کھیل

’وزڈن کے پانچ کرکٹرز میں شمولیت اعزاز ہوگا‘-مصباح الحق

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ اگر ان کا نام وزڈن کے پانچ بہترین کرکٹرز میں شامل کیا جاتا ہے تو یہ ان کے لیے بڑے اعزاز کی بات ہوگی۔

 

مصباح الحق نے بی بی سی اردو کو دیے گئےانٹرویو میں کہا کہ ان کی ہمیشہ سے اولین ترجیح پاکستانی ٹیم کو جیت سے ہمکنار کرنا اور اچھی کارکردگی دکھانا ہے لیکن ظاہر ہے کہ اگر وزڈن یا اسی طرح کے دوسرے اعزازات آپ کے حصے میں آتے ہیں تو ان کی بھی بڑی اہمیت ہوتی ہے کیونکہ انھیں آپ نہ صرف ہمیشہ یاد رکھتے ہیں بلکہ فخر بھی محسوس کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ دنیائے کرکٹ میں معتبر مقام رکھنے والی کتاب وزڈن ہر سال انگلینڈ میں کھیلی جانے والی بین الاقوامی اور کاؤنٹی کرکٹ میں غیرمعمولی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے پانچ بہترین کرکٹرز کا انتخاب کرتی ہے۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے موجودہ دورۂ انگلینڈ میں کپتان مصباح الحق وزڈن کے پانچ بہترین کرکٹرز میں شمولیت کے ایک مضبوط دعوےدار کے طور پر سامنے آئے ہیں جس کا سبب بحیثیت کپتان اور بیٹسمین ان کی اس دورے میں عمدہ کارکردگی ہے۔

مصباح الحق کی قیادت میں پاکستانی کرکٹ ٹیم نے انگلینڈ کے خلاف چار ٹیسٹ میچوں کی سیریز دو دو سے برابر کی۔ اس نے لارڈز میں کھیلا گیا پہلا ٹیسٹ جیتا اور پھر اگلے دو ٹیسٹ میچز ہارنے کے بعد اوول کا آخری ٹیسٹ جیت کر سیریز برابر کی۔

مصباح الحق نے پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان کھیلے گئے لارڈز ٹیسٹ میں شاندار سنچری سکور کی تھی

اس کارکردگی کے نتیجے میں پاکستانی کرکٹ ٹیم پہلی بار ٹیسٹ کرکٹ کی عالمی رینکنگ میں پہلی پوزیشن حاصل کرنے میں بھی کامیاب ہوگئی۔ مصباح الحق نے اس سیریز کے لارڈز ٹیسٹ میں شاندار سنچری سکور کی تھی۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ وہ اپنے کریئر میں پہلی بار انگلینڈ میں ٹیسٹ میچ کھیل رہے تھے جس میں وہ 42 سال 47 دن کی عمر میں سنچری بنانے والے ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کے سب سے عمر رسیدہ کپتان بھی بن گئے۔

مصباح الحق نے سیریز کے دوسرے اور تیسرے ٹیسٹ میں بھی نصف سنچریاں سکور کی تھیں۔

پاکستان کے 15 کھلاڑی اب تک وزڈن کے پانچ بہترین کرکٹرز میں جگہ بناچکے ہیں۔ ان میں فضل محمود، مشتاق محمد، آصف اقبال، حنیف محمد، ماجد خان، ظہیرعباس، جاوید میانداد، عمران خان، سلیم ملک، وقاریونس، وسیم اکرم، مشتاق احمد، سعید انور، ثقلین مشتاق اور محمد یوسف شامل ہیں۔

سنہ 2011 کے وزڈن ایڈیشن میں پانچ کے بجائے چار کرکٹرز شامل کیے گئے تھے۔ ایک کرکٹر کو اس اعزاز سے نوازا نہیں گیا تھا جس کے بارے میں وزڈن کی انتظامیہ نے اس کرکٹر کا نام لیے بغیر کہا تھا کہ سپاٹ فکسنگ سکینڈل کی وجہ سے ایک پاکستانی کرکٹر کو پانچ بہترین کرکٹرز میں شامل نہیں کیا گیا۔

عام خیال یہی ہے کہ وہ کرکٹر محمد عامر تھے جنھوں نے سنہ 2010 کے انگلینڈ کے دورے میں شاندار بولنگ کی تھی اور مین آف دی سیریز رہے تھے۔

ٹی 20میں شاہد آفریدی کی شمولیت کا کوئی امکان نہیں

احمد شہزاد اور عمر اکمل کے نام بھی ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز میں زیر غور لا ئیں جائیں گے ۔سلیکشن کمیٹی کے ذرائع کا کہنا ہے کہ انگلینڈ کے خلاف واحد ٹی ٹوئنٹی میچ کےلیے قومی اسکواڈ میں زیادہ تبدیلیوں کا امکان نہیں ہے ۔

عماد بٹ کو تو ٹیم میں شامل کیا جا رہا ہے ،البتہ عمر اکمل اور احمد شہزاد کو ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز سے زیر غور لایا جائے گا ۔ سابق کپتان شاہد آفریدی کو انگلینڈ کے خلاف ٹی ٹوئنٹی میچ کےلیے زیر غور نہیں لایا جائے گا ۔

سلیکشن کمیٹی کا مؤقف ہے کہ شاہد آفریدی نے ٹیم میں کم بیک کرنا ہے لیکن وہ ڈومیسٹک ٹی ٹوئنٹی نہیں کھیل رہے اور اگر وہ فٹ نہیں ہیں تو سلیکشن کمیٹی کو اس حوالے سے بتا دیں ۔

بین الاقوامی اسنائپر مقابلوں میں پاک فوج کی پہلی پوزیشن

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ یعنی آئی ایس پی آر کے مطابق چین کے صوبے بیجنگ میں بین الاقوامی اسنائپر مقابلوں کا انعقاد ہوا جس میں 14ممالک کی 21ٹیموں نے حصہ لیا ۔

پاک فوج کے نائیک ارشد کو بہترین اسنائپر قرار دیا گیا جبکہ پاک فوج کی ٹیم نے بھی ان مقابلوں میں پہلی پوزیشن حاصل کی۔

رپورٹ کے مطابق رواں سال جولائی میں پاک فضائیہ کے سی 130 ہرکولیس ٹرانسپورٹ ایئرکرافٹ نے برطانیہ میں ہونے والے ’رائل انٹرنیشنل ایئر ٹیٹو شو‘ میں فتح حاصل کی تھی۔

برطانیہ کے رائل ایئر فورس بیس فیئر فورڈ میں ہونے والے شو میں 50 ممالک کے 200 سے زائد طیاروں نے حصہ لیا جس میں پاکستان کی نمائندگی سی 130 طیارے نے کی جہاں پاک فضائیہ نے یہ منفرد اعزاز حاصل کیا۔

گزشتہ سال پاک فوج کی ٹیم نے برطانوی آرمی کے ’ایکسرسائز کیمبرائن پٹرول‘ ایونٹ میں بھی تقریباً 140 ٹیموں کو پیچھے چھوڑتے ہوئے سونے کا تمغہ حاصل کیا تھا۔

پاکستا ن نے ویسٹ انڈین ٹیم کے ساتھ ہونے والی سیریز کا باضابطہ شیڈول کر دیا ۔

لاہور:  پاکستان صحرائے عرب میں کالی آندھی کی میزبانی کیلیے تیار ہے،سیریز کا باضابطہ شیڈول جاری کردیا گیا، ستمبر سے نومبرتک ہونے والی سیریز تینوں فارمیٹ کے 3،3میچز پر مشتمل ہوگی، دبئی میں تاریخی نائٹ ٹیسٹ کی تیاری کیلیے ویسٹ انڈین ٹیم ای سی بی الیون سے آئی سی سی اکیڈمی کی مصنوعی روشنیوں میں 2 روزہ ٹور میچ 3اور4اکتوبر کو کھیلے گی.

تفصیلات کے مطابق سری لنکن ٹیم کی بس پر لاہور میں دہشت گردوں کا حملہ ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کو ختم کر گیا،اس کے بعد سے میدان مقابلوںکو ترس رہے ہیں، پی سی بی بھاری بھرکم اخراجات کے باوجود اپنی ہوم سیریز یواے ای میں کرانے پر مجبور ہے، مالی خسارے کو کم کرنے کیلیے ویسٹ انڈیز کی میزبانی سری لنکا میں کرنے کی تجویز بھی سامنے آئی تھی لیکن وہاں موسم کی مداخلت کو پیش نظر رکھتے ہوئے بالآخر کیریبیئنز کا امارات میں ہی استقبال کرنے کا فیصلہ کیا گیا، ستمبرسے نومبر تک ہونے والی سیریز 3ٹی ٹوئنٹی، اتنے ہی ون ڈے انٹرنیشنل اور 3 ٹیسٹ پر مشتمل ہوگی، پی سی بی کی جانب سے مقابلوں کا باقاعدہ شیڈول جاری کردیا گیا ہے۔

ویسٹ انڈین ٹیم ای سی بی الیون کے ساتھ مختصر فارمیٹ کا ایک ٹور میچ 20ستمبر کو دبئی کے آئی سی سی اکیڈمی گرائونڈ پرکھیلے گی، ابتدائی دونوں ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل 23اور24ستمبر کو دبئی میں ہونگے،اس طرز کے تیسرے اور آخری میچ کا 27 ستمبرکو ابوظبی میزبان ہوگا۔ ون ڈے سیریز کے ابتدائی دونوں مقابلے 30ستمبر اور 2 اکتوبر کو شارجہ میں شیڈول کیے گئے ہیں، اس کے بعد مہمان ٹیم 2روزہ ٹور میچ میں 3اور 4اکتوبر کو ای سی بی الیون پر آئی سی سی اکیڈمی میں ہنر آزمائے گی، تیسرے ایک روزہ انٹرنیشنل میچ میں دونوں ٹیمیں 5 تاریخ کو ابوظبی میں مقابل ہونگی، ویسٹ انڈین ٹیم شارجہ اسٹیڈیم کی مصنوعی روشنیوں میں پی سی بی پیٹرنز الیون کیخلاف سہ روزہ ٹور میچ 7سے 9اکتوبر تک کھیلے گی۔

اس مقابلے میں مہمان ٹیم کو نئی تاریخ رقم کرنے والے نائٹ ٹیسٹ کی تیاری کا موقع ملے گا جو 13 سے17اکتوبر تک دبئی میں رکھاگیا ہے، ابوظبی21 سے25اکتوبر تک دوسرے میچ کا میزبان ہوگا، تیسرا اور آخری ٹیسٹ 30 اکتوبر سے 3نومبر تک شارجہ میں ہوگا۔ یاد رہے کہ دبئی میں ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کا دوسرا ڈے نائٹ میچ ہوگا، اولین مقابلہ گذشتہ سال آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے درمیان ایڈیلیڈ میں ہوا تھا، آئی سی سی کی طرف بھرپور حوصلہ افزائی کیے جانے پر پی سی بی نے ویسٹ انڈیز کو مصنوعی روشنیوں میں طویل فارمیٹ کا میچ کھیلنے کی تجویز دی تھی۔

جس نے اس نوعیت کے مقابلوں کی پریکٹس نہ ہونے کے سبب ابتدا میں توقف کا اظہار کیا، تاہم پاکستان کی جانب سے ڈے اینڈ نائٹ ٹور میچ شیڈول کیے جانے پر رضامندی ظاہر کردی۔ پاکستانی کرکٹ ٹیم کو رواں برس کے آخر میں شیڈول دورئہ آسٹریلیا میں بھی برسبین میں ایک ڈے نائٹ ٹیسٹ میچ کھیلنا ہے،سیریز کے دوسرے مقابلے میں 15دسمبر کو میزبان کینگروز کا مصنوعی روشنیوں میں سامنا کرنا ہوگا۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان دوسرا ون ڈے کل لارڈز میں ہوگا

ساؤتھ ہیمپٹن میں بیٹسمین بڑا اسکور کرنے میں ناکام،بولرز فیلڈ کے مطابق بولنگ کرنے میں ناکام،جس کے نتیجے میں پاکستانی ٹیم 44 رنز سے ناکام ہو گئی۔

یعنی کپتان پریشان ، ٹیم مینجمنٹ بھی پریشان ،مینجمنٹ سوچ میں ہے کہ کیسے بیٹنگ میں کمزوری ختم کی جائے۔ بولنگ میں کوتاہی اور فیلڈنگ میں خرابی کیونکہ کل لارڈز میںسیریز کا دوسرا مقابلہ ہےجس کی تیاری گرین کیپس جم کر رہےہیں۔

امکان ہے دوسرے ون ڈے کےلیے فائنل الیون میں ایک سے دو تبدیلیاں کی جائیں۔ سمیع اسلم اور یاسر شاہ کی شمولیت پر غور کیا جا رہا ہے، کون کون ڈراپ ہوگا فیصلہ کل ہی سامنے آئے گا۔

بحران کی شکار ٹیم کا عالمی نمبر ون بن جانا حیرت انگیز ہے، مصباح الحق

ناروے: قومی ٹیسٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ بحران کی شکار ٹیم کا عالمی نمبر ون بن جانا حیرت انگیز ہے۔

آسٹریلوی اخبار کو انٹریو دیتے ہوئے مصباح الحق کا کہنا تھا کہ 2010 میں  پاکستانی کرکٹ ٹیم پر شدید دباؤ تھا اور وہ ٹیم اور کیمپ کے 35 کھلاڑیوں میں بھی شامل نہیں تھے لیکن سابق چیئرمین پی سی بی اعجاز بٹ نے انہیں اچانک بورڈ کے دفتر بلا کر ڈرامائی انداز میں کپتان بنانے کی پیشکش کی اور جب تینوں فارمیٹ کا کپتان بنایا گیا تو ہر کوئی حیران تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ مشکل وقت میں قومی ٹیم کی قیادت سنبھالنا آسان کام نہیں تھا لیکن اب قومی ٹیم ڈرامائی انداز میں ہی نمبر ون ٹیم بن گئی، یہ ایسے ہی ہے جیسے ورلڈ کپ جیتا ہو۔

مصباح الحق کا کہنا تھا کہ عالمی رینکنگ پر ایک دن، ایک ہفتہ یا ایک ماہ تک قبضہ رہے تو بھی اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا تاہم اس سے کھلاڑیوں کا مورال بلند ہوا ہے، ہمیں ویسٹ انڈیز کے خلاف یو اے ای میں اچھا کھیل پیش کرنا ہوگا اس کے بعد نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے خلاف سیریز ہیں اور یہ ہمیشہ بڑا امتحان ہوتا ہے۔ ایک سوال پر مصباح کا کہنا تھا انگلینڈ گئے تو ہر کوئی انگلینڈ کی تین صفر یا چار صفر کی باتیں کرتا تھا لیکن سیریز برابر کر دی ۔اس لئے وہ سمجھتے ہیں کہ ٹیم باصلاحیت ہے اور آسٹریلیا کی مضبوط ٹیم کو ان کے ملک میں ہرا سکتی ہے۔

قومی ٹیسٹ ٹیم کے کپتان کا کہنا تھا کہ انگلینڈ کے خلاف متحدہ عرب امارات میں 2012 میں کلین سویپ بہت بڑی کامیابی تھی، لڑکوں میں فائٹنگ کا جذبہ ہے جب کہ انگلینڈ کے خلاف ہی حالیہ ٹیسٹ سیریز میں لارڈز ٹیسٹ جیتنے کے باوجود اولڈ ٹریفورڈ میں بری طرح ناکامی کا سامنا کرنا پڑا لیکن ایجبسٹن میں کئی بار پلڑا بھاری ہوا لیکن جیت نہ سکے۔ پریشر کے باوجود پوری ٹیم ایک ہو کر کھیلی اور اوول ٹیسٹ جیت کر قوم کو یوم آزادی کا تحفہ دیا۔

برطانوی شہزادے ہیری کا یوسین بولٹ کو چیلنج

لندن : دنیا کے تیز ترین انسان یوسین بولٹ نے برطانوی شہزادے ہیری کا دوڑنے کا چیلنج قبول کرلیا ہے اور مقابلے کے لیے لندن پہنچ گئے ہیں۔

bolt-12

شہزادے ہیری نے دو روز قبل دنیا کے تیز ترین انسان کی سالگرہ پر ٹوئٹ کیا تھا، جس میں انہوں نے ریو اولمپکس میں شاندار کارکردگی دکھانے پر یوسین بولٹ کو مبارکباد پیش کی اور انہیں عظیم ایتھلیٹ قرار دیا اور ساتھ ساتھ ایک بار پھر ٹریک پر مقابلے کی پیشکش کی، یوسین بولٹ نے اس چیلنج کو قبول کرلیا ہے اور جمیکا سے لندن پہنچ گئے ہیں۔

View image on Twitter

ٹوئٹ میں شہزادہ ہیری نے ایک پوسٹ بھی شیئر کی ہے، جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ شہزادہ ہیری اور یوسین بولٹ ایک ساتھ بھاگ رہے ہیں اور ہیری انہیں شکست دے رہے ہیں، ہیری کے ٹویٹر پر چیلنج پر ہزاروں لوگوں نے اسے پسند کیا۔

اب دیکھنا ہے کہ اس مرتبہ ہنری یوسین سے جیتنے کے لیے کیا ترکیب لڑاتے ہیں۔

ٹیسٹ رینکنگ میں پاکستان کی بادشاہت

ٹیسٹ رینکنگ میں پاکستان کی بادشاہت کا سورج طلوع ہوگیا،پورٹ آف اسپین میں ہونے والی بارش بھارت کی عالمی رینکنگ میں نمبر ون پوزیشن کو بھی بہا لے گئی،آئی سی سی کی جانب سے اس کا اعلان بھی ہوگیا ہے۔

پاکستان ٹیم 22 ماہ سے کوئی ٹیسٹ سیریز نہیں ہاری، جس کا ثمر آج گرین کیپس کو ملا ہے، پاکستان کی ورلڈ رینکنگ میں بادشاہت قائم ہو گئی۔

صرف پانچ روز پہلے بھارت کو نمبر ون پوزیشن ملیجو پورٹ آف اسپین میں ہونے والی بارش میں بہہ گئی، جہاں ویسٹ انڈیز کے خلاف آخری ٹیسٹ کا آج آخری دن تھا، لیکن چار دن میں صرف 22 اوورز کا ہی کھیل ہو سکا ہے،یعنی ٹیسٹ کا ڈرا ہونا یقینی تھا، جسسے بھارت سے ٹیسٹ رینکنگ میں پہلی پوزیشن بھی چھن گئی اور نمبر ون پوزیشن پاکستان کے نام ہوگئی۔

Google Analytics Alternative