کھیل

کون بنانے گا آئی سی سی ورلڈکپ کا میزبان؟

انٹر نیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی ) نے کرکٹ کے کھیل کو دنیا بھر میں پھیلانے کے منصوبے کے تحت اگلے 10سالوں کے دوران ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ امریکا میں منعقد کروانے پر نظریں جما لی ہیں ،غیر ملکی میڈیا کے مطابق 2024ء کا ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ امریکہ میں کرائے جانے کا منصوبہ زیر غور ہے۔ آئی سی سی کے ہیڈ آف گلوبل ڈویلپمنٹ ٹم اینڈر سن کا کہنا ہے کہ گورننگ باڈی اس کھیل کو اب ایک ایسی سرزمین پر لے جانا چاہتی ہے جہاں کے لوگ باسکٹ با ل اور بیس بال کے دیوانے ہیں ،اینڈرسن کے مطابق انہیں لگتا ہے کہ کرکٹ کا کھیل بھی فٹ بال اور رگبی کی طرح امریکہ میں اپنی جڑیں مضبوط کرنے میں کامیاب ہوجائے گا۔کرکٹ کا کھیل امریکیو ں کے لیے اب بھی اجنبی ہے لیکن آئی سی سی ورلڈ کپ 2015ئ کے لیے ہزاروں امریکیوں نے آسٹریلیا کا سفر کیا تھا جب کہ امریکی براڈ کاسٹرز کے ساتھ ملٹی ملین ڈیلز بھی آئی سی سی کی آنکھیں خیرہ کررہی ہیں جسے دیکھتے ہوئے اب کرکٹ کی عالمی کونسل کے ہیڈ آف گلوبل ڈویلپمنٹ ٹم اینڈر سن کا کہنا ہے کہ اگر ہم اپنے منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے میں کامیاب رہے تو بعید نہیں کے اگلے 10کے دوران ہی ہم ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ کی میزبانی امریکہ کو کرتا دیکھیں ، ٹیسٹ کھیلنے والے تمام ممالک نے امریکہ میں کھیلنے کے لیے رضامندی ظاہر کی ہے اور یہ ہمارے لیے ایک شاندار موقع ہوگا کہ ہم اس کھیل کو ایک اجنبی ملک لے کر جائیں۔اینڈر سن کا مزید کہنا تھا کہ امریکی ریاست فلوریڈا میں ون ڈے کرکٹ کے لیے ایک منظو ر شد ہ سٹیڈیم موجود ہے جب کہ انڈیانا کے دارلحکومت انڈیانا پولز میں ایک اور سٹیڈیم زیر تعمیر ہے اور ہمیں امید ہے کہ ہم اگلے 12سے 18ماہ کے دوران ٹیسٹ پلیئنگ ممالک کو امریکہ میں ون ڈے کرکٹ کھیلتا دیکھ سکیں گے۔

وقار یونس نے ایک بار پھرمحمدعامرکی حمایت کر دی

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ وقار یونس نے ایک بار پھر محمد عامر کی قومی ٹیم میں واپسی کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس حوالے سے انہوںنے بورڈ اور سلیکٹرز کو اپنی رائے دیدی ہے اگر وہ چاہئیں تو محمد عامر کو ٹیم میں لے سکتے ہیں۔ایک انٹرویو میں انہوںنے کہاکہ محمد عامر نے اپنی سزا پوری کرلی ہے اور اسے قومی ٹیم میں دوبارہ موقع ملنا چاہیے یہ اس کا حق ہے تاہم انہوںنے کہاکہ محمد عامر کو بین الاقوامی کرکٹ میں اپنا مقام بنانے میں کچھ وقت لگے گا اس سے فوری کامیابی کی توقع نہیں کی جانی چاہیے۔ایک سوال کے جواب میں وقار یونس نے کہاکہ محمد عامر واپس اپنی فارم میں آگیا تو وہ ملک کےلئے اہم خدمات فراہم کر سکتا ہے۔محمد حفیظ کے محمد عامر کے بارے میں ریمارکس کے بارے میں سوال پر وقار یونس نے کہاکہ محمد حفیظ نے وہ نہیں کہا جو میڈیا میں شائع ہوا۔انہوںنے کہاکہ پی سی بی کو ایک اجلاس بلا کر کھلاڑیوں کو بتانا چاہیے کہ عامر نے اپنی سزا پوری کر لی ہے اس لئے وہ ٹیم میں واپس آ سکتا ہے۔آئندہ سال کے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے بارے میں وقار یونس نے کہاکہ وہ چاہتے ہیں کہ کھلاڑی اپنا ذہن تبدیل کریں اور کار کر دگی میں تسلسل پیدا کریں جس طرح اے بی ڈویلئرز  ویرات کوہلی اور ہاشم آملہ کی کار کر دگی میں تسلسل ہے۔

بھارت کی فتح،پاکستانی ٹیم کی رینکنگ پر منفی اثر

جنوبی افریقہ کے خلاف بھارت کی فتح کا منفی اثر براہ راست پاکستانی ٹیم کی رینکنگ پر پڑاجوتیسرے سے چوتھے نمبر پر آگئی۔تفصیلات کے مطابق پاکستان نے انگلینڈ کے خلاف دبئی سیریز میں جو شاندار کامیابی حاصل کی تھی وہ پائیدار ثابت نہیں ہوپائی۔بھارتی ٹیم نے جنوبی افریقہ کے خلاف0-3 سے کامیابی حاصل کی اور رینکنگ میں دوسرے نمبر پر پہنچ گئی،جبکہ آسٹریلیا کو تیسرے اور پاکستانی ٹیم کو چوتھے نمبر پر جانا پڑا ،بھارت کے پوائنٹس 100 سے110 ہو گئے ہیں جبکہ ٹاپ پر موجود پرو ٹیز کے پوائنٹس بھارت کی جیت کے بعد 114 ہو گئے ہیں۔ پاکستان کی اس عرصے میں مزید کوئی ٹیسٹ سیریز شیڈول میں نہ ہو نے کی وجہ سے پوزیشن مزید نیچے گرنے کا کوئی امکان نہیں۔ سیر یز میں انگلش ٹیم پانچویں ، نیوزی لینڈچھٹے اورویسٹ انڈیز آٹھویں نمبر پر براجمان رہی جبکہ آخری دسویں پوزیشن بدستور زمبا بوے کے پاس ہی موجود ہے۔

باکسنگ چیمپئن عامر خان کے مداحوں کیلئے بڑی خبر آگئی

عالمی شہرت یافتہ کم عمر ترین باکسنگ چیمپئن پاکستانی نڑاد برطانوی باکسر عامر خان آج اپنی 29 ویں سالگرہ منا رہے ہیں عامر خان 8 دسمبر 1986 کو برطانوی کاونٹی گریٹر مانچسٹر میں پیدا ہوئے اور نسیم حمید اور حربی حیدی کے بعد وہ برطانیہ کے تیسرے کم عمر ورلڈ چیمپئن ہیں۔ انہوں نے گیارہ سال کی عمر میں باکسنگ کھیلنا شروع کی اور انگلش اسکول جونیئر اے بی بے ٹائٹل کے علاوہ 2003 میں جونیئر اولمپکس کے مقابلے میں گولڈ میڈل حاصل کیا۔ سال 1976 ئ میں کولن جونز کے بعد محض 17 برس کی عمر میں2004 ئ میں برطانیہ کے سب سے کم عمر اولمپکس باکسر بنے۔سال 2005 میں عامر خان نے باقاعدہ طورپر باکسنگ کیرئیر کا آغاز کیا اور ڈیوڈ برلے کیخلاف اپنے پہلے میچ میں کامیابی حاصل کی بس پھر کیا تھا پے درپے کامیابیوں نے نوجوان باکسر کو شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیا اور2009 میں انہوں نے ڈبلیو بی اے انٹر نیشنل لائٹ ویٹ ٹائٹل حاصل کیا اور محض 22 سال کی عمر میں یہ اعزاز اپنے نام کرنے والے برطانیہ کے تیسرے کم عمر چیمپئن بن گئے۔ پروفیشنل کیرئیر کیساتھ ساتھ عامر خان سماجی سرگرمیوں میں بھی اپنا خاطر خواہ ڈالتے ہیں۔

محمدعامر کی ٹیم میں واپسی کا فیصلہ شائقین پر چھوڑ دیا جائے

ٹیسٹ کپتان مصباح الحق نے فکسنگ میں سزا یافتہ عامر کی ٹیم میں واپسی کا فیصلہ شائقین پرچھوڑ دیا، انھوں نے کہاکہ اگر لوگ پیسرکو قبول کرنے کیلیے تیار ہیں تو پھر ہم روکنے والے کون ہوتے ہیں، اس حوالے سے حتمی فیصلے کا اختیار آئی سی سی اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے پاس ہی ہے، اپنے ایک انٹرویو میں ٹیسٹ کپتان نے کہا کہ انگلینڈ سے محدود اوورز کے فارمیٹس میں شکست کے بعد ہیڈ کوچ وقار یونس نے محمدعامر کی ٹیم میں واپسی کا معاملہ اٹھایا، جس کی چیئرمین بورڈ شہریار خان نے تائید کی، اس سے ایک بار پھر ماضی میں کرپٹ سرگرمیوں میں ملوث رہنے والے کھلاڑیوں کی ٹیم میں واپسی پر بحث شروع ہوگئی ہے۔ اس بارے میں مصباح نے کہاکہ میں پہلے بھی کہہ چکا اور اب بھی یہی کہوں گا کہ ان کے بارے میں فیصلہ کرنے کا ہمیں کوئی اختیار نہیں، حتمی فیصلہ آئی سی سی اور پی سی بی نے کرنا ہے لیکن اس سے بھی زیادہ یہ شائقین پر منحصر ہے، اگر وہ ان کھلاڑیوں کو قبول کرنے کو تیار ہیں تو پھر ہم روکنے والے کون ہوتے ہیں، ماضی میں بھی ان کے ساتھ کھیل چکے، ہم پروفیشنلز اور کرکٹ کھیلنا ہی ہمارا پیشہ ہے۔ ان کرکٹرز کی واپسی کا فیصلہ بورڈ اور شائقین پر ہی منحصر ہے۔ آئندہ موسم گرما میں انگلینڈ سے سیریز میں پاکستانی فتح کے امکانات پر مصباح نے کہاکہ اس کا دارومدار تیاریوں پر ہوگا۔

پاکستان اےٹیم نے انگلینڈ لائنز کو شکست دیدی

دبئی: پاکستان اے ٹیم نے افتخاراحمد اور بابراعظم کی شاندار کارکردگی کی بدولت انگلینڈ لائنز کو ٹی ٹوئنٹی سیریز کے پہلے مقابلے میں سات وکٹوں سے شکست دے دی۔انگلینڈ لائنز نے پیر کو یہاں کھیلے گئے میچ میں ٹاس جیت کر پاکستان اے کے خلاف پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور مقررہ 20 اوورز میں 6 وکٹوں کے نقصان پر 145 رنز بنائے۔لائنز کی جانب سے ڈیوڈ میلان نے سب سے زیادہ 51 رنز جبکہ سیم بلنگز 31 اور ریس وائٹلی 22 رنز بنا کر نمایاں رہے۔پاکستانی کپتان جنید خان اور دیگر باولرز نے بہترین کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے انگلش بلے بازوں کو کھل کر کھیلنے نہیں دیا. عامر یامین، رومان رئیس اور بلال آصف نے دو، دو وکٹیں حاصل کیں۔جواب میں پاکستان اے نے مطلوبہ ہدف ایک اوور قبل تین وکٹوں کے نقصان پر حاصل کرلیا۔ہدف کے تعاقب میں پاکستان اے کی ابتدائی تین وکٹیں 25 کے مجموعے پر گرگئیں، جب شاہ زیب حسن 4، فخرزمان 3 اور صہیب مقصود 17 رنز بنا کر آوٹ ہوئے.تاہم افتخار احمد اور بابراعظم نے 124 رنز کی ناقابل شکست شراکت قائم کرکے ٹیم کو سیریز کے پہلے میچ میں کامیابی دلادی۔افتخار احمد نے 66 اور بابراعظم نے 53 رنز بنائے۔سیریز کا دوسرا میچ 10 دسمبر کو دبئی میں ہی کھیلا جائے گا۔

فکسنگ کیس میں مقدمے بازی سے سابق کیوی کرکٹر کرس کینز ’کنگال‘

فکسنگ کیس میں مقدمے بازی نے سابق کیوی کرکٹر کرس کینز کو ’کنگال‘ کردیا، انھوں نے دعویٰ کیا ہے کہ فکسنگ کیس میں مقدمے بازی سے میں کوڑی کوڑی کا محتاج ہوگیا ہوں۔تفصیلات کے مطابق گذشتہ دنوں لندن کی ساوتھ ورک کراو¿ن کورٹ میں جیوری نے کرس کینزکو فکسنگ کے الزامات سے بری کردیا تھا مگر ان کی مشکلات ختم ہونے کانام ہی نہیں لے رہی ہیں، آئی پی ایل کے سابق چیئرمین للت مودی نے ان کے خلاف ملٹی ملین ڈالرز کا فراڈ کیس دائر کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ کینز کہتے ہیں کہ اس مقدمے بازی نے مجھے کنگال کرکے رکھ دیا ہے لیکن اس کے باوجود میں اپنا نام کلیئر کرنے کی جنگ جاری رکھوں گا، میں ان سب چیزوں سے اکتا چکا ہو، کوڑی کوڑی کا محتاج ہوگیا ہوں لیکن پھر بھی شکست ماننے والا نہیں ہوں۔سابق آل راونڈر نے اپنے خلاف کیس کے دوران گواہی دینے پر نیوزی لینڈ کے کپتان برینڈن میک کولم کو بھی آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ لندن میں جب 2012 میں میں نے للت مودی کے خلاف ہرجانے کا کیس کیا تھا تو سابق آئی پی ایل چیئرمین کے گواہوں میں لوونسنٹ اور برینڈن میک کولم دونوں ہی شامل تھے، ونسنٹ کے بارے میں تو اب یہ بات واضح ہوچکی کہ وہ کرپٹ تھا لیکن میرا سوال موجود کیوی کپتان سے ہے کہ انھوں نے مودی کے پہلے کیس میں میرے خلاف گواہی کیوں نہیں دی تھی اور کیا اب جب مودی کیس کرنے والے ہیں وہ اس میں گواہی کیلیے آئیں گے یا نہیں۔ کینز نے ایک بار پھر واضح کیا کہ ان کا فکسنگ وغیرہ سے کوئی تعلق نہیں انھیں اس سلسلے میں بدنام کیا گیا ہے۔

پاکستانی باکسر وسیم کی پروفیشنل باکسنگ میں دوسری کامیابی

پاکستانی باکسر محمد وسیم نے بنکاک میں منعقدہ سپر فلائٹ ویٹ کیٹگری میں انڈونیشین حریف کو ناک آوٹ کرتے ہوئے کیریئر کی دوسری پروفیشنل باکسنگ فائٹ جیت لی۔ محمد وسیم نے بنکاک میں ہونے والے سپر فلائی ویٹ کیٹگری (52 کلو گرام) کے مقابلے میں انڈونیشا کے باکسر سوپریانٹو ڈوگلو پر تابڑ توڑ مکے برساتے ہوئے تیسرے راو¿نڈ میں انھیں ناک آو¿ٹ کردیا اور کیریئر کی دوسری پروفیشنل کامیابی حاصل کی۔ اس جیت کے ساتھ کوئٹہ سے تعلق رکھنے والے 28 سالہ باکسر کے لیے اگلے سال ہونے والے ریجنل ایونٹس میں شرکت کی راہ ہموار ہوگئی ہے۔ وسیم نے اس سے قبل رواں سال 4 اکتوبر کو کوریا باکسنگ چمپیئن شپ میں کوریا کے ہی من وو لی کو شکست دے کر پروفیشنل باکسنگ میں قدم رکھا تھا۔ وسیم گزشتہ کچھ ماہ سے کوریا کے اینڈی کم کی زیر نگرانی باکسنگ ٹورنامنٹ کی تیاری کررہے تھے۔ پاکستان باکسنگ فیڈریشن کے صدر دودا خان اور سیکرٹری اقبال حسین نے وسیم کو دوسری پروفیشنل کامیابی پر مبارک باد دی ہے.

Google Analytics Alternative