کھیل

پاکستان کرکٹ بورڈ نے عمر اکمل کو ٹی ٹوینٹی سکواڈ میں شامل کر لیا

لاہو:پولیس نے قومی ٹیم کے کھلاڑی عمر اکمل کو ڈانس سکینڈل میں کلین چٹ دیدی ہے جبکہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے بھی عمر اکمل کو ٹی ٹوینٹی سکواڈ میں شامل کر لیاہے۔تفصیلات کے مطابق پولیس سے گرین چٹ ملنے کے بعد پی سی بی نے عمر اکمل کو انگلینڈ کیخلاف ٹی ٹوینٹی سکواڈ میں شامل کر لیا ہے ،نجم سیٹھی کا کہناتھا کہ پی سی بی کی انکوائری پولیس رپورٹ پر انحصار کرتی تھی اور پولیس کا کہناہے کہ انہیں تفتیش میں معلوم ہواہے کہ عمر اکمل وہاں تھے ہی نہیں جس کے بعد عمر اکمل کو سکینڈل سے بری کر دیا گیاہے اور اسی لیے انہیں انگلینڈ کیخلاف ٹی ٹوینٹی سکواڈ میں بھی شامل کر لیا گیاہے۔واضح رہے کہ قومی ٹی ٹوینٹی کرکٹ ٹیم کے کپتان شاہد آفریدی نے پی سی بی سے مطالبہ کیا تھا کہ عمر اکمل کو انگلینڈ کیخلاف ٹی ٹوینٹی سریز میں شامل کیا جائے۔

محمدحفیظ کا عامر کےساتھ کھیلنے سے انکار

لندن: محمدحفیظ نے بنگلہ دیشی پریمیئر لیگ میں سپاٹ فکسنگ کیس میں سزا یافتہ فاسٹ بالر محمد عامر کے ساتھ کھیلنے سے انکار کر دیا ہے۔ برطانوی میڈ یا کے مطابق محمدحفیظ کا کہنا ہے کہ یہ ذاتی معاملہ نہیں ہے بلکہ اس کا تعلق ملک کی عزت اور ساکھ سے ہے اور وہ کسی ایسے کھلاڑی کے ساتھ نہیں کھیل سکتے جس نے ملک کو بدنام کیا ہو، اگر کسی دوسری ٹیم نے انہیں پیشکش کی تو وہ بنگلہ دیشی پریمئر لیگ کھیلیں گے۔ بی بی سی کے مطابق یہ اطلاعات بھی سامنے آ رہی ہیں کہ پاکستانی ٹیم کے بیشتر کرکٹر ان سزا یافتہ کھلاڑیوں کی ٹیم میں واپسی کے خلاف ہیں تاہم ان میں سے محمد حفیظ وہ پہلے کرکٹر ہیں جنھوں نے کھل کر اپنے جذبات کا اظہار کیا ہے۔ یادرہے کہ چٹاگانگ نے بنگلہ دیشی پریمیئر لیگ میں محمد عامر اورمحمد حفیظ سے معاہدہ کیا تھا لیکن محمد حفیظ نے محمد عامر کے ساتھ کھیلنے سے انکار کر دیا۔

اوپنر احمد شہزاد کی مشکلات ختم ہونے کا نام ہی نہیں لے رہیں

شارجہ:انگلینڈ کے خلاف سیریز میں ٹیم انتظامیہ اوپنر احمد شہزاد کے ساتھ جو سلوک کررہی ہے۔ اس پر وہ خوش دکھائی نہیں دیتے لیکن انہوں نے ٹیم کے وسیع تر مفاد میں اپنے جذبات کو کنٹرول کررکھا ہے۔ وہ حساس معاملے پر بات کرنے سے گریز کرتے ہیں۔پاکستان کی سیریز کے لئے آیا ہوا برطانوی میڈیا بھی احمد شہزاد کو نہ کھلانے پر حیران ہے۔ اوپنر احمد شہزاد کی مشکلات ختم ہونے کا نام ہی نہیں لے رہیں۔ تین ٹیسٹ میچوں کے بعد مسلسل تیسرے ون ڈے انٹرنیشنل میں ٹیم انتظامیہ نے انہیں کھلانے سے گریز کیا۔احمد شہزاد موجودہ سیریز میں کپتان اظہر علی اور کوچ وقار یونس کا اعتماد حاصل کرنے میں ناکام رہے ہیں اور ایسا لگ رہا ہے کہ وہ پانی پلانے کی ذمے داریاں نبھائیں گے اور ٹی ٹوئینٹی میچوں میں شاہد آفریدی کی موجودگی میں انہیں موقع دیا جائے گا۔

بھارت میں پاکستانی ٹیم کو کہاں کہاں خطرہ ہےہمیں پتہ ہے،انوراگ ٹھاکر

ممبئی:سیکرٹری بی سی سی ائی انوراگ ٹھاکر نے کہا ہے کہ دو دن میں پاک بھارت سیریز کے حوالے سے فیصلہ ہوجائے گا ہمیں پتہ ہے پاکستانی ٹیم کو بھارت می کہاں کہاں خطرہ ہے پاکستان کا بھارت اکر کھیلنے پر انکار کرنے کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ دونوں بورڈز کو جہاں کھیلنا بہتر لگے گا وہیں کھیلا جائے گا ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کیلئے پاکستان کے تحفظات کو مد نظر رکھیں گے ہمیں معلوم ہے پاکستان کو کن شہروں میں کھیلنے میں مسئلہ ہوسکتا ہے ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی میزبانی میں سیریز متحدہ عرب امارات میں شیڈول ہے دسمبر میں مجوزہ پاک بھارت سیریز کا فیصلہ2روز میں ہوجائے گا۔

حق مانگنے پر شائقین نے فٹبالر کی پٹائی کر دی

ارجنٹینا میں تنخواہ مانگنے پر کلب شائقین نے فٹبالر کی پٹائی لگادی۔ چوتھے درجے کے کلب ارجنٹینو ڈی میرلو کے 20 سالہ فارورڈ میزیمیلائینو میسیل نے فیس بک اکاونٹ پر انکشاف کیا کہ گزشتہ روز ٹریننگ کے بعد جب میں نے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ ستمبر سے واجب الادا تنخواہ مانگی تو کلب کا ایک ڈائریکٹر ہمیں اپنے ساتھ لے گیا، وہاں جاکر خاص طور پر مجھے رقم ادا کرنے سے انکار کردیاپھر اس نے کہیں کال کی ‘ تھوڑی دیر بعد تین گاڑیوں میں کلب کے شائقین پہنچ گئے، انہوں نے مجھے لاٹھیوں سے خوب پیٹا اور زخمی حالت میں چھوڑ کر چلے گئے، اس واقعے کے بعد سے میرا اب فٹبال کھیلنے کو بھی دل نہیں چاہ رہا۔

وقار یونس کو عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کیاگیاہے

کراچی: پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور عظیم بیٹسمین جاوید میانداد اور سابق فاسٹ باولر سرفراز نواز نے قومی ٹیم کی انگلینڈ کے خلاف دو میچوں میں مسلسل شکست پر افسردگی کا اظہار کرتے ہوئے قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ وقار یونس کو عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کردیا۔جاوید میانداد نے سرکاری خبر رساں ایجنسی ‘اے پی پی’ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ٹیم مبینہ طور پر ہیڈ کوچ وقار یونس کی پسند اور ناپسند کو مدنظر رکھتے ہوئے چنی گئی تھی اس لیے وہ اس شکست کے ذمہ دار ہیں۔انھوں نے دعویٰ کیا کہ اوپننگ بیٹسمین احمد شہزاد بھی ہیڈ کوچ کا نشانہ بنے ہیں جیسا کہ ان کے کوچ اور ٹیم انتظامیہ کے ساتھ کچھ مسائل ہیں۔جاوید میانداد نے سوال اٹھایا کہ “پاکستان کرکٹ بورڈ نے احمد شہزاد کو ٹی ٹوئنٹی سیریز کے لیے ٹیم میں شامل کیا ہے لیکن ون ڈے کے لیے انہیں کیوں شامل نہیں کیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ اس طرح کے رویے ٹیم اور اس کی کارکردگی کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔انگلینڈ ٹیم کے سابق کپتان مائیکل وان کے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر دیے گئے بیان میں پاکستان کی ہار پر شکوک وشبہات کے اظہار پر جاوید میانداد کا کہنا تھا کہ میں اس پر کچھ نہیں کہنا چاہتا لیکن اس وقت ٹیم کے لیے نیا کوچ لانا جانا چاہیے تھا۔سابق فاسٹ باو¿لر سرفراز نواز نے وقار یونس کے ساتھ ساتھ ون ڈے ٹیم کے کپتان اظہر علی کو بھی ہار کا ذمہ دار ٹھہرایا۔مائیکل وان کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے سرفراز نواز کا کہنا تھا کہ 2010 میں جب تین پاکستانی کھلاڑیوں محمد عامر، محمد آصف اور سلمان بٹ اسپاٹ فکسنگ میں ملوث ہوئے تھے تو اس وقت بھی وقار یونس قومی ٹیم کے کوچ تھے۔ان کا کہنا تھا کہ “میں سمجھتا ہوں کہ وقاریونس کو ہٹادینا چاہیے اور ان کی جگہ نیا کوچ لایا جائے”۔سرفراز نواز کا کہنا تھا کہ مائیکل وان کے بیان پر اظہر علی سے بھی پوچھنا چاہیے اور ترجیحی بنیادوں پر ایک انکوائری رپورٹ بھی ترتیب دی جانی چاہیے۔دوسری جانب قومی ٹیم کے سابق کپتان وسیم باری اور عامر سہیل نے بھی ٹیم کی انگلینڈ کے خلاف ون ڈے میچوں میں مسلسل شکست پر حیرانی کا اظہار کیا ہے۔وسیم باری نے کہا کہ ‘غیر ضروری تجربے اور اہم چیزوں پر توجہ دینے میں ناکامی ہماری شکست کی بنیادی وجوہات ہیں’۔انھوں نے کہا کہ یہ ایک پراسرار راز ہے کہ پاکستان نے باقاعدہ اوپنر احمد شہزاد کو کیوں باہر بٹھایا جبکہ دیگر اوپنر اب تک سیریز میں خراب کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔وسیم باری نے کہا کہ ‘ احمد شہزاد ایک قابل بیٹسمین ہے جو کسی بھی باولنگ اٹیک کو دباو میں رکھ سکتا ہے، ان کو مسلسل باہر بٹھانا ٹیلنٹ کا ضیا ہے۔’عامر سہیل نے ٹیم انتظامیہ کے فیصلوں کو حیران کن قرار دیتے ہوئے کہا کہ “پاکستان ٹیم کا کوچنگ اسٹاف حکمت عملی میں غلطیوں کو مسلسل جاری رکھے ہوئے ہے اور بیٹنگ آرڈر میں تبدیلیاں ٹیم کی ناکامی کا باعث بن رہی ہیں”۔ان کا کہنا تھا کہ “ابوظہبی میں کھیلے گئے پہلے میچ میں کامیابی کے بعد ہم بیٹنگ میں تبدیلیوں کو سمجھنے میں ناکام ہوئے ہیں، کسی شک و شبہہ کے بغیر پاکستان تجربہ اور صلاحیتوں کے اعتبار سے ایک بہتر ٹیم ہے لیکن ہم حکمت عملی میں غلطیوں کی وجہ سے نقصان اٹھا رہے ہیں۔سابق چیف سلیکٹر اقبال قاسم نے بھی پاکستانی ٹیم کی خراب کارکردگی پر حیرانی کا اظہار کیا۔اقبال قاسم کا کہنا تھا کہ “اظہر علی، شعیب ملک اور محمد رضوان تینوں کے رن آوٹ ہونے سے پاکستانی بیٹنگ لائن بری طرح لڑکھڑا گئی جو ہماری ناکامی کا سبب بنی۔”

شکیرا اور جیراڈ کو بلیک میل کیاجارہا ہے

بارسلونا: اسپین کے معروف فٹ بالرجیراڈ پیکے اور ان کی بیگم مشہور گلوکارہ شکیرا کے سابق ملازم نے بھاری رقم ادا نہیں کرنے کی صورت میں ان کی خفیہ ویڈیو ٹیپ کو عام کرنے کی دھکمی دے دی۔واکا واکا ‘ گانے سے شہرت پانے والی 38 سالہ کولمبین گلوکارہ شکیرا اور 28 سالہ ہسپانوی فٹ بالر جیراڈ کی ملاقات 2010 کے فٹ بال ورلڈکپ کے گانے کی ویڈیو کی تیاری کے دوران ہی ہوئی تھی، ان کے 2 بیٹے 2 سالہ میلان اور 11 مہینے کا ساشا ہیں۔برطانوی ویب سائٹ مررکے مطابق جیراڈ اور شکیرا نے ہسپانوی میڈیا کی ان خبروں کو مسترد کردیاہے تاہم اس طرح کی خبریں اب شیکرا کے ملک کولمبیا سے بھی آرہی ہیں۔ہسپانوی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق مشہور جوڑے کو ان کے سابق ملازم نے بھاری رقم ادا نہ کرنے کی صورت میں دونوں کی خفیہ ویڈیو کو مشتہر کرنے کی دھمکی دی۔اسپین میں بلیک میل کرنا ایک بڑا جرم ہے اورقانون کے مطابق اس کی سزا قید ہے۔ہسپانوی کلب ریال میڈرڈ کے فرانسیسی کھلاڑی کریم بینزیما کو بھی ساتھی کھلاڑی کو رقم کے عوض کے لیے بلیک میل کرنے کے الزامات کا سامنا ہے۔اسپین فٹ بال ٹیم کے اہم کھلاڑی جیراڈ پیکے 16 سال کی عمر میں 2004 میں انگلش فٹ بال کلب مانچسٹر یونائیٹڈ سے منسلک ہوگئے تھے جہاں انھوں نے 12 میچوں میں ٹیم کی نمائندگی کی جبکہ 2008 میں ہسپانوی کلب بارسلونا سے 5 ملین میں معاہدہ کرکے لالیگا کا حصہ بن گئے۔بارسلونا نے ان کی موجودگی میں تین دفعہ چمپئنز لیگ اور 5 لالیگا ٹائٹل جیتا۔جیراڈ 2010 میں ورلڈکپ اور 2012 میں یورپین چمپین شپ جیتنے والی اسپین کی ٹیم کا بھی حصہ تھے

تیسرے ون ڈے میں شکست کے باوجود ٹیم کے حوصلے پست نہیں ہوئے،اظہر علی

دبئی:پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان اور مایہ ناز آل راو¿نڈر اظہر علی نے کہا ہے کہ انگلینڈ کے ہاتھوں چار ون ڈے میچوں کی سیریز کے دوسرے اور تیسرے میچ میں شکست کے باوجود ٹیم کے حوصلے پست نہیں ہوئے، انہوں نے کہا کہ انگلینڈ ٹیم کو چوتھے اور آخری میچ میں شکست دیکر سیریز میں 2-2 سے برابر کرینگے تاہم انہوں نے کہا کہ اس مقصد کے حصول کیلئے ٹیم کو کھیل کے تینوں شعبوں میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے اظہر علی نے کہا کہ ہار جیت کھیل کا حصہ ہے انگلینڈ کے ہاتھوں ون ڈے سیریز کے پہلے میچ میں فتح کے بعد مسلسل دو میچ میں شکست کے باوجود ٹیم کے حوصلے پست نہیں ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انکی ٹیم کے کھلاڑی مکمل طور پر فٹ اور بھر پور فارم میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تیسرے میچ میں ناقص بیٹنگ ٹیم کی شکست کی وجہ بنی، انہوں نے کہا کہ انکی ٹیم چوتھے میچ میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے انگلینڈ ٹیم کو شکست دیکر سیریز 2-2 سے برابر کرنے کی بھرپور کوشش کریگی۔ اظہر علی نے کہا کہ وہ انگلینڈ کے خلاف چوتھے میچ میں مربوط حکمت کے تحت جیت کیلئے میدان میں اتاریں گے۔ واضح رہے کہ دونوں ٹیموں کے درمیان چوتھا اور آخری ون ڈے میچ جمعہ کو دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں کھیلا جائیگا۔

Google Analytics Alternative