کھیل

کینیڈین گلوبل لیگ پر بھی غیریقینی کے سائے دراز

ٹورنٹو: کینیڈین گلوبل کرکٹ لیگ پر بھی غیریقینی کے سائے دراز ہونے لگے، صرف تین ہفتے باقی ہونے کے باوجود ابھی تک کئی بنیادی کام ہی مکمل نہیں ہوئے۔

کچھ عرصے قبل جنوبی افریقہ نے گلوبل ٹی 20 کے نام سے ایونٹ شروع کرنے کا اعلان کیا تھا مگر آغاز سے قبل ہی اس منصوبے کو ختم کردیا گیا، اب کینیڈا میں بھی گلوبل ٹی 20 کے انعقاد کا اعلان کیا گیا اور اس کی ٹیموں کا اعلان بھی کردیا گیا ہے، مگر ابھی تک بنیادی انتظامات مکمل نہیں ہوئے جس کی وجہ سے ایونٹ پر غیریقینی چھانے لگی ہے، ٹورنامنٹ میں آسٹریلوی نقطہ نگاہ سے خاص بات یہ ہے کہ اس میں پابندی کے شکار اسٹیون اسمتھ اور ڈیوڈ وارنر کی واپسی ہونی ہے۔

آسٹریلیا کے ہی ایک میڈیا گروپ کی رپورٹ کے مطابق 18 روزہ ایونٹ کیلیے کھلاڑیوں کا زیادہ سے زیادہ معاوضہ ایک لاکھ ڈالر مقرر کیا گیا ہے، اس میں گیل، مالنگا اور آندرے رسل سمیت کئی انٹرنیشنل اسٹارز کے حصہ لینے کا اعلان کیا گیا ہے۔

سرمایہ کاروں نے 10 سے 20 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کی یقین دہانی کرائی اور ان کو بتا دیا گیاکہ پہلے سال منافع کا امکان بھی نہیں ہے۔ ابھی تک میپل لیف کرکٹ کلب کے گراؤنڈ میں 7 ہزار تماشائیوں کی گنجائش پیدا کرنے کیلیے عارضی اسٹینڈز نہیں لگائے گئے ہیں، تمام 22 میچز ایک ہی وینیو پر کھیلے جائینگے جس کیلیے 5 وکٹیں تیار کی جارہی ہیں۔ امکان یہی ہے کہ یہاں پر صرف اسپنرز کا ہی راج ہوگا۔

ایک سینئر آفیشل کی جانب سے دعویٰ کیا گیاکہ ان کے ایونٹ میں بہت زیادہ دلچسپی لی جارہی ہے مگر ابھی تک کسی براڈ کاسٹر سے ڈیل نہیں ہوئی۔

آسٹریلوی میڈیا کے مطابق آخری اطلاعات تک پلیئرز کو کنٹریکٹس بھی نہیں بھجوائے گئے تھے، لیگ کی ویب سائٹ پر ایک روز قبل تک ٹکٹوں کے بارے میں کوئی تفصیل نہیں تھی۔

یاد رہے کہ اس سے قبل 2012 میں بھی ٹورنٹو میں ایک آل اسٹارز گیم میں پلیئرز نے معاوضے نہ ملنے کی شکایت کی تھی، شاہد آفریدی سمیت 6 پاکستانی پلیئرز آخری لمحات میں دستبردار ہوگئے تھے۔

دوسری جانب جی ٹی 20 کے ڈائریکٹر ہارپر نے کہاکہ ہمارا عملہ18 سے 20 گھنٹے تک کام کررہا ہے،آخری لمحات میں سب چیزیں مکمل ہوجائینگی، معاوضوں کا کوئی مسئلہ نہیں ہوگا، ہر کام مشاورت کیساتھ ہورہا ہے۔

 

ویمن ایشیا کپ: بھارت نے پاکستان کو شکست دے کر فائنل کیلئے کوالیفائی کرلیا

کوالالمپور: ویمن ایشیا کپ میں بھارت نے پاکستان کو 7 وکٹوں سے شکست دے کر فائنل کے لیے کوالیفائی کرلیا۔

ایشیا کپ کے سیمی فائنل میں پاکستان ویمن ٹیم نے بھارت کے خلاف پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 72 رنز بنائے۔

 ثناء میر 20 اور ڈیانا بیگ 6 رنز کے ساتھ ناٹ آوٹ رہیں جب کہ ناہیدہ خان سب سے زیادہ 18 رنز کے ساتھ نمایاں رہیں۔

پاکستان کی جانب سے 7 کھلاڑی ڈبل فیگر میں بھی شامل نہ ہوسکیں۔

73 رنز کے ہدف کے تعاقب میں بھارت کو صرف 5 رنز پر 2 وکٹوں کے خسارے کا سامنا رہا جس کے بعد امید ظاہر ہوئی کہ قومی ویمن ٹیم گیم میں دوبارہ واپس آسکتی ہے لیکن روایتی حریف نے ہدف 3 وکٹوں کے نقصان پر باآسانی حاصل کرلیا۔

پاکستان کو شکست دینے کے بعد بھارتی ٹیم ویمن ایشیا کپ کے فائنل میں پہنچ گئی۔

اوپننگ میں 17واں تجربہ بھی کامیاب نہ ہوسکا

لاہور: گزشتہ 6 سال میں پاکستان کااوپننگ میں17واں تجربہ بھی کامیاب نہ ہوسکا۔

ٹیسٹ کرکٹ میں اوپننگ پاکستان کا دیرینہ مسئلہ بن چکا،گذشتہ 6سال میں مختلف 16 جوڑیاں آزمائی جا چکی ہیں، حالیہ دورئہ انگلینڈ میں 17واں تجربہ کیا گیا، آخری 18ٹیسٹ میں ہی 8اوپننگ پیئرز کی آزمائش ہوئی۔

محمد حفیظ اور شان مسعود، محمد حفیظ اور سمیع اسلم، اظہر علی اور سمیع اسلم، اظہر علی اور شرجیل خان، اظہر علی اور احمد شہزاد، اظہر علی اور شان مسعود بطور اوپننگ جوڑی میدان میں اتارے جا چکے ہیں، سری لنکا کیخلاف یواے ای میں منعقدہ گذشتہ سیریز میں سمیع اسلم اور شان مسعود بطور اوپنر کھیلے تھے۔

آئرلینڈ اور انگلینڈ کیخلاف ٹیسٹ میچز میں پاکستان نے اظہر علی اور امام الحق پر انحصار کیا مگر دونوں ناکام رہے، سینئر بیٹسمین کی کارکردگی کسی طور شایان شان نہیں کہی جا سکتی،آئرلینڈ کیخلاف ایک ففٹی کے بعد امام الحق نے بھی مایوس کیا اور صرف 18.66کی اوسط سے رنز بناسکے،دونوں اوپنرز کے مابین انگلینڈ میں کھیلی گئی 4اننگز میں سب سے بڑی شراکت 20کی رہی۔

ٹاپ آرڈر کی ناکامی پر دباؤ کا شکار ہونے والی بیٹنگ کو شاداب و دیگر ٹیل اینڈرز سہارا دیتے رہے، پاکستان کی آئندہ ٹیسٹ سیریز رواں سال کے آخر میں نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کیخلاف ہونگی۔ یواے ای یا ملائیشیا جہاں بھی سیریز ہو پاکستان کی جانب سے ایک اور تجربہ خارج ازامکان قرار نہیں دیا جاسکتا۔

دوسری جانب اپنے فیصلوں کا دفاع کرتے ہوئے چیف سلیکٹر انضمام الحق نے کہاکہ نوجوان ٹیم بھجوانے کی وجہ سے بڑی تنقید کا سامنا بھی کرنا پڑا لیکن اختتام پر یہی کہوں گا کہ سیریز سے میں بہت مطمئن ہوں۔

ایک انٹرویو میں انضمام الحق نے مزید کہا کہ کھلاڑیوں میں صلاحیتیں نظر آئیں، اگر ان پر اعتماد کیا جائے تو 1،2 برس میں یہی ورلڈ کلاس کرکٹرز بنیں گے۔ انھوں نے کہا کہ امام الحق میرے لیے ایک کھلاڑی کی حیثیت رکھتا ہے، توجہ بھتیجے پر نہیں پوری ٹیم کی کارکردگی پر ہوتی ہے، اتنا ضرور کہوں گا کہ اوپنر نے اپنی صلاحیتیں دکھائیں جس کی وجہ سے وہ آگے جا سکتا ہے۔

چیف سلیکٹر نے کہا کہ مصباح  اور یونس کے بعد اظہر علی اور اسد شفیق پر دباؤ بڑھا جسکی وجہ سے وہ توقعات پر پورا نہ اترے۔ انھوں نے کہا کہ کپتان سرفراز احمد تینوں فارمیٹ کی ٹیموںکو اچھا لے کر چل رہے ہیں، کپتان ہونے کی وجہ سے دباؤ بڑھنا فطری بات ہے، جہاں تک ان کی اپنی کارکردگی کی بات ہے تو اس کو مزید بہتر ہونا چاہیے،وہ اس سے اچھا پرفارم کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

10ہزار رنز اور 500 وکٹیں؛ شکیب الحسن دنیا کے تیسرے آل راؤنڈر بن گئے

ڈھاکا:  بنگلادیشی اسٹار آل راؤنڈر شکیب الحسن نے انٹرنیشنل کرکٹ میں کیریئر کی 500 وکٹیں مکمل کرلیں۔

شکیب الحسن ٹیسٹ، ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی تینوں فارمیٹس میں 10ہزار سے زائد رنز اور 500 یا زائد وکٹیں لینے والے دنیا کے تیسرے آل راؤنڈر بن گئے ہیں، انھوں نے افغانستان کے خلاف تیسرے اور آخری ٹی ٹوئنٹی میچ میں ایک وکٹ لے کرانٹرنیشنل کرکٹ میں کیریئر کی 500 وکٹیں مکمل کرکے یہ اعزاز حاصل کیا، انھوں نے مجموعی طور پر 302 میچز کھیل کر کیریئر کی 500 وکٹیں مکمل کیں۔

آل راؤنڈر نے ٹیسٹ میچز میں 188، ون ڈے میں 235 جبکہ ٹی ٹوئنٹی میں 77 وکٹیں حاصل کر رکھی ہیں، انھوں نے تینوں فارمیٹس میں 500 وکٹیں اور 10ہزار سے زائد رنز بنا رکھے ہیں۔

اس سے قبل سابق پاکستانی آل راؤنڈر شاہد خان آفریدی اور جنوبی افریقہ کے جیک کیلس بھی یہ کارنامہ انجام دے چکے ہیں، کیلس نے تینوں فارمیٹس میں 25534 رنز اور577 وکٹیں لی ہیں جبکہ شاہد آفریدی نے 11196رنز اور541 وکٹیں حاصل کی ہیں۔

چیف سلیکٹر انضمام نے نوجوان ٹیم پر تنقید کو مسترد کردیا

قومی ٹیم کے چیف سلیکٹر انضمام الحق نے انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ سیریز برابر کرنے والی نوجوان پاکستانی ٹیم پر تنقید کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ نوجوان کھلاڑیوں میں ورلڈ کلاس کرکٹر بننے کی پوری صلاحیت موجود ہے۔

پاکستان نے دورہ آئرلینڈ اور انگلینڈ کے دوران آئرلینڈ کو اس کی تاریخ کے پہلے ٹیسٹ میچ میں شکست دینے کے بعد انگلینڈ کے خلاف لارڈز میں بھی شاندار کھیل پیش کرتے ہوئے 9وکٹوں سے فتح سمیٹی تھی۔

تاہم ہیڈنگلے میں ہونے والے دوسرے ٹیسٹ میچ میں قومی ٹیم کی کارکردگی یکسر مختلف رہی اور بدتر بیٹنگ پرفارمنس کے سبب اننگز اور 55رنز سے ناکامی کا منہ دیکھنا پڑا۔

ٹیم کی دوسرے ٹیسٹ میں بدترین بیٹنگ خصوصاً سینئر بلے بازوں اور کپتان کی غیرذمے دارانہ کارکردگی پر ٹیم کو بدترین کارکردگی کا نشانہ بنایا گیا تاہم چیف سلیکٹر انضمام الحق قومی ٹیم کی کارکردگی سے مطمئن نظر آتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس سیریز سے یہ بات ثابت ہو گئی کہ ہماری نوجوان ٹیم میں بہت صلاحیت ہے اور اگر ہم ان پر اعتماد کرتے ہوئے مسلسل مواقع دیں اور انہیں لمبے عرصے تک کھلائیں تو ایک سے دو سال میں ٹیم کی بالکل مختلف شکل نظر آئے گی اور ان کھلاڑیوں میں ورلڈ کلاس کرکٹر بننے کی پوری صلاحیت موجود ہے۔

اپنے بھتیجے اور نوجوان امام الحق کے حوالے سے سوال پر انضمام نے کہا کہ ایک نوجوان کے طور پر اس نے ٹیمپرامنٹ دکھایا ہے اور آگے چل کر امید ہے کہ وہ مزید بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرے گا۔

چیف سلیکٹر نے سیریز میں اظہر علی اور اسد شفیق کی ناقص بیٹنگ کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ دباؤ آنے سے بعض اوقات آپ توقعات کے مطابق اس سطح پر کارکردگی نہیں دکھا پاتے لیکن اظہر نے گزشتہ سیزن میں سب سے زیادہ رنز کیے تھے جبکہ اسد شفیق نے بھی گزشتہ سیزن میں شاندار کھیل پیش کیا تھا اور بعض سیریز اچھی نہیں جاتیں لیکن آئندہ سیریز میں ہمیں ان دونوں کھلاڑیوں سے توقعات وابستہ ہیں۔

انہوں نے کپتان سرفراز احمد کا بھی دفاع کرتے ہوئے کہا کہ کپتان پر بہت زیادہ دباؤ ہوتا ہے جس کی وجہ سے وہ اپنی انفرادی کارکردگی پر توجہ نہیں دے پاتا اور میرے خیال میں سرفراز جس معیار کا کھلاڑی ہے اسے بہتر کارکردگی دکھانی چاہیے اور امید ہے کہ وہ آنے والے میچوں میں اچھی کارکردگی دکھانے میں کامیاب رہیں گے۔

قومی ٹیم اب 12 اور 13 جون کو ایڈن برگ میں اسکاٹ لینڈ کے خلاف دو ٹی20 میچز کھیلے گی۔

ٹی ٹوئنٹی بیٹنگ رینکنگ؛ بابراعظم نمبر ون بیٹسمین برقرار

آئی سی سی کی جانب سے جارہ کردہ نئی ٹی ٹوئنٹی رینکنگ میں ٹاپ 9 بولرز میں اسپنرز شامل ہیں جب کہ بیٹسمینوں کی فہرست میں قومی ٹیم کے بلے باز بابر اعظم سرفہرست ہیں۔ 

انٹر نیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کی نئی ٹی ٹوئنٹی رینکنگ جاری کردی، نئی رینکنگ میں بنگلا دیش اور افغانستان کے مابین ٹی ٹوئنٹی سیریز کے بعد نئی ٹی ٹوئنٹی ٹیم رینکنگ میں پاکستان ٹیم بدستور نمبر ون ہے جب کہ بنگلا دیش کے خلاف کلین سوئپ کے بعد افغانستان ٹیم کو 4 پوائنٹس ملے ہیں تاہم وہ 8 ویں پوزیشن پر ہی موجود ہے، بنگلا دیشی ٹیم کو 5 پوائنٹس کی کمی کا سامنا کرنا پڑا ہے اور اب ان کا 11 ویں نمبر پر موجود اسکاٹ لینڈ سے صرف 4 پوائنٹس کا فرق رہ گیا ہے۔

بولنگ رینکنگ میں بولرز کی ٹاپ 9 پوزیشنز پر اسپنرز کا قبضہ برقرار ہے، افغان اسپنر راشد خان نے بنگلا دیش کے خلاف مین آف دی سیریز ایوارڈ لینے کے بعد ٹاپ پوزیشن مزید مستحکم کر لی ہے جب کہ پاکستان کے شاداب خان دوسرے نمبر پر موجود ہیں۔ محمد نبی 11 درجے کی چھلانگ کے ساتھ کیریئر میں پہلی مرتبہ 8 ویں جب کہ مجیب زدران 51 ویں نمبر پر آ گئے ہیں۔ فہرست میں عماد وسیم نے نویں پوزیشن سنبھالے رکھی، محمد عامر 13ویں درجے پر ہیں۔

بیٹسمینوں کی فہرست میں پاکستان کے بابر اعظم بیٹنگ میں بدستور نمبر ون ہیں، کولن منرو دوسرے، گلین میکسویل تیسرے، آرون فنچ چوتھے اور ایون لوئس ایک درجے بہتری ملنے پر پانچویں نمبر پر آگئے ہیں۔ افغان سمیع اللہ شنواری ترقی کرتے ہوئے 44 ویں، بنگلا دیشی محمود اللہ 33 ویں اور مشفیق الرحیم 41 ویں نمبر پر پہنچ گئے ہیں۔

افغانستان کا کلین سوئپ، بنگلادیش کو تیسرے ٹی ٹوئنٹی میں بھی شکست

افغانستان نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد بنگلادیش کو تیسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں ایک رنز سے شکست دے دی جس کے بعد سیریز بھی 0-3 سے اپنے نام کرلی۔

افغانستان نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اوورز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر 145 رنز بنائے جس کے جواب میں بنگال ٹائیگرز 6 وکٹوں پر 144 رنز بناسکے۔

افغانستان کی جانب سے نپی تلی بولنگ کرائی گئی اور جلد بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تین بنگلادیشی بلے باز رنز آؤٹ ہوئے۔

بلیو کیپس کے مجیب الرحمان، کریم جنت اور راشد خان نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

بنگلادیش کے اوپننگ بلے باز لٹن داس 12 اور تمیم اقبال 5 رنز بناکر آؤٹ ہوئے جس کے بعد نئے آنے والے بلے باز سومیا سرکار بھی 15 رنز بنا کر رنز آؤٹ ہوئے۔

بنگال ٹائیگرز کی جانب سے مشفق الرحیم 46 اور محمد اللہ 45 رنز کے ساتھ نمایاں رہے۔

اس سے قبل افغانستان نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 6 وکٹوں پر 145 رنز بنائے جس میں محمد شہزاد کے 26 رنز اور سمیع اللہ شنواری کی ناقابل شکست 33 رنز کی اننگز نمایاں ہے۔

دیگر افغان بلے بازوں میں عثمان غنی 19، اصغر استنکزئی 27، محمد نبی 3، نجیب زدران 15اور شفیق اللہ 4 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

میچ میں بہترین کارکردگی پیش کرنے پر راشد خان کو مین آف دی میچ کے اعزاز سے نوازا گیا جب کہ بنگلادیش کے مشفق الرحیم سیریز کے بہترین کھلاڑی قرار پائے۔

فٹبال ورلڈکپ سے قبل کرپشن کا بڑا اسکینڈل سامنے آگیا

لندن: فٹبال ورلڈکپ کے آغاز سے پہلے دنیا کے مقبول ترین کھیل میں بھی کرپشن اسکینڈل سامنے آگیا۔

فٹ بال کے کھیل  میں بھی ایک بڑے اسٹنگ آپریشن نے کئی چہروں کو بے نقاب کردیا، اسٹنگ آپریشن کی ویڈیو میں افریقن فٹبال کے ریفری اور حکام کو میچز سے پہلے ڈالرز اور تحائف لیتے دیکھا جاسکتا ہے، ان میں ایک ریفری ایسا بھی شامل ہے جس نے ورلڈکپ میں بھی ذمہ داری نبھانی تھی۔

ویڈیو میں مکالمہ سنا جاسکتا ہے جس میں کرپٹ ریفری نے کہا کہ تحفہ دینے کا شکریہ، اس سے بھی زیادہ اہم آپ سے دوستی ہونا ہے۔ اسٹنگ آپریشن نے افریقن فٹبال کے مستقبل پر سوالیہ نشان لگادیا ہے۔ افریقن فٹبال حکام نے چند روز بعد 2026 کی میزبانی کے لیے اپنا ووٹ بھی کاسٹ کرناہے۔

Google Analytics Alternative