- الإعلانات -

ایس کے نیازی کا بڑا اقدام گجرپورہ زیادتی کیس کی میڈیا کوریج پر پابندی کا نوٹیفیکیشن معطل

لاہور : لاہور ہائی کورٹ نے گجر پورہ ریپ کیس کی میڈیا کوریج پر پابندی کا نوٹیفیکیشن معطل کر دیا، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اگر پیمرا نے پابندی لگائی تھی تو وزرا اور مشیروں کی اس کیس کے متعلق تقاریر کیوں نشر کی گٸیں۔
تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں چیف جسٹس قاسم خان کی سربراہی میں 2بینچ نے لنک روڈزیادتی کیس میں پیمرا کے کوریج پر پابندی کے فیصلے کیخلاف پاکستان کے معروف صحافی اور سی ای او (روز ٹی وی) سردار خان نیازی کی اپیل پر سماعت کی۔

چیف جسٹس قاسم خان نے سرکاری وکلا کو روسٹرم پربلایا ، ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت میں مؤقف اختیار کیا کہ یہ پیمرا کا معاملہ ہے، جس پر چیف جسٹس قاسم خان نے ریمارکس دیے کہ میٹھا ،میٹھا ہپ ہپ، کڑوا کڑوا تھو تھو ،ایسا نہیں چلے گا ، میڈیا مقدمے کی کارروائی سے متعلق رپورٹنگ کرسکتا ہے۔چیف جسٹس قاسم خان کا کہنا تھا کہ رائٹ آف انفارمیشن کے تحت عوام کو آگاہی سے نہیں روکا جاسکتا، ملزم عابدکی گرفتاری سے متعلق میڈیاپرپریس کانفرنس کا ریکارڈ پیش کریں ، آئین کے تحت رائٹ ٹوانفارمیشن پرپابندی نہیں لگائی جاسکتی۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے ریمارکس میں کہا کہ میڈیا ملزم اورمتاثرہ افراد کی فیملی کی تصاویر نہیں چلائے گا، پیمرا نے پابندی لگائی تو وزرا ،مشیروں کی تقریریں کیوں نشرہوئیں، وہ دورختم ہوگیا جب حکومت کے سارے گناہ معاف ہوجاتے تھے اور ا اپوزیشن کو بغیر گناہ کے سزا ملتی تھی۔جس کے بعد لاہور ہائی کورٹ نے پیمرا کا لنک روڈ زیادتی کیس کی رپورٹنگ پر پابندی کا نوٹیفکیشن معطل کردیا۔

خیال رہے پاکستان کے معروف صحافی اور سی ای او (روز ٹی وی) سردار خان نیازی نے ہائی کورٹ میں اپیل کی تھی ، جس میں کہا تھا کہ اےٹی سی حکم پرپیمرا نےلنک روڈ زیادتی کیس کی کوریج پر پابندی لگا ئی ، میڈیا کوریج پر پابندی آئین و قانون کی خلاف ورزی ہے۔