کھیل

سعید اجمل کی دھماکہ خیز واپسی

لاہور ( این این آئی):سعید اجمل کی دھماکہ خیز واپسی،کراچی بلیوز کی جانب سے نمائندگی کرتے ہوئے لیگ اسپنر نے آٹھ میچز کھیل کر اٹھارہ کھلاڑیوں کوپویلین کی راہ دکھائی ۔قومی ٹی ٹونٹی ٹورنامنٹ میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے سپنر سعید اجمل نے کہا ہے کہ میری پرفارمنس ظاہر کرتی ہے کہ مجھ میں اب بھی صلاحیتیں موجود ہیں ،قومی ٹورنامنٹ میں شاندار کارکردگی یہ ظاہر کرتی ہے کہ میں اب بھی ٹیم میں واپسی کرنا چاہتا ہوں۔سوشل میڈیا پر اپنے بیان میں سعید اجمل نے کہا کہ بالنگ ایکشن کی تبدیلی کے بعد موثر کارکردگی دکھانے کیلئے بھرپور محنت کر رہا ہوں ۔ قومی ٹی ٹونٹی ٹورنامنٹ میں اس کا پھل سامنے آیا ہے۔کراچی بلیوز کی جانب سے نمائندگی کرتے ہوئے لیگ اسپنر نے آٹھ میچز کھیل کر اٹھارہ کھلاڑیوں کوپویلین کی راہ دکھائی ۔یاد رہے کہ سعید اجمل پر ستمبر 2014ء میں غیر قانونی بالنگ ایکشن کے باعث پابندی عائد کی گئی تھی لیگ اسپنر نے عظیم آف اسپنر ثقلین مشتاق کی زیرنگرانی اپنا ایکشن ٹھیک کیا اور قومی واپس ٹیم میں آگئے۔ مگر دوسرے ایکشن سے سعید اجمل خاطر خواہ کارکردگی نہ دکھاسکے جس کے باعث سلیکٹرز نے انہیں قومی ٹیم سے فارغ کردیا تھا۔

انگلینڈ نے دورئہ بنگلہ دیش کیلیے ٹیسٹ اور ون ڈے اسکواڈز کا اعلان کردیا،

ناٹنگھم: انگلش کرکٹ ٹیم میں پاکستانی نژاد پلیئرزکی تعداد بڑھنے لگی، ایون مورگن اور الیکس ہیلز کے انکار پر حسیب حمید اور ظفرانصاری کی قسمت چمک اٹھی، انھیں دورہ بنگلہ دیش کیلیے اسکواڈ کا حصہ بنا لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق انگلینڈ نے دورئہ بنگلہ دیش کیلیے ٹیسٹ اور ون ڈے اسکواڈز کا اعلان کردیا،دو بیٹسمینوں 19 سالہ حسیب حمید اور بین ڈکٹ کے ساتھ آل راؤنڈر ظفر انصاری پر انگلش سلیکٹرز نے اعتماد کیا، سرے کاؤنٹی کی نمائندگی کرنے والے 39 سالہ اسپنر گیراتھ بیٹی کی 11 سال بعد انگلش ٹیم میں واپسی ہوئی،انھوں نے اس سے قبل اپنا آخری ٹیسٹ 2005 میں کھیلا تھا، 7 اکتوبر سے شروع ہونے والے دورئہ بنگلہ دیش کے دوران انگلش ٹیم 3 ایک روزہ اور 2 ٹیسٹ میچزکھیلے گی، لنکاشائر کے نوجوان اوپنر حسیب حمید رواں کاؤنٹی چیمپئن شپ سیزن میں 52 کی اوسط 1129 رنز بناچکے ہیں۔

انگلینڈ کی انڈر 19 ٹیم کے سابق کپتان حسیب اگر چٹاگانگ میں شیڈول پہلے میچ میں شرکت کرتے ہیں تو وہ 1949 کے بعد انگلینڈ کی نمائندگی کرنے والے 20 سال سے کم عمر کے دوسرے کھلاڑی ہوں گے،منتخب ٹیم میں مجموعی طور پر پہلی بار 4 پاکستانی نژاد کرکٹرز حسیب حمید، معین علی، عادل رشید اور ظفرانصاری شامل ہیں ، مارک ووڈ 2برس بعد ٹیسٹ اسکواڈ کا حصہ بنے، یاد رہے کہ بنگلہ دیش میں رواں برس ہونے والی دہشت گردی کی کارروائی کے بعد کچھ انگلش کھلاڑیوں نے دورہ کرنے کے حوالے سے اپنے تحفظات کا اظہارکیا تھا۔

شاہد آفریدی کے چاہنے والوں کیلئے آخر کار بڑی بری خبر آ گئی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک): پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شاہد آفریدی نے متحدہ عرب امارات میں ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز میں الوداعی میچ کھیل کر ٹی ٹوئنٹی کرکٹ سے کنارہ کشی کا ارادہ ظاہر کردیا۔تفصیلات کے مطابق شاہد آفریدی نے پاکستان کرکٹ بورڈ سے ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز میں ایک میچ کھیلنے کی اجازت طلب کی ہے جس کے بعد وہ بین الاقوامی کرکٹ کو خیرباد کہہ دیں گے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ شاہد آفریدی نے اس موضوع پر چیف سلیکٹر انضمام الحق سے بات کی اور عزت کے ساتھ اپنے کرکٹ کو الوداع کہنے کی اپنی خواہش کا اظہار کردیا ہے۔قومی ٹیم ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز میں تین ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلے گی جس کا آغاز 23 ستمبر کو ہوگا۔خیال رہے کہ شاہد آفریدی نے پاکستان کی جانب سے سب زیادہ 98 ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلے ہیں جس میں 18 کی اوسط سے ایک ہزار 405 رنز بنا ئے ہیں۔آفریدی ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے باؤلر بھی ہیں جہاں انھوں نے 97 وکٹیں حاصل کی ہیں جبکہ عمرگل 60 اور سعید اجمل 64 میچوں میں 85، 85 وکٹیں حاصل کر کے دوسرے نمبر پر ہیں۔یاد رہے کہ شاہد آفریدی نے ورلڈ کپ 2015 میں شکست کے فوری بعد ایک روزہ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا تھا۔واضح رہے متحدہ عرب امارات میں ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز کے بعد پاکستان ٹیم اگلے ایک سال تک کوئی ٹی ٹوئنٹی میچ نہیں کھیلے گی۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کا اصل مسئلہ فٹنس ہے-ہیڈکوچ مکی آرتھر

پاکستان کرکٹ ٹیم کے ہیڈکوچ مکی آرتھر نے کہا ہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کا اصل مسئلہ فٹنس ہے ، یہ بات سب سے زیادہ کھل رہی ہے ،فٹنس کے معیار پر پورا نہ اترنے والے پلیئرز کو ٹیم میں مزید شامل نہیں کیا جاسکتا ،ون ڈے کرکٹ میں فٹنس سب سے ضروری ہے ،ٹیم کو آگے بڑھنا ہے تو اس معاملے پر سخت فیصلے لینے ہوں گے ۔

کرکٹ ویب سائٹ کو انٹرویو دیتے ہوئےپاکستان ٹیم کے کوچ مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ گرین شرٹس ون ڈے میں پیچھے ہے،کامیابی کےلئے بہادر ی سے کھیلنا تو پڑے گا ،اس کے ساتھ ہی ٹیم کی سمت درست کرنے کے لئے سخت فیصلے بھی لینے ہوں گے ۔

انہوں نے کہا کہ ون ڈے کرکٹ میں فٹنس سب سے اہم ہے ،رنز بنانے کے لئے کبھی کبھی پورا پورا اووز بھاگنا پڑتا ہے،فٹنس ٹھیک نہیں ہوگی تو کوئی بھی پلئیر ٹیم کے لئے فائدہ مندثابت نہیں ہوسکتا ۔

محمد عرفان کی فٹنس پر بھی مکی آرتھر پریشان نظر آئے ،ان کا کہنا تھا کہ وہ اچھا بولر ہے لیکن فٹنس اسٹینڈرز پر پورا نہیں اترتا،کوئی بھی کرکٹر جو فٹ نہ ہو ،ٹیم میں گنجائش نہیں بن سکتی ۔

انہوں نے کہا کہ ٹیم کو اسٹریم لائن کرنے کے لئے چھوٹے چھوٹے قدم اٹھارہا ہوں ،وقت ضرور چاہیے ،جس کے لئے مجھے امید ہے کہ پی سی بی وقت ضرور دے گا۔

مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ اظہر علی کی بیٹنگ اچھی ہے،وہ وقت کے ساتھ ساتھ گروم ہورہا ہے، شعیب ملک نے کارڈف میں انگلینڈ کے خلاف جس طرح کھیلا وہ قابل تعریف ہے ۔

انگلینڈ کے سابق بلے باز گراہم ہک آسٹریلوی ٹیم کے بیٹنگ کوچ مقرر

سڈنی: انگلینڈ کے سابق بیٹسمین گراہم ہک آسٹریلوی ٹیم کے بیٹنگ کوچ بن گئے ہیں۔ 

سابق انگلشن بلے باز گراہم ہک اب آسٹریلیا کے کھلاڑیوں کو بلے بازی کے گرسکھائیں گے۔ گراہم ہک آسٹریلیا کے کوچنگ اسٹاف میں ہیڈ کوچ ڈیرن لیمن اور ان کے معاون کوچ ڈیوڈ سیکر کو جوائن کریں گے جب کہ آسٹریلیا کے نئے بولنگ کوچ ڈیوڈ سیکر اور فیلڈنگ کوچ کریگ بلوٹ بھی نومبر میں جنوبی افریقا کے خلاف ہوم سیریز سے اپنے معاہدے کا آغاز کریں گے۔

گراہم ہک کے لیے سب سے بڑا اور پہلا چیلنج بھارت کے خلاف ہونے والی 4 ٹیسٹ میچوں پر مشتمل سیریز ہوگی کیونکہ آسٹریلیا ایشیا میں گزشتہ 9 ٹیسٹ میچ ہار چکا ہے اور کینگروز کو سری لنکا کے خلاف حالیہ ہونے والی سیریز میں 3 صفر سے عبرتناک شکست کا بھی سامنا کرنا پڑا تھا۔

50 سالہ گراہم ہک نے انگلینڈ کی جانب سے 65 ٹیسٹ میچوں کی 114 اننگز میں 3 ہزار383 رنز بنارکھے ہیں جس میں 6 سینچریاں اور 18 نصف سینچریاں بھی شامل ہیں جب کہ ٹیسٹ میں ان کا بہترین انفرادی اسکور 178 ہے۔ ایک روزہ میچز میں گراہم ہک نے 120 میچز کی 118 اننگز میں انگلینڈ کی نمائندگی کی اور 3 ہزار 846 رنز بنائے جس میں 5 سینچریاں اور 27 نصف سینچریاں بھی شامل ہیں جب کہ ون ڈے میں ان کا بہترین انفرادی اسکور 126 ہے۔

گراہم ہک نے  فرسٹ کلاس کرکٹ میں 136 سینچریوں اور 158 نصف سینچریوں کی مدد سے 41 ہزار 112 رنز بنارکھے ہیں جب کہ فرسٹ کلاس کرکٹ میں ان کا بہترین انفرادی اسکور 405 رنز ہے جو اب تک دنیا میں صرف 8 کھلاڑی ہی بناسکے ہیں۔

ہیکروں نے مزید کھلاڑیوں کی طبی معلومات افشا کردیں

مبینہ طور پر روس سے تعلق رکھنے والے ہیکرز نے ورلڈ اینٹی ڈوپنگ ایجنسی (واڈا) کی چوری شدہ مزید طبی معلومات افشا کی ہیں۔

جن کھلاڑیوں کے بارے میں معلومات جاری کی گئی ہیں ان میں ریو اولمپکس میں طلائی تمغہ جیتنے والے برطانوی سائیکلسٹ سر بریڈلے وگنز اور تین بار ٹور ڈی فرانس ریس جیتنے والے کرس فروم بھی شامل ہیں۔

سامنے آنے والی معلومات سے یہ ظاہر نہیں ہوتا کہ یہ کھلاڑی کسی غیرقانونی سرگرمی میں ملوث تھے۔

واڈا کا کہنا ہے کہ یہ سائبر حملہ بین الاقوامی سطح پر اینٹی ڈوپنگ سسٹم کو نقصان پہنچانے کی کوشش ہے۔

خود کو’فینسی بیئرز‘ کہلوانے والے گروپ کی جانب سے جاری کی گئی معلومات میں زیادہ تر کھلاڑیوں کو طبی بنیادوں پر غیرقانونی عناصر کے استعمال کی اجازت دینے سے متعلق ہیں۔

واڈا کے ڈائریکٹر اولویئر نگلی کا کہنا ہے کہ ’واڈا کو یہ احساس ہے کہ یہ مجرمانہ حملہ، جس نے آج لاپرواہی سے 29 کھلاڑیوں کی ذاتی معلومات افشا کی ہیں، ان کھلاڑیوں کے لیے پریشان کن ہے جنھیں نشانہ بنایا گیا ہے، اور ان تمام کھلاڑیوں کے لیے بھی تشویش مند ہے جنھوں نے ریو 2016 کی اولمپکس کھیلوں میں شرکت کی تھی۔‘

اولویئر نگلی کا کہنا تھا کہ اس بات میں ’کوئی شک نہیں‘ ہے کہ یہ ہیکنگ واڈا کی جانب سے روس کے سرکاری سطح پر بدعنوانی کی رپورٹ اور روسی حکومت سے اس کو روکنے کی درخواست کے بدلے کے طور پر کی گئی ہے۔

روسی حکام اس معاملے میں ملوث ہونے کی تردید کرتے ہیں۔

افشا ہونے والی معلومات دس امریکی، پانچ برطانوی، پانچ جرمن اور ڈنماک، روس، پولینڈ، جمہوریہ چیک اور رومانیہ کے ایک ایک کھلاڑی سے متعلق ہیں۔

اس سے قبل امریکی کھلاڑیوں کی ذاتی معلومات افشا کی گئی تھیں جن میں جمناسٹک مقابلوں میں کئی طلائی تمغے حاصل کرنے والی سائمن بائلز بھی شامل تھیں۔

ریکارڈ کے مطابق سائیکلسٹ وگنز کو دو ممنوعہ ادویات سنہ 2008 اور 2013 کے درمیان کئی مواقع پر استعمال کی اجازت دی گئی تھی جن میں سے ایک بار سنہ 2011 کے ٹور ڈی فرانس اور سنہ 2013 میں گرو ڈی اٹالیہ کے دوران بھی شامل تھی۔

اسناد کے مطابق ان میں سے ایک دوا ’ٹریمسینولون ایسٹونائڈ‘ پولن الرجی کے لیے استعمال کی گئی تھی۔

فروم کو ایک ممنوعہ قوت بخش دوا ’پروڈنیسولون‘ سنہ 2013 اور 2014 کے درمیان استعمال کی اجازت دی گئی جس میں سنہ 2013 کی ٹور آف رومانڈی ریس کے دوران استعمال کی اجازت بھی شامل تھی۔

 

کرکٹ بورڈ سے اختلافات پر ویسٹ انڈیز ٹیم کے کوچ فل سمنز برطرف

پورٹ آف اسپین: ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ نے ثقافت اور اسٹریٹجک معاملات میں اختلافات کے باعث ہیڈ کوچ فل سمنز کو برطرف کردیا۔

کرک انفو کے مطابق ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ نے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے اجلاس میں ثقافتی اور اسٹریٹیجک معاملات میں اختلافات کے باعث ٹیم کوچ فل سمنز کو عہدے سے برطرف کرنے کا فیصلہ کیا اور بورڈ کے چیف ایگزیکٹو مائیکل موئرہیڈ نے فل سمنز کو بورڈ کے فیصلے سے باضابطہ آگاہ کردیا۔

فل سمنز کی برطرفی کے بعد پاکستان کے خلاف متحدہ عرب امارات میں ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کے لئے سابق فاسٹ بولر جوئل گارنر ویسٹ انڈیز کے کوچ ہوں گے جب کہ ہینڈرسن اور روڈی ایسٹرک کوچنگ میں ان کی معاونت کریں گے۔

واضح رہے کہ فل سمنز کو 2015 میں 3 سال کے لئے ویسٹ انڈیز کا کوچ تعینات کیا گیا تھا لیکن بہت سارے معاملات پر ان کے بورڈ سے اختلافات زیر گردش رہے۔ سمنز کو 2015 میں ٹیم سلیکشن میں مداخلت کی شکایت پرمعطل کردیا گیا تھا لیکن بعد ازاں انہیں عہدے پر بحال کردیا گیا۔ فل سمنز کی ہی قیادت میں ویسٹ انڈیز نے ٹی ٹوئنٹہ ورلڈ کپ جیتا تھا۔

عرصے بعد قومی کرکٹرز کی اپنے وطن میں عید

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی عام طور پر عید کے دنوں میں کسی نہ کسی ملک کے خلاف کھیلنے میں مصروف ہوتے ہیں، اس بار ان کھلاڑیوں کو اپنے اہل خانہ کے ہمراہ عید منانے کا موقع ملا ۔

کھلاڑیوں نے عید کی خوشیاں اپنے اہل خانہ کے سنگ منائیں، اپنے پسندیدہ رنگ کے کرتا شلوار زیب تن کیے، ٹیسٹ کپتان مصباح الحق نے سیاہ رنگ پہنا جبکہ سرفراز احمد نے سفید رنگ کا انتخاب کیا۔

Google Analytics Alternative