بین الاقوامی

سعودی اتحادی افواج یمن میں انسانیت کے خلاف جرائم میں ملوث”اقوام متحدہ”

نیویارک: اقوام متحدہ مانیٹرنگ گروپ نے کہا ہے کہ یمن میں سعودی اتحادی افواج کے بعض حملے انسانیت کے خلاف جرائم ہوسکتے ہیں،جن میں تمام فریقین ملوث ہیں۔اقوام متحدہ کے مانیٹرنگ گروپ نے سکیورٹی کونسل کو سالانہ رپورٹ پیش کی ،جس میں کہا گیا ہے کہ سعودی اتحادی افواج یمن میں انسانیت کے خلاف جرائم میں ملوث ہو سکتی ہیںرپورٹ کے مطابق سعودی اتحادی افواج نے یمن میں شہری آبادی کونشانہ بنایا اور سعودی اتحادی افواج کی جانب سے بعض فضائی حملے انسانیت کے خلاف جرائم ہو سکتے ہیں۔پینل کے ماہرین کے مطابق سعودی افواج نے یمن میں119 ایسے فضائی حملے کیے، جن میں متعدد شہری علاقوں کو ہدف بنایا گیا، ان حملوں میں بین الاقوامی انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی گئی ہے۔

افریقہ،مردوں کی تعداد انتہائی کم، بیک وقت2شادیاں رچاؤ یا جیل جاؤ

ایریٹریا: افریقی ملک ایریٹریا میں مردوں کی تعداد انتہائی کم ہوگئی ہے جس کے بعد مردوں کے لیے بیک وقت دو شادیاں کرنے کا سرکاری فرمان جاری کر دیا گیا ہے جس کی خلاف ورزی کی تو جیل بھی جانا پڑ سکتا ہے۔ایریٹریا حکومت کی جانب سے جاری کئے گئے سرکاری فرمان کے مطابق ملک کے مفتی اعظم کی جانب سے جہاں مردوں کو بیک وقت دو شادیاں رچانے کا پابند کردیا گیا ہے وہیں پہلی بیویوں کو بھی پابند کیا گیا ہے کہ وہ مجازی خداؤں کو دوسرا بیاہ رچانے کی اجازت دیں ورنہ جیل کی ہوا کھائیں۔یہ انوکھا فرمان اس لیے جاری کیا گیا کیونکہ ایریٹریا میں مردوں کی تعداد انتہائی کم ہے اور کئی خواتین دلہن بننے کے انتظار میں بوڑھی ہوتی جارہی ہیں۔

بان کی مون دہشت گردوں کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں “اسرائیلی وزیراعظم”

یروشلم: اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو نے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بان کی مون پر دہشت کی حوصلہ افزائی کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردوں کی حوصلہ افزائی کا کوئی جواز نہیں ہے۔

اسرائیلی وزیراعظم نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کی جانب سے فلسطینیوں کی احتجاج اور مظاہروں کو انسانی فطرت قرار دینے کے بیان کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے کہا کہ بان کی مون دہشت گردوں کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں۔

بینجمن نیتن یاہو نے فلسطین پر بھی ریاست کے قیام کے خلاف کام کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ فلسطینی ’قاتل‘ ریاست قائم نہیں کرنا چاہتے بلکہ وہ ایک ریاست کو تباہ کرنا چاہتے ہیں۔ انھوں نے بین الاقوامی فورم کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ بہت عرصے پہلے ہی اپنی غیر جانبداری اور اخلاقی قوت کھو چکا ہے۔

واضح رہے کہ بان کی مون نے سلامتی کونسل میں اپنے ایک بیان میں فلسطین کا حوالہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ اپنے گھروں پر قبضے کے خلاف درعمل ظاہر کرنا مظلوم طبقے کی فطرت ہوتی ہے جس کے نتیجے میں اکثر نفرت اور انتہا پسندی کی افزائش ہوتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حملوں کی حالیہ لہر فلسطینی نوجوانوں میں تنہائی اور مایوسی کے گہرے احساس کا نتیجہ ہے، 50 برس سے قبضے کے خلاف اور امن کے لئے کوشاں فلسطینیوں کی مایوسی میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔

بان کی مون نے فلسطینیوں کی جانب سے اسرائیلیوں پر چاقوؤں سے حملوں کے حالیہ واقعات کی بھی مذمت کی لیکن ساتھ ہی کہا کہ اسرائیل کی جانب سے مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں غیر قانونی تعمیرات فریقین کے درمیان کئے گئے وعدوں پر شکوک و شبہات کو جنم دے رہی ہیں۔

اٹلی کے وزیراعظم اور ایرانی صدر کا کاروباری سمجھوتوں پر دستخط

روم: ایران کے صدر حسن روحانی کے اٹلی کے دارالحکومت روم کے عجائب گھر میں تقریب میں شرکت کی وجہ سے وہاں موجود بے لباس مجسموں کو ڈھانپ دیا گیا۔ایران کے صدر حسن روحانی یورپ کے 5روزہ دورے پر ہیں۔ روم کے عجائب گھر میں اٹلی کے وزیراعظم ماتیو رینزی اور ایرانی صدر نے کاروباری سمجھوتوں پر دستخط کئے۔ اس موقع پر عجائب گھر میں موجود بے لباس مجسموں کو ڈھانپ دیا گیا تھا تاکہ ایرانی صدر کو کسی قسم کی ناگواری نہ ہو۔اٹلی نے ایرانی صدر کے اعزاز میں دیے گئے سرکاری عشائیے میں وائن بھی نہیں رکھی کیونکہ ایران میں شراب نوشی کی سخت ممانعت ہے

لندن،نصرت غنی نے داعیش پر کڑی تنقید کی

لندن: برطانوی قدامت پسند جماعت سے تعلق رکھنے والی مسلمان رکن پارلیمنٹ نصرت غنی نے داعش میں شمولیت کے لئے شام جانے والی خواتین کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگرد گروپ خواتین کو بہترین زندگی کے خواب دکھاتا ہے مگر یہ کوئی چھٹیوں کا پیکج نہیں ہے۔ انہوں نے مسلمان خواتین کے نقاب کرنے پر بھی تنقید کی اور کہا کہ نوعمر لڑکیوں کے نقاب کرنے پر پریشانی ہوتی ہے، یہ سمجھنا مشکل ہے کہ کوئی خاتون اپنا چہرہ چھپا کر کیوں ’نامعلوم‘ بن جاتی ہے۔ نصرت غنی سے بتایا کہ وہ اپنی فیملی میں پہلی لڑکی تھی جو سکول گئی۔ انہوں نے مزید کہا داعش کی جانب سے سنی اسلام کا انتہاپسند تصور استعمال کرتے ہوئے نوجوانوں کو گمراہ کیا جا رہا ہے۔

افغان پولیس اہلکارا 10 ساتھیوں کو قتل کر کے فرار

کابل: افغانستان کے جنوبی صوبے میں پولیس اسٹیشن کے اندر ایک ہلکارا فائرنگ کر کے اپنے 10 ساتھیوں کو قتل کرنے کے فرار ہوگیا جب کہ حملے کی ذمہ داری طالبان نے قبول کرلی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق افغانستان کے جنوبی صوبے رزگان کے ضلع چنارٹو کے ایک پولیس اسٹیشن میں اہلکار نے فائرنگ کرکے اپنے 10 ساتھیوں کو ہلاک کرنے کے بعد اسلحہ لے کر فرار ہوگیا۔ صوبے رزگان کے گورنر ہاؤس کے ترجمان کے مطابق ابتدائی تحقیقات کے مطابق فائرنگ کرنے والا پولیس اہلکار طالبان سے متاثر تھا جس نے اپنے ساتھیوں کو نشہ آور چیز کھلائی اور بیہوش ہونے کے بعد فائرنگ کر کے 10 اہلکاروں کو قتل کرنے کے بعد ان کا اسلحہ لے کر فرار ہوگیا۔دوسری جانب ڈپٹی پولیس چیف رحیم اللہ خان نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ قاتل پولیس اہلکار کو گرفتار کرنے کے لئے آپریشن شروع کردیا گیا ہے۔افغان سیکیورٹی فورسز پر رواں ہفتے کے دوران اندر سے کیا جانے والا یہ دوسرا حملہ ہے جب کہ طالبان نے حملے کی ذمہ داری بھی قبول کرلی۔

کشمیری عوام نے بھارت کا یوم جمہوریہ ’’ یوم سیاہ‘‘ کے طور پر منایا

سلام آباد/مظفرآباد،نئی دہلی: پاکستان کے چاروں صوبوں، آزاد اور مقبوضہ کشمیر ، گلگت بلتستان سمیت دنیا بھر میں کشمیریوں نے نے بھارت کا یوم جمہوریہ ’’ یوم سیاہ‘‘ کے طور پر منایا ،ریاست کے دونوں اطراف عام ہڑتال کی گئی اور کاروباری مراکز بند رکھے گئے ، تمام ضلعی، تحصیل، سٹی مقامات پر جلسے، جلوس ریلیاں، احتجاجی مظاہرے کر کے اقوام متحدہ کے مشن دفاتر کے سامنے دھرنے دیئے گئے اور یادداشتیں پیش کی گئیں جبکہ بھارت کایوم جمہوریہ سنگینو ں کے سائے تلے منا یا گیا ، فرانسیسی صدر نے بھی شرکت کی ۔تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر چوہدری عبدالمجید اور آل پارٹیز حریت کانفرنس کی مشترکہ کال پر منگل کو بھارت کا یوم جمہوریہ ریاست جموں وکشمیر کے دونوں اطراف، پاکستان کے چاروں صوبوں گلگت بلتستان سمیت دنیا بھر میں کشمیری یوم سیاہ کے طو ر پر منایا گیا ،ریاست کے دونوں اطراف عام ہڑتال اورکاروباری مراکز بند رہے ، تمام ضلعی، تحصیل، سٹی مقامات پر جلسے، جلوس ریلیاں، احتجاجی مظاہرے کر کے اقوام متحدہ کے مشن دفاتر کے سامنے دھرنے دیئے گئے اورشرکاء نے اقوام متحدہ کے مبصرین کو یادداشتیں بھی پیش کیں ،اس موقع پر بھارت کے خلاف شدید نعرے بازی کی اور بھارتی پرچم اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے پتلے نذر آتش کئے ۔شرکاء نے عالمی برادری سے مقبوضہ کشمیر میں جاری پرتشدد کارروائیوں ، انسانی حقوق کی پامالیوں اور قتل و غارت گری سمیت تشدد کی دیگر اقسام کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ۔ کشمیر لبریشن سیل کے زیر اہتمام سب سے بڑا اجتماع مرکز ی ایوان صحافت میں ہوا جس سے وزیر اعظم آزا د کشمیر چوہدری عبدالمجید ، وزیر خزانہ چوہدری لطیف اکبر سمیت سے تمام سیاسی سماجی جماعتوں کے نمائندگان خطاب کیا ۔دوسری جانب بھارت نے منگل کو اپنا 67 واں یوم جمہوریہ منا یا۔ اس موقع پر صدر پرناب مکھرجی نے بھارتی ترنگے کی پرچم کشائی کی اور روایتی طور پر 21 توپوں کی سلامی لی۔یوم جمہوریہ کے مہمان خصوصی کے طور پر فرانسیسی صدر فرانسوا اولاند بھارتی صدر، وزیر اعظم اور ملک بیرون ملک سے آئے دیگر سفارتکاروں کے ساتھ راج پتھ پر منعقد پریڈ کا لطف لیتے رہے ۔تاریخ میں پہلی بار روسی فوجی دستے نے پریڈ میں حصہ لیااس کے ساتھ مرکزی ریزرو پولیس فورس کا خواتین دستہ اور فوج کے ڈاگ سکواڈ کو بھی پریڈ میں شامل کیا گیا ہے۔یوم جمہوریہ کے موقع پر دارالحکومت دہلی میں سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق 50 ہزار سکیورٹی اہلکار کو تعینات کیا گیا ہے جن میں 15 ہزار نیم فوجی دستے سے تعلق رکھتے ہیں۔پریڈ کے روپ پر تقریباً 15 ہزار سی سی ٹی وی کمیرے نصب کیے گئے ہیں تاکہ ساری نقل و حرکت پر نظر ہو۔اس موقع پر دہلی کے تاریخی لال قلعے میں تین دن کا ’بھارت پرو‘ تہوار شروع ہو گیا ہے۔جبکہ سرکاری ٹی وی پرسار بھارتی یوم جمہوریہ کے دن کلاسیکی موسیقی کے 24 گھنٹے چلنے والے چینل ’راگم‘ کا آغاز ہو گیا ہے۔ یہ آکاش وانی (آل انڈیا ریڈیو) کی ویب سائٹ اور ڈی ٹی ایچ کے ذریعہ دستیاب ہوگا۔واضح رہے کہ یوم جمہوریہ کی تقریب سے قبل صدر پرناب مکھرجی نے اپنے خطاب میں پڑوسی ممالک کے ساتھ تمام مسائل کے حل کے لیے بات چیت کی اہمیت پر زور دیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’گولیوں کی بوچھار کے درمیان بات چیت ممکن نہیں۔صدر نے اپنی تقریر میں کہا کہ انتہا پسندی اس کینسر کی طرح ہے، جسے آپریشن سے کاٹ کر باہر نکال دینا چاہیے۔انھوں نے کہا کہ ’خشک سالی، سیلاب اور بین الاقوامی کساد بازاری کے باوجود بھارت نے 7.30 فیصد کی ترقی کی شرح حاصل کی تاہم معیشت کو مزید مضبوط کرنے کی ضرورت ہے۔دریں اثنا ء بھارت کے 67 ویں یوم جمہوریہ کے موقع پر پریڈ کا انعقاد کیا گیا اور پریڈ کی اس کے علاوہ بھارتی بحریہ نے بھی فلائی پاسنگ کا مظاہرہ کیا،یوم جمہوریہ پر منعقدہ بھارتی فوج کی جانب سے اسلحہ کی نمائش کی گئی ،تقریب میں بھارتی وزیرا عظم نریندرمودی ،اترپردیش کے وزیراعلی شیو راج سنگھ سوہان اور راجھستان کے وزیراعلی ویشیوا راجے سمیت دیگر اعلی حکام نے شرکت کی اس موقع پر بھارتی وزیر اعظم نے قوم کو یوم جمہوریہ کی مبارکباد دی ،دارالحکومت نئی دہلی سمیت ملک بھرمیں سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے اور پریڈ ویونیو کے مقام کی فضائی نگرانی بھی کی جاتی رہی ،پریڈ میں شرکت کیلئے آنے والے شرکاء کو سخت چیکنگ کے مراحل سے گزرنا پڑا اس دوران سکیورٹی پر معمور اہلکار لوگوں سے الجھتے رہے اور ان کے ساتھ بدسلوکی بھی کی۔

بھارتی جنگی طیارے نے راجھستان میں پاکستان کی سرحد کے قریب واقع علاقے پر بم گرائے

راجستھان: ہندوستان کی ایئرفورس کے ایک جنگی طیارے نے راجستھان میں 5 بم گرائے، تاہم اس بمباری سے کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا۔

ہندوستانی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق جنگی طیارے نے راجھستان میں پاکستان کی سرحد کے قریب واقع علاقے بارمر میں گڈگی کے مقام پر بم گرائے۔

رپورٹس میں دعویٰ کیا گیا کہ یہ بم حادثاتی طور پر اس علاقے میں گرے۔

جنگی جہاز سے گرائے گئے پانچوں بموں کی آوازیں 10 کلومیٹر دور تک سنی گئیں.

Google Analytics Alternative