بین الاقوامی

نوبل انعام یافتہ خواتین کا بل گیٹس فاؤنڈیشن سے مودی کو ایوارڈ نہ دینے کا مطالبہ

اسلام آباد: نوبل انعام یافتہ خواتین نے بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں بنیادی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں پر بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو ایوارڈ سے نہ نوازیں۔

نوبل انعام یافتہ خواتین نے بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں بنیادی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور بھارت میں اقلیتوں پر حملوں اور گجرات میں معصوم لوگوں کے قتل عام میں بھارتی وزیراعظم نرینندر مودی کے ملوث ہونے کی وجہ سے انہیں ایوارڈ سے نہ نوازیں۔

فاؤنڈیشن کے نام اپنے مشترکہ خط میں میریڈ میگوائر، تاوکل عبدالسلام کارمان اور شیریں عبادی نے کہا انہیں یہ جان کر بڑی تشویش ہوئی ہے کہ بل اینڈمیلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن رواں ماہ کے آخر میں نریندر مودی کو ایوارڈ دینے جارہی ہے۔ مودی قیادت میں بھارت نے انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیاں کی ہیں۔ فاؤنڈیشن کے اس فیصلے کیخلاف آن لائن پٹیشن پر اب تک لاکھوں افراد دستخط کر چکے ہیں۔

بھارت پر تجارتی پابندیاں لگائی جائیں، ارکان یورپی پارلیمنٹ

برسلز: یورپی یونین کے ارکان پارلیمنٹ نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں پر بھارت کے خلاف تجارتی پابندیاں لگانے کے علاوہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں ملوث افراد پر سفری پابندیاں عائد کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

یورپی یونین کی پارلیمنٹ میں فرینڈز آف کشمیر گروپ کے شریک چیئرمین رچرڈ کوربیٹ نے برسلز میں کشمیر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مطالبہ کیا مقبوضہ کشمیر میں کرفیو ہٹانے کے لئے بھارت پر دباؤ ڈالنے کے لیے تمام ممکنہ اقدامات بروئے کار لائے جائیں۔

انہوں نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے باعث نئی دہلی پر تجارتی پابندیاں لگانے کے علاوہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں ملوث افراد پر سفری پابندیاں عائد کرنے کی تجویز دی۔

فرینڈز آف کشمیر گروپ نے مقبوضہ وادی میں صورتحال پر یورپی یونین میںقرارداد پیش کرنے کی کی بھی تجویز دی۔ یورپین پارلیمنٹ کے ارکان انتھیا، شفیق محمد، جان ہو ارتھ، ارینا وان ویز، تھریساگریفین، نوشینا مبارک اور راجہ نجابت حسین نے بھی خطاب کیا۔

اس موقع پر صدر آزاد کشمیر سردار مسعود نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عالمی برادری مقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزیوں کو رکوانے اور کشمیریوں کے حق خودارادیت کو یقینی بنانے کے لئے ٹھوس عملی اقدامات اٹھائے۔ وقت آگیا ہے کہ عالمی برادری بھارت کے ساتھ تجارت سمیت ہر قسم کے تعلقات کو مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی صورتحال کی بہتری اور کشمیری عوام کے بنیادی حق، حق خودارادیت کے ساتھ مشروط کرے۔

بھارت ایک منصوبہ بندی کے تحت مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی نسل کشی کر رہا ہے اور اگر بھارت کے خلاف عالمی سطح پر فوری اقدامات نہ اٹھائے گے تو وہاں ایک بڑا انسانی المیہ جنم لے سکتا ہے۔

پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے سردار مسعود نے کہا کشمیر بھارت کا حصہ تھا نہ بنے گا۔ انتہاء پسندانہ ہندو نظریات کو محض کشمیر، بھارت اور پاکستان کے مسلمانوں کے خلاف سمجھنا سنگین غلطی ہو گی۔

مانچسٹر میں خطاب کرتے ہوئے سردار مسعود نے کہاعالمی میڈیا نے بھارتی کرتوتوں کی قلعی کھول دی ہے۔

عوام راشی سرکاری افسروں کو ماریں، سزا نہیں دوں گا، فلپائنی صدر

منیلا: فلپائن کے صدر روڈریگو ڈوٹیرٹے نے اپنے ملک کے عوام کو ہدایت کی ہے کہ وہ رشوت طلب کرنے والے سرکاری ملازمین اور افسروں کی پٹائی کریں۔

فلپائنی صدرنے کہا کہ اگرآپ کے پاس آتشیں ہتیھار ہوں تو ان اہلکاروں کو گولی ماردیں جو رشوت لیتے ہوں اور کرپشن میں ملوث ہوںتاہم انہیں قتل نہ کریں، صرف زخمی کر دیں۔ سخت گیر صدر نے عوام سے وعدہ کیا ہے کہ اس اقدام پر انہیں جیل نہیں جانے دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ عوام ٹیکس دیتے ہیں سرکاری واجبات ادا کرتے ہیں اور کسی اہلکار کو ان سے رشوت طلب کر نے کی جرات نہیں ہونی چاہیے۔

چھ امریکی سینیٹرز کا مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار

اسلام آباد / واشنگٹن: چھ امریکی سینیٹرز نے بھارت میں امریکی سفیر اور اسلام آباد میں امریکی ناظم الامور کو خط لکھ کر مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق 6 امریکی سینیٹرز نے بھارت میں امریکی سفیر اور اسلام آباد میں امریکی ناظم الامور کو خط لکھ کر کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہارکیا ہے اور کہا ہے کہ وہ جموں و کشمیر میں پابندیاں اٹھانے اور صحافیوں کی رسائی کے لیے بھارتی حکومت پر دباؤ ڈالیں۔

امریکی سینیٹرز نے خط میں بتایا ہے کہ بھارتی حکومت نے جموں کشمیر میں مواصلاتی رابطے بند کررکھے ہیں، بڑی تعداد میں جبری گرفتاریوں، عصمت دری، رہنماؤں کی گرفتاریوں کی بھی اطلاعات ہیں، وادی میں کرفیو، اظہارِ  رائے، اجتماعات اور نقل وحرکت پر بندشیں ناقابل قبول ہیں۔

خط میں کہا گیا ہے کہ انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں بھی جموں کشمیرکی صورتحال پر الرٹ جاری کیے ہوئے ہیں اور وادی میں نسل کشی پر جینوسائیڈ واچ کے الرٹ پر گہری تشویش ہے، اس تمام تر صورتحال کے باعث پاکستان اور بھارت کے تعلقات مزید خراب ہونے کا خدشہ ہے، لہذٰا جموں کشمیر میں پابندیاں اٹھانے اور صحافیوں کی رسائی کے لیے بھارتی حکومت پر دباؤ ڈالا جائے۔

ٹرمپ نے اسامہ بن لادن کے بیٹے حمزہ کی ہلاکت کی تصدیق کردی

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کالعدم تنظیم القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کے بیٹے حمزہ بن لادن کی ہلاکت کی تصدیق کردی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کے بیٹے اور ممکنہ جانشین حمزہ بن لادن کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ حمزہ بن لادن پاکستان اور افغانستان کے درمیان سرحدی علاقے میں انسدادِ دہشت گردی کی ایک کارروائی کے دوران مارا جاچکا ہے۔

وائٹ ہاؤس سے جاری بیان کے مطابق امریکی صدر نے مزید کہا ہے کہ حمزہ بن لادن کا کئی دہشت گرد تنظیموں سے تعلق تھا اس کی موت سے دہشت گرد تنظیم القاعدہ ایک اہم اور ماہرانہ قیادت سے محروم ہوگئی، اب اس تنظیم کے سرگرمیوں کو بھی نقصان ہوگا۔

واضح رہے کہ حمزہ کی عمر 30 سال تھی اور وہ القاعدہ کے اہم لیڈر تھے، امریکا نے انہیں عالمی دہشت گرد قرار دیتے ہوئے ان کی معلومات فراہم کرنے پر 10 لاکھ ڈالر انعام کا اعلان کررکھا تھا۔

گزشتہ ماہ امریکی حکام نے حمزہ بن لادن کو انٹیلی جنس آپریشن میں قتل کرنے کا دعویٰ کیا تھا لیکن اس آپریشن کی کوئی تفصیلات فراہم نہیں کی گئی تھیں جب کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس بارے میں کوئی بات کرنے سے انکار کردیا تھا۔

بھارت مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی پامالیوں کی ذمہ داری قبول کرے، امریکی رکن کانگریس

نیویارک: امریکی رکن کانگریس راشدہ طلیب نے بھارتی حکومت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں ہونے والی انسانی حقوق کی پامالیوں کی ذمہ داری قبول کرے۔

امریکی رکن کانگریس راشدہ طلیب نے ٹوئٹ کرتے ہوئے مقبوضہ وادی میں بھارتی حکومت کی جانب سے 40 روز سے عائد لاک ڈاؤن کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں بھارتی حکومت پر زور دیتی ہوں کہ وہ مقبو ضہ کشمیر میں ہونے والی انسانی حقوق کی پامالیوں کی ذمہ داری قبول کرے اور اس کے ذمہ داران کو سزا دی جائے۔ وادی میں جاری کرفیو اور ذرائع مواصلات پر پابندی ہٹائی جائے تاکہ مقبوضہ کشمیر کی اصل صورتحال واضع ہو سکے۔

راشدہ طلیب نے مودی حکومت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں آرٹیکل 370 اور 35 اے کی منسوخی کی بھی پرزور مذمت کرتے ہوئے کہا میں آرٹیکل 370 اور آرٹیکل 35اے کی منسوخی کی شدید مذمت کرتی ہوں جس کے باعث وادی میں ذرائع مواصلات کی پابندی عائد کی گئی ہے، زندگی بچانے والی ادویات کا فقدان پیدا ہو گیا اور بڑے پیمانے پر انسانی حقوق کی پامالیاں جاری ہیں۔

ذرائع مواصلات پر پابندی کا مطلب صرف یہ نہیں کہ کشمیری اپنے خاندان والوں سے رابطے میں نہیں ہیں بلکہ اس کا مطلب یہ ہے کہ وادی میں ادویات کی قلت پیدا ہوگئی ہے اور عوام کو بنیادی طبی سہولیات بھی میسر نہیں ہیں۔

راشدہ طلیب نے کہا رپورٹس بناتی ہیں کہ تین ہزار سے زائد افراد کو بنا کسی جرم کے پبلک سیفٹی ایکٹ کے کالے قانون کے تحت گرفتار کیا جا چکا ہے۔ جن میں بچے، وکلاء، ڈاکٹرز، حریت رہنما، مذہبی رہنما اور سیاسی جماعتوں کے رہنما شامل ہیں۔

واضح رہے کہ بھارتی حکومت کی جانب سے مقبوضہ وادی میں آرٹیکل 370 اور 35 اے کی منسوخی کے بعد حالات نہایت کشیدہ ہیں۔ جب کہ وادی میں مودی حکومت کی جانب سے کیے جانے والے لاک ڈاؤن کو 40 روز سے زائد گزر چکے ہیں جس کے باعث کشمیری عوام کا دنیا سے رابطہ ٹوٹ چکا ہے۔

سعودی عرب کی بڑی آئل فیلڈ پر ڈرون حملے

ریاض: سعودی عرب کے شہر بقیق میں تیل کے کنوؤں اور پراسسنگ پلانٹ پر ڈرون حملے ہوئے جس کے نتیجے میں شدید مالی نقصان ہوا۔

سعودی شہر بقیق میں بڑی آئل فیلڈ اور ارامکو کمپنی کے پلانٹ پر ڈرون حملے ہوئے جس کے نتیجے میں وہاں خوفناک آگ بھڑک اٹھی۔ آگ نے دیکھتے ہی دیکھتے بڑے علاقے کو اپنی لپیٹ میں لے لیا اور کافی مالی نقصان پہنچا۔

امدادی اداروں اور آگ بجھانے والے اہلکاروں نے سخت جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پا لیا ہے۔ سعودی وزارت داخلہ نے ڈرون حملوں کی تصدیق کی ہے تاہم مزید تفصیلات نہیں بتائیں کہ کتنا جانی و مالی نقصان ہوا۔

تاحال کسی تنظیم نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی تاہم سعودی عرب پر پڑوسی ملک یمن سے حوثی باغی اکثر میزائل حملے کرتے رہتے ہیں۔ واقعے کی آن لائن ویڈیوز بھی سامنے آئی ہیں جن میں دھویں کے کالے بادل اٹھ رہے ہیں اور آگ کے شعلے آسمان سے باتیں کررہے ہیں۔

ارامکو کا کہنا ہے کہ بقیق پلانٹ دنیا میں خام تیل کا سب سے بڑا پلانٹ ہے۔ ایک بار فروری 2016 میں القاعدہ نے بھی اس پلانٹ پر خودکش حملے کی کوشش کی تھی۔

بھارت کے سرکاری اعداد و شمار نے خود مقبوضہ کشمیر میں مظالم کی تصدیق کردی

سری نگر: بھارتی حکومت نے مقبوضہ کشمیر میں ظلم و ستم پر خود سرکاری اعداد و شمار جاری کردیے ہیں۔

بھارت کے سرکاری اعداد و شمار نے خود ہی مقبوضہ کشمیر میں مودی حکومت کے ظلم و ستم کو بے نقاب کردیا ہے، غیر ملکی خبر رساں ادارے کی جانب سے منظر عام پر آنے والی بھارتی سرکاری رپورٹ میں وادی کے 13 پولیس ڈسٹرکٹس کی تفصیلات بیان کی گئی ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بھارتی حکام نے گذشتہ 40 روز میں 4 ہزار سے زائد افراد کو گرفتار کیا جن میں سابق وزراء اعلیٰ سمیت 200 سے زائد سیاستدان شامل ہیں جب کہ 3 ہزار سے زائد افراد صرف پتھراؤ کے الزام میں گرفتار ہوئے اور ڈیڑھ سو سے زائد افراد شدت پسند گروپوں سے تعلق پر گرفتار ہوئے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 1200 سے زائد افراد کئی روز سے گرفتار اور قانونی حقوق سے محروم ہیں، لوگوں کی بہت بڑی تعداد گھروں میں نظر بند بھی ہے، سرکاری اعدادوشمار پر ردعمل کے لیے عالمی میڈیا کے رابطے بھی یکسر نظر انداز کیے جارہے ہیں، بھارتی حکام گرفتاریوں کی وجوہات جاننے کے لیے عالمی میڈیا کے رابطوں پر جواب دینے سے بھی گریز کررہی ہیں۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ وادی میں لاکھوں لوگوں کو ادویات اور اشیائے خوراک تک رسائی نہیں جب کہ انٹرنیٹ اور موبائل سروسز مسلسل بند ہیں، اس کے علاوہ سکیورٹی فورسز اور مقامی کشمیریوں کے درمیان جھڑپیں معمول بن چکی ہیں۔

Google Analytics Alternative