Home » کالم » بلوچستان میں دہشت گردی۔۔۔دشمن مذموم عزائم میں کامیاب نہیں ہوسکتا
adaria

بلوچستان میں دہشت گردی۔۔۔دشمن مذموم عزائم میں کامیاب نہیں ہوسکتا

کوئٹہ ایک بار پھر دہشت گردی کی زد میں آگیا، ہزارہ گنجی فروٹ اینڈسبزی منڈی میں خود کش حملے میں سیکورٹی پر مامور ایف سی اہلکاراور ایک بچے سمیت 20افراد شہید جبکہ چار ایف سی اہلکاروں سمیت 50افراد ہو گئے ،مرنیوالوں میں ہزارہ برادری کے 8افراد شامل ہیں، دھماکہ اتنازوردار تھا کہ اس کی آواز دور دور تک سنی گئی، دھماکے کے بعدہر طرف چیخ و پکار مچ گئی اور لوگ اپنے پیاروں کو تلاش کر تے رہے، دھماکے سے چار گاڑیاں تباہ ، درجنوں دکانوں اور عمارتوں کے شیشے ٹوٹ گئے۔ دھماکے میں 10کلو دھماکہ خیز مواد کیلیں اورنٹ بولٹ استعمال کئے گئے ،خود کش حملہ آورکی ٹانگیں اور دیگر اعضا تحویل میں لے لئے گئے ،واقعہ کے خلاف ہزارہ برادری نے احتجاج کیااور کوئٹہ چمن شاہراہ بلاک کردی۔دہشت گردی کادوسراواقعہ چمن میں مال روڈپرفلسطین چوک میں پیش آیا جس میں دوافرادجاں بحق اوردس زخمی ہوئے۔ وزیر داخلہ بلو چستا ن میر ضیااللہ لانگو نے صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ دھماکے کا ہدف کوئی خاص کمیونٹی نہیں تھی،سیف سٹی منصوبہ جلد مکمل کریں گے قاتلوں تک پہنچ کر انہیں کیفر کردار تک پہنچائیں گے ، کوئٹہ کاواقعہ انتہائی افسوسناک اورقابل مذمت ہے۔ سیکیورٹی فورسزدہشت گردی کے خاتمے کیلئے پُرعزم ہیں۔ملک دشمن قوتیں اوردہشت گرد عناصر بلوچستان میں افراتفری اور بد امنی پھیلا کر صوبے کے امن کو خراب کررہے ہیں۔خود کش دھماکہ کرنے والے نہ تو مسلمان ہیں نہ ہی انسان کہلانے کے لائق ہیں۔ بھارت نہیں چاہتا کہ پاکستان اور خاص کر بلوچستان ترقی کی راہ پر گامزن ہو جائے ، بلوچستان میں دہشت گردی میں ہمیشہ بھارت ملوث رہاہے اور اس حوالے سے حکومت پاکستان نے ثبوت بھی فراہم کئے،پاکستان میں بھارت کی کھلم کھلا مداخلت اس امر کا بین ثبوت ہے کہ وہ اب بھی پاکستان کے خلاف خفیہ کارروائیوں میں مصروف ہے۔ہمیں اس پوشیدہ و ازلی دشمن سے ہمیشہ چوکنا رہنا ہو گا بھارت بلوچستان میں افراتفری پھیلانا چاہتاہے۔ بھارت اور اس کی خفیہ ایجنسیاں پاکستان کے خلاف مہم میں مصروف رہتی ہیں۔ ہمارے خلاف سازشوں میں صرف بھارت ملوث نہیں ہے بلکہ اسرائیل اور امریکہ بھی ہر وقت بھارت کی پشت پناہی کو تیار رہتے ہیں۔ خاص طور پر چین کی مدد سے بننے والے سی پیک منصوبے پر تو امریکہ ، اسرائیل اور بھارت کی نیندیں اڑی ہوئی ہیں۔ ان کامقصدوطن عزیز میں دھماکے کرکے خوف و ہراس پھیلانا، معصوم لوگوں کو خون میں نہلانا اور امن و امان کی حالت کو تہس نہس کرنا ہے۔ ہمارے بعض سیاسی عناصر اور سیاسی جماعتیں دشمن قوتوں کے ہاتھوں کھلونا بنی ہوئی ہیں اور ان قوتوں کے مذموم عزائم کو پایہ تکمیل تک پہنچانے میں ان کی مدد گار ہیں جس کے عوض میں انہیں بھاری مالی امداد، جدید اسلحہ اور گاڑیاں فراہم کی جاتی ہیں۔ یہ عناصر بلوچستان میں علیحدگی پسند عناصر اور کراچی میں لسانی قوتوں کو منظم کر کے آپس میں لڑوانے کی حکمت عملی اپنائے ہوئے ہیں۔ ان عناصر کو بین الاقوامی خفیہ ہاتھ منظم کر رہے ہیں ۔’’را‘‘ ہمارے وطن عزیز میں انتشار پیدا کرنے اور فرقہ واریت پھیلانے کیلئے ہمارے بعض مذہبی فرقوں کے سرگرم کارکنوں کو پیسہ اور اسلحہ فراہم کر کے پاکستان کے مختلف علاقوں میں بم دھماکے کروارہی ہے۔عوام پرامن رہتے ہوئے اپنی صفوں میں اتحاد برقرار رکھیں مذہبی ہم آہنگی ،رواداری، یکجہتی اور بھائی چارے کے فروغ اور متحد رہ کر ہی امن دشمنوں کی سازشوں کو ناکام بنایا جا سکتا ہے ۔پاکستان خطے کا اہم ملک بننے جا رہا ہے اسکے بہت سے دشمن ہیں جو بد امنی پھیلانا چاہتے ہیں۔ دہشت گردحملے میں غریب اور بے گناہ لوگوں کو نشانہ بنایا گیا جوکہ اپنے بال بچوں کا پیٹ پالنے کیلئے مزدوری میں مصروف عمل تھے۔پاکستان نے خطے میں دہشت گردوں کے سہولت کارو ں کو بے نقاب کرنے کاعزم کررکھاہے اور دہشت گردی کے حملے اس ناسور کے خاتمے کیلئے قوم کے عزم کوغیرمتزلزل نہیں کرسکتے۔ مسلح افواج کی قربانیوں کی بدولت ملک میں سیکیورٹی کی صورتحال میں نمایاں بہتری آئی ہے۔ہمسایہ ملک نے پاکستان کے خلاف جارحانہ رویہ اپنا رکھا ہے۔ دہشت گردی کے حملے سے پاکستان کے وزیرخارجہ کے اس بیان کی توثیق ہوگئی ہے کہ بھارت ملک میں انتخابات سے قبل پاکستان کے خلاف کسی قسم کی مہم جوئی کرسکتاہے۔ جانی و مالی نقصان کے باوجود پاکستان نے عزم، اجتماعی دانش اور مسلسل جدوجہد سے دہشت گردی کا خاتمہ کیاہے، دہشت گردی کیخلاف اجتماعی طرزِ عمل، سکیورٹی فورسز اور دیگر کی جامع حکمت عملی کارگر ثابت ہوئی۔بم دھماکے کرنے میں ملک دشمن قوتیں ملوث ہیں ،صوبائی حکومت اور تمام سیکورٹی ادارے ایک پیج پر ہیں اور صوبے میں امن وامان کے قیام کیلئے بھرپوراقدامات اٹھارہے ہیں۔ دہشت گرد قوتیں اصل میں انسانیت کی دشمن ہیں جو نہتے اور بے گناہ شہریوں کو نشانہ بنا رہی ہیں۔ بلوچستان میں بحالی امن کے لئے سیکورٹی فورسز اور عوام کی بے پناہ قربانیاں ہیں جنہیں ضائع ہونے نہیں دیا جائے گا۔انسانیت کے دشمن کسی رعایت کے مستحق نہیں ہیں۔ملک دشمن عناصرصوبے کی ترقی نہیں چاہتے ،پہلے بھی دشمن کی ہرسازش کوناکام بنایاگیا ہے اورآئندہ بھی انشاء اللہ انہیں ناکامی کاسامناہی کرناپڑے گا۔پاکستان کی مسلح افواج نے بے شمارقربانیوں کی بدولت صوبے میں امن قائم کیاہے جسے ہرصورت قائم رکھاجائے گا ،بچے کھچے دہشت گردجلداپنے منطقی انجام کو پہنچ جائیں گے ۔
اما م کعبہ کی پاکستان آمد۔۔۔فیصل مسجدمیں خطبہ جمعہ
امام کعبہ نے اسلام آباد کی فیصل مسجد میں جمعہ کا خطبہ دیا اور نمازجنازہ جمعہ کی امامت کروائی جس میں بہت بڑی تعداد میں عوام شریک ہوئے۔ خطبے میں انہوں نے مسلمانوں کو تقوی اختیار کرنے کی تلقین کی۔امام کعبہ نے خطبہ جمعہ دیتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان اور سعودی عرب توحید کی بنیاد پر قائم ہوئے اور پاکستان تمام مسلمانوں کا محور ہے، امام کعبہ نے کہا کہ مسلمانوں کو اتحاد کی سخت ضرورت ہے۔ انہوں نے پاکستان کی ترقی و خوشحالی کیلئے دعائیں بھی کروائیں۔ اسلام امن و امان سے رہنے کا درس دیتا ہے، اسلام اخوت و بھائی چارے کا نام ہے، رمضان کا مہینہ مسلمانوں کیلئے اللہ کا تحفہ ہے اس مہینے میں صدقات اور خیرات کا اہتمام کریں۔امام کعبہ نے مسلمانوں کے اتحاد پرزوردیاہے ۔دریں اثنا انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے امام کعبہ شیخ عبداللہ عواد الجہنی نے کہا کہ نوجوان کسی بھی معاشرے کی قوت ہوتے ہیں معاشرے کا کایا پلٹ سکتے ہیں۔ نوجوان اپنی قدومنزلت کو پہچانیں۔ نوجوانوں کو دین کے نام پر ورغلایا جاتا ہے۔ نوجوان گمراہ لوگوں کے جھانسے میں نہ آئیں، دینی مسائل میں علما حق سے رہنمائی حاصل کریں۔ آپﷺ کی شخصیت ہمارے لئے اسوہ حسنہ ہے علما کرام اور دینی طبقات معاشرے کی کردار سازی کیلئے کردار ادا کرسکتے ہیں۔ آج کل اسلاموفوبیا کا چیلنجز ہے اس کا علاج ایک ہی ہے کہ نوجوان نسل کے ذریعے اس کا مقابلہ کیاجائے۔ رسولﷺ نے بھی نوجوانوں کی تربیت پر زور دیاقائداعظم محمدعلی جناحؒ جب بھی اہم اعلان کرتے تو نوجوانوں کے سامنے کرتے تھے علامہ اقبالؒ نے بھی نوجوانوں کو اپنے شاعری کا مرکز بنایا۔

About Admin

Google Analytics Alternative