کھیل

بنگلہ دیشی لیگ کیلیے کھلاڑیوں کو ریلیز کرنے کا ابھی فیصلہ نہیں کیا.شہریارخان

کراچی: پاکستان کا بنگلہ دیشی بورڈ پر غصہ ٹھنڈا نہ ہو سکا،چیئرمین شہریارخان کا کہنا ہے کہ پریمیئر لیگ کیلیے کھلاڑیوں کو ریلیز کرنے کا ابھی فیصلہ نہیں کیا، پہلے اپنے تمام آپشنز کا جائزہ لینگے۔ تفصیلات کے مطابق پی سی بی کے بنگلہ دیشی بورڈ سے تعلقات گذشتہ کچھ عرصے سے زیادہ خوشگوار نہیں ہیں، سابق چیئرمین ذکا اشرف کے دورمیں ٹیم بھیجنے کا وعدہ کرکے مُکر جانے پر پاکستانی کھلاڑیوں کو بنگلہ دیشی لیگ میں شرکت سے روک دیا گیا تھا، اب یہ ایونٹ 25 نومبر سے 25 دسمبر تک شیڈول ہے، البتہ گرین شرٹ پلیئرز کی شرکت اب بھی یقینی نہیں، پاکستان نے بھارت سے سیریز نہ ہونے پر پلان بی کی صورت میں بنگلہ دیشی ٹیم سے کھیلنے کی خواہش ظاہر کی تھی مگر منفی جواب ملا، اس سے پی سی بی خوش نہیں ہے۔ اسے امید تھی کہ تاریخوں میں تھوڑا ردوبدل کر کے سیریز کا انعقاد کر لیا جائیگا مگر ایسا نہ ہو سکا، ویمنز ٹیم کے دورے میں بھی بی سی بی سیکیورٹی وفد بھیجنے کے باوجود واضح جواب دینے سے گریز کر رہا ہے۔ اس حوالے سے جب نمائندہ ’’ایکسپریس‘‘ نے چیئرمین پی سی بی شہریارخان سے رابطہ کیا تو انھوں نے کہا کہ بنگلہ دیشی لیگ کیلیے پلیئرز کو ریلیز کرنے کا ابھی فیصلہ نہیں کیا، ہم اس حوالے سے اپنے تمام آپشنز کا جائزہ لے رہے ہیں، انھوں نے کہا کہ بھارتی بورڈ نے تاحال ہمارے خط کا کوئی جواب نہیں دیا،اب یاددہانی کیلیے مزید کسی فوری رابطے کا امکان نہیں ہے، شہریارخان نے کہا کہ ہم ابھی ہمت نہیں ہارے، سیاسی کشیدگی میں کمی ہوئی تو دسمبر میں شیڈول سیریز کا انعقاد اب بھی ممکن ہوگا۔

محمد عامر دنیا کے بہترین فاسٹ باؤلرز میں سے ہیں۔ آئن پونٹ

سابق انگلش کرکٹر اور فاسٹ باؤلنگ مکینکس کے ماہر آئن پونٹ نے محمد عامر کو دنیا کے بہترین فاسٹ باؤلرز میں سے قرار دیتے ہوئے کہا ہیے کہ ان کا ایکشن عظیم پاکستانی فاسٹ باؤلر وسیم اکرم سے کافی بہتر ہے۔انہوں نے کہا کہ عامر کا ایکشن بہت شاندار اور مضبوط ہے جو گیند ریلیز کرتے ہوئے مستقل مزاجی میں ان کیلئے مددگار ثابت ہوتا ہے.انہوں نے پاک پیشن کیلئے اپنے بلاگ میں مزید کہا کہ ہم سب ایسے باؤلرز کی تلاش میں رہتے ہیں جو ایسا کر سکتے ہوں کیونکہ اس سے انجریز کا خطرہ کم ہونے کے ساتھ ساتھ صحیح اور تیز باؤلنگ کے امکانات بڑھ جاتے ہیں، عامر کی اسپیڈ 87 میل فی گھنٹہ ہے جو بلے بازوں کیلئے مسائل پیدا کرنے کیلئے کافی ہے اور وہ اس رفتار میں مزید اضافہ بھی کر سکتے ہیں۔ایسیکس کی نمائندگی کرنے والے اور اپنی جاندار تھرو کیلئے مشہور پونٹ نے کہا کہ عامر بہت خوش قسمت ہیں کہ گیند کراتے ہوئے کلائی کی شاندار پوزیشن بہت اچھی ہوتی ہے۔سابق انگلش کرکٹر نے کہا کہ عامر ابھی صرف 23 سال کے ہیں اور ابھی ان کے کیریئر کے بہترین سال ان کے سامنے ہیں لیکن حقیقتاً ان کی کلائی کی پوزیشن انہیں ایک شاندار باؤلرز بناتی ہے جس کی بدولت وہ تیز رفتاری کے ساتھ گیند کو سوئنگ کر سکتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ عامر کا واضح طور پر وسیم اکرم سے موازنہ کیا جائے گا اور آگے چل کر کسی موقع پر یہ ناگزیر ہو گا کہ وسیم عامر کی رہنمائی کریں۔پونٹ کا ماننا ہے کہ عامر میں تمام تر صلاحیتیں موجود ہیں کہ وہ وسیم جیسے شاندار باؤلر بن سکیں کیونکہ ان کا باؤلنگ ایکشن وسیم اکرم سے کافی بہتر ہے، بحیثیت فاسٹ سوئنگ باؤلر کے نا کی تکنیک کافی بہتر ہے، عامر کو یہ اگر کوئی چیز روک سکتی ہے تو وہ خود ہیں۔

2010 کے بدنام زمانہ اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں ملوث عامر کو آئی سی سی نے سلمان بٹ اور محمد آصف کے ساتھ 2 ستمبر سے ہر طرز کی کرکٹ کھیلنے کی اجازت دے دی ہے تاہم پاکستان کرکٹ بورڈ نے ان تینوں کی عالمی کرکٹ میں فوری واپسی کے امکانات کو یکسر رد کردیا ہے۔

شاہد آفریدی کی عید قربان سے پہلے قربانی ۔

اسلام آباد:  پاکستان کی ٹی 20کرکٹ ٹیم کے کپتان اور جارح مزاج بلے باز شاہد خان آفریدی ڈومیسٹک ٹورنامنٹ میں کراچی بلوز کی قیادت سے وکٹ کیپر بیٹسمین سرفراز احمد کے حق میں دستبردار ہوگئے واضح رہے کہ شاہد آفریدی کو کراچی بلوز کی قیادت کے فرائض سونپے گئے تھے تاہم کوالیفائینگ راﺅنڈ میں مین راﺅنڈ کے ابتدائی میچز میں آفریدی عدم دستیابی پر سرفراز نے قیادت کی تھی گذشتہ روز شاہد آفریدی وطن واپس لوٹ گئے تھے لیکن انہوںنے سرفراز کیلئے قیادت سے دستبردار ہونے کا اعلان کردیا ہے شاہد آفریدی کا کہنا ہے کہ ٹورنامنٹ کے دیگر میچوں میں سرفرازٹیم کی قیادت کرینگے اور میں بھی ان کی زیر قیادت کھیلوں گا ۔

ٹاس ختم کرنے بجائے آئی سی سی کھیل میں پیدا ہونے والی خامیوں کو دور کرے.جاوید میانداد

اسلام آباد: پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان جاوید میانداد نے بین الاقوامی کرکٹ میں ٹاس ختم کرنے کی تجویز کو مسترد کردیا ۔انہوں نے کہا کہ دہائیوں پرانی اس روایت کو ختم کرنے کے بجائے آئی سی سی کو کھیل میں پیدا ہونے والی خامیوں کو دور کرنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ ٹیسٹ کرکٹ کا معیار گرگیا ہے اور ٹاس کو ختم کرنے سے کھیل مزید متاثر ہوگا۔خیال رہے کہ سابق آسٹریلوی کپتان رکی پانٹنگ اور عظیم ویسٹ انڈین کھلاڑی مائیکل ہولڈنگ نے حال ہی میں ٹیسٹ میچوں میں ٹاس ختم کرنے کی تجویز دی تھی۔رکی پونٹنگ نے انگلینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان ہونے والی حالیہ ایشز ٹیسٹ سیریز کے دوران تجویز پیش کی تھی کہ بیرون ملک کھیلنے والی یا مہمان ٹیم کو پہلے باؤلنگ یا بیٹنگ کا اختیار دینا چاہیے تاکہ وہ ہوم ٹیم کی جانب سے اپنی مرضی وکٹ بنا کر حاصل کیے گئے فائدے کا مقابلہ کر سکیں۔ اسٹیو وا نے بھی اس تجویز کی حمایت کی تھی جبکہ مائیکل ہولڈنگ بھی اس تجویز کے حامی نظر آئے تھے۔تاہم پاکستان کی جانب سے 124 ٹیسٹ کھیلنے والے میاں داد نے کہا کہ ٹاس کھیل کے لیے فائدہ مند ہے، سکے کے ہوا میں جانے کے ساتھ ہی تجسس کا پہلو پیدا ہوجاتا ہے اور ہر کوئی اس فیصلے کا انتظار کررہا ہوتا ہے کہ ٹاس جیتنے والا کپتان بیٹنگ کرے گا یا فیلڈنگ۔انہوں نے کہا کہ ٹاس ہارنے یا جیتنے کا اثر میزبان ٹیم پر بھی پڑتا ہے اور اس کے پیچھے دی جانے والی منطق درست نہیں۔

یونس خان اور یاسر حمید کی شاندار بلے بازی لاہور کو شکست سے دوچار کردیا.

راولپنڈی: قومی ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ میں یونس خان اور یاسر حمید کی شاندار بلے بازی کی بدولت ایبٹ آباد نے لاہور کو اپ سیٹ شکست سے دوچار کردیا جبکہ پشاور کی ٹیم نے مصباح الحق کی ٹیم فیصل آباد کو زیر کر کے قیمتی پوائنٹس حاصل کر لیے۔

راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلے گئے پہلے میچ میں لاہور کے کپتان اظہر علی نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا جو تباہ کن ثابت ہوا۔

ایبٹ آباد کی ٹیم نے یاسر حمید اور یونس خان کی شاندار بلے بازی کی بدولت اسکور بورڈ پر 198 رنز کا بڑا مجموعہ سجایا۔

یاسر حمید نے 43 گیندوں پر دو چھکوں اور نو چوکوں کی مدد سے 67 اور یونس نے لگاتار دوسرے میچ میں نصف سنچری اسکور کرتے ہوئے 39 گیندوں پر آٹھ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 61 رنز بنائے، سجاد علی نے بھی 38 رنز کی کارآمد اننگ کھیلی۔

جواب میں اسٹار سے سجی لاہور وائٹس کی ٹیم ایبٹ آباد کی باؤلنگ کے سامنے شروع سے ہی بے بس نظر آئی اور کھلاڑی وقفے وقفے سے وکٹیں گنوا کر پویلین لوٹتے رہے۔

لاہور کی ناقص بیٹنگ کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ سات بلے باز ڈبل فیگر میں بھی داخل نہ ہو سکے جبکہ محمد حفیظ 31 رنز کے ساتھ سب سے کامیاب بیٹسمین رہے۔

لاہور کی پوری ٹیم 115 رنز پر ڈھیر ہو گئی اور ایبٹ آباد نے 83 رنز کے بھاری مارجن سے کامیابی حاصل کی۔

ایبٹ آباد کی جانب سے خالد عثمان نے تباہ کن باؤلنگ کرتے ہوئے پانچ وکٹیں حاصل کر کے میچ آف دی میچ کا ایوارڈ حاصل کیا جبکہ جنید خان اور یاسر شاہ نے دو دو وکٹیں حاصل کیں۔

ادھر بدھ کو ہی کھیلے گئے دوسرے میچ میں پشاور کی ٹیم نے قومی ٹیسٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کی فیصل آباد کی ٹیم کو اپ سیٹ شکست دی۔

فیصل آباد نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور ایک موقع پر انہوں نے نویں اوور میں تین وکٹ کے نقصان پر 75 رنز بنا لیے تھے، اس موقع پر کپتان مصباح الحق کی وکت پر موجودگی کو دیکھتے ہوئے ایسا محسوس ہوتا تھا کہ شاید فیصل آباد کی ٹیم 150 سے زائد رنز کا مجموعہ اسکور بورڈ پر سجا لے گی۔

لیکن 94 کے مجموعے پر جب مصباح 34 رنز رنز بنا کر آؤٹ ہوئے تو بیٹنگ لائن میں بھونچال آگیا، مزید 13 رنز کے اضافے سے ٹیم مزید تین وکٹیں گنوا بیٹھی۔

اختتامی اوورز میں احسان عادل کی بہتر بیٹنگ کی بدولت فیصل آباد اسکور 133 رنز تک پہنچانے میں کامیاب رہا۔

جواب میں پشاور کی ٹیم بھی 52 رنز پر تین وکٹیں گنوا کر مشکلات سے دوچار ہو گئی تھی لیکن اس موقع پر افتخار احمد فیصل آباد کے باؤلرز کے سامنے ڈٹ گئے۔

انہوں نے لو اسکورنگ میچ میں 34 گیندوں پر دو چھکوں اور چار چوکوں کی مدد سے ناقابل شکست 51 رنز بنا کر اپنی ٹیم کو میچ میں پانچ وکٹ کی فتح سے ہمکنار کرا دیا جس پر انہیں میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا

کامن ویلتھ یوتھ گیمز میں پاکستان کے عبدالرحمان نے چاندی کا تمغہ جیت لیا.

سمووا: کامن ویلتھ یوتھ گیمز میں پاکستان کے عبدالرحمان نے ویٹ لفٹنگ کی 77 کلو گرام کی کیٹیگری میں چاندی کا تمغہ جیت لیا۔سمووا میں جاری پانچویں کامن ویلتھ یوتھ گیمز میں تمغے کی دوڑ کیلئے عبدالرحمان کو کیمرون، اسکاٹ لینڈ اور میزبان سمووا کے ویٹ لفٹرز سے سخت مقابلے کا سامنا تھا۔انہوں نے مجموعے طور پر 242 کلو گرام کا وزن اٹھا کر پاکستان کو چاندی کے تمغے کا حقدار بنا دیا۔اس موقع شائقین نے میڈل کیلئے جنگ میں چاروں کھلاڑیوں کے درمیان سخت مقابلے پر ان کو خوب سراہا۔یہ عبدالرحمان کی پاکستان کیلئے دوسری بڑی کامیابی ہے۔اس سے قبل رواں سال جنوری میں انہوں نے دوحا میں ایشین یوتھ ویٹ لفٹنگ چیمپیئن شپ میں 39 سال بعد پاکستان کو سونے کے تمغے کا حقدار بنایا تھا۔ادھر ٹینس کے مقابلے مزمل مرتضیٰ کو کوارٹر فائنل میں شکست کا سامنا کرنا پڑا اور وہ مقابلے سے باہر ہو گئے۔اب تک پاکستان نے پانچویں کامن ویلتھ یوتھ گیمز میں دو چاندی کے تمغے جیتے ہیں اور یہ دونوں ہی کامیابیاں ویٹ لفٹنگ کے شعبے میں حاصل کی ہیں۔

محمد حفیظ کو ٹی ٹونٹی ایونٹ میں باؤلنگ کرنے کی اجازت مل گئی

لاہور: قومی ٹی ٹونٹی ٹیم کے سابق کپتا ن محمد حفیظ کو آج سے شروع ہونے والے ڈومیسٹک ٹی ٹونٹی ایونٹ میں باؤلنگ کرنے کی اجازت مل گئی ہے ۔ ذرائع کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے اعلی حکام نے اس حوالے سے حفیظ کو گرین سگنل دے دیا ہے جس کے بعد آل راؤنڈر آ ج اپنی ٹیم لاہوروائٹس اور اسلام آباد ریجن کے مابین راولپنڈی کرکٹ سٹیڈیم میں شیڈول میچ میں باؤلنگ کر یں گے ۔ اس بارے میں آئی سی سی کے ایک اعلی عہدیدار کا کہنا ہے کہ اگر کسی کھلاڑی پر انٹر نیشنل کرکٹ میں باؤلنگ کرنے پر پابندی عائد ہو تو متعلقہ کرکٹ بورڈ اسے ڈومیسٹک کرکٹ میں باؤلنگ کرنے کی اجازت دے سکتا ہے ، مذکورہ عہدیدار کے مطابق اس اجازت کا مقصد اس باؤلر کے ایکشن کی جانچ پڑتا ل کرنا ہوتا ہے اور اگر اسکا بورڈ مطمئن ہو تو وہ آئی سی سی سے اس کے باؤلنگ ایکشن کا ٹیسٹ دوبارہ لینے کی درخواست بھی کر سکتا ہے ۔ یاد رہے کہ محمد حفیظ کا ایکشن پہلی مرتبہ نومبر 2014ء میں نیوزی لینڈ کے خلاف متحدہ عرب امارات میں کھیلی گئی ٹیسٹ سیریز کے دوران رپورٹ ہوا تھا جس کے بعد آئی سی سی نے ان پر پابندی عائد کر دی تھی ،اپریل 2015ء میں انہوں نے اپنا باؤلنگ ایکشن چنائی کی لیب سے کلیئر کروایا تاہم سری لنکا کے خلاف حالیہ ٹیسٹ سیریز کے دوران ان کا ایکشن ایک بار پھر رپورٹ ہوا جس کے بعد باؤلنگ ایکشن کے ٹیسٹ کا نتیجہ انکے خلاف آنے کے بعد آئی سی سی نے ان پر ایک سال تک انٹر نیشنل کرکٹ میں باؤلنگ کروانے پر پابندی عائد کر دی ۔

پاکستان سپر لیگ میں شرکت کیلیے غیرملکی کرکٹرز سر گرم

کراچی:  پاکستان سپر لیگ میں شرکت سے قبل غیرملکی کرکٹرز نے ایسوسی ایشن سے مشاورت شروع کر دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور، کراچی، پشاور، کوئٹہ اور اسلام آباد کے نام سے5ٹیمیں آئندہ برس 4 سے 24 فروری تک دوحا، قطر میں پی ایس ایل کے دوران ایکشن میں نظر آئیں گی، ایک ملین ڈالر انعامی رقم کے ایونٹ میں پی سی بی کا دعویٰ ہے کہ 40 انٹرنیشنل کرکٹرز شرکت کی خواہش رکھتے ہیں۔ ایونٹ کے حوالے سے فیڈریشن آف انٹرنیشنل کرکٹرز ایسوسی ایشن (فیکا) کے ایگزیکٹیو چیئرمین ٹونی آئرش نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے،کیپ ٹاؤن، جنوبی افریقہ سے نمائندہ ’’ایکسپریس‘‘ کو خصوصی انٹرویو میں انھوں نے کہا کہ بعض ممبر کرکٹرز نے پاکستان سپر لیگ کے حوالے سے ہم سے معلومات طلب کی ہیں البتہ ان کے نام نہیں بتا سکتا،ٹونی آئرش نے کہا کہ فیکا پی ایس ایل سمیت کسی بھی ٹوئنٹی 20 لیگ میں پلیئرز کو شرکت کا موقع ملنے کی حوصلہ افزائی کرتی ہے۔ البتہ بعض معاملات پر عمل درآمد ضروری ہے، ایک تو ایونٹ آئی سی سی سے منظور شدہ ہو، سیکیورٹی معاملات کے لحاظ سے کھلاڑیوں کی اس میں شرکت درست ہو،کھیل کا وقار برقرار رکھنے کے سلسلے میں اینٹی کرپشن اور ڈوپنگ کوڈز کا مکمل اطلاق کیا ہو، منفی عناصر سے بچنے کیلیے اینٹی کرپشن یونٹ کا تقرر بھی ضروری ہے۔ اسی کے ساتھ پلیئرز کے ساتھ درست اور منصفانہ معاہدے کیے جائیں۔انھوں نے کہا کہ ہمارا اپنے رکن ارکان کو یہی مشورہ ہوگا کہ اگر ان تمام باتوں پر عمل درآمد کیا جائے تو ضرور پی ایس ایل میں شرکت کریں، ساتھ ان کے اپنے ملک کی کرکٹ بورڈ کا این او سی بھی ضروری ہوگا۔ یاد رہے کہ1998میں قائم شدہ فیکا دنیا بھر کے کرکٹرز کے حقوق کا تحفظ کرتی ہے،آسٹریلیا، انگلینڈ، نیوزی لینڈ، جنوبی افریقہ،سری لنکا اور ویسٹ انڈیز کی پلیئرز ایسوسی ایشنز اس کی رکن ہیں،بنگلہ دیشی کرکٹرز ویلفیئر ایسوسی ایشن کا بھی فیکا سے اطلاق ہے، ٹیسٹ ممالک میں صرف پاکستان، بھارت اور زمبابوے اس کے رکن نہیں ہیں۔ ایک سوال پر ٹونی آئرش نے کہا کہ ماضی میں بعض ٹی ٹوئنٹی لیگز کے دوران کھلاڑیوں کو معاوضوں کے معاملے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، اسی لیے ہم تمام ایسے ایونٹس کے منتظمین کو معاہدے میں یہ شق رکھنے کا مشورہ دیتے ہیں کہ فیس کا کچھ حصہ لیگ شروع ہونے سے قبل ادا کر دیا جائے گا۔ہم کھلاڑیوں سے بھی کہتے ہیں کہ اس بات پر اصرار کریں۔ بھارت، سری لنکا اور بنگلہ دیشی لیگز کے فکسنگ سے متاثر ہونے کے بعد فیکا چیف نے پاکستان کو مشورہ دیا کہ سخت اینٹی کرپشن کوڈ کا اطلاق کریں، ایونٹ ہر حالت میں اینٹی کرپشن یونٹ کی زیرنگرانی کرایا جائے جو آئی سی سی کا ہو یا کونسل اسے جانچ چکی ہو

Google Analytics Alternative