کھیل

پی سی بی کا جونیئر سطح پر راہول ڈریوڈ ماڈل متعارف کرانے کا فیصلہ

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے جونیئر سطح پر بھارتی کرکٹر راہول ڈریوڈ کی طرز کا ماڈل متعارف کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ 

پاکستان کرکٹ بورڈ ایک ایسے پلان پر کام کررہا ہے جس کے تحت جونیئر سطح پر راہول ڈریوڈ ماڈل متعارف کرایا جائے گا اور نوجوان کرکٹرز کیلئے ماضی کے کسی عظیم کھلاڑی کو کوچ مقرر کیا جائے گا۔

یاد رہے کہ بھارت نے ماضی کے عظیم کھلاڑی راہول ڈریوڈ کو اپنی انڈر 19 ٹیم کا نگران مقرر کیا ہوا ہے۔

اس ماڈل کے تحت نوجوان کھلاڑیوں کو آف دی فیلڈ ڈسپلن سکھانے کیلئے انگریزی کی کلاسز دی جائیں گی، کھانے پینے اور لباس کے معاملے پر بھی قومی اکیڈمی میں خصوصی کلاسز کا اہتمام کیا جائے گا۔

گزشتہ کئی سالوں سے جونیئر ٹیموں کی کوچنگ میں بندر بانٹ ہورہی ہے اور ہر سیریز میں نیا کوچ ہوتا ہے۔ انڈر19 ورلڈ کپ میں پاکستانی ٹیم کے ہیڈ کوچ منصور رانا کو پاکستانی ٹیم میں ڈیلی الاؤنس بانٹنے اور میڈیا ہینڈلنگ کا کام سونپ دیا گیا ہے۔

اپنے انٹرویو میں کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی کا کہنا ہے کہ بلاشبہ مکی آرتھر نے پاکستانی ٹیم کو اوپر لانے میں محنت کی، یہ تاثر غلط ہے کہ پاکستانی کرکٹرز کو غیر ملکی کوچز سے بات چیت کرنے میں مشکل پیش آتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں غیر ملکی کوچز کے ساتھ اپنے کوچز کو تیار کرنے کی ضرورت تھی لیکن بدقسمتی سے ہم نے یہ کام نہیں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی جونیئر کرکٹ میں راہول ڈریوڈ طرز پر ایسے کوچز لائیں گے جو بڑے پائے کے کھلاڑی رہے ہوں، پی سی بی کے اصلاحاتی ایجنڈے میں یہ نکتہ اہم ہے کہ بڑے کھلاڑی بھارتی طرز کا ماڈل اپناتے ہوئے جونیئر ٹیموں کو کوچ کریں۔

احسان مانی کے مطابق کھلاڑی ملک کے سفیر ہوتے ہیں جنہیں کرکٹ کے علاوہ کھانے پینے، بول چال اور ڈریسنگ کے بارے میں کلاسز دی جائیں گی تاکہ جب یہ کھلاڑی پاکستان ٹیم میں آئیں تو انہیں کرکٹ کے ساتھ ہر چیز کی مکمل آگاہی ہو، آن اور آف دی فیلڈ کھلاڑیوں کی ڈسپلن مثالی ہو۔

پاکستان ویمن ٹیم نے ویسٹ انڈیز کیخلاف ون ڈے سیریز جیت کر تاریخ رقم کر دی

دبئی: پاکستان ویمن ٹیم نے تیسرے ایک روزہ میچ میں ویسٹ انڈیز کو شکست دیکر مہمان ٹیم کے خلاف پہلی بار ون ڈے سیریز اپنے نام کر لی۔

دبئی میں کھیلے گئے میچ میں پاکستان ویمن ٹیم نے ویسٹ انڈیز ویمن کو 4 وکٹ سے شکست دی۔

ویسٹ انڈین ویمن ٹیم نے پہلے کھیلتے ہوئے 47.3 اوورزمیں 159 رنز بنا کر آؤٹ ہوئی۔

ویسٹ انڈیز ویمنز کی سات کھلاڑی ڈبل فیگرمیں داخل نہ ہو سکیں۔ پاکستان کی جانب سے نشرہ سندھو اور ڈائنا بیگ نے تین تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

پاکستان ویمن ٹیم نے مقررہ ہدف 47.2 اوورز میں 6 وکٹ پر حاصل کر لیا۔

سدرہ امین نے ایک بار پھر اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 52 رنز بنائے جب کہ ندا ڈار نے 26 اور جویریہ خان نے 24 رنز بنائے۔

پاکستان نے تین میچوں کی سیریز دو ایک سے اپنے نام کر لی۔

پاکستان ویمن ٹیم کی کامیابی پر سابق کپتان وسیم اکرم، یونس خان اور ہیڈ کوچ قومی ٹیم مکی آرتھر کھلاڑیوں کو مبارکباد دینے پہنچ گئے۔

وسیم اکرم اور مکی آرتھر نے قومی ویمن ٹیم کے کوچ اور کھلاڑیوں کو سیریز جیتنے پر مبارکباد پیش کی۔ فوٹو: پی سی بی

پاکستان ویمن ٹیم اپنی تاریخ میں پہلی مرتبہ اپنے سے بہتر رینکنگ والی ٹیم سے سیریز جیتی ہے۔

قومی ٹیم کے سابق کپتان یونس خان نے پاکستان ویمن ٹیم کی کپتان بسمہ معروف کو 100 ایک روزہ میچ مکمل کرنے پر پی سی بی کی جانب سے اسپیشل مومنٹو ایوارڈ سے نوازا۔

PCB Official

@TheRealPCB

Pakistan captain @maroof_bismah received a special memento from @TheRealPCB on reaching the milestone of 100 ODIs.
Legendary Test batsman, former captain Younis Khan handed over the memento.

55 people are talking about this

آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی رینکنگ میں بابراعظم کی پہلی پوزیشن برقرار

دبئی: آئی سی سی نے ٹی ٹونٹی کی نئی عالمی رینکنگ جاری کردی۔

پاکستانی ٹیم بدستور پہلی اور بھارت دوسری پوزیشن پر ہے، جنوبی افریقی ٹیم  ،انگلینڈ اور آسٹریلیا کو پیچھے چھوڑتے ہوئے تیسرے نمبر پر آ گئی  ہے ۔ بیٹنگ میں بابر اعظم بدستور پہلے نمبر پر موجود ہیں جب کہ فخر زماں ایک درجہ تنزلی کے بعد چھٹے نمبر پر  پہنچ گئے ہیں۔

بولنگ میں راشد خان  کے بعد کلدیپ یادیو دوسرے نمبر پر جگہ پانےمیں کامیاب ہوئے ہیں۔ پاکستانی لیگ اسپنر شاداب خان تیسری پوزیشن پر آگئے ہیں، عماد وسیم  نے پانچ درجے چھلانگ لگاکر چوتھی پوزیشن اپنےنام کرلی ہے جبکہ  ایک درجے تنزلی کے ساتھ فہیم اشرف نویں نمبر پر  چلے گئے ہیں ۔شاہین آفریدی اٹھائیس درجہ ترقی کر کے اڑتالیس نمبر پر پہنچ گئے ہیں۔

ٹاپ ٹین آل رائونڈرز میں کوئی پاکستانی شامل نہیں ہے ۔ آسٹریلوی میکسویل پہلے اور شکیب الحسن دوسری پوزیشن پر ہیں ۔

سرفراز کو شائقین کے ممکنہ ردعمل سے بچانے کیلیے بھی باہر بٹھایا، احسان مانی

لاہور: چیئرمین پی سی بی احسان مانی نے کپتان سرفراز احمد کے نسل پرستانہ فقرے کے بعد انھیں ٹیم سے باہر بٹھانے کے فیصلے کا انکشاف کردیا۔

احسان مانی کا کہنا ہے کہ قومی ٹیم کے جنوبی افریقہ کے دورے کے دوران سرفراز نے جوبات کی، وہ میری رائے میں قابل قبول نہیں تھی، بعد ازاں کپتان نے اس کی معافی بھی مانگی، اس کے باوجود میں یہ بھی چاہتا تھا کہ کچھ میچز کے لیے سرفراز احمد کو ٹیم سے دور رکھا جائے کیونکہ میں یہ نہیں چاہتا تھا کہ میچزکے دوران کراؤڈکی جانب سے کوئی ردعمل ہو جس کی وجہ سے سرفرازمزید دباؤکا شکار ہوں۔

چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ میرا آئی سی سی سے گلہ یہ ہے کبھی کبھی قانون اوردوسرے عوامل اور ہوتے ہیں، اس حوالے سے ہم نے آئی سی سی کو بڑا کلیئر خط لکھ دیا ہے۔ بین اسٹوکس کو نئے قانون کا فائدہ مل گیا، دوبارہ بیٹنگ کیلیے بلالیاگیا۔

اداروں کو ختم نہیں کررہے بلکہ ساتھ لے کر چلیں گے، احسان مانی

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی نے کہا ہے کہ اداروں کو ختم نہیں کررہے بلکہ ان کو ساتھ لے کر چلیں گے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی کا کہنا ہے کہ پی سی بی کے ایم ڈی وسیم خان کے انتخاب میں شفاف طریقہ کار اپنایا گیا ہے اور ان کی وجہ سے ملکی کرکٹ کو بہت فائدہ ہوگا۔

قذافی اسٹیڈیم لاہور میں  بورڈ کے نئے ایم ڈی وسیم خان کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے احسان مانی نے کہا کہ میں نے پہلی پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ ہم پی سی بی کو پروفیشنل بورڈ بنائیں گے ،بورڈ آئین کے مطابق چیف ایگزیکٹو بھی چئیرمین ہے، دنیا بھر میں چئیرمین صرف معاملات کی نگرانی کرتا ہے اور پالیسیاں بورڈ بناتا ہے، ہم نے آئین میں ترمیم ہونے تک فیصلہ کیا کہ چیف ایگزیکٹو کی جگہ ایم ڈی کو رکھا جائے، وسیم خان 1997 میں پاکستان کرکٹ ٹیم کے لئے 12ویں کھلاڑی کی خدمات انجام دے چکے ہیں ۔

احسان مانی کا مزید کہنا تھا کہ گراس روٹ کرکٹ اور ڈومیسٹک کرکٹ کے اسٹرکچر کو بہتر بنانے کے لئے وسیم کی خدمات حاصل کی ہیں، انہیں انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ نے بھی پیش کش کی تھی لیکن یہ اس کو چھوڑ کر پاکستان آ ئے ہیں۔

چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ ہمارا پہلے دن سے یہ کہنا ہے کہ ڈومیسٹک کرکٹ کو ٹھیک کرنا ضروری ہے، ہم اداروں کو ختم نہیں کررہے بلکہ ان کو ساتھ لے کر چلیں گے، اس میں کوئی شک نہیں کہ ماضی میں بورڈ سیاست کا شکار ہوچکا تھا اور کوئی اسٹرٹیجیک منصوبہ نہیں تھا۔ انہوں نے کہا کہ اس سال بھارتی کرکٹ بورڈ کے انتخابات ہونے ہیں، امید ہے کہ اس کے بعد انڈین بورڈ کا رویہ تبدیل ہوگا۔

احسان مانی نے کہا کہ شرجیل خان اپنی سزا مکمل ہونے کے بعد بحالی کے عمل سے گزریں گے، پھر وہ ڈومیسٹک کرکٹ کھلیں گے، اس کے بعد سلیکشن کمیٹی ان کے مستقبل کا فیصلہ کرے گی، سلمان بٹ اور شرجیل خان کا معاملہ الگ ہے، سلیکشن کمیٹی کھلاڑی کا انتخاب کرتے وقت اس کے مستقبل کے حوالے سے ہرچیز کو دیکھتی ہے، سرفراز احمد والے معاملے پر ہم نے آئی سی سی کو خط لکھا ہے۔

اس موقع پر پی سی بی ایم ڈی وسیم خان نے کہا کہ میں احسان مانی اور پی سی بی کا شکر گزار ہوں جنہوں نے مجھے موقع دیا، میں ہمیشہ پاکستان کرکٹ کا سپورٹر رہا ہوں، ہمارے مسائل سسٹم میں ہیں اور اس سسٹم کو ٹھیک کرنا ہے جس میں وقت لگے گا۔

پاک آسٹریلیا ون ڈے سیریز کے شیڈول کا اعلان

پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان ایک روزہ سیریز کے لیے شیڈول کا اعلان کر دیا گیا۔

شیڈول کے مطابق پاکستان اورآسٹریلیا میں 5 میچز کی سیریز 22 سے 31 مارچ تک یو اے ای میں ہوگی، پی سی بی کے مطابق پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان پہلا میچ 22 اور دوسرا 24 مارچ کو شارجہ میں کھیلا جائے گا، سیریز کا تیسرامیچ 27 مارچ کو ابوظہبی میں کھیلا جائے گا جب کہ چوتھا اور پانچواں ون ڈے میچ 29 اور31 مارچ کودبئی میں شیڈول ہے۔

پی سی بی کا کہنا ہے کہ سیریز سے ورلڈ کپ کی تیاریوں میں مدد ملے گی ،اس کے علاوہ آسٹریلیا کو پاکستان میں میچز کھیلنے کی پیش کش کریں گے۔

نیوزی لینڈ نے بھارت کو تیسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں شکست دیکر سیریز1-2 سے جیت لی

ہملٹن : نیوزی لینڈ نے بھارت کو تیسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں 4 رنز سے شکست دے کر سیریز 1-2 سے اپنے نام کرلی۔

ہملٹن میں کھیلے گئے میچ میں نیوزی لینڈ نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ اوورز میں 4 وکٹوں کے نقصان پر 212 رنز بنائے، ہدف کے تعاقب میں مہمان بھارتی ٹیم 6 وکٹ پر 208 رنز بناسکی۔

بھارت کی جانب سے وجے شنکر 43، کپتان روہت شرما 38 اور رشبا پانٹ 28 رنز کے ساتھ نمایاں رہے جب کہ کرونال پانڈیا نے 26 اور دنیش کارتھک نے 33 رنز کی اننگز کھیلی اور ناٹ آؤٹ رہے۔

نیوزی لینڈ کے 213 رنز کے ہدف کے تعاقب میں مہمان ٹیم 208 رنز بناسکی۔ فوٹو: اے ایف پی

کیویز ٹیم کے مچل سینٹنر اور ڈیرل مچل نے 2،2 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا، فاتح ٹیم کے کولن منرو ‘مین آف دی میچ’ اور  ٹم سیفرٹ ‘پلیئر آف دی سیریز’ قرار پائے۔

اس سے قبل میزبان ٹیم نے پہلے بیٹنگ کی تو کولمن منرو نے 72، ٹم سیفرٹ نے 43، کولن ڈی گرینڈ ہوم نے 30 اور کپتان کین ولیمسن نے 27 رنز بنائے، بھارت کے کلدیپ یادیو نے 2، بھونیشور کمار اور خلیل احمد نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

عمران خان کے پاس اسٹار کھلاڑی تھے،اُن سے موازنہ درست نہیں، سرفراز احمد

کراچی: پاکستان کرکٹ ٹیم اور پی ایس ایل کی فرنچائز کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ ورلڈ کپ میں پاکستان کی ٹیم بہتر نظر آئے گی، کھلاڑیوں کا پول تیار ہے، پی ایس ایل فور میں فائنل کھیلنے کی بھر پور کوشش کریں گے۔

کپتان سرفراز احمد نے ان خیالات کا اظہار کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور اپنے اعزاز میں منعقدہ تقریب میں میڈیا سے گفتگو میں کیا، اس موقع پر کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے مالک ندیم عمر، منیجر اعظم خان اور برانڈ ایمبیسیڈر مایا علی بھی موجود تھیں۔

سرفراز احمد نے کہا کہ پی ایس ایل-4 میں عمدہ نتائج دینے کی کوشش کروں گا، فائنل کھیلنا ہماری پہلی ترجیح ہے، پی ایس ایل فور کے میچز کے پاکستان میں انعقاد پر خوشی ہے، اپنے ہوم سٹی میں میچز کھیلنے کا لطف ہی کچھ اور ہوتا ہے، شائقین کی امیدوں پر پورا اترنے کی کوشش کریں گے۔

ایک سوال کے جواب میں سرفراز احمد نے کہا کہ ہماری ٹیم میں موجود تمام غیر ملکی کرکٹرز پاکستان آئیں گے اس طرح ہمارا کمبی نیشن متاثر نہیں ہوگا، حالیہ سیریز میں جو غلطی ہوئی جس پر پابندی کی سزا بھی ہوئی وہ اب ماضی کا حصہ بن گیا ہے، میں جو کچھ ہوا میں فراموش کرچکا ہوں۔

کپتان سرفراز احمد کا مزید کہنا تھا کہ ورلڈ کپ میں پاکستان کی ٹیم پہلے سے کہیں بہتر نظر آئے گی ،آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں ہمارے لیے موقع موجود ہے، جس سے بھرپور فائدہ اُٹھائیں گے۔

ایک سوال کے جواب میں کپتان نے بتایا کہ میری طبیعت شروع سے ہی سادہ ہے، میں چشمہ نہیں پہنتا اور تقریبات میں نہیں جاتا ،یہ چیزیں میرے مزاج میں شامل نہیں، میرے کھیل کو نکھارنے میں کوچ اعظم خان کا بہت بڑا کردار ہے۔

سرفراز احمد کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان میرے پسندیدہ کرکٹر رہے ہیں ان کے پاس اسٹار کھلاڑی تھے اس لیے ان سے موازنہ درست نہیں، 1992 عالمی کپ کی ٹیم بہت زبردست تھی۔

اس موقع پر کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے اونر ندیم عمر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سرفراز کے ساتھ پرانا رشتہ ہے، مجھے سرفراز احمد کی صلاحیتوں پر مکمل اعتماد ہے اور جب تک سرفراز کھیلتے رہیں گے وہ ہی کوئٹہ کے کپتان رہیں گے۔

Google Analytics Alternative