بین الاقوامی

استنبول میں امریکی قونصل خانے پر فائرنگ

turkey

ترکی کے شہر استنبول میں پیر کی صبح امریکہ قونصل خانے کی عمارت پر دو مسلح افراد نے فائرنگ کر دی، پولیس کی جوابی کارروائی میں حملہ آور فرار ہو گئے۔ اس حملے میں کسی جانی نقصان اطلاع نہیں ملی۔ اطلاعات کے مطابق حملے میں ایک مرد اور ایک عورت ملوث تھی۔ خبر رساں ادارے’ ’رائیٹرز‘‘ کے مطابق پولیس نے امریکی قونصلیٹ پر حملے میں مبینہ طور پر ملوث ایک خاتون کو تحویل میں لے لیا ہے۔ فائرنگ کے اس واقعہ کے بعد قونصل خانے کی عمارت کے اردگرد سکیورٹی بڑھا دی گئی۔ ترکی میں حالیہ ہفتوں میں تشدد کے کئی واقعات ہوئے ہیں۔ ملک میں تشدد کے کارروائیاں ایسے وقت دیکھی گئیں جب ترکی کی حکومت نے کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) کے خلاف کارروائیاں تیز کر رکھی ہیں جب کہ شدت پسند تنظیم’ ’داعش‘‘ کے خلاف کارروائی میں بھی ترکی اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ امریکی قونصلیٹ پر حملے سے کچھ گھنٹے قبل ہی ترکی کے علاقے سلطان بیلی میں ایک پولیس اسٹیشن کے قریب بم دھماکے میں کم از کم سات اہلکار زخمی ہو گئے تھے

سعودی مسجد پر خودکش حملہ کرنیوالا شخص حراست میں تھا لیکن پھر چھوڑدیاگیامگر کیوں؟

bomber

ریاض (نیوزڈیسک) گمراہ کن نظریات کی بناءپر معصوم انسانوں کی جان لینے والے دہشت گرد کس طرح قانون کے ہاتھوں سے نکل جاتے ہیں اس کی تازہ مثال سعودی عرب میں خوفناک خودکش حملہ کرنے والے دہشت گرد کسی صورت میں سامنے آئی ہے۔ ’عرب نیوز‘ کے مطابق جمعرات کے روز سعودی سپیشل فورسز کی مسجد میں خود کش حملہ کرنے والے دہشت گرد یوسف بن سلمان کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ اسے شدت پسند نظریات رکھنے کی وجہ سے ماضی میں گرفتار کیا گیا تھا لیکن اس کے خلاف شواہد نہ ہونے کی وجہ سے اسے چھوڑ دیا گیا۔
اکیس سالہ یوسف کو دو سال قبل گرفتار کیا گیا تھا اور وہ ریاض کی الحیر جیل کے بحالی مرکز میں بھی رہا جہاں اسے شدت پسند نظریات اور داعش کی حمایت کے نظریات سے نجات دلانے کیلئے اس کی اصلاح کی کوششیں کی جاتی رہیں۔ اس کے خلاف ثبوت موجو د نہ ہونے پر 45 دن بعد اسے چھوڑ دیا گیا۔ اسکا تعلق الجوف کے علاقے شکاکہ سے تھا اور اس نے کبھی بھی کسی دوسرے ملک کا سفر نہ کیا تھا۔
ذرائع کے مطابق یوسف سوشل میڈیا پر شدت پسندوں کے فریب میں آگیا تھا اور داعش میں شمولیت اختیار کرلی تھی۔ دہشت گردی سے متعلق سوشل میڈیا ویب سائٹوں پر ہی اس کی تصاویر اور وصیت کے آڈیو کلپ بھی جاری کئے گئے تھے۔ تجزیہ کاروںکا کہنا ہے کہ بظاہر معمولی شدت پسند نظر آنے والے نوجوان کے بارے میں کسی کو اندازہ نہ تھا کہ وہ نہ صرف اپنی جان کا دشمن ہوچکا تھا بلکہ دوسرے انسانوں کی زندگی بھی اس کیلئے کوئی معنی نہ رکھتی تھی اور وہ موت کے جنون میں مبتلا ہو کر انسانیت کیلئے بڑا خطرہ بن چکا تھا۔

دھرنے میں عمران خان کو جنرل راحیل شریف کا مشورہ مان لینا چاہیے تھا ، جسٹس (ر) وجیہ الدین احمد

4
تحریک انصاف کے رہنما جسٹس (ر) وجیہ الدین احمد نے روز نیوز کے پروگرام ‘‘سچی بات ایس کے نیازی کیساتھ ’’ میں گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ جب جنرل راحیل شریف نے عمران خان کو گارنٹی دی تھی کہ اگر وہ استعفے کے علاوہ باقی مطالبات مان لیتے ہیں تو وہ جوڈیشل کمیشن کی گارنٹی کرتے ہیں اس پر مشورہ مان لینا چاہیے تھا ۔

ق لیگ کی باقیات تحریک انصاف میں پیسہ استعمال کرتی ہیں ، جسٹس (ر) وجیہ الدین

3
جسٹس (ر) وجیہ الدین نے روز نیوز کے پروگرام ‘‘سچی بات ایس کے نیازی کیساتھ ’’ میں گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ تحریک انصاف میں وہ شخصیات جو پیسہ استعمال کرتی ہیں وہ آگے آتی ہیں ، پارٹی میں آگے آنے کے لئے پیسہ استعمال کیا گیا

جنرل پاشا اور جنرل ظہیرالاسلام کے خلاف الزامات کی تحقیقات ہونی چاہیں ، جسٹس (ر) وجیہ الدین

جسٹس(ر) وجیہ الدین نے چیف ایڈیٹر پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز سردار خان نیازی سے ان کے پروگرام ‘‘سچی بات ایس کے نیازی کیساتھ ’’ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سابق آئی ایس آئی چیف جنرل پاشا اور جنرل ظہیر الدین کے خلاف لگائے گئے الزامات کی تحقیقات ہونی چاہیں 2

سعودی عرب اور مصر کے درمیان “مشترکہ عرب فوج” بنانے کا معاہدہ

سعودی عرب اور مصر نے ایک کثیر جہتی معاہدے پر دستخط کیے ہیں جس کے تحت دونوں ممالک کے درمیان دفاعی اور معاشی تعاون بڑھایا جائے گا اور اسے مزید توسیع دے کر مشترکہ عرب دفاعی فورس قائم کرنے میں مدد ملے گی۔

قاہرہ میں مصری صدرعبدالفتاح السیسی اور سعودی عرب کے وزیر دفاع محمد بن سلمان کے درمیان طویل مذاکرات کے بعد ’معاہدہ قاہرہ‘ منظرِعام پرآیا ہے جس کے تحت دونوں ممالک مشترکہ عرب افواج کے لیے کوشش کریں گے۔ ملاقات کے بعد جاری ایک مشترکہ بیان کے تحت عرب ممالک وزرائے خارجہ اور وزرائے دفاع اس سال 27 اگست کو قاہرہ میں ہونے والے ایک غیرمعمولی اجلاس میں شرکت کریں گے جس میں عرب مشترکہ فورس کے لیے ابتدائی گفتگو کی جائے گی۔

مصر کے صدارتی آفس سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں جانب سے خطے میں استحکام اور سیکیورٹی کے لیے تمام تراقدامات کرنے پر زور دیا گیا اور عرب ممالک کے تحفظ کے لیے مشترکہ طور پر کام کرنے پراتفاق ہوا ہے، “قاہرہ اعلامیہ” کے تحت ٹرانسپورٹ اور توانائی میں بھی تعاون بڑھایا جائے گا۔ اجلاس میں دونوں ممالک نے شام اور عراق میں سرگرم داعش سے نمٹنے کا عزم بھی ظاہرکیا۔

عراقی فوج نے 108داعش جنگجو ہلاک کر دیے

عراقی فوج کے آپریشن کے دوران داعش کے  108جنگجو ہلاک ہوگئے۔ذرائع ابلاغ کے مطابق عراقی فضائیہ نے دارالحکومت بغداد سے 428 کلومیٹر دور مغرب میں صوبہ انبار کے اتباہ قصبے میں داعش پر بمباری کی جس میں13جنگجو ہلاک ہوگئے۔ المدہق علاقے میں چھاپہ مار کارروائی کے دوران مزید 12جنگجو مارے گئے۔ رمادی کے مغرب میں20 جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا۔ انبار کے دیگر علاقوں میں فورسز نے 30 جنگجوؤں کو ہلاک اور متعدد بارودی سرنگوں کو ناکارہ بنادیا۔ کرما، دھیرا، ادجلا اور الفارس کے علاقوں میں بھی داعش کے 23جنگجو مارے گئے۔

امریکی فوج کی بمباری سے عراقی سرحد کے قریب شامی علاقے میں داعش کے زیر استعمال 2 پل تباہ ہوگئے۔ دریں اثنا امریکی فوج نے عراق اور شام میں داعش کے ٹھکانوں پر 41 فضائی حملے کیے ہیں۔ دوسری طرف شام کے شمال میں  القاعدہ سے تعلق رکھنے والے شدت پسند شامی گروہ النصرہ فرنٹ نے امریکی تربیت یافتہ باغیوں پر حملہ کر کے 11 افراد کو ہلاک کر دیا ہے۔

اے ایف پی کے مطابق ترکی کے جنوبی علاقے عدانا میں کرد جنگجوؤں کے حملے میں مزید  2 ترک پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے۔ ترک صدر رجب طیب اردوان نے کہا کہ انقرہ حکومت پرداعش کی مدد کا الزام سیاہ پروپیگنڈا ہے۔ یہ بات انہوں نے اپنے دورہ انڈونیشیا کے موقع پر کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ ترکی نے دہشت گردوں کے خلاف کارروائیوں میں بہت نقصان اٹھایا ہے مگر وہ عسکریت پسندوں کے خلاف اپنی کارروائیوں میں پرعزم ہے۔

طیارہ حادثہ: اسامہ بن لادن کی بہن اور ماں سمیت تین افراد ہلاک

برطانیہ سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق اسامہ بن لادن کی ہمشیرہ اور سوتیلی ماں طیارے کے ایک حادثے میں جاں بحق ہو گئیں ہیں۔اس حادثے میں اسامہ بن لادن کے بہنوئی اور طیارے کا اُردنی پائلٹ بھی ہلاک ہو گیا ہے۔ برطانیہ کے علاقے ہیمپشائر میں حادثے کا شکار ہونے والے نجی طیارے کے بارے میں سعودی سفارتخانے کا کہنا ہے کہ اس میں اسامہ بن لادن کے خاندان کے افراد سوار تھے۔ جمعے کو بلیک بش ہوائی اڈے پر پیش آنے والے اس حادثے میں پائلٹ اور طیارے میں سوار تینوں مسافر ہلاک ہوگئے تھے۔ سعودی سفارت خانے کی جانب سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ برطانیہ میں سعودی سفیر شہزادہ محمد بن نواف ال سعود نے ہلاک ہونے والے افراد کے خاندان سے تعزیت کی ہے۔سعودی سفارت خانے سے جاری بیان کے مطابق شہزادہ محمد بن نواف ال سعود نے اس حادثے کے نتیجے بن لادن خاندان کو جو بہت بڑا نقصان ہوا ہے اور سفیر محترم نے اس حادثے پر خاندان اور ان کے عزیز واقارب سے تعزیت کی ہے۔ سفارت خانے نے مزید کہا ہے کہ سعودی حکام اس حادثے کی تحقیقات کرنے والے برطانوی اہلکاروں سے رابطے میں ہیں۔ سعودی سفارتی ذرائع نے بتایا ہے کہ وہ برطانوی حکام کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں اور ان کی کوشش ہے کہ مرنے والوں کی میتوں کو جلد از جلد تدفین کے لیے سعودی عرب پہنچایا جائے۔ سعودی سفارت خانے نے ہلاک ہونے والے مسافروں کے نام ظاہر نہیں کیے ہیں۔ اطلات کے مطابق اٹلی سے برطانیہ آنے والا یہ طیارہ القاعدہ کے سابق سربراہ اسامہ بن لادن کے خاندان کی ملکیت تھا۔ خیال رہے کہ جمعے کو بلیک بش ہوائی اڈے پر لینڈنگ کے وقت یہ طیارہ بے قابو ہو کر رن وے کے جنگلے کو توڑتا ہوائی اڈے کے قریب واقع کاروں کے ایک شو روم میں کھڑی گاڑیوں سے ٹکرا کر تباہ ہو گیا تھا۔

Google Analytics Alternative