بین الاقوامی

ایرانی صدر کا داعش کو ختم کرنے کا دعویٰ

بیروت: ایرانی صدر حسن روحانی نے اپنے خطاب میں خطے سے شدت پسند تنظیم داعش کے خاتمے کا اعلان کردیا۔

ڈان اخبار کی ایک رپورٹ میں برطانوی خبر رساں ادارے کی جانب سے بتایا گیا کہ ایرانی صدر حسن روحانی نے گزشتہ روز سرکاری ٹی وی پر براہِ راست خطاب میں کہا تھا کہ خطے میں لوگوں کی مزاحمت اور اللہ کی رہنمائی سے ہم یہ کہ سکتے ہیں کہ ہم نے لوگوں کے سروں سے ان لوگوں (داعش) کو ختم کردیا یا کم کردیا ہے۔

ایک سینئر فوجی کمانڈر نے بھی ہزاروں شہیدوں کو خراجِ تحسین پیش کیا جنہوں نے ایران کی جانب سے عراق اور شام میں عسکریت پسند گروپ کو شکست دینے کے لیے اپنی جانیں قربان کیں۔

ایرانی صدر نے سرکاری ٹی وی پر نشر کیے گئے اپنے خطاب میں کہا کہ دہشت گردوں کی کچھ باقیات موجود ہیں تاہم ان کی جڑوں اور ان کی بنیاد کو مکمل طور پر تباہ کردیا گیا ہے۔

اپنے خطاب میں حسن روحانی نے الزام لگایا کہ امریکا اور اسرائیل خطے میں داعش کی حمایت کررہے ہیں۔

ایران پاسدارانِ انقلاب کی نیوز ویب سائٹ سیپاہ پر جاری ایک پیغام کے مطابق سینئر کمانڈر میجر جنرل قاسم سلیمانی کی جانب سے ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای کو بھیجے گئے پیغام میں بھی یہی کہا گیا تھا کہ داعش کو خطے سے شکست دے دی گئی ہے۔

ایرانی ذرائع ابلاغ کی جانب سے اکثر قاسم سلیمانی کی تصاویر اور ویڈیو دکھائی جاتی ہیں جس میں انہیں پاسدارانِ انقلاب کی برانچ ’قدس فورس‘ کی سربراہی کرتے دکھایا جاتا ہے جو ایران سے باہر آپریشن کی ذمہ دار بتائی جاتی ہے اور یہی فورس فرنٹ لائن پر عراق اور شام میں داعش کے خلاف جنگ میں مصروف رہی تھی۔

خیال رہے کہ پاسدارانِ انقلاب ایک طاقت ور فوجی فورس ہے جو اربوں ڈالر مالیت کی اقتصادی سلطنت کی نگرانی بھی کرتی ہے جبکہ یہی فورس شام میں صدر بشارالاسد اور بغداد میں مرکزی حکومت کی حمایت میں لڑ رہی ہے۔

شام اور عراق میں پاسدارانِ انقلاب کے سینئر کمانڈروں سمیت ہزاروں فوجی مارے جاچکے ہیں۔

شام کا تنازعہ ہفتے کو نئے مرحلے میں داخل ہوا جب حکومت اور اس کی اتحادیوں کی جانب سے البو کمال نامی شہر کو داعش کے قبضے سے خالی کرایا گیا۔

عراق اور شام میں داعش کے خلاف جنگیں لڑنے والی مختلف فورسز کا کہنا ہے کہ انہیں لگتا ہے کہ وہ لوگ روپوش ہوگئے ہیں اور خیال ہے کہ وہ لوگ گوریلا بغاوت کی طرح سلیپر سیل اور بمباری کا استعمال کریں گے۔

خیال رہے کہ 2014 میں شدت پسند تنظیم داعش نے شام اور عراق کے متعدد علاقوں پر قبضہ کر کے خود ساختہ خلافت قائم کرنے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد سے شام اور عراق، اتحادی افواج کے ساتھ ملک کر داعش کے خلاف جنگ میں مصروف تھے۔

فلسطینی اتھارٹی نے دھمکیوں کے بعد سے امریکا سے رابطے معطل کردیئے

راملہ: فلسطینی اتھارٹی نے دھمکیوں کے بعد سے امریکا سے رابطے معطل کر  دیئے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق فلسطینی حکام نے کہا ہے کہ حال ہی میں امریکا کی طرف سے تنظیم آزادی فلسطین کے دفاتر بند کرنے کی دھمکیوں کے بعد فلسطینی اتھارٹی نے واشنگٹن کے ساتھ رابطے معطل کردیئے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق فلسطینی وزیرخارجہ ریاض المالکی نے ایک بیان میں کہا کہ امریکا نے واشنگٹن میں پی ایل او کے مشن کو بند کرنے کی دھمکی دی تو ہم نے رد عمل میں باضابطہ طور پر امریکیوں سے رابطے معطل کردیے ہیں۔درایں اثنا پی ایل او کے ترجمان نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ صدر محمود عباس کی طرف سے ہدایت کی گئی ہے کہ تنظیم امریکی حکام کے ساتھ ہرطرح کے رابطے معطل کردے۔

خیال رہے کہ واشنگٹن میں پی ایل او کے نمائندہ دفتر کوامریکا میں مقیم فلسطینیوں کا نمائندہ مرکز سمجھا جاتا ہے۔ ہرچھ ماہ کے بعد اس دفتر کو سرگرمیاں جاری رکھنے کے لیے امریکا سے تجدید حاصل کرنا ہوتی ہے۔ گذشتہ ہفتے چھ ماہ کی یہ مدت ختم ہوگئی تھی جس کے بعد امریکا میں تنظیم آزادی فلسطین کا دفتر بند ہے۔گذشتہ ہفتے امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹیلرسن نے پی ایل او کے دفتر کی تجدید سے انکار کردیا تھا۔

امریکی حکام کا کہنا تھاکہ واشنگٹن میں فلسطینی نمائندہ دفتر کی بندش رام اللہ اتھارٹی کے اسرائیل کے خلاف یک طرفہ اقدامات کا نتیجہ ہے جو اس نے عالمی فوج داری عدالت میں اسرائیل کے خلاف شروع کیے ہیں۔سنہ 2015 کو امریکی کانگریس نیاپنی سفارشات میں کہا تھا کہ فلسطینیوں کے لیے اسرائیلی شہریوں کے خلاف تحقیقات کے لیے عالمی فوج داری عدالت سے رجوع کرنے کا کوئی جواز نہیں۔

امریکا میں فلسطینی مشن کی بندش کے بعد اگر فلسطینی اتھارٹی اور اسرائیل کے درمیان مذاکرات بحال ہوتے ہیں تو امریکی صدر کو 90 روز میں تنظیم آزادی فلسطین کے دفاتر کو کھولنے کا اختیار ہے۔

امریکہ داعش کی شکست کے بعد بھی شام میں اسلحہ سپلائی کر رہا ہے: ترک صدر

انقرہ: ترک صدر صدر رجب طیب اردوان نے کہا ہے کہ شام میں داعش کو شکست ہونے کے باوجود امریکا ابھی بھی علاقے کو اسلحہ سپلائی کر رہا ہے۔

ترک صدر رجب طیب اردوان نے قومی اسمبلی میں اپنی سیاسی جماعت کے پارلیمانی گروپ سے خطاب کرتے ہوئے اس امر پر زور دیا کہ انہوں نے خطے میں امریکہ کی غلط پالیسیوں کے حوالے سے ترکی کے خدشات کا ہر موقع پر کھل کر اظہار کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ شام میں داعش کو شکست ہونے کے باوجود امریکا ابھی بھی علاقے کو اسلحہ سپلائی کر رہا ہے۔

افغان سیکورٹی فورسز کی زمینی اور فضائی کاروائیوں میں5 پاکستانیوں سمیت داعش کے 17 جنگجو ہلاک

کابل: افغان نیشنل سیکورٹی اور ڈیفنس فورسز کی زمینی اور فضائی کاروائیوں میں5 پاکستانیوں سمیت داعش کے 17 جنگجو  ہلاک ہو گئے، دوسری جانب سابق افغان صدر حامد کرزئی نے جنوبی صوبہ ہلمند میں امریکی فضائی حملے میں شہریوں کی ہلاکت کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی فورسز کی جانب سے ایسے حملے افغان سرزمین پر امریکی فورسز   کی جانب سے واضح خلاف ورزی ہے، افغان دیہاتوں اور شہریوں کے گھروں پر فضائی حملے فوری طورپر روکے جائیں۔

بدھ  کو  افغان میڈیا کے مطابق مشرقی صوبہ ننگرہار میں افغان نیشنل سیکورٹی اور ڈیفنس فورسز   کی زمینی اور فضائی کاروائیوں میں داعش کے 17جنگجو مارے گئے جن میں 5 پاکستانی بھی شامل ہیں۔صوبائی گورنر کے ترجمان عطااللہ کھوگیانی نے بتایا  کہافغان نیشنل سیکورٹی اور ڈیفنس فورسز نے داعش کے جنگجو ؤں کو ضلع دور بابا، ہسکا مینا اور  آچن کے مختلف علاقوں میں نشانہ بنایا۔ دہشتگرد عسکریت پسندانہ کاروائیوں کی منصوبہ بندی میں مصروف تھے جب انھیں نشانہ بنایا  گیا۔

ایک اور رپورٹ کے مطابق افغان سیکورٹی فورسز نے مختلف علاقوں میں آپریشن کے دوران بارودی سرنگیں اور دیگر اسلحہ برآمد کرلیا۔ادھر ننگرہار صوبہ میں ہی داعش کے ساتھ جھڑپ میں بارڈر پولیس کا ایک اہلکار ہلاک اور 3 دیگر زخمی ہوگئے۔صوبائی پولیس کے ترجمان حضرت حسین مشرقی وال نے بتایا ہے کہ جھڑپ اس وقت شروع ہوئی جب عسکریت پسندوں نے ضلع باٹی کوٹ میں سیکورٹی فورسز پر حملہ کر دیا۔

دوسری جانب سابق افغان صدر حامد کرزئی نے جنوبی صوبہ ہلمند میں امریکہ کی افغان فورسز کے ساتھ مل کر مشترکہ کاروائی جس میں متعدد شہری مارے گئے تھے کی مذمت کی ہے ۔سابق صدر کے دفتر سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ حامد کرزئی نے فضائی حملے میں موسی قلعہ کے ایک ہی خاندان کے 10افراد کی فضائی حملے میں ہلاکت پر گہرے دکھ اور تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ امریکی فورسز کی جانب سے ایسے حملے افغان سرزمین پر امریکی فورسز کی جانب سے واضح خلاف ورزی ہے۔

بیان میں مزیدکہا گیاہے کہ سابق صدر نے ایک بار پھر افغان دیہاتوں اور شہریوں کے گھروں پر فضائی حملے فوری طورپر روکنے کا مطالبہ کیا ہے۔

لبنانی وزیراعظم سعد حریری نے استعفیٰ واپس لے لیا

بیروت: لبنانی وزیراعظم سعد حریری نے صدر سے ملاقات کے بعد مستعفیٰ ہونے کا فیصلہ واپس لے لیا ہے۔

برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق لبنان کے وزیراعظم سعد حریری آج وطن واپس پہنچے تھے جہاں انہوں نے صدر سے ملاقات کے بعد مستعفی ہونے کا فیصلہ واپس لے لیا، سعد حریری کا کہنا ہے کہ انہوں نے اپنا استعفیٰ صدر کو دیا تھا لیکن انہوں نے مزید بات چیت تک منظور کرنے سے انکار کردیا ہے۔

اس  سے قبل لبنان کے وزیراعظم سعد الحریری عہدے سے مستعفیٰ ہونے کا اعلان کرنے کے تین ہفتے بعد بیروت کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اترے جہاں ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا، سعد حریری نے بیروت واپسی سے قبل قبرص اور مصر میں مختصر قیام کیا جہاں انھوں نے مصری صدر عبدالفتاح السیسی سے بھی ملاقات کی۔ ملاقات میں لبنان کے موجودہ بحران اور خطے میں تیزی سے تبدیل ہونے والی صورت حال کا جائزہ لیا گیا۔

واضح رہے کہ سعد حریری نے تین ہفتے قبل سعودی عرب کے دورے کے دوران وزارت عظمیٰ سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ ان کے استعفیٰ دینے کے بعد لبنان کی جانب سے الزام عائد کیا گیا تھا کہ لبنانی وزیراعظم کو سعودی عرب نے یرغمال بنایا ہےاور استعفیٰ بھی سعودی دباؤ کا نتیجہ ہے تاہم سعد الحریری نے استعفے کی وجہ ایران اور حزب اللہ کی لبنان میں مداخلت کو قراردیا تھا، لبنان کےصدرنےسعدالحریری کے استعفے کو سعودی دباؤ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ جب تک وزیراعظم باضابطہ طورپر استعفیٰ پیش نہیں کرتے اس کو قبول نہیں کیاجائے گا۔

نائجیریا کی مسجد میں خودکش حملے میں 50 افراد جاں بحق

ابوجا: نائجیریا کی مسجد میں نماز کے دوران خودکش حملے کے نتیجے میں میں 50 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے۔

غیرملکی خبررساں ادارے نے مقامی پولیس کے حوالے سے بتایا کہ دھماکا اس وقت ہوا جب شمال مشرقی علاقے موبی میں نماز کے دوران  خودکش حملہ آور نے  خودکو دھماکے سے اڑالیا جس کے نتیجے میں 50 افراد جاں بحق اور  متعدد زخمی ہوگئے۔

پولیس کا کہنا تھا کہ خودکش حملہ آور جماعت میں پہلے سے موجود تھا جس نے دوران نماز خود کو دھماکے سے اڑالیا، پولیس کے مطابق لاشوں اورزخمیوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں بعض زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔

ابتدائی طورپر حملے کی ذمہ داری کسی جماعت نے قبول نہیں کی تاہم حکام کہنا ہے کہ  خودکش حملے کے پیچھے شدت پسند تنظم بوکو حرام کا ہاتھ ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ8 سالوں میں بوکوحرام کی دہشت گردانہ کارروائیوں میں اب تک 20 ہزارافراد ہلاک اور 26 لاکھ سے زائد بے گھر ہوچکے ہیں۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نےمزید 3 کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا

سری نگر: مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے تازہ کارروائیوں میں محاصرے اور سرچ آپریشن کے دوران مزید 3  کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا۔

مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کی جانب سے ریاستی دہشت گردی جاری ہے، ضلع کپواڑہ کے علاقے ماگام اور ہنڈوارہ میں بھارتی فوج نے تازہ کارروائیوں میں محاصرے اور سرچ آپریشن کے دوران مزید 3  کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا جب کہ علاقے میں بھارتی ریاستی دہشت گردی کے تحت آپریشن جاری ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ 5 روز میں بھارتی دہشت گردی سے شہید ہونے والے کشمیریوں کی تعداد 11 ہوگئی ہے۔

اسرائیل کی جیلوں میں 100 فلسطینی بچے قید

تل ابیب:  اسرائیل کی جیلوں میں 18 سال سے کم عمر 100 فلسطینی بچے قید ہیں جن میں 10 لڑکیاں بھی شامل ہیں۔

عالمی یوم حقوق اطفال کی مناسبت سے جاری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج رواں سال کے آغاز سے لے کر اب تک ایک ہزار 150 بچوں کو حراست میں لے چکی ہے۔ بچوں کو حراست میں لئے جانے کا عمل شروع ہونے سےاسرائیل متعدد خلاف ورزیوں کا مرتکب ہوا ہے۔ بچوں کو رات گئے ان کے گھروں سے نہایت بے رحمی کے ساتھ حراست میں لیا گیا ہے۔ بچوں کو براہ راست گولیوں کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

حراست کے بعد بچوں کو تفتیشی اور حراست میں رکھنے کے مراکز بھیجا جاتا ہے، انہیں بھوکا پیاسا رکھا جاتا ہے اور اسی حالت میں زدوکوب اور تحقیر کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ 100 بچوں کو ان کے گھروں میں قید کیا گیا ہے۔

Google Analytics Alternative