کھیل

انڈیا کی 276 رنز کی برتری,یوزی لینڈ کی پوری ٹیم299 بنا کر آؤٹ ہوگئی

نیوزی لینڈ کی پوری ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 299 بنا کر آؤٹ ہوگئی تھی۔

پیر کو تیسرے روز کا کھیل جب شروع ہوا تو نیوزی لینڈ نے بغیر کسی نقصان کے 28 رنز بنائے تھے۔

نیوزی لینڈ‌ کی جانب سے گپٹل 72، نیشم 71 اور لیتھم 53 رنز بنا کر نمایاں سکورر رہے اور دیگر کھلاڑیوں میں کوئی بھی انڈین بولنگ کو جم کر مقابلہ نہ کر سکا۔

انڈیا کی جانب سے روی چندرن ایشون نے چھ اور جاڈیجا نے 2 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

اس سے قبل انڈیا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا اور اپنی پہلی اننگز 557 رنز پانچ کھلاڑی آؤٹ پر ڈکلیئر کر دی تھی۔

انڈیا کی پہلی اننگز کی خاص بات کپتان وراٹ کوہلی کی شانداز ڈبل سنچری اور ریہانے کی 188 رنز کی اننگز تھی۔ کوہلی اور ریہانے نے مل کر 365 رنز کی پارٹنرشپ قائم کی تھی۔

یاد رہے کہ انڈیا پہلی دو ٹیسٹ میچ جیت چکا ہے۔

قانونی کارروائی کا فیصلہ,جاوید میانداد کو جمعرات تک لیگل نوٹس بھجوا دیا جائے گا

بوم بوم شاہد آفریدی نے جاوید میانداد کے خلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق آل رائونڈرشاہد آفریدی نےلیجنڈ کرکٹر اور سابق کوچ جاوید میانداد کے بیان پر وکلا سے مشاورت کےبعد قانونی کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ شاہد آفریدی کی جانب سےجاوید میانداد کو جمعرات تک لیگل نوٹس بھجوا دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز جاوید میانداد نے شاہد آفریدی پر میچ فکسنگ کے الزامات لگائے تھے۔

گزشتہ روز ہونے والی پریس کانفرنس میں آفریدی سے جب پوچھا گیا کہ میانداد کا کہنا ہے کہ آپ پیسوں کے لئے فیئرویل میچ مانگ رہے ہیں،جس پر آفرید ی نے جواب دیا کہ جاوید میانداد کو ہمیشہ پیسوں کا مسئلہ رہا ہے ،اتنے بڑے کرکٹر کو ایسی بات نہیں کرنی چاہےتھی ۔

ماضی کے عظیم بیٹسمین میانداد کا ری ایکشن ہوش اڑا دینے کے لئے کافی تھا ،انہوں نے بوم بوم آفریدی پر میچ فکسنگ کا الزام ہی لگادیا ۔جاوید میانداد نے کہا کہ آفریدی اپنی بیٹیوں کے سر پر ہاتھ رکھ کر کہیں کہ انہوں نے میچ نہیں بیچے۔

بوم بوم آفریدی نے بھی سوشل میڈیا پر پیغام دیا کہ جاوید میانداد کے ذاتی حملے کافی عرصہ برداشت کئے ،لیکن ہر کسی کے برداشت کی ایک حد ہوتی ہے ۔

آفریدی کا کہناتھاکہ جو کچھ ہوا اس پر انہیں افسوس ہے لیکن میانداد کے رویے پر ان کا ردعمل فطری تھا

کسی بھی کھلاڑی کے ساتھ دشمنی نہیں ہے,میرا کام کھلاڑی کو سلیکٹ کرنا ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیف سلیکٹر انضمام الحق نے کہا ہے کہ کسی کھلاڑی کو فیئرویل نہیں دے سکتا، میرا کام کھلاڑی کو سلیکٹ کرنا ہے۔ یہ بات انہوں نے لاہور میں پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان کھیلے جانے والی ٹیسٹ سیریز کیلئے پاکستانی اسکواڈ کے ناموں کا اعلان کرنے کے موقع پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

چیف سلیکٹر انضمام الحق نے گیند پی سی بی کے کورٹ میں ڈالتے ہوئے شاہد آفریدی کے الوداعی میچ کے حوالے سے کہا کہ کسی لڑکے کو سلیکٹ کرسکتا ہوں، فیئرویل دینا میرا کام نہیں۔

انضمام نے کہا کہ میں کسی کھلاڑی کو فیئرویل نہیں دے سکتا، شاہد آفریدی کوخود پتہ ہونا چاہئیے کہ کب جانا چاہئیے اور کب نہیں، یہ فیصلہ آفریدی خود کریں گے۔

انضمام الحق نے کہا کہ آفریدی نے اٹھارہ سے بیس سال تک ملک کی خدمت کی، جس نےاتنی خدمت کی ہو، اسے اعزاز کے ساتھ رخصت ہونا چاہیے۔

ان کا کہناتھا کہ سابق کپتان شاہد آفریدی کہہ چکے ہیں کہ ان کی کرکٹ ابھی باقی ہے۔ جب وقت آئے گا خود کرکٹ کے میدان سے رُخصت ہوجائیں گے، کھلاڑیوں کو اعزاز کے ساتھ ہی رخصت ہونا چاہئیے۔

انہوں نے کہا کہ میری کسی بھی کھلاڑی کے ساتھ دشمنی نہیں ہے، سب کھلاڑی میرے چھوٹے بھائیوں کی طرح ہیں

ٹیسٹ میچوں کےسکواڈ میں بابر اعظم کو شامل کیا ہے,جبکہ محمد حفیظ جگہ بنانے میں ناکام رہے

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے متحدہ عرب امارات میں ویسٹ انڈیز کے خلاف تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے پہلے ٹیسٹ کے لیے پندرہ رکنی سکواڈ میں بابر اعظم کو شامل کیا ہے جبکہ محمد حفیظ شامل نہیں ہیں۔

سکواڈ کا اعلان چیف سلیکٹر انضمام الحق نے ہفتہ کے روز پریس کانفرنس میں کیا۔

ویسٹ انڈیز کے خلاف پہلا ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں دوسرا ڈے اینڈ نائٹ میچ ہو گا۔ پہلا ڈے اینڈ نائٹ میچ گذشتہ سال آسٹریلیا میں آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے مابین ہوا تھا۔

بابر اعظم نے ویسٹ انڈیز کے خلاف تین ایک روزہ میچوں کی سیریز میں تین سنچریاں سکور کی تھی۔

بابر اعظم محمد حفیظ کی جگہ ون ڈاؤن کھیلے گے۔ پی سی بی پیٹرنز الیون کی جانب سےویسٹ انڈیز کے خلاف وارم اپ میچ میں محمد حفیظ نے سات گیندیں کھیلیں اور کوئی رن بنائے بغیر آؤٹ ہوئے۔

دوسری جانب شان مسعود جنھوں نے دو ٹیسٹ میچوں میں 71 رنز سکور کیے کو سکواڈ میں شامل نہیں کیا گیا۔

انگلینڈ کے خلاف پہلے ٹیسٹ میچ میں دو نصف سنچریاں سکور کرنے والے سمیع اسلم کو سکواڈ میں شامل کیا گیا ہے۔

پی سی بی کے چیف سلیکٹر انضمام الحق نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے یونس خان کے بارے میں کہا کہ وہ ابھی فٹ نہیں ہیں اس لیے ان کو پہلے ٹیسٹ میں شامل نہیں کیا گیا۔

انھوں نے کہا کہ یونس خان جب فٹ ہو جائیں گے تو ان کو سکواڈ میں شامل کر لیا جائے گا۔

پہلے ٹیسٹ کا سکواڈ: سمیع اسلم، اظہر علی، مصباح الحق، سرفراز احمد، بابر اعظم، اسد شفیق، وہاب ریاض، سہیل خان، راحت علی، محمد عامر، عمران خان، یاسر شاہ، ذوالفقار بابر اور محمد نواز۔

کوہلی کی شاندار ڈبل سنچری,بڑے بڑوں کو پیچھے چھوڑ دیا

بطور کپتان سنچریاں بنانے کے معاملے میں ویرات کوہلی نے اپنے پیشرو دھونی، منصور پٹودی اور سارو گنگولی کو پیچھے چھوڑدیا، وہ اندور میں بطور کپتان چھٹی سنچری داغ کر چوتھے کامیاب قائد بن گئے۔انھوں نے جنوری 2015 میں دھونی سے ٹیسٹ ٹیم کی قیادت حاصل کی تھی، ان سے زیادہ بطور کپتان سنیل گاوسکر(11)، محمد اظہرالدین(9) اور سچن ٹنڈولکر (7 سنچریاں) نمایاں ہیں،واضح رہے کہ منصورعلی خان پٹودی، سارو گنگولی اور مہندرا سنگھ دھونی نے بطور کپتان 5،5 سنچریاں بنا رکھی ہیں۔تفصیلات کے مطابق  ویرات کوہلی کا بیٹ پھر سے رنز اگلنے لگا،کپتان کی ناقابل شکست سنچری سے تقویت پا کر بھارت نے اندور ٹیسٹ کے ابتدائی دن 3 وکٹ پر 267 رنز بنالیے، کوہلی 103 اور اجنکیا راہنے 79پر ناٹ ا?ؤٹ رہے،ان کے درمیان 167 کی ناقابل شکست شراکت قائم ہوچکی،کیوی بولرز خاص تاثر نہ چھوڑ سکے۔تفصیلات کے مطابق اندور ٹیسٹ کے ابتدائی دن کیوی بولرز بھارتی کپتان ویرات کوہلی کے سامنے بے بسی کی تصویر بنے رہے، جنھوں نے وکٹ کے چاروں اطراف دلکش اسٹروکس کھیلتے ہوئے ناقابل شکست سنچری جڑ دی، ٹاس جیتنے والے بھارت نے ابتدائی دن کا کھیل ختم ہونے تک 3 وکٹ پر267 رنزاسکور بورڈ پر سجائے، کوہلی 103 اور اجنکیا راہنے 79رنز کے ساتھ وکٹ پر موجود ہیں، ان کے درمیان اب تک چوتھی وکٹ کیلیے 167رنز کی پارٹنر شپ بن چکی۔کوہلی نے کیریئر کے48 ویں ٹیسٹ میں 13ویں جبکہ جولائی میں ویسٹ انڈیز کیخلاف اپنی پہلی ڈبل سنچری کے بعد پہلی تھری فیگر اننگز سجائی، اس دوران7 اننگزمیں ان کا زیادہ اسکور45 رہا تھا،راہنے نے کیوی اسپنر جیتن پٹیل کو چھکا لگاکر کیریئر کی 10ویں ففٹی مکمل کی،کیوی کپتان کین ولیمسن وائرل انفیکشن سے نجات پانے کے بعد ٹیم میں واپس آگئے۔میزبان بیٹسمینوں نے اختتامی سیشن کے 34 اوورز میں کوئی وکٹ گنوائے بغیر شاندار بیٹنگ سے شائقین کو محظوظ کیا، لنچ کے بعد ون ڈاؤن بیٹسمین چتیشور پجارا 41رنز بناکر لیفٹ آرم اسپنر مچل سینٹنر کی عمدہ گیند پر بولڈ ہوگئے، انھوں نے کوہلی کے ہمراہ تیسری وکٹ کیلیے 40رنز جوڑے،قبل ازیں ابتدائی سیشن میں دونوں بھارتی اوپنرز نے پویلین کی راہ لی۔ٹیم کو پہلا نقصان 26 کے ٹوٹل پر مرلی وجے کی صورت میں پہنچا، وہ محض 10رنز بناکر جیتن پٹیل کی گیند پر شارٹ لیگ پوزیشن پر موجود ٹام لیتھم کا کیچ بنے، دو برس بعد پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے گوتم گمبھیر نے اگرچہ اچھا آغاز کیا لیکن کیوی پیسر ٹرینٹ بولٹ نے انھیں اپنے بچھائے ہوئے جال میں پھانس لیا، وہ 29رنز بناکر ایل بی ڈبلیو ہوئے، واضح رہے کہ بھارت پہلے ہی سیریز 2-0 سے اپنے نام کرچکا ہے۔

انڈیا کو جنوبی کوریا کے ہاتھوں شکست,اپ سیٹ میچ

انڈیا کے شہر احمد آباد میں جاری کبڈی ورلڈ کپ میں جنوبی کوریا نے ورلڈ کپ کے پہلے میچ میں اس وقت اپ سیٹ کر دیا جب اس نے فیورٹ انڈیا کو 34-32 سے شکست دے دی۔

انڈیا نے شروع ہی میں جنوبی کوریا پر برتری حاصل کر لی لیکن وہ اپنی برتری کو برقرار نہ رکھ سکا۔ انڈیا کی شکست پر سٹیڈیم میں مکمل خاموشی طاری ہو گئی۔

میچ میں شکست کے بعد انڈیا کبڈی ٹیم کے کپتان انوپ کمار نے کہا ’آج ہمارے ریڈرز اچھا نہیں کھیلے۔ اور ہم نے میچ کے آخری مراحل میں غلطیاں کیں۔ لیکن اب بھی موقع ہے ہمارے پاس اور ہم اپنی غلطیوں کو سدھار کر ورلڈ کپ میں دوبارہ واپس آئیں گے۔‘

دو ہفتے جاری رہنے والے کبڈی ورلڈ کپ میں 12 ٹیمیں حصہ لے رہی ہیں۔ اس ورلڈ کپ میں انڈیا نے پاکستان کو شرکت کرنے کی اجازت نہیں دی۔

انٹرنیشنل کبڈی فیڈریشن کے صدر دیوراج چترویدی نے کہا تھا کہ پاکستان اور انڈیا کے درمیان موجودہ کشیدہ تعلقات کے سبب یہ مناسب نہیں ہوگا کہ پاکستانی کبڈی ٹیم انڈیا آئے۔

پاکستان کبڈی فیڈریشن نے انڈیا میں منعقد ہونے والے کبڈی ورلڈ کپ میں پاکستان کو شرکت کی اجازت نہ دینے پر سخت مایوسی ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ یہ معاملہ انٹرنیشنل کبڈی فیڈریشن میں اٹھائے گی۔

پاکستان کبڈی فیڈریشن کے سیکریٹری محمد سرور نے بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انٹرنیشنل کبڈی فیڈریشن کا یہ فیصلہ انتہائی مایوس کن ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستانی کبڈی ٹیم کے ویزوں کے لیے پہلے ہی انڈیا سے رجوع کیا جا چکا ہے لیکن انڈین وزارت داخلہ نے ابھی تک پاکستانی ٹیم کو کلیئرنس نہیں دی ہے۔

14 رکنی قومی ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کااعلان کردیا ہے

چیف سلیکٹر انضمام الحق نے ویسٹ انڈیز کے خلاف تین ٹسیٹ میچوں کی سیریز کے لیے 14 رکنی قومی ٹیم کا اعلان کردیا ہے

ٰٹیسٹ اسکواڈ میں جگہ پانے والوں بلے باز اظہرعلی،سمیع اسلم،اسد شفیق،مصباح الحق بابراعظم،وکٹ کیپرسرفرازاحمد آل راؤنڈر محمد نواز اور وہاب ریاض فاسٹ باولر محمد عامر، راحت علی،سہیل خان اورعمران خان جب کہ اسپینرز میں یاسر شاہ اور ذوالفقاربابرشامل ہیں۔

دوسری جانب شان معسود،محمد حفیبظ،محمد رضوان اور افتخار احمد ٹیم میں جگہ بنانے میں ناکام رہے جب کہ محمد یونس علیل ہونے کے باعث ٹیم کے لیے دوسرے ٹیسٹ میں دستیاب ہوں گے فاسٹ محمد عامر کی والدہ علیل ہیں اس لیے وہ ٹیم کو پیر کے روز جوائن کریں گے۔

واضح رہے 14 رکنی قومی ٹیسٹ ٹیم ویسٹ انڈیز اور پاکستان کے درمیان 13 اکتوبر کو کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ کے لیے منتخب کی گئی ہے جو متحدہ عرب امارات کے شہر دبئی میں کھیلا جائے گا۔

انگلینڈ نے بنگلہ دیش کو پہلے ایک روزہ میچ میں شکست دی,سیریز میں 0۔1 کی برتری حاصل کر لی

انگلینڈ نے جیک بال اور عادل راشد کی عمدہ باؤلنگ کی بدولت بنگلہ دیش کو پہلے ایک روزہ میچ میں سنسنی خیز مقابلے کے بعد 21 رنز سے شکست دے کر سیریز میں 0۔1 کی برتری حاصل کر لی۔ڈھاکا میں کھیلے گئے میچ میں انگلینڈ کے قائم مقام کپتان جوز بٹلر نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا جہاں انگلینڈ نے نوجوان جیک بال اور بین ڈکٹ کو ڈیبیو کرایا۔جیسن روئے کی جارحانہ بیٹنگ کی بدولت اوپنرز نے ٹیم کو 61 رنز کا آغاز فراہم کیا لیکن اسکور 61 رنز تک پہنچا تو 41 رنز بنانے والے روئے سمیت دونوں اوپنرز پویلین لوٹ چکے تھے جبکہ دو رنز کے اضافے سے جونی بیئراسٹو رن آؤٹ ہوئے تو انگلش ٹیم تین وکٹیں گنوا کر مشکلات سے دوچار تھی۔اس موقع پر بین اسٹوکس پہلا میچ کھیلنے والے ڈکٹ کے ساتھ چوتھی وکٹ کیلئے 153 رنز کی شراکت قائم کر کے اپنی ٹیم کو میچ میں واپس لے آئے، ڈکٹ 60 رنز بنا کر پویلین لوٹے جبکہ 230 کے مجموعے پر بین اسٹوکس کی بھی 101 رنز کی اننگ کا خاتمہ ہو گیا۔جوز بٹلر نے یکے بعد دیگرے دو وکٹیں گرنے کے بعد مجموعہ آگے بڑھانے کی ذمے داری سنبھالی لیکن معین علی ان کا ساتھ نہیں نبھا سکے اور چھ رنز بنا کر مشرفی مرتضیٰ کو وکٹ دے بیٹھے۔بٹلر نے اختتامی اوورز میں جارحانہ بیٹنگ کرتے ہوئے 38 گیندوں پر چار چھکوں اور تین چوکوں کی مدد سے 63 رنز کی اننگ کھیلی اور ٹیم کا اسکور 309 رنز تک پہنچانے میں اہم کردار ادا کیا۔بنگلہ دیش کی جانب سے مشرفی مرتضیٰ، شفیع الاسلام اور شکیب الحسن نے دو دو وکٹیں حاصل کیں۔جواب میں بنگلہ دیش کو بھی اوپنرز نے 46 رنز کا آغاز فراہم کیا جبکہ تمیم کے آؤٹ ہونے کے بعد امرالقیس نے صابر رحمان کے ساتھ اسکور کو 82 تک پہنچا دا۔امرالقیس نے عمدہ بیٹنگ کا سکلسلہ جاری رکھا اور صابر کے آؤٹ ہونے کے بعد محموداللہ کے ساتھ 50 رنز جوڑ کر اسکور کو 132 تک پہنچا دیا۔محموداللہ 25 رنز بنا کر رخصت ہوئے جبکہ مشفیق الرحیم بھی زیادہ دیر وکٹ پر نہ ٹھہر سکے اور 153 رنز پر ٹیم کو بیچ منجھدار میں چھوڑ کر پویلین لوٹ گئے۔اس موقع پر بحرانی صورتحال سے دوچار بنگلہ دیشی ٹیم کو امرلقیس اور تجربہ کار شکیب الحسن نے سہارا دیا اور 118 رنز کی شراکت قائم کر کے اپنی ٹیم کی جیت کے امکانات روشن کر دیے۔جب شکیب 55 گیندوں پر 79 رنز کی بہترین اننگ کھیل کر رخصت ہوئے تو دوسرے اینڈ پر موجود امرالقیس سنچری مکمل کر چکے تھے اور بنگلہ دیش کو 51 گیندوں پر جیت کیلئے محج 39 رنز درکار تھے اور ان کی جیت کے امکانات انتہائی روشن تھے لیکن جیک بال نے اور عادل راشد نے میچ کا نقشہ بدل دیا۔چکیب کو آؤٹ کرنے کے بعد بال نے اگلی ہی گیند پر مصدق حسین کی وکٹیں بکھیر کر گراؤنڈ میں سناٹا طاری کردیا۔کپتان مشرفی مرتضیٰ نے محتاط بیٹنگ کی کوشش کی لیکن عادل نے ان کی ننگ کا خاتمہ کر کے اپنی ٹیم کو ساتویں کامیابی دلائی۔اس موقع پر بنگلہ دیش کی امیدوں کا محور امرالقیس تھے لیکن عادل نے 112 رنز بنانے والے بلے باز کو اسٹمپ کرا کر بنگلہ دیش کو یقینی فتح کے امکانات ختم کردیے۔بال نے 288 رنز پر بنگلہ دیشی ٹیم کی بساط لپیٹ کر اپنی ٹیم کو حیران کن فتح سے ہمکنار کرا دیا۔بنگلہ دیش نے آخری چھ وکٹیں صرف 17 رنز کے اضافے سے گنوائیں۔فاسٹ باؤلر جیک بال نے پانچ وکٹیں لے کر ڈیبیو پر بہترین باؤلنگ کرنے والے انگلش باؤلر کا اعزاز اپنے نام کرنے کے ساتھ ساتھ مین آف دی میچ کا ایوارڈ بھی حاصل کیا جبکہ عادل راشد نے چار وکٹیں حاصل کیں۔سیریز میں 1۔0 کی برتری کے ساتھ انگلش ٹیم اتوار کو دوسرے ایک روزہ کیلئے میدان میں اترے گی۔۔

Google Analytics Alternative