش اور امید ہے کہ مناسب قیمت مل جائے گی۔ انھوں نے اس تاثر سے اتفاق نہیں کیا کہ فرنچائزز سے تنازعات کی وجہ سے پی ایس ایل کا مستقبل خدشات کی زد میں ہے ۔

احسان مانی نے کہا کہ لیگ کو کوئی خطرات لاحق نہیں ہیں، آئندہ سال 14 فروری سے پروگرام کے مطابق انعقاد ہوگا،انھوں نے کہا کہ امید ہے کہ تمام فرنچائزز جلد فیس جمع کرا دیں گی،اگر کسی نے ایسا نہیں کیا تو ہمارے پاس بینک گارنٹی تو موجود ہے جسے کیش کرا لیا جائے گا، اس سوال پر کہ ایک ٹیم نے گارنٹی جمع کرانے سے گریز کیا اس کا کیا ہوگا۔

چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ مذکورہ فرنچائز نے بورڈ کو ایک ملین ڈالر دے دیے تھے جبکہ باقی رقم کے بھی چیک جمع کرا دیے ہیں، اس لیے کوئی مسئلہ نہیں ہوگا، انھوں نے کہا کہ ہم فرنچائزز کے تحفظات سے بخوبی واقف اور کوشش ہے کہ جائز مطالبات حل کیے جائیں، البتہ اس وقت میں یہ بتانے کی پوزیشن میں نہیں کہ کیا کر رہے ہیں۔

دوسری جانب ذرائع کے مطابق پی سی بی نے فرنچائزز کے مسائل پر حکومت کو اعتماد میں لے لیا،اسے امید ہے کہ انھیں15 سے 20 فیصد رقم کا ریلیف مل جائے گا، پنجاب حکومت سے کہا گیا ہے کہ وہ سیلز ٹیکس معاف کر دے جبکہ وفاقی حکومت سے جب تک ٹیموں کا خسارہ کم نہ ہو ود ہولڈنگ ٹیکس نہ لینے کی درخواست کر دی گئی، اگر ایسا ہو گیا تو فرنچائزز کے2 سے 3 ملین ڈالرز بچ جائیں گے۔

واضح رہے کہ 14 نومبر کو انوائس جاری ہونے کے باوجود پی ایس ایل فرنچائزز فیس کی ادائیگی سے گریزاں ہیں، ان کا مطالبہ ہے کہ بغیر ٹیکس کے رقم لی جائے مگر پی سی بی اسے تسلیم کرنے کوتیار نہیں، جاوید آفریدی اور سلمان اقبال پر مشتمل کمیٹی بورڈ حکام کے ساتھ مل کر اعلیٰ حکومتی شخصیات سے ملاقات کر کے ٹیکس کی معافی کیلیے درخواستیں کررہی ہے، اس وقت فرنچائزز کو26 فیصد ٹیکس ادا کرنا پڑتا ہے،16 فیصد سیلز ٹیکس پنجاب حکومت اور 10 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس وفاقی حکومت کو جاتا ہے۔

ذرائع نے مزید بتایا کہ براڈکاسٹنگ رائٹس کی فروخت میں مزید بڈرز کو شامل کرنے کیلیے مختلف آپشنز پر غور جاری ہے، ان میں سے ایک انٹرٹینمنٹ چینلز کو بھی بڈنگ کی عمل میں شامل ہونے کی اجازت دینا ہے،اس حوالے سے حکومت سے بھی بات ہوگئی تاہم ابھی کوئی حتمی فیصلہ نہیں ہوا۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں بورڈکی جانب سے ترمیمی اشتہار جاری کرتے ہوئے بڈز کی تاریخ آگے بڑھا کر7دسمبر کردی گئی تھی۔

دورہ جنوبی افریقہ میں دو وکٹ کیپرز بھیجنے کا فیصلہ

لاہور: پی سی بی نے دورہ جنوبی افریقہ میں قومی ٹیم کے ساتھ دو وکٹ کیپرز بھیجنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

جنوبی افریقہ کے  خلاف سیریز میں  قواعد کے تحت  15 رکنی ٹیم نے جانا ہے تاہم  چیئرمین پی سی بی احسان مانی کی طرف سے ایک اضافی کھلاڑی کی شمولیت کی اجازت  ملنے کی صورت میں رضوان 16ویں کھلاڑی کے طورپر  ٹیم میں شامل کیے جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے بھی رضوان کی شمولیت پر مثبت ردعمل کا اظہار کیاہے، سلیکٹرز محمد رضوان کی قومی اے ٹیم کی جانب سے بیٹنگ اور وکٹوں کے پیچھے کارکردگی سے بہت خوش ہیں، وہ اب تک 649 رنز کے ساتھ 20 کیچز بھی وکٹوں کے پیچھے پکڑ چکے ہیں،  محمد رضوان کی  فٹنس بھی بہت متاثر کن ہے، جس پر تمام سلیکٹرز انہیں ایک بارپھر ملک کی نمائندگی کا موقع دینے کے حق میں ہیں۔

پشاور سے تعلق رکھنے والے 26 سالہ وکٹ کیپر بلے باز بیٹنگ لائن میں بھی  خاصے کارآمد ثابت ہوسکتے ہیں۔ محمد رضوان نے پاکستان کی جانب سے واحد ٹیسٹ نیوزی لینڈ کے خلاف ہملٹن میں نومبر 2016 میں کھیلا تھا،جس میں وہ صرف 13 رنز تک محدود رہے، رضوان اب تک 25 ایک روزہ میچز اور 10 ٹی ٹوئنٹی میچز میں پاکستان کی نمائندگی بھی کرچکے ہیں۔ انہوں نے گزشتہ برس آسٹریلیا کے خلاف  آخری بار ون ڈے میچ کھیلا تھا۔

محمد رضوان ان دنوں قومی اے ٹیم کے ساتھ ایشیا ایمرجنگ کپ کے لیےاعلان کردہ قومی ایمرجنگ ٹیم کے بھی کپتان ہیں۔ پاکستانی ٹیم نے دورہ جنوبی  افریقہ میں ایک تین روزہ  پریکٹس میچ  ، تین ٹیسٹ، پانچ ون ڈے اور تین ٹوئنٹی میچز کھیلنا ہیں۔

Google Analytics Alternative