- الإعلانات -

ہاؤسنگ اسکینڈل، دو سابق بھارتی آرمی چیفس سمیت فوجی افسران نامزد

ممبئی ہائی کورٹ کے حکم پر یہ انکوائری کمیٹی سابق وزیر دفاع منوہر پاریکر نے قائم کی تھی ۔

ممبئی میں کارگل جنگ میں مارے گئے فوجیوں کے لواحقین کی رہائشی عمارت 31منزلہ عمارت آدرش سوسائٹی میں مبینہ اسکینڈل سامنے آیا تھا۔

جس میں غیر قانونی طور پر سابق آرمی چیف، نیوی چیف، سیاستدانوں اور بیوروکریٹس کے نام بھی فلیٹس الاٹ کر دیے گئے تھے،جس کے بعد انکوائری کا آغاز کیا گیا تھا۔

انکوائری کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں آرمی کے دو سابق سربراہوں، این سی وج اور دیپک کپور کے علاوہ بحریہ کے سابق ایڈمرل مادھویندر سنگھ کے ناموں کی تصدیق کی ہے۔

اس سے قبل مہاراشٹر کے چار سابق وزرائے اعلیٰ، دو ریاستی وزیروں اور 12کے قریب بیورو کریٹس پر پہلے ہی فرد جرم عائد کی جاچکی ہے۔

انکوائری کمیٹی کے مطابق اس سارے معاملے میں سابق آرمی چیف این سی وج نے خاموشی اختیار کیے رکھی اور کوئی اعتراض نہیں کیا جبکہ دیپک کپور نے اس حوالے سے غلط معلومات فراہم کیں۔