کھیل

مین راﺅنڈ کا آغاز آج ہو گا, راﺅنڈ کا پہلا مرحلہ عبور کر لیا

ہوسٹن اوپن سکوائش،پاکستانی پلیئر دانش اطلس خان نے کوالیفائنگ راﺅنڈ کا پہلا مرحلہ عبور کر لیا،شاہد ناکام ,مین راﺅنڈ کا آغاز آج ہو گا،شاہ جہان خان ایکشن میں نظر آئیں گے

پاکستانی پلیئر دانش اطلس خان نے ہوسٹن اوپن سکوائش ٹورنامنٹ میں کوالیفائنگ راﺅنڈ کا پہلا مرحلہ عبور کر لیا، شاہد حسین ابتدائی میچ میں شکست کے بعد ایونٹ سے باہر ہو گئے۔ ہوسٹن اوپن سکوائش ٹورنامنٹ کے مین راﺅنڈ کا آغاز (آج) جمعرات سے ہو گا۔ پاکستان کے شاہ جہان خان نے براہ راست مین راﺅنڈ تک رسائی حاصل کی تھی جبکہ دانش اطلس خان نے کوالیفائنگ راﺅنڈ کے پہلے میچ میں حریف انگلش پلیئر کو 3-1 سیٹس سے زیر کر کے فائنل راﺅنڈ تک رسائی حاصل کی، ایک اور میچ میں پاکستان کے شاہد حسین کو حریف نیوزی لینڈ کے پلیئر کے ہاتھوں 3-0 سیٹس سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

احمد شہزاد کی ٹیم میں واپسی کےلئے بساط بچھا دی گئی

مستقبل میں بہتر رویے کی یقین دہانی کا فرمائشی خط لکھوا لیاگیا، ڈسپلن نظر انداز کرنے کی تیاری
یونس خان کی طرح احمد شہزاد کی بھی معافی قبول کرکے14مئی سے شروع ہونے والے قومی کیمپ میں بلایا جائے گا ڈسپلنری وجوہات کی بنا پر بوٹ کیمپ سے باہر ہونے والے اوپنر احمد شہزادکی واپسی کیلئے بساط بچھا دی گئی، ذرائع کے مطابق پہلے مرحلے میں ان سے مستقبل میں بہتر رویے کی یقین دہانی کا فرمائشی خط لکھوا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق نئے چیف سلیکٹر انضمام الحق نے سابق کوچ وقار یونس اور ٹیم منیجر انتخاب عالم کی رپورٹ کو مدنظر رکھتے ہوئے اوپننگ بیٹسمین احمد شہزاد کو بوٹ کیمپ کیلئے مجوزہ کھلاڑیوں کی فہرست میں شامل نہیں کیا تھا، ان کے اس فیصلے کے پیچھے پاکستان کرکٹ بورڈ کی منشا شامل تھی مگر اب حکام خود ہی اپنے فیصلے کو تبدیل کرنے کیلئے پرتول رہے ہیں، جذبات میں آکر احمد شہزاد کو باہر تو کردیا گیا مگر موزوں متبادل اوپنر نہ ہونے کی وجہ سے اب اس غلطی کی تلافی کی جا رہی ہے۔اس کیلیے احمد شہزاد سے کہا گیا ہے کہ وہ خود آگے بڑھ کر اپنی غلطیوں پر معذرت کریں اور مستقبل میں بہتر رویے کی یقین دہانی کرائیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ احمد شہزاد نے ایک خط تحریر کیا جس میں پی سی بی کو یقین دلایا ہے کہ وہ مستقبل میں اپنے رویے میں بہتری لانے کی پوری کوشش کریں گے،کسی کو شکایت کا موقع نہیں دیا جائے گا، اس کے ساتھ یہ درخواست بھی کی گئی کہ انھیں ایبٹ آباد میں رواں ہفتے شروع ہونے والے کیمپ میں بھی شامل کرلیا جائے، دلچسپ بات ہے کہ اس خط کے حوالے سے خود ہی میڈیا کو آگاہی دی گئی تاکہ احمد کی واپسی کا جواز بنایا جا سکے، ذرائع کے مطابق اس بات کے امکانات روشن ہے کہ یونس خان کی طرح احمد شہزاد کی بھی معافی قبول کرکے انھیں قومی کیمپ میں بلایا جائے گا جو14 مئی سے شروع ہونے والا ہے، اگر ایسا نہ ہوا تو دورئہ انگلینڈ کیلیے اسکواڈ میں واپسی ہو جائے گی۔انضمام نے احمد شہزاد کے ساتھ عمر اکمل کو بھی اسی بنیاد پر ٹیم سے باہر کیا تھا، دونوں کے بارے میں سابق کوچ وقار یونس کی رپورٹ تھی کہ ان کے ڈسپلن معاملات درست نہیں ہیں،انھوں نے گذشتہ برس ورلڈ کپ کے بعد بھی ایسی ہی رپورٹ دی تھی۔ یاد رہے کہ گذشتہ دنوں پاکستان کپ کے دوران یونس خان بھی ڈسپلن کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ایونٹ

شعیب اختر نے مکی آرتھر کو ازخود 8 ماہ کی ڈیڈ لائن دے دی

نئے ہیڈ کوچ اس عرصے میں پاکستان ٹیم کی کارکردگی میں بہتری نہ لاسکیں تو گھر واپس لوٹ جائیں
میں پر امید ہوں نئے ہیڈ کوچ میں ہمارے کھلاڑیوں کا رویہ اور مائنڈ سیٹ تبدیل کرنے کی قابلیت ہے، سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے نئے کوچ مکی آرتھر کو ازخود 8 ماہ کی ڈیڈ لائن دے دی، نئے ہیڈ کوچ اس عرصے میں پاکستان ٹیم کی کارکردگی میں بہتری نہ لاسکیں تو گھر واپس لوٹ جائیں۔ان خیالات کا اظہارانہوںنے ایک انٹرویو میں کیا۔انہوںنے کہا کہ نئے کوچ مکی آرتھر کافی تجربہ کار اور وہ جنوبی افریقہ و آسٹریلیا جیسی بڑی ٹیموں کے ساتھ کام کرچکے، مگر میں سمجھتا ہوں کہ یہ جاننے کے لیے 8 ماہ بہت ہوں گے کہ وہ ٹیم پرفارمنس میں تبدیلی لاتے یا پھر اپنے سے پہلے والوں کی طرح گھر لوٹ جاتے ہیں، اس عرصے کے دوران ہم نے بہت اہم سیریز کھیلنی ہیں، اسی اندازہ ہوجائے گا کہ وہ ہمارے کرکٹ کھیلنے کے انداز کو نئی سمت دے پاتے ہیں یا پھر خود الوداع کہنے کا فیصلہ کرتے ہیں۔شعیب نے کہا کہ آرتھر میں ہمارے کھلاڑیوں کا رویہ اور مائنڈ سیٹ تبدیل کرنے کی قابلیت ہے اس لیے میں کافی پرامید ہوں۔ ڈسپلن کے حوالے سے بات چیت کرتے ہوئے انہوںنے کہا کہ ان میں احساس ذمہ داری پیدا کرنا زیادہ اہم ہے، میرے وقت میں بھی کچھ کھلاڑی ڈسپلن کی خلاف ورزی کرتے تھے مگر میچ والے دن ان کی پوری توجہ صرف کھیل پر مرکوز ہوتی تھی۔دورہ انگلینڈ کیلئے ممکنہ کھلاڑیوں میں جگہ نہ بنا پانے والے عمر اکمل اور احمد شہزاد کے بارے میں شعیب اختر نے کہا کہ شروع میں ہم سب ان دونوں کو ٹیلنٹ کی وجہ سے سپورٹ کرتے، سراہتے اور حوصلہ دیتے تھے، مگر ان کے ساتھ دوسرے ممالک میں جن کھلاڑیوں نے کیریئر شروع کیا وہ اب ٹاپ پرفارمر بن چکے اور ان دونوں کا ابھی تک بہترین کھیل سامنے نہیں آیا ہے، دونوں کو اپنی ترجیحات پر نظر ثانی، کرکٹ پر پوری توجہ اور اپنے ٹیلنٹ سے انصاف کرنے کی ضرورت ہے۔

ریسلنگ کے وہ کھلاڑی جو طاقت کے جوش میں قاتل بن گئے

بعض اوقات کھیل کے میدان یا رنگ خونی بن جاتی ہیں اور بعض اوقات کھلاڑی خونی بن جاتا ہے جب کہ ریسلنگ اور باکسنگ ایسے کھیل ہیں جن میں کھلاڑی اکثر ایک دوسرے کو خون میں نہلاتے نظر آتے ہیں لیکن پھر بھی اپنی پوری قوت سے لڑتے ہیں اور اسی قوت اور طاقت میں نشے کچھ ریسلرز نے تو اپنے حریف کو ایسا چت کیا کہ وہ رنگ میں تو کیا زندگی کی رنگ سے شکست کھا کر دنیا فانی سے کوچ کرگئے۔ریسلنگ کے دوران اکثر ریسلرز طاقت اور شراب کے نشے میں اتنے سرکش ہوجاتے ہیں کہ وہ کھیل کو موت کے کھیل میں بدل دیتے ہیں اور ان میں 10 مشہور اور سپر اسٹارز ریسلرز بھی شامل ہیں جنہوں نے اپنے حریف کو ایسا مارا کہ وہ زندگی کے بازی ہی ہار گیا۔ایکیٹوشی سیٹو: جاپانی ریسلنگ کے سپر اسٹار اور دنیائے ریسلنگ میں کئی ٹائٹل اور تین بار ریسلر ا?ف دی ایئر کا اعزاز حاصل کرنے والے مٹ سوہارو مساوا جب اپنے حریف سیٹو کے سامنے ا?ئے تو اس سال وہ لڑ لڑ کر ذہنی طور پر تھک چکے تھے لیکن پھر بھی وہ طاقتور سیٹو کے سامنے ڈٹ تو گئے لیکن زیادہ دیر کھڑے نہ رہ سکے۔ سیٹو نے اچانک اسے اٹھا کر زمین پر دے مارا تو مساوا بے ہوش ہوگئے اور اسپتال جاتے ہوئے دم توڑدیا۔برائن مائیکل: برائن مائیکل ایک سی گھی نے 2010 میں ڈبلیو ڈبلیو ای کے ساتھ معاہدہ کیا اور 2 سال تک ریسلنگ رنگ میں خوب رنگ جمایا لیکن وہ بڑی شہرت حاصل نہیں کرپائے مگر 2 سال بعد اچانک وہ اس وقت اخبارات کی سرخیوں کا حصہ بن گئے جب انہیں اپنے گرل فرینڈ کو قتل کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔ برائن مائیکل نیبعد میں اعتراف کیا کہ اس نے اپنی دوست کو چھرا گھونپ کر قتل کیا۔جیمی سنوکا: ریسلنگ رنگ میں سپر فلائی کے ماہر جیمی سنوکا کو 1985 میں اپنی گرل فرینڈ کو قتل کرنے کے الزام میں سزا بھگتنا پڑی لیکن سنوکا کا کہنا ہے کہ جب وہ ریسلنگ میچ کے بعد واپس ہوٹل کے کمرے میں ا?ئے تو ان کی گرل فرینڈ زندہ تھی لیکن اچانک اسے کچھ ہوا اور وہ دم توڑ گئی مگر اس کے باوجود انہیں مجرم قرار دیا گیا تاہم بعد میں رہا کردیا گیا۔جوز گونزیلز: پوئیرٹو ریکو کی ریسلنگ رنگ کا بڑا نام اور لوگوں کی دلوں کی دھڑکن بن جانے والے جوز گونزیلز اپنے حریف سے زبانی لڑائی کے دوران غصے پر قابو نہ پاسکے اور انہیں موت کے گھاٹ اتاردیا۔ لاکر روم میں گونزیلز اپنے حریف ریسلر بروزربراڈی سے کسی بات پر الجھ پڑے اور اس دوران وہ اتنے طیش میں ا?ئے کہ اپنے حریف پر چھری سے حملہ کرکے انہیں زخمی کردیا جو بعد میں جانبر نہ ہوسکا۔ایکس بیکر: ایکس بیکر نے کئی سال تک ریسلنگ رنگ میں حکمرانی کی اور انہوں نے کسی ریسلر کو جان بوجھ کر نہیں مارا لیکن ان کے کچھ داؤ حریف کے لیے جان لیوا ثابت ہوئے۔ پہلی بار 1971 میں وہ اپنے حریف البیرٹو ٹوریس کے ساتھ لڑائی کے دوران ایک زوردار مکا ٹوریس کے دل پر لگا اور وہ وہیں دم توڑ گئے۔ بیکر کی خوف اور دہشت یہیں ختم نہیں ہوئی بلکہ ایک سال بعد ہی بیکرکے مد مقابل رے گنکل اچانک رنگ میں گرے اور جان سے ہاتھ دھو بیٹھے لیکن ان دونوں واقعات میں بیکر کو مورد الزام نہیں ٹھہرایا گیا۔ورن گینگن: گینگن کا نام دنیائے ریسلنگ میں چند بڑے ناموں میں شمارہوتا ہے اور وہ سپر اسٹارز برونو سمارٹینو اور لاؤ تھیز کی صف میں کھڑے تھے جوامریکن ریسلنگ ایسوسی ایشن کی پروموشن کا اہم نام رہا ہے۔ 2009 میں گینگن نیالزائمر کی بیماری کے باعث اچانک اپنے روم میٹ کو اٹھا کر زمین پر پھینک دیا جس پروہ فوری دم توڑ گیا لیکن گینگن خوش قسمت رہا کہ مقتول کی فیملی نے ان پر کوئی الزام نہیں لگایا اور سزا سے بچ گئے۔دی گریٹ کھلی: ڈبلیو ڈبلیو ای میں کھلی کا نام چند سپر اسٹارز ریسلرز میں ہوتا تھا اور جب وہ ریسلنگ رنگ میں آتے ہیں تو ان کے مداح ان کی ایک جھلک کے لیے اچھل پڑتے ہیں لیکن اپنے غصے کی وجہ سے ان کا ریکارڈ خراب رہا اور اسی وجہ سے اے پی ڈبلیو کے بگنرز کمیپ کے دوران اپنے غصے پر قابو نہ پاسکے اور ایک شخص کی زندگی چھین لی جس پر انہیں لاکھوں ڈالر کا جرمانہ ادا کرنا پڑا۔ ایک میچ کے دوران کھلی نے اپنے حریف برائن اونگ کو فلائی جیکس لگائے جس پر وہ بے ہوش ہوگئے اور انہیں اسپتال لے جایا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہوسکے لیکن خالی پر ان کے قتل کا الزام نہیں لگایا گیا۔

ہیڈ کو چ نے آتےہی ہلچل مچا دی, اور کہا کہ ایسے کھلاڑی نہیں لوں گا

پاکستان کرکٹ ٹیم کے نومنتخب ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے کہا ہے کہ انہیں خودغرضکھلاڑی نہیں چاہیے اور تمام کھلاڑیوں کو ملک وٹیم کیلئے کھیلنا ہوگا۔نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر پاکستان ٹیم کو بہتر کرنے کی امید نہیں ہوتی تو وہ ہرگز ہیڈ کوچ بننے کی ذمہ داری نہیں لیتے انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کرکٹ کا جنون ہے پی ایس ایل میں بہت ٹیلنٹ دیکھنے کو ملا ، ابتدائی کچھ سیریز میں مشکلات درپیش ہوں گی ۔انہوں نے مزید کہا کہ پاکستانی کھلاڑیوں کو گروم کرنے کی ہر ممکن کوشش کروں گا ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں مجھے سکیورٹی خدشات نہیں.

پاکستان کرکٹ بورڈ نے قومی ٹیم کے دورہ انگلینڈ کے لیے اہم کام شروع کر دیا

پاکستان کرکٹ بورڈ نے قومی ٹیم کے دورہ انگلینڈ کے لیے ویزوں کی تیاری کا کام شروع کر دیا ہے ، فاسٹ باو¿لر محمد عامر کے لیے خصوصی کیس تیار کیا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق قومی ٹیم کو جولائی تا ستمبر تک 4ٹیسٹ ،5ون ڈے اور 2ٹی ٹونٹی میچز کی سیریز کھیلنے کے لیے انگلینڈ کا دورہ کرنا ہے جس کے لیے پاکستان کرکٹ بورڈ نے ممکنہ کھلاڑیوں کے ویزے بنوانے کی تیاریوں کا آغاز کردیا ہے۔ذرائع کے مطابق سپاٹ فکسنگ میں سزا یافتہ فاسٹ باو¿لر محمد عامر کو انگلینڈ کا ویزہ ملنے میں مشکلات کا سامنا ہے جس کے بعد پی سی بی نے ان کے لیے خصوصی کیس تیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ اس سلسلے میں انگلش کرکٹ بورڈ سے بھی رابطہ کرلیا گیا ہے اور اس کے ساتھ قانونی مشیروں سے مشورے کیے جارہے ہیں۔ذرائع کے مطابق چیئر مین پی سی بی شہریار خان سابق سفارتکار ہونے کی حیثیت سے عامر کو ویزہ دلوانے کے لیے برطانوی سفارتخانے میں اپنا اثر و رسوخ استعمال کریں گے.

پاکستان والی بال فیڈریشن کے سیکرٹری جنرل محمد شاہد کمال انتقال کرگئے

اسلام آباد ۔ پاکستان والی بال فیڈریشن کے سیکرٹری جنرل محمد شاہد کمال گذشتہ روز اسلام آباد میں انتقال کرگئے۔ قومی ٹیم کے کوچ مظہر حسین نے بتایاکہ شاہد کمال قومی والی بال چیمپئن شپ کی تیاری کے سلسلہ میں پاکستان سپورٹس کمپلیکس کے علامہ اقبال ہوسٹل میں دو دن سے رہائش پذیر تھے ان کو منگل صبح دل کا دورہ پڑا اور ان کو پولی کلینک ہسپتال لے جایا جا رہا تھا کہ راستے میں اپنے خلق حقیقی سے جا ملے، بعد میں ان کی میت کو ان کے آبائی گاﺅں کےلئے روانہ کر دیا گیا۔

6 رکنی قومی ٹیم ایشین سینئر سکوائش چیمپئن شپ میں شرکت کیلئے تائیوان روانہ

6 رکنی سکوائش ٹیم ایشین سینئر سکوائش چیمپئن شپ میں شرکت کیلئے پیر کو تائیوان روانہ ہوگئی۔ پاسکتان سکوائش فیڈریشن کے نائب صدر قمر الزمان نے اے پی پی کو بتایاکہ چیمپئن شپ 11 سے16 مئی تک تائیوان میں کھیلی جائےگی جس میں 4 کھلاڑی اور 2 آفیشلز پاکستان کی نمائندگی کریں گے۔ کھلاڑیوں میں فرحان زمان، فرحان محبوب، اسرار الحسن اور طیب اسلم شامل ہیں جبکہ آفیشلز میں فہیم گل بطور کوچ اور پاکستان سکوائش فیڈریشن کے سیکرٹری گروپ کپیٹن عامر نواز بطور منیجر ٹیم کے ہمراہ ہیں۔ قمر الزمان نے کہاکہ ایونٹ کی تیاری کیلئے قومی کھلاڑیوں نے تربیتی کیمپ میں بھرپور محنت کی ہے اور ایونٹ میں کھلاڑیوں سے عمدہ کارکردگی کی توقع ہے۔ انہوںنے کہاکہ 2014ءمیں ہونے والے ایشین سینئر سکوائش چیمپئن شپ میں کامیابی حاصل کی تھی اور پاکستان اس مرتبہ ایونٹ میں دفاع کرےگا۔ قمر الزمان نے کہاکہ ایونٹ کیلئے باصلاحیت اور مستند ٹیم کا انتخاب کیا ہے، ایونٹ میں قومی ٹیم شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرکے کامیابی حاصل کرےگی اور ایونٹ کا کامیابی سے دفاع کرے گی۔ انہوں نے کہاکہ ایونٹ میں ایشیاءکے 9 ممالک کے نامور کھلاری ایکشن میں نظر آئیں گے اور تمام کھلاڑیوں کے درمیان کانٹے دار مقابلوں کی توقع ہے۔ علاوہ ازیں فیڈریشن صدر قمر الزمان کا 50 ہزار پی ایس اے ایونٹ کی میزبانی کے حوالے سے کہنا تھاکہ پاکستان سکوائش فیڈریشن کا پی ایس اے کے ساتھ پاکستان کو 50 ہزار ڈالر رینٹ کی میزبانی کے حوالے سے بات چیت جاری ہے اور پاکستان کو جلد 50ہزار ڈالر کی میزبانی مل جائے گی۔ قمرا لزمان نے کہاکہ پاکستان سکواش فیڈریشن کے صدر ایئر چیف مارشل سہیل امان ملک میں سکواش کے فروغ اور بہتری کیلئے کوشاں ہیں اور فیڈریشن کے صدر کی ہدایت پر ملک میں نوجوان کھلاڑیوں کو بھی مواقع دے رہے ہیں تاکہ سکواش کا نیا ٹیلنٹ سامنے آسکے۔

Google Analytics Alternative