- الإعلانات -

مشرق وسطیٰ میں بڑھتی ہوئی کشیدگی، امریکی لڑاکا طیارے ایف 22 قطر پہنچ گئے

واشنگٹن: مشرق وسطیٰ میں جاری کشیدگی میں اضافے کے بعد امریکا نے لڑاکا F-22 اسٹیلتھ طیارے قطر میں واقع اپنے فوجی بیس پر پہنچا دیئے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی فضائیہ نے مشرق وسطیٰ میں ایران کی دھمکیوں سے پیدا ہونے والی کشیدگی کے دوران پہلی بار اپنے صف اول کے جنگی ایف-22 اسٹیلتھ طیارے قطر میں واقع امریکی بیس پہنچا دیئے ہیں جہاں یہ طیارے پہلے سے موجود ایف-35 طیاروں کے بیڑے میں مزید استعداد اور طاقت میں اضافے کا سبب بنیں گے۔

امریکی ایئر فورس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے ایف-22 لڑاکا طیارے عبید ایئر بیس قطر پہنچ گئے ہیں تاہم طیاروں کی تعداد ظاہر نہیں کی گئی ہے البتہ بیان کے ساتھ جاری کی گئی تصویر میں کم از کم 5 طیاروں کو امریکی بیس پر اترتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

امریکی فضائیہ نے اپنے بیان میں موقف اختیار کیا ہے کہ ایف-22 لڑاکا طیارے مشرق وسطیٰ میں تعینات 3 ہزار سے زائد امریکی سپاہیوں اور درجنوں تنصیبات کی حفاظت پر مامور ہوں گے جنہیں ایران کی دھمکیوں کے پیش نظر خطرے کا سامنا ہے۔

واضح رہے کہ مشرق وسطیٰ میں امریکا کو تیل کی فراہمی پر مامور سعودی عرب کے تیل بردار طیاروں پر حملے کے بعد پہلے ہی امریکی بحری بیڑہ تعینات ہے جبکہ ایف-35 اور ایف-15 جنگی طیارے بھی مستعد ہیں تاہم اس کے باوجود ایران کی جانب سے امریکی ڈرون مار گرائے جانے پر ایف-22 بھی تعینات کردیئے گئے۔