کھیل

پاکستان ٹیم کا کوچ اور سلیکٹر بننا بہت بڑا اعزاز ہے ،مصباح الحق

لاہور: قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق کا کہنا ہے کہ پاکستان ٹیم کا کوچ اور سلیکٹر بننا بہت بڑا اعزاز ہے، ذمے داریاں دینے پرپی سی بی کا مشکورہوں۔

لاہور میں مصباح الحق کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے پی سی بی کے سی ای او وسیم خان نے مصباح الحق کے ہیڈ کوچ بننے کا اعلان کیا۔ اس موقع پر وسیم خان نے کہا کہ 2021،2020 میں دوبڑےانٹرنیشنل ایونٹس آرہے ہیں، مصباح کے تجربے سے فائدہ ہوگا، ہم اپنے کوچزکو موقع دے رہے ہیں، ان کوکتنا معاوضہ دے رہیں یہ رازکی بات ہے اور مصباح الحق ہیڈ کوچ اورسلیکٹر ہیں، انھیں کم پیسے کیوں دیں گے جب کہ مصباح الحق کو پی ایس ایل میں کوچنگ کرنےکی اجازت دے دی ہے۔

ہیڈ کوچ کی ذمہ داریاں سنبھالنے والے سابق کپتان مصباح الحق نے کہا کہ پاکستان ٹیم کا کوچ اور سلیکٹر بننا بہت بڑا اعزاز ہے، ذمے داریاں دینے پرپی سی بی کا مشکورہوں، مجھ پر اعتماد کرنے کا شکریہ، سب نے دیکھا ہے کہ تنقید برائے تنقید کو کیسے ڈیل کیا، خامیوں کو دورکرنے کا حوصلہ ہونا چاہیے، 17 سال کرکٹ کھیلی ہے، دستیاب وسائل پرہی حکمت عملی بنائی جاتی ہے۔

مصباح الحق کا کہنا تھا کہ پاکستانی ٹیم میں پروفیشنلزم کس طرح لانا ہے اس پر کام کرنا ہے اور وقاریونس کے کام میں مداخلت نہیں کروں گا، ہماری شروع سے ہی سوچ تھی کہ سلیکٹر اور کوچ ایک ہی ہونا چاہیے، فائنل الیون کا فیصلہ کپتان کو کرنا چاہیے، کپتان کو سلیکشن میں اہمیت دینی چاہیے۔

مصباح الحق قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر مقرر

لاہور: قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان مصباح الحق کو قومی کرکٹ ٹیم کا ہیڈ کوچ مقرر کردیا گیا ہے جب کہ انہیں چیف سلیکٹر کی اضافی ذمہ داری بھی دی گئی ہے۔

مصباح الحق کو قومی کرکٹ ٹیم کا ہیڈ کوچ مقرر کردیا گیا جب کہ وقار یونس بولنگ کوچ ہوں گے، باضابطہ اعلان تھوڑی دیر میں متوقع ہے، توقعات کے عین مطابق 5 رکنی سلیکشن پینل کو انٹرویو دینے والے محسن حسن خان، ڈین جونز اور جوہان بوتھا منہ دیکھتے رہ گئے، بیٹنگ اور اسٹرینتھ و کنڈیشننگ کوچ سمیت معاون اسٹاف کا اعلان بعد میں کیا جانا ہے۔

پی سی بی کے مطابق کوچز کی تلاش کے لیے قائم کردہ 5 رکنی پینل میں شامل انتخاب عالم، بازید خان، اسد علی خان، وسیم خان اور ذاکر خان نے متفقہ طور پر مصباح الحق کا نام پیش کیا، دونوں کوچز کے ناموں کی منظوری چیئرمین پی سی بی احسان مانی نے دی ہے۔

مصباح الحق اور وقار یونس کی قومی کرکٹ ٹیم کے ہمراہ پہلی اسائنمنٹ سری لنکا کے خلاف سیریز ہوگی، آئی لینڈرز کے خلاف 3 ایک روزہ اور 3 ٹی ٹوئنٹی میچز کی سیریز 27 ستمبر سے شروع ہوگی۔

مصباح الحق ہیڈ کوچ کے ساتھ چیف سلیکٹر کی ذمہ داریاں بھی نبھائیں گے، سابق کپتان 6 صوبائی ٹیموں کے ہیڈ کوچ کی معاونت سے قومی ٹیموں کے لیے کرکٹرز کا پول تیار کریں گے۔

مصباح الحق کا کہنا ہے کہ قومی کرکٹ کی کوچنگ کرنا میرے لیے اعزاز کی بات ہے،اس نئی ذمہ داری کو نبھانے کےلیے مکمل تیار ہوں۔ چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان نے امید ظاہر کی ہے قومی کرکٹ کو مصباح الحق کی قائدانہ صلاحیتوں کا فائدہ ہوگا، کوچز کےلیے درخواست جمع کروانے والے تمام امیدواروں کے مشکور ہیں۔

واضح رہے کہ وقار یونس قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ اور مصباح الحق ان کے ساتھ کپتان رہے ہیں، اب ایک بار پھر یہ جوڑی مل کر کام کرے گی لیکن دونوں کے رول مختلف ہوں گے، سابق اسپیڈ اسٹار نے گزشتہ دنوں ”کرکٹ پاکستان“ کو انٹرویو میں ہی واضح کردیا تھا کہ انہیں مصباح الحق کے ساتھ بطور بولنگ کوچ کام کرتے ہوئے کوئی مسائل نہیں ہوں گے،ہم  دونوں اپنے دائرہ کار میں رہتے ہوئے ٹیم کی بہتری کے لیے اپنی ذمہ داریاں سرانجام دے سکتے ہیں۔

 

نئی ذمہ داریاں سنبھالنے پر ڈین جونز کی مصباح اور وقار یونس کو مبارکباد

ڈین جونز نے مصباح الحق اور وقار یونس کو نئی ذمہ داریاں سنبھالنے پر مبارکباد دی ہے۔

پاکستان ٹیم کا ہیڈ کوچ کے امیدوار ڈین جونز نے اپنی ناکامی کے باوجود کھلے دل سے مصباح الحق اور وقار یونس کو مبارکباد پیش کی ہے، سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ پر انہوں نے کہا کہ ہیڈ کوچ اور بولنگ کوچ کا عہدہ سنبھالنے پر اپنے دونوں ساتھیوں کیلیے نیک خواہشات کا اظہار کرتا ہوں، ہم نے مل کر چیمپئن شپس جیتی ہیں، امید ہے کہ دونوں پاکستان کیلیے بھی ایسی ہی کارکردگی دہرائیں گے۔

یاد رہے کہ پی ایس ایل کی فرنچائز میں مصباح الحق کپتان اور وقار یونس ڈائریکٹر کے طور پر ڈین جونز کی کوچنگ میں کھیلنے والی اسلام آباد یونائیٹڈ سے وابستہ رہے ہیں، ٹیم نے دوبار پی ایس ایل ٹائٹل پر قبضہ جمایا ہے، پی سی بی کے 5رکنی پینل نے ویڈیو لنک کے ذریعے ڈین جونز کا بھی انٹرویو لیا تھا لیکن ان کو نظر انداز کرتے ہوئے مصباح الحق کو ہیڈ کوچ مقرر کردیا گیا۔

پی سی بی کا قومی کرکٹ ٹیم کے نئے کوچز کا نام کل جاری کرنے کا اعلان

 لاہور: پی سی بی نے قومی ٹیم کے ہیڈکوچ اور بولنگ کوچ کا نام کل جاری کرنے کا اعلان کردیا۔

پی سی بی ترجمان کے مطابق قومی ٹیم کے ہیڈکوچ اور بولنگ کوچ کے لیے مشاورت مکمل کرلی گئی ہے اب بدھ کو منظوری پانے والے کوچز کے ناموں کا اعلان کردیا جاے گا۔

پہلے مرحلے میں پریس ریلیز کے ذریعے نام جاری کیے جائیں گے اس کے بعد ہیڈکوچ پریس کانفرنس کرکے اپنے پلان سے میڈیا کو بریف کرنے کے ساتھ مختلف سوالات کے جوابات بھی دیں گے۔

پی سی بی کے پانچ رکنی پینل وسیم خان، ذاکر خان،انتخاب عالم، بازید خان اورممبر گورننگ بورڈ اسد علی نے مصباح الحق، ڈین جونز ، محسن خان اور جوہان بوتھا کے ہیڈکوچ کے لیے انٹرویو کیے تھے ۔وقاریونس بولنگ کوچ کے لیے انٹرویو دینے والے واحد امیدوار تھے۔

ٹی 20 بلاسٹ میں تہلکہ مچانے والے بابراعظم نے لاہور میں ٹریننگ کا آغاز کردیا

لاہور: انگلش ٹی 20 بلاسٹ میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے بابراعظم وطن واپس آگئے اور انہوں نے نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں ٹریننگ کا آغاز بھی کردیا ہے۔

انگلش ٹی 20 بلاسٹ میں سمر سیٹ کی جانب سے بابر اعظم نے 52.54 کی اوسط اور 149 کے اسٹرائیک ریٹ سے 578 رنز بنائے، بابراعظم کی تسلسل کے ساتھ عمدہ پرفارمنس کے باوجود سمرسیٹ کی ٹیم ساؤتھ گروپ میں چھٹے نمبر پر رہی اور ناک آؤٹ مرحلے تک رسائی نہ حاصل کر پائی، سمرسیٹ کاؤنٹی نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے پاکستانی بیٹسمین کی خدمات کو سراہتے ہوئے ان کا شکریہ ادا کیا ہے۔

بابر اعظم کو لاہور میں جاری پری سیزن کیمپ سے چھوٹ دے دی گئی تھی، پاکستان واپسی کے بعد انہوں نے کیمپ میں شریک کرکٹرز سے ملاقات کی، انہوں نے انفرادی طور پر اپنی ٹریننگ کا سلسلہ بھی شروع کردیا ہے۔

رواں ماہ کے آخری ہفتے میں سری لنکا کے خلاف 3 ون ڈے میچز کی سیریز کراچی میں شروع ہونا ہے، بعد ازاں اتنے ہی ٹی ٹوئنٹی مقابلوں کا انعقاد لاہور میں کیا جائے گا،ان فارم بابر اعظم پاکستان ٹیم کی امیدوں کا محور ہوں گے۔

پی سی بی نے 6 صوبائی ایسوسی ایشنز کی ٹیموں کے کپتانوں کا انتخاب کرلیا

لاہور: پی سی بی نے 6 صوبائی ایسوسی ایشنز کی ٹیموں کے کپتانوں کا انتخاب کرلیا جن کا باقاعدہ اعلان آج متوقع ہے۔
ذرائع کےمطابق سندھ ٹیم کی قیادت سرفراز احمد کریں گے۔ سدرن پنجاب کی قیادت حارث سہیل کو سونپی گئی ہے۔ امام الحق کو بلوچستان ٹیم کی قیادت کا تاج پہنایا گیا ہے۔

خیبر پختونخوا محمد رضوان کی قیادت میں میدان میں اترے گی جب کہ سینٹرل پنجاب کے لیے بابراعظم کی قائدانہ صلاحیتوں پر بھروسہ کرنےکا فیصلہ کیا گیا ہے۔ لیگ اسپنر شاداب خان کو ناردرن ایسوسی ایشن کی ٹیم کا کپتان مقرر کیا گیا ہے۔
پی سی بی کے نئے ڈومیسٹک سیزن کا آغاز 14 ستمبر سے ہورہا ہے، جس میں ہوم اینڈ اوے کی بنیاد پر 31 میچز کھیلے جائیں گے۔

راشد لطیف، ندیم خان اور مصباح الحق پر مشتمل کمیٹی نے ایسوسی ایشنز کی ٹیموں کا چناؤ کیا ہے، ان تینوں سابق کرکٹرز نے کپتان اور کوچز کی سفارشات بھی تیار کرکے بورڈ کےحوالے کی ہیں۔

نوید اکرم چیمہ کو ایک بار پھر کرکٹ ٹیم کا مینجر مقرر کیے جانے کا امکان

سینئر بیورو کریٹ نوید اکرم چیمہ ایک بارپھر قومی ٹیم کے مینجر کے عہدے کے لیے فیورٹ امیدوار  کے طورپر سامنے آگئے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے سربراہ احسان مانی کی منظوری کے بعد ان کی تقرری کا جلد باقاعدہ اعلان متوقع ہے۔ ا س عہدے کے لیے  دو معروف سابق کرکٹرز نے بھی  امیدیں وابستہ کررکھی تھیں لیکن ذرائع کے مطابق  نوید اکرم چیمہ اس دوڑ میں سب سے آگے ہیں ، بورڈ کے ساتھ معاملات طے ہونے پر ان کا انتخاب یقینی دکھائی دے رہا ہے۔

سری لنکا کے خلاف سیریز  کے لیے مینجر، ہیڈکوچ سمیت دوسرے کوچنگ اسٹاف کے نام کا  باقاعدہ اعلان  چیئرمین پی سی بی کی جانب سے منظوری ملنے پر ایک سے دو روز میں کسی بھی وقت سامنے آسکتا ہے۔  ایک سال پہلے فیڈرل پبلک سروس کمیشن کے چیئرمین  کےعہدے سے ریٹائرمنٹ لینے والے نویداکرم چیمہ اس سے پہلے  دوبار قومی ٹیم  کے ساتھ بطور  مینجر ذمہ داریاں نبھانے کا تجربہ رکھتے ہیں۔ ایک سخت گیر اور ڈسپلن پر مکمل پاسداری کرنے والے مینجر کے طورپر ان کی شہرت ہے۔

نوید اکرم چیمہ چیف سیکرٹری پنجاب، چف سیکرٹری اسپورٹس پنجاب کے طورپر بھی خدمات انجام دے چکے ہیں۔ نوید اکرم چیمہ سری لنکا کے خلاف سیریز سے اپنی ذمہ داریان سنبھال سکتے ہیں، اطلاعات کے مطابق  ٹیم کے ڈسپلن کو بہتر بنانے اور کسی ناخوشگوارواقعہ سے بچنے کے لیے پی سی بی حکام کی اکثریت نوید اکرم چیمہ کی تقرری کے حق میں ہے ۔

یو ایس اوپن: دفاعی چیمپئن نواک جوکووچ انجری کا شکار ہوکر ٹائٹل سے دستبردار

یو ایس اوپن کے میچ کے دوران انجری کا شکار ہونے والے نواک جوکووچ ایونٹ سے باہر ہوگئے جبکہ اس کے ساتھ ہی وہ اپنے ٹائٹل سے بھی دستبردار ہوگئے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق عالمی نمبر ایک سربیا کے نواک جوکووچ سوئٹزرلینڈ کے اسٹن واورینکا کے خلاف میچ ادھورا چھوڑ کر چلے گئے تھے۔

سربیا کے نواک جوکووچ میچ کے ابتدائی 2 سیٹ 4-6 اور 5-7 سے اپنے نام کر چکے تھے جبکہ آخری سیٹ میں بھی انہیں 1-2 سے برتری حاصل تھی تاہم وہ اچانک کندھے کی انجری کا شکار ہوگئے۔

انجری شدید ہونے کی وجہ سے دفاعی چیمپئن میچ سے دستبردار ہوگئے اس کے ساتھ ہی وہ اپنے ٹائٹل سے بھی دستبردار ہوگئے ہیں۔

اپنی انجری سے متعلق نواک جوکووچ کا کہنا تھا کہ ’کسی بھی انجری کی وجہ سے زندگی نہیں رکتی، وہ چلتی رہتی ہے‘۔

خیال رہے کہ سربیئن اسٹار کو یو ایس اوپن کے آغاز سے ہی کندھے میں تکلیف کا سامنا رہا ہے جس نے اب تک کے میچز میں انہیں بہت پریشان کیا۔

نواک جوکووچ کا کہنا تھا کہ ’چند ہفتوں سے اس تکلیف کا سامنا ہے، کبھی اس میں کمی آجاتی ہے اور کبھی شدید درد کا سامنا رہتاہے تاہم ایسے میں درد کو فوری ختم کرنے کے لیے مخلتف ادویات اور طریقہ کار بھی استعمال کیے‘۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے عالمی نمبر ایک ٹینس اسٹار نے کہا کہ کبھی کھبار یہ طریقہ کار کارآمد ہوتے تھے جبکہ کبھی ان سے کوئی فائدہ نہیں ہوتا تھا، تاہم اس کا احساس اس وقت ہی ہوتا تھا جب آپ کو یہ محسوس ہوجائے کہ اب آپ میں ٹینس گیند کو ہٹ کرنے کی ہمت نہیں ہے‘۔

تاہم سربیئن اسٹار نے اپنی انجری کی نوعیت کے حوالے سے بات کرنے سے انکار کردیا، جس کی وجہ سے انہیں دوسرے راؤنڈ میں جوان اگنیشیو کے خلاف میچ میں تکلیف کا سامنا بھی کرنا پڑا تھا۔

نواک جوکووچ کا کہنا تھا کہ ’میں آپ لوگوں کو بتا چکا ہوں کہ میں دستبردار ہوگیا ہوں، انجری میرے بائیں کندھے میں ہوئی ہے، میرے پاس اس سے زیادہ بات کرنے کے لیے کچھ بھی نہیں ہے‘۔

تین مرتبہ یو ایس اوپن کا ٹائٹل اپنے نام کرنے والے نواک جوکووچ نے ایک مرتبہ پھر کہا کہ ’میں اپنی انجری کے بارے میں بات نہیں کرنا چاہتا‘۔

سوئٹزر لینڈ کے حریف کے ساتھ مقابلے سے قبل انہیں ادویات دی گئی تھیں، تاہم دوران میچ انہیں مزید تکلیف کا سامنا کرنا پڑا جس کی وجہ سے وہ گرینڈ سلام ٹورنامنٹ سے دستبردار ہوگئے۔

نواک جوکووچ کا کہنا تھا کہ یہ ان کے لیے بہت ہی مایوس کن ہے کیونکہ نہ تو وہ پہلے شخص ہیں جو انجری کا شکار ہوکر کسی بھی اسپورٹس کے اتنے بڑے ایونٹ سے باہر ہوئے ہیں اور نہ ہی آخری شخص ہیں۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ میں ٹینس کورٹ سے باہر ہوگیا ہوں، بس اس وجہ سے مجھے بہت زیادہ تکلیف ہوئی ہے، تاہم میں جانتا ہوں کہ زندگی اسی طرح چلتی رہتی ہے۔

خیال رہے کہ نواک جوکووچ اس سے قبل رواں برس آسٹریلین اوپن اور ومبلڈن ٹائٹل جیت چکے ہیں جبکہ مجموعی طور پر 16 گرینڈ سلام ٹائٹل اپنے نام کر چکے ہیں۔

Google Analytics Alternative