کھیل

پاکستان نے انگلینڈ کو شکست دے کر سیریز اپنے نام کرلی

Pakistan-cricket

شارجہ: پاکستان نے شارجہ ٹیسٹ میں انگلینڈ کو 127 رنز سے ہرا کر 3 میچوں کی سیریز 0-2 سے اپنے نام کرلی ۔

شارجہ کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلے گئے میچ میں انگلینڈ کو جیت کے لئے 284 رنز کا ہدف ملا جس کے تعاقب میں مہمان ٹیم 156 رنز پر ہی ڈھیر ہوگئی۔ پاکستان کی جانب سے اسپنرز نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کیا اور کوئی انگلش بلے باز پراعتماد انداز میں مزاحمت نہ کرسکا اور وقفے وقفے سے وکٹیں گرتی چلی گئیں۔ یاسر شاہ نے 4، شعیب ملک 3، ذوالفقار بابر 2 اور راحت علی نے ایک وکٹ حاصل کی۔ میچ میں بہترین کارکردگی پیش کرنے پر محمد حفیظ کو مین آف دی میچ اور سیریز میں بولنگ کے شعبے میں نمایاں کارکردگی دکھانے پر یاسر شاہ کو مین آف دی سیریز کے اعزاز سے نوازا گیا۔

ٹیسٹ میں کئی غلطیاں کیں مگر دوسرے میچ میں غلطیوں کی گنجائش نہیں.مصباح الحق

دبئی: پاکستان کے ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ ہم نے پہلے ٹیسٹ میں کئی غلطیاں کیں مگر دوسرے میچ میں غلطیوں کی گنجائش نہیں ہے، آج کے میچ میں یاسر شاہ کا کردار انتہائی اہم ہوگا ۔دبئی میں پریکٹس سیشن کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے پاکستان کے ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا تھا کہ آج کا میچ انتہائی اہم ہے جس پر ہم بھرپور توجہ دے رہے ہیں بولرز اور بیٹسمین سب ہی محنت کررہے ہیں تاہم انگلینڈ اچھی تیاری کے ساتھ آئی ہے اس لیے ہمیں جیتنے کے لیے مزید اچھا کھیل پیش کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ انگلینڈ سے اچھے میچز ہورہے ہیں تاہم پہلے ٹیسٹ میں کئی غلطیاں کیں مگراب مزید غلطیوں کی گنجائش نہیں اس لیے پہلے ٹیسٹ کی غلطیوں کو ٹھیک کررہے ہیں۔پاکستانی کپتان کا کہنا تھا کہ غلطیوں سے سیکھنے میں مدد ملتی ہے جب کہ یاسرشاہ مکمل فٹ ہیں اور وہ کل کا میچ کھیلیں گے۔

علیم ڈار کو امپائرنگ سے ہٹانے کا فیصلہ آئی سی سی کی نااہلی ہے،سابق کرکٹرز

اسلام آباد : سابق کرکٹرز نے امپائر علیم ڈار کو بھارت جنوبی افریقہ کی ون ڈے سیریز میں امپائرنگ سے ہٹنے کے فیصلے کو آئی سی سی کی نااہلی قرار دیا ۔ آئی سی سی اگر بھارت جنوبی افریقہ کی سیریز میں اپنے آفیشل کو تحفظ نہیں دے سکتی تو وہ آئندہ ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ 2016 میں اپنے آفیشل کو کیا تحفظ دے گی ۔ سابق کرکٹر محسن حسن خان نے کہا کہ پی سی بی چیئرمین اور پی سی سی آئی چیئرمین کو ملاقات کے مواقع پر شیوسینا کی طرف سے بھارتی کرکٹ بورڈ پر جو حملہ ہوا ہے وہ بہت افسوس ناک ہے انہوں نے کہا کہ علیم ڈار کے حوالے سے آئی سی سی اس پوزیشن میں نہیں تھی کہ وہ فیصلہ کر سکے ۔ انہوں نے کہا کہ امپائر علیم ڈار کو بھارت کی سیریز سے ہٹا کر واپس بلانا بہت افسوس ہوا ہے ایسا نہیں ہونا چاہئے تھا انہوں نے کہا کہ پی سی بی کو بھارت کے پیچھے نہیں بھاگنا چاہئے دنیا میں دیگر ممالک بھی ہیں جن کے ساتھ کرکٹ کھیل جا سکتی ہے ۔ سابق کرکٹرز وسیم اکرم اور شعیب اختر کی طرف سے بھارت جنوبی افریقہ سیریز کمنٹری کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ پاکستانی کمنٹیٹروں کو بھارت کمنٹری کے لئے نہیں جانا چاہئے کیونکہ پاکستانی کھلاڑیوں کو آر پی ایل میں کھیلنے کا موقع نہیں دیا گیا ۔ دانش کنریا نے آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امپائر علیم ڈار کو بھارت جنوبی افریقہ کی سیریز سے امپائرنگ کرنے سے روکنے کے فیصلے کو آئی سی سی کی کمزوری قرار دیا انہوں نے کہا کہ علیم ڈار کو بھارت میں امپائرنگ سے روکنا آئی سی سی کی نااہلی ہے انہوں نے کہا کہ جس میں اگر کھلاڑیوں اور آئی سی سی کے آفیشلز کو تحفظ نہیں ہے تو وہاں پر کرکٹ کے ایونٹ نہیں ہونے چاہئے انہوں نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو بھارت نہیں جانا چاہئے اور بار بار ان کی منتیں سماجت نہیں کرنی چاہئے اس سے پاکستان کا امیج خراب ہوتا ہے جبکہ باقی ممالک بھی موجود ہیں ۔ ان کے ساتھ کرکٹ کھیلی جا سکتی ہے ۔ سابق کرکٹر اقبال قاسم نے آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آئی سی سی نے اپنے امپائر علیم ڈار کو تحفظ نہ دے کر اپنی کمزوری ظاہر کر دی ہے جبکہ ان کو چاہئے تھا کہ وہ بھارتی کرکٹ بورڈ سے کہتے کہ وہ ان کے آفیشل کا تحفظ ان کی ذمہ داری ہے انہوں نے کہا کہ جس طرح کی موجودہ صورت حال بھارت میں ہے کو آئندہ سال ہونے والی ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں بھارتی کرکٹ بورڈ اور حکومت کھلاڑیوں کو وہاں پر کیا تحفظ دے گی ۔ انہوں نے کہا کہ کھلاڑیوں اور آفشلز کا تحفظ کرنا بھارتی حکومت کی ذمہ داری ہے وہ اگر چاہے تو کھلاڑیوں اور آفشلز کو تحفظ دے سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ بھارتی کرکٹ بورڈ اور ہند انتہا پسندوں کے حملے سے واضح ہوتا ہے کہ بھارت کی حکومت نے جان بوجھ کر بھارتی کرکٹ بورڈ کے دفتر میں حفاظتی انتظامات ٹھیک طریقے سے نہیں کئے ۔ انہوں نے کہا کہ انتطامیہ نے غیر مناسب سیکورٹی کا انتظام کیا تھا جس کی وجہ سے شیوسینا کے غنڈوں نے ان کے دفتر پر حملہ کیا انہوں نے کہا کہ اس کی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے ۔

پیپسی نے آئی پی ایل کی سپانسر شپ ختم کر دی

نئی دہلی: متنازع انڈین پریمئر لیگ کے سپانسر پیپسی کی معذرت کے بعد انڈین کرکٹ حکام نے ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ کیلئے ایک نئے سپانسر کا اعلان کر دیا۔ انڈین کرکٹ بورڈ (بی سی سی آئی) نے ایک اجلاس کے بعد بتایا کہ چینی موبائل کمپنی ویوو آٹھ ٹیموں پر مشتمل اس ٹورنامنٹ کی ٹائٹل سپانسر ہو گی۔ بی سی سی آئی نے مزید تفصیلات میں جائے بغیر صرف اتنا بتایا کہ ویوو اگلے دس دنوں میں بینک گارنٹی دے گی۔ بورڈ نے گزشتہ ہفتہ تصدیق کرتے ہوئے بتایا تھا کہ وہ پیپسی کے کچھ تحفظات کا حل نکالنے کیلئے کمپنی سے بات چیت کر رہے ہیں۔ 2013 میں تقریباً چار ارب انڈین روپے کاپانچ سالہ معاہدہ کر نے والی کمپنی پیپسی نے ڈیل ختم کرنے کی کوئی وجہ نہیں بتائی۔ تاہم، نقادوں کا کہنا ہے کہ آئی پی ایل کے کرپشن اور میچ فکسنگ سمیت متعدد سکینڈلز کی ذد میں آنے سے انڈیا میں کھیلوں کی ساکھ متاثر ہوئی۔ جولائی میں سپریم کورٹ کے مقرر کردہ پینل نے غیر قانونی سٹہ بازی کی وجہ سے آئی پی ایل کی دو فرنچائز ٹیموں کو دو سالوں کیلئے معطل کر دیا۔ انتہائی مقبول ٹورنامنٹ کے نگران بی سی سی آئی نے اتوار کو معطل ہونے والی دو ٹیموں کے متبادل ٹیموں کی بولیاں بھی طلب کر لیں۔

اگر بھارت نے انکار کیا تو پی سی بی اس ایونٹ میں اپنے اسکواڈ کو شامل کرا لے گا

ابو ظبی: بھارت سے میچزکی منسوخی پر پاکستان چھوٹی ٹیموں کی سیریز کو بڑا بنائے گا، پی سی بی دسمبر میں زمبابوے، یو اے ای اور افغانستان کے ساتھ امارات میں چار قومی ٹورنامنٹ کھیلنے پر غور کر رہا ہے، اسی کے ساتھ بنگلہ دیش کو مہمان بنانے کیلیے بھی دوبارہ بات چیت ہوئی ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان اور بھارت کی دسمبر میں شیڈول سیریز طوفانوں کی زد میں ہے، صرف2ماہ رہ گئے لیکن بھارت نے تاحال کوئی جواب ہی نہیں دیا، گذشتہ دنوں دبئی میں آئی سی سی میٹنگز کے دوران چیئرمین بورڈ شہریارخان کی سیکریٹری بی سی سی آئی انوراگ ٹھاکر سے ملاقات نے کچھ آس دلائی مگر ابھی کچھ فائنل نہیں ہے، آئندہ چند روز میں شہریارخان بھارت جا کر نئے بورڈ چیف ششانک منوہر سے ملاقات کریں گے،اسی کے ساتھ پاکستان دیگر آپشنز بھی دیکھ رہا ہے۔دسمبر میں یو اے ای میں ہی میزبان، زمبابوے اور افغانستان کے درمیان ٹرائنگولر سیریز شیڈول ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اگر بھارت نے انکار کیا تو پی سی بی اس ایونٹ میں اپنے اسکواڈ کو شامل کرا لے گا، چھوٹی ٹیموں کے اس ایونٹ کی ابھی کوئی مارکیٹ ویلیو نہیں ہے، مگر پاکستانی ٹیم شامل ہوئی تو براڈکاسٹنگ رائٹس اچھی قیمت پر فروخت کرنے کے ساتھ اسپانسرز کی توجہ بھی مبذول کرائی جا سکے گی۔اسی کے ساتھ بنگلہ دیش کو امارات میں سیریز کیلیے مدعو کرنے کی بھی تجویز ہے، گوکہ گذشتہ دنوں اس حوالے سے بی سی بی نے زیادہ دلچسپی نہیں دکھائی مگر اب اعلیٰ حکام کے درمیان مثبت بات چیت ہوئی ہے، یو اے ای میں بنگالیوں کی بڑی تعداد مقیم اور میچز میں بڑا کراؤڈ آ سکتا ہے، ٹائیگرز اپنی ٹوئنٹی 20لیگ کے بعد گرین شرٹس سے سیریز کھیلنے پر غور کر رہے ہیں۔

یاسر شاہ دبئی ٹیسٹ میں شرکت کیلئے فٹ ہو گئے.

ابوظہبی: پہلت ٹیسٹ میچ میں انگلش بلے بازوں کے سامنے بے بس پاکستانی ٹیم کو دوسرے ٹیسٹ سے قبل خوشخبری مل گئی ہے جہاں یاسر شاہ دبئی ٹیسٹ میں شرکت کیلئے فٹ ہو گئے جبکہ پاکستان نے اگلے ٹیسٹ کیلئے ایک خفیہ ہتھیار کے استعمال کا بھی عندیہ دیا ہے.پہلے ٹیسٹ میچ سے قبل کمر کی انجری کا شکار ہونے والے یاسر شاہ فٹ ہو گئے ہیں اور دوسرے ٹیسٹ میچ کیلئے دستیاب ہیں۔یاسر شاہ کی غیر موجودگی میں پاکستانی باؤلنگ انگلینڈ کے خلاف بالکل بے بس نظر آئی جبکہ ڈراپ کیچز نے رہی سہی کسر بھی پوری کردی اور قومی ٹیم تقریبآ دو دن کی مشقت کے بعد بھی مہمان ٹیم کو آؤٹ کرنے سے قاصر ہے.گزشتہ روز دن کے اختتام پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے قومی ٹیم کے باؤلنگ کوچ مشتاق احمد نے کہا تھا کہ یاسر کے نہ ہونے سے باؤلنگ لائن کمزور ہوئی اور اس سے ذوالفقار بابر کی کارکردگی پر بھی اثر پڑا.پہلے میچ میں باؤلرز کی سلیکشن کے سلسلے میں مشکلات سے دوچار قومی ٹیم اب کسی قسم کا خطرہ مول لینے کو تیار نہیں اور کسی بھی باؤلر کے ان فٹ ہونے کے پیش نظر احتیاطاً اسکواڈ میں اضافی باؤلر کو طلب کیا جا رہا ہے۔ویزا مسائل کے سبب ظفر گوہر تو پہلے ٹیسٹ سے قبل ٹیم کو جوائن نہ کر سکے لیکن قومی ٹیم کے منیجر انتخاب عالم نے قومی ٹیم کے اسکواڈ میں حیران کن اضافے کی بھی پیشگوئی کر دی پہلے ٹیسٹ میچ کے آغاز سے قبل کپتان مصباح الحق نے زخمی یاسر شاہ کا متبادل اسپنر دستیاب نہ ہونے پر برہمی کا اظہار کیا تھا۔انتخاب عالم نے کہا کہ ہم ابھی کچھ بتانا نہیں چاہتے لیکن ہمارے کچھ منصوبے ہیں۔قومی ٹیم کے منیجر کے اس بیان کے ساتھ ہی اسکواڈ میں شمولیت کے حوالے سے دو نام ذہن میں آتے ہیں،سعید اجمل اور نوجوان بلال آصف۔بلال آصف کا ایکشن مشکوک رپورٹ ہو چکا ہے اور ان کے باؤلنگ ایکشن کا ٹیسٹ 19 اکتوبر کو آئی سی سی سے منظور شدہ چنئی کی لیبارٹری میں ہو گا لیکن وہ 22 اکتوبر سے شروع ہونے والے دوسرے ٹیسٹ میچ سے قبل ٹیم کو جوائن کر سکیں گے اور رہورٹ آنے تک باؤلنگ کر سکتے ہیں۔دوسری جانب پاکستان ایک بار پھر سعید اجمل کو طلب کر سکتا ہے جو باؤلنگ ایکشن میں تبدیلی کے ساتھ ہی افادیت کھو چکیں لیکن اجمل نے بذات خود اس بات کی تردید کر دی ہے۔اجمل نے کہا کہ میں تصدیق کرتا ہوں کہ بورڈ نے میرے پاسپورٹ کے بارے میں نہیں پوچھا لیکن مجھے یقین ہے کہ موجودہ صورتحال میں وہ میرے بارے میں سوچ رہے ہوں گے۔لیکن انتخاب عالم کے اس بیان سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ پاکستان بلال آصف کو اگلے میچ میں موقع دے گا۔

ظفر گوہ یاسر شاہ کی جگہ ابو ظبی نہیں پہنچ سکے۔

لاہور: پاکستان کے زخمی اسپنر یاسر شاہ کی جگہ ظفر گوہر ابو ظبی نہیں پہنچ سکے۔ پی سی بی حکام کا کہنا ہے کہ ظفر سوتا رہ گیا اور فلائٹ مس کر دی جبکہ ذرائع کا کہنا ہے کہ مسئلہ بورڈ کے عہدیداروں کی بد انتظامی کا ہے۔ پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان ٹیسٹ سیریز کا محور اسپنرز تصور کئے جارہے تھے، مصباح الحق کے پاس رواں برس سری لنکا کے خلاف 24 شکار کرنے والے یاسر شاہ کی شکل میں زبردست ہتھیار تھا لیکن پہلے ہی میچ سے پہلے فٹ نس ٹیسٹ میں فیل ہوجانے کے سبب یاسر شاہ کے بغیر صرف ایک اسپیشلسٹ اسپنر ذوالفقار بابر کو لیکر میدان میں اترنا پڑا ۔ ظفر گوہر کے ابوظبی نہ پہنچنے پر پی سی بی حکام کا موقف ہے کہ بروقت ابو ظبی نہ پہنچنا ظفر گوہر کی غلطی ہے، چیف سلیکٹرہارون رشید کا دعویٰ ہے کہظفرگوہرسوتا رہ گیا اور فلائٹ مس کر دی جبکہ کپتان مصباح الحق نے اسے مس مینجمنٹ قرار دیا تھا۔ سوال یہ ہے کہ کیا پاکستان کے پاس اتنی اہم سیریز کے لئے کوئی اور بیک اپ اسپنر نہیں تھا ؟ کیا پی سی بی انتظامیہ ایک نوجوان کرکٹر کا کیریئر خراب کر کے خود سے ملبہ ہٹا رہی ہے؟ حقیقت کیا ہے؟ لیفٹ آرم اسپنر ظفر گوہرنےفرسٹ کلاس کرکٹ میں اچھی کارکردگی کے باعث سلیکٹرز کی توجہ حاصل کی ، انگلینڈ کے خلاف سائیڈ میچ میں بھی انہیں پاکستان اے کی نمائندگی کا موقع ملا ،جس میں پانچ وکٹیں حاصل کیں، ظفر گوہر پاکستان انڈر۔15اور انڈر 19ٹیموں کی بھی نمائندگی کرچکے ہیں۔

پاکستانی ویٹ لفٹرزنے بھارتی سر زمین پر پاکستان کا نام روشن کر دیا

پونے :امن ویلتھ ویٹ لفٹنگ چیمپئن شپ میں نوح دستگیر بٹ نے 2 گولڈ ،ایک برونز میڈل جیت کر تاریخ رقم کردی ایونٹ میں پاکستان کے میڈلز کی تعداد پانچ ہوگئی، اس سے قبل محمد ثاقب ،عثمان امجد میڈلزجیت چکے.کامن ویلتھ ویٹ لفٹنگ چیمپئن شپ میں پاکستانی ویٹ لفٹرزکی شاندار کارکردگی،نوح دستگیر بٹ نے چیمپیئن شپ میں دو گولڈ اورایک برونز میڈل جیت کر تاریخ رقم کردی،پونے میں جاری کامن ویلتھ ویٹ لفٹنگ چیمپیئن شپ میں پاکستان کے سترہ سالہ نوجوان ویٹ لفٹرنوح دستگیر بٹ نے نیا ریکارڈ قائم کردیا،ایک سو پانچ کے جی کیٹگری میں نوح دستگیر بٹ نے یوتھ اورجونیئرایونٹ میں گولڈ میڈلز جبکہ اوپن ویٹ میں برونزمیڈل اپنے نام کیا، نوجوان ویٹ لفٹر نے مجموعی طور پرتین سوستاون کے جی وزن اٹھایا، وہ تین کیٹگریزمیں میڈل جیتنے والے پہلے پاکستانی ہیں،ایونٹ میں پاکستان کے میڈلز کی تعداد پانچ ہوگئی، اس سے قبل محمد ثاقب ستترکلوگرام کیٹگری میں سونے اورعثمان امجد چورانوے کلوگرام کیٹگری میں چاندی کا تمغہ جیت چکے ہیں۔
Google Analytics Alternative