- الإعلانات -

غازی ثاقب شکیل جلالی کی رہائی کے موقع پر 12 واں سالانہ تحفظ ناموس رسالت سیمینار گجرات پریس کلب میں ہوا جس کی سرپرستی پیر سید نوید الحسن شاہ آف بھکھی شریف نے کی

گجرات (ڈسٹرکٹ رپورٹر) غازی ثاقب شکیل جلالی کی رہائی کے موقع پر 12 واں سالانہ تحفظ ناموس رسالت سیمینار گجرات پریس کلب میں ہوا جس کی سرپرستی پیر سید نوید الحسن شاہ آف بھکھی شریف نے کی۔ خصوصی خطاب پروفیسر ڈاکٹر ظفر اقبال جلالی نے کیا۔ سیمینار کی قیادت غازی ثاقب شکیل جلالی نے کی۔ تحریک تحفظ اسلام انٹرنیشنل آزاد کشمیر کے صدر سید ابرار حسین کاظمی ایڈووکیٹ، علامہ مولانا عبدالرحمان جلالی صدر جلالیہ ضلع گجرات ، مولانا محمد یونس نظامی مرکزی راہنما ٹی ٹی آئی اور مولانا امتیا ز جلالی نے خصوصی شرکت کی۔ یہ سیمینار ہر سال 2 فروری کو غازی ثاقب جلالی کی گستاخ رسول کو واصل فی النار کرنے کے بعد رہائی کی نسبت سے منعقد کیا جاتا ہے۔تحفظ ناموس رسالت سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے قائد تحریک غازی ثاقب شکیل جلالی نے کہا کہ ملک اسلام کے نام پر حاصل کیا اور پورے اسلام میںتمام عبادتوں، تمام ضابطوں میںتحفظ نامو س رسالت کو مرکزی مقام حاصل ہے ۔ اگر ناموس رسالت کا تحفظ نہیں تو اسلام کی عمارت بھی قائم نہیں۔ پروفیسر ڈاکٹر ظفر اقبال نے دوران خطاب غازی ثاقب شکیل جلالی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں ناموس رسالت کے قانون کو مضبوط کرنے اور عدالتوں میں قرآن و سنت کے مطابق فیصلوں پر عملدرآمد کرنے کی ضرورت پر روشنی ڈالی۔ سید ابرار شاہ کاظمی ایڈووکیٹ نے دوران خطاب کہا کہ غازی کے ایک عمل نے انہیں پوری ملت کے وفاداروں میں ممتاز مقام عطا کر دیا جو شاید سالوں کی عبادت سے بھی نہ مل سکتا۔تحفظ ناموس رسالت سیمینار میں خطاب کرتے ہوئے مولانا عبدالرحمان جلالی نے کہا کہ غازی ثاقب شکیل جلالی نے 15 جون 2007 ءکو گستاخ رسول کو داخل فی النار کیا اور امت کا قرض اتار دیا لیکن یہ صرف غازیوں پر فرض نہیں بلکہ امت کے ہر فرد پر یہ فرض ہے کہ وہ ناموس رسالت کا تحفظ کرے۔ تحریک تحفظ اسلام کی بدولت ہی ملک کی نظریاتی سرحدوں کر پیر ادیا جا سکے۔ آپ نے دوران خطاب کہا کہ ملک میں قانون ناموس رسالت کو محفوظ کرنے اور عدالتوں میں قرآن و سنت کے مطابق فیصلے کرنے پر عملدرآمد کروانا نہایت ضروری ہے ۔ بیرونی قوتوں کی سازشوں کو پس پشت ڈال کر ملک کو جغرافیائی سرحدوں کے ساتھ ساتھ نظریاتی سرحد کے اعتبار سے بھی مضبوط کرنا نہایت ضروری ہے۔تحریک تحفظ اسلام انٹرنیشنل اور جماعت جلالیہ پاکستان ہر حال میں پاکستان کو مضبوط دیکھنا چاہتی ہے جو ناموس رسالت کے تحفظ کے بغیر کسی صورت ممکن نہیں۔تحریک تحفظ اسلام انٹرنیشنل آزاد کشمیر کے صدراور ڈڈیال بار کونسل کے نائب صدر نے کہا کہ غازی ثاقب شکیل جلالی بلاشبہ ایک شخصیت ہیں بلکہ ایک نظریہ اور ایک سوچ بن چکی ہے۔ غازی ثاقب شکیل جلالی نے 15 جون 2007ءکو گستاخ رسول کو وصل جہنم کر کے ملت کا سر بلند کر دیا اور آپ کی دوررس نگاہی کی بدولت آج ملک کے طول و عرض سے نوجوان تحریک تحفظ اسلام میں شامل ہو کر ناموس رسالت اور ختم نبوت کا تحفظ کر رہے ہیں۔