بین الاقوامی

افغانستان میں سیکیورٹی فورسز کے قافلے پر حملے میں 6 انٹیلی جنس اہلکار ہلاک

کابل: افغانستان میں سیکیورٹی فورسز کے قافلے پر حملے  کے نتیجے میں 6 انٹیلی جنس اہلکار ہوگئے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق دہشت گردوں نے افغانستان میں دارالحکومت کابل کے ضلع پغمان سے گزرنے والے افغان انٹیلی جنس ایجنسی اور نیشنل ڈائریکٹوریٹ سیکیورٹی کی آپریشنل ٹیم کے قافلے کو کار بم دھماکے کے ذریعے نشانہ بنایا گیا۔

دھماکا خیز مواد سے بھری ایک کار سیکیورٹی فورسز کے قافلے میں شامل ہوکر زور دار دھماکے سے پھٹ گئی۔ کار کو ریموٹ کنٹرول ڈیوائس سے دھماکے سے اُڑایا گیا۔ قافلے میں شامل دیگر اہلکار زخمی ہیں جنہیں طبی امداد فراہم کی جا رہی ہے۔

افغان حکومت کی جانب سے خودکش دھماکے میں 6 انٹیلی جنس اہلکاروں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے تاہم دھماکے کی نوعیت، زخمیوں کی تعداد اور ہلاک ہونے والے اہلکاروں کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔

پولیس نے جائے وقوعہ کا گھیراؤ کر کے شاہراہ کو آمدورفت کے لیے بند کردیا، سیکیورٹی اداروں نے قریبی علاقوں میں سرچ آپریشن کا آغاز کردیا تاہم اس حوالے سے کوئی گرفتاری میں عمل میں نہیں آئی ہے۔

گزشتہ 3 ماہ سے افغانستان میں طالبان جنگجوؤں کے حملوں میں شدت دیکھنے میں آئی ہے لیکن تاحال کسی شدت پسند جماعت نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

دنیا کی 100 بڑی اسلحہ ساز کمپنیوں میں سے 47 امریکی ہیں، رپورٹ

اسٹاک ہوم: دنیا بھر میں اسلحہ اور اس سے متعلق ساز و سامان کی نصف تعداد امریکی کمپنیاں تیار کرتی ہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق دنیا بھر میں اسلحے کے فروغ اور اسلحہ سازی کی صنعت کے حوالے سے اسٹاک ہوم انٹرنیشنل پیس ریسرچ انسٹی ٹیوٹ (SIPRI) نے 100 بڑی اسلحہ ساز کمپنیوں کے نام کے ساتھ تازہ رپورٹ جاری کی ہے۔

دنیا بھر میں جنگوں، اسلحہ سازی، تنازعات اور دفاعی ساز و سامان سے متعلق ریسرچ کرنے والے ادارے (SIPRI) نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ 2017ء میں 2.5 فیصد اضافے کے ساتھ  اسلحے کی 398.2 بلین ڈالر کی خرید و فروخت ہوئی۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 100 بڑی اسلحہ ساز کمپنیوں میں 47 امریکی ہیں جو دنیا بھر میں اسلحے کی نصف تعداد تیار کررہی ہیں جب کہ دنیا کی 10 بڑی اسلحہ ساز کمپنیوں میں 5 امریکی ہیں۔ امریکی کمپنی لاک ہِیڈ مارٹن اول نمبر پر براجمان ہے جس نے 44 بلین ڈالرز کا کاروبار کیا۔

دفاعی ساز و سامان کی تیاری میں روس نے برطانیہ سے اعزاز چھین کر دوسرے نمبر پر قدم جمالیے، تیزی سے ترقی کے منازل طے کرنے والی روسی کمپنی ’الماز آنتے‘ پہلی بار 10 بڑی اسلحہ ساز کمپنیوں میں شامل ہوئی۔ برطانیہ بدستور مغربی یورپی ممالک کو اسلحہ فراہم کا سب سے بڑا ملک ہے۔

اسپری (SIPRI) نے اپنی رپورٹ میں مزید کہا کہ چینی کمپنیاں بھی بڑی مقدار میں اسلحہ فروخت کر رہی ہیں تاہم ان کے بارے میں بہت کم اعداد و شمار جاری کیے جاتے ہیں۔ اس لیے چین کو کس فہرست میں رکھا جائے، یہ فیصلہ کرنا مشکل ہے جب کہ اسلحہ فروخت کرنے والے ممالک کی دوڑ میں اسرائیل نے بھی اپنی پوزیشن بہتر کرلی ہے۔

مسلمان ممالک میں ترکی کی اسلحہ ساز کمپنیوں نے حیران کن نتائج دے کر خریداروں کو اپنی جانب متوجہ کرلیا۔ ترکی نے اسلحے کی فروخت کو 2016ء کے مقابلے میں 2017ء میں 27 فیصد کے اضافے پر پہنچا دیا جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ترکی دفاعی ساز و سامان کی صنعت میں خود کفیل ہونے کے ساتھ ساتھ زرمبادلہ بھی کما کر معیشت میں بہتری کا خواہاں ہے۔

واضح رہے کہ دنیا بھر میں سب سے زیادہ اسلحہ خریدنے والے ممالک میں بھارت، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات شامل ہیں۔

نادیہ مراد، ڈاکٹر ڈینس مکویگے کو امن کے ‘نوبیل انعام’ سے نواز دیا گیا

اوسلو: کانگو کے ڈاکٹر ڈینس مُکویگے اور عراق کی یزیدی خاتون نادیہ مُراد نے سال 2018 کا امن کا نوبیل انعام جیت لیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ‘اے ایف پی’ کے مطابق ڈاکٹر ڈینس مکویگے، جنہیں جنسی زیادتی کا نشانہ بننے والی خواتین کی مدد کرنے پر ‘ڈاکٹر مِراکل (معجزہ)’ بھی کہا جاتا ہے اور دہشت گرد تنظیم ‘داعش’ کی جنسی غلامی سے فرار ہونے والی نادیہ مراد، جو اپنے تجربے کو استعمال کرکے یزیدی لوگوں کی طاقتور آواز بنیں، کو ناروے کے دارالحکومت اوسلو میں اعزاز سے نوازا گیا۔

ناروے کی نوبیل کمیٹی نے دونوں کو جنگ اور مسلح تصادم کے دوران جنسی زیادتی کے بطور ہتھیار استعمال کی خاتمے کی کوششوں پر اکتوبر میں انعام سے نوازنے کا اعلان کیا تھا۔

ڈاکٹر ڈینس اور نادیہ مراد نے عالمی انعام دنیا بھر میں جنسی زیادتی سے متاثرہ خواتین کے نام کردیا تھا اور ان کا کہنا تھا کہ امید ہے کہ نوبیل انعام سے جنسی تشدد سے متعلق آگاہی کو فروغ ملے گا اور دنیا کو اسے نظرانداز کرنا آسان نہیں رہے گا۔

ڈاکٹر ڈینس مکویگے نے گزشتہ روز پریس کانفرنس کے دوران صحافیوں کو بتایا تھا کہ ‘ہم یہ نہیں کہہ سکتے کہ ہم زیادتی کے خلاف میدان عمل میں اس لیے نہیں آئے کیونکہ ہمیں علم نہیں تھا، اب ہر کوئی جانتا ہے اور میرے خیال میں اب یہ عالمی برادری کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس کے خلاف سامنے آئے۔’

یہ دوسرا موقع ہے کہ امن کے نوبیل انعام کسی کم عمر لڑکی کو گیا ہے، اس سے قبل 2014 میں پاکستانی طالبہ ملالہ یوسف زئی کو یہ انعام دیا گیا تھا۔

ملالہ یوسف زئی کو محض 17 سال کی عمر میں نوبیل کا انعام دیا گیا تھا، ان کے ساتھ 61 سالہ بھارتی سماجی کارکن کیلاش سدھیارتھی کو یہ انعام دیا گیا تھا۔

نادیہ مراد

25 سالہ نادیہ مراد عراق کے یزیدی کرد قبیلے سے تعلق رکھتی ہیں، 2003 میں امریکا کی جانب سے عراق پر حملے کے وقت ان کے خاندان کے کچھ افراد مارے گئے، وہ اس وقت انتہائی کم عمر تھیں۔

جب نادیہ مراد کی عمر 19 برس تھی، تب ‘داعش’ نے ان کے گاؤں پر حملہ کرکے 600 افراد کو قتل کردیا، جن میں ان کے بھائی اور دیگر اہل خانہ بھی شامل تھے۔

اسی حملے کے دوران نادیہ مراد سمیت دیگر متعدد نوجوان لڑکیوں کو اغوا کرکے جنسی کاروبار کے لیے استعمال کیا گیا۔

نادیہ مراد کم سے کم 3 سال تک داعش سمیت دیگر جنگجو گروپوں کے دہشت گردوں کے ہاتھوں جنسی کاروبار کے تحت فروخت ہوتی اور ریپ کا نشانہ بنتی رہیں۔

بعد ازاں نادیہ مراد 2015 میں کسی طریقے سے داعش کے قبضے سے بھاگنے میں کامیاب ہوگئیں۔

فروری 2015 میں نادیہ مراد کو اقوام متحدہ (یو این) کے اجلاس میں بلایا گیا، جہاں انہوں نے اپنے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کی لرزہ خیز داستان سنائی، وہ اس وقت اقوام متحدہ کی جذبہ خیر سگالی کی سفیر بھی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ان سمیت سیکڑوں نوجوان لڑکیوں کو وحشی جنگجو ریپ کا نشانہ بناتے اور ان پر بدترین تشدد کرتے رہے، جنگجو لڑکیوں کے جسموں کو سگریٹ سے جلانے سمیت دیگر طرح سے اذیتیں دیتے رہے۔

نادیہ مراد اس وقت جرمنی میں مقیم ہیں اور لڑکیوں کے اغواء، ریپ اور خواتین کے خلاف جنسی تشدد اور استحصال سے متعلق کام کرنے میں مصروف ہیں، انہوں نے ‘نادیہ انیشیٹو’ نامی سماجی تنظیم بھی قائم کر رکھی ہے۔

ڈاکٹر ڈینس مکویگے

کانگو کے 63 سالہ سماجی کارکن ڈینس مکویگے افریقہ کے پسماندہ ملک میں تشدد، جنگ اور خواتین کے استحصال جیسے جرائم کی روک تھام کے لیے کوشاں ہیں۔

ڈینس مکویگے نے حکومت کی توسط سے 1991 میں ایک ایسا ہسپتالبنایا جو خصوصی طور پر گینگ ریپ اور جنسی تشدد کی شکار خواتین کو بہتر اور جلد علاج کی سہولیات فراہم کرتا ہے۔

ڈینس مکویگے نے اسی ہسپتال میں کانگو میں دوسری خانہ جنگی یعنی 1998 کے دوران باغیوں اور جنگجو کی جانب سے گینگ ریپ، جنسی تشدد اور استحصال کی شکار ہونے والی ہزاروں خواتین کا علاج کیا۔

وہ اس وقت بھی خواتین کے خلاف جنسی تشدد، استحصال اور ریپ کی روک تھام کے لیے کام کر رہے ہیں، انہیں نوبیل انعام سے قبل بھی متعدد ایوارڈز سے نوازا جا چکا ہے۔

سوڈان میں ہیلی کاپٹر حادثے میں گورنر اور وزیراعلیٰ کی ہلاکت کی تصدیق

خرطوم: مغربی سوڈان میں گورنر اور وزیراعلیٰ کو لے جانا والا ہیلی کاپٹر حادثے کا شکار ہوگیا جس کے نتیجے میں 5 افراد ہلاک ہوگئے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق سوڈان کی ریاست القضارف میں گورنر سمیت اہم حکومتی شخصیات کو لے جانے والا ہیلی کاپٹر لینڈنگ سے قبل موبائل فون ٹاور سے ٹکرا کر تباہ ہوگیا۔

سرکاری ٹیلی ویژن نے ہیلی کاپٹر حادثے میں القضارف کے گورنر میر غنی صالح ، اُن کی کابینہ کے وزیراعلیٰ، صوبائی وزیر برائے زراعت، مقامی پولیس چیف اور بارڈر فورس کے محافظ  کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی ہے۔ ہیلی کاپٹر حادثہ ایتھوپیا کے سرحدی علاقے کے نزدیک پیش آیا تاہم سرکاری ٹیلی ویژن نے حادثے کی وجہ نہیں بتائی۔

دوسری جانب سوڈان کی نیوز ایجنسی سونا (SUNA) نے گورنر سمیت 6 اعلیٰ حکومتی شخصیات کی ہلاکت اور فوجی اہلکاروں کے زخمی ہونے کا دعویٰ کیا ہے۔ زخمیوں کو قریبی اسپتال میں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔

واضح رہے سوڈان کے زیادہ تر طیارے اور ہیلی کاپٹرز روسی ساختہ اور پرانے ہیں جس کے باعث حادثات معمول ہیں۔ رواں برس ستمبر میں فوجی طیارہ تباہ ہونے سے دو پائلٹ ہلاک جب کہ اکتوبر میں دو فوجی طیاروں میں تصادم سے 6 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

خلیج تعاون کونسل کا خطے کو درپیش خطرات کیخلاف مشترکہ کوششوں کا عزم

ریاض: خلیج تعاون کونسل نے جدوجہدِ فلسطین، شام کے بحران، یمن تنازع اور خطے کو درپیش دیگر خطرات سے نبردآزما ہونے کے لیے مشترکہ کاوشیں کرنے کا عہد کیا ہے۔

سعودی نیوز ایجنسی کے مطابق ریاض میں جی سی سی کا ایک روزہ 39 واں اجلاس اختتام پذیر ہوگیا جس میں سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، کویت، بحرین اور عمان کے سربراہان مملکت نے شرکت کی جب کہ قطر کی جانب سے وزیرخارجہ نے نمائندگی کی۔

اجلاس کے مشترکہ اعلامیہ کے مطابق خطے کو درپیش خطرات سے نمٹنے کے لیے رکن ممالک کے درمیان اتحاد اور مستحکم تعلقات کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے مشترکہ کاوشیں کرنے کا عہد کیا گیا ہے۔

رکن ممالک نے فلسطینیوں کو اسرائیلی مظالم سے نجات دلانے، شام میں جاری بحران کے خاتمے اور یمن کے تنازعے کو حل کرنے کے لیے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے اور ایران کے دہشت گردانہ عزائم کی حوصلہ شکنی پر زور دیا گیا۔

رکن ممالک نے اتفاق رائے سے جی سی سی جوائنٹ ملٹری کمانڈ کے نئے سربراہ کی نامزدگی کردی، قرعہ فال سعودی فوج کے لیفٹیننٹ جنرل عید اوواد کے نام نکلا جو جلد نئے چیف آف جوائنٹ ملٹری کمانڈ جی سی سی کی ذمہ داریاں سنبھال لیں گے۔

اجلاس کے دوران متحدہ عرب امارات نے آئندہ برس ہونے والے جی سی سی کے 40 ویں اجلاس کی میزبانی کی خواہش کا اظہار کیا جسے رکن ممالک نے اتفاق رائے سے قبول کرلیا۔

خلیجی عرب ممالک کی تنظیم کے 39 ویں اجلاس کی سب سے اہم بات سفارتی تعلقات منقطع کرنے کے باوجود سعودی فرماں روا کی جانب سے قطر کو مدعو کرنا تھا۔ تاہم امیر قطر تمیم بن حمد الثانی نے خود شرکت کرنے سے گریز کرتے ہوئے وفاقی وزیر خارجہ  سلطان بن سعد المریخی کی سربراہی میں ایک وفد کو بھیجا تھا

وائٹ ہاؤس کی ٹرمپ کے وزیراعظم عمران خان کو خط بھیجنے کی تصدیق

واشنگٹن: وائٹ ہاؤس نے صدر ٹرمپ کی جانب سے  وزیراعظم عمران خان کو خط بھیجے جانے کی تصدیق کردی ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق وائٹ ہاؤس نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کو خط بھیجے جانے کی تصدیق کردی ہے۔

ترجمان نیشنل سیکیورٹی کونسل نے خط کی تفصیل بتائے بغیر کہا کہ پاکستان سے افغان امن عمل کے لیے مکمل حمایت حاصل کرنے کے لیے درخواست کی گئی ہے، افغان مذاکراتی عمل کے کامیاب انعقاد پاکستان کے کردار کے بغیر ناممکن ہے۔

وائٹ ہاؤس ترجمان نے مزید کہا کہ خط میں یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ افغان امن عمل میں پاکستان کی مدد پاک امریکا شراکت کے لیے بنیادی اہمیت رکھتی ہے اور پاکستان میں یہ صلاحیت ہے کہ وہ اپنی سرزمین پر طالبان کے ٹھکانے نہ بننے دے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے دو روز قبل سینئرصحافیوں اوراینکرپرسنز سے ملاقات کے دوران بتایا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ایک خط موصول ہوا ہے جس میں افغان طالبان سے مذاکرات کے لیے پاکستان سے تعاون مانگا گیا ہے۔

پیرس: یونیورسٹی ٹیچر کے قتل کے الزام میں پاکستانی گرفتار

پیرس کی پولیس نے یونیورسٹی کے باہر ٹیچر کو قتل کرنے کے الزام میں مشتبہ پاکستانی نوجوان کو گرفتار کرلیا۔

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق پولیس نے بتایا کہ پیرس کے شمال مغرب کے مضافات میں قائم یونیورسٹی کے باہر 66 سالہ استاد پر چھرے سے حملہ کیا گیا۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ ’یونیورسٹی کے سابق پاکستانی طالبعلم نے لیونارڈو ڈاونچی یونیورسٹی کے باہر پےدر پے چھرے کے وار سے حملہ کیا۔

اس حوالے سے بتایا گیا کہ مشتبہ پاکستانی شخص 1981 میں پیدا ہوا تھا۔

پریسین نامی اخبار میں خبر شائع ہوئی کہ مقتول انگریزی کا استاد تھا اور اس کے گلے پر چھرے کے وار کیے گئے۔

واضح رہے کہ امریکا کی ریاست ٹیکساس کے ہائی اسکول میں مسلح شخص کی فائرنگ سے پاکستانی طالبہ سبیکا عزیز شیخ سمیت 10 طالبعلم جاں بحق ہوگئے تھے۔

واشنگٹن میں پاکستانی ایمبیسی نے تصدیق کی تھی کہ ہلاک شدگان میں کراچی سے تعلق رکھنے والی سبیکا عزیز شیخ بھی شامل ہیں جو کینیڈی لوگر یوتھ ایکسچینج پروگرام کے تحت امریکا میں پڑھائی کرنے گئی تھیں۔

سفارتکار عزیز احمد چوہدری نے ٹوئٹ کیا تھا کہ ‘ہماری دعا سبیکاعزیز شیخ کے اہلخانہ اور دوستوں کے ساتھ ہیں’۔

افغانستان میں پولیس چوکی پر حملے میں اہلکار اور 3 شہری ہلاک

کابل: افغانستان میں پولیس چوکی پر طالبان کے حملے میں پولیس اہلکار اور 3 شہری ہلاک ہوگئے جب کہ جوابی کارروائی میں 6 جنگجو بھی مارے گئے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق افغانستان کے صوبے ہرات میں پولیس چیک پوسٹ پر طالبان جنگجوؤں نے حملہ کردیا جس کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار اور 3 شہری ہلاک ہوگئے، پولیس کی جوابی کارروائی میں 6 جنگجو بھی مارے گئے۔

پوليس ترجمان عبدالاحد ولی زادہ نے میڈیا کو بتايا کہ درجن سے زائد طالبان جنگجوؤں نے پولیس چیک پوسٹ پر رات گئے حملہ کیا، پولیس نے جوابی کارروائی کرتے ہوئے طالبان جنگجوؤں کے عزائم خاک میں ملا دیے۔ زخمی طالبان فرار ہوگئے جن کی تلاش جاری ہے۔

دريں اثناء افغانستان کے صوبے ننگرہار ميں ايک مقامی ٹيلی وژن اسٹيشن کے ڈائریکٹر کو بھی اغواء کر ليا گيا ہے جب کہ مزاحمت کرنے پر ڈائریکٹر کے ڈرائیور کو قتل کردیا گیا، تاہم تاحال واضح نہیں کہ اغوا کس نے اور کن مقاصد کے لیے کیا۔

واضح رہے کہ افغانستان میں امن عامہ کی حالت نہایت مخدوش ہے اور ماسکو میں افغان مذاکراتی کانفرنس کی روسی کوشش بھی کامیاب نہیں ہوسکی جب کہ امریکی صدر نے وزیراعظم عمران خان کو خط لکھ کر امن مذاکرات میں مدد طلب کی ہے۔

Google Analytics Alternative