- الإعلانات -

گائے کی مدد سے بنایا جا سکتا ہے ایڈز کا ٹیکا

امریکی محققین کا کہنا ہے کہ ایچ آئی وی سے نمٹنے کے لیے ویکسین بنانے میں گائے کافی مددگار ثابت ہو سکتی ہے۔

مدافعت کے طور پر گائے مسلسل ایسے خاص اینٹی باڈی بناتی ہے جن کے ذریعے ایچ آئی وی کو ختم کیا جا سکتا ہے۔

کہا جاتا ہے کہ گائیوں کے نظام ہضم میں بیکٹریا کی بڑی تعداد موجود ہونے کے باعث ان کی مدافعتی صلاحیت بہت زیادہ ہوتی ہے۔

امریکہ کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ نے اس نئی معلومات کو بہترین قرار دیا ہے۔

ایچ آئی وی ایک مہلک بیماری ہے اور مریض کے مدافعتی نظام پر حملہ کرتا ہے۔

ایک ویکسین مریض کے مدافعتی نظام کو ایسا بنا سکتا ہے جس سے اینٹی باڈیز بن سکیں جن کے باعث لوگوں کو ایچ آئی وی نہ ہو۔

انٹرنیشنل ایڈز ویکسین انیشی ایٹو اور دی سكرپس ریسرچ انسٹیٹیوٹ نے گائیوں پر تجربے شروع کیے۔

ایک محقق ڈاکٹر ڈیون سوک نے بی بی سی نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا ‘ان تجربات کے نتائج نے ہمیں حیران کر دیا۔’

انھوں نے بتایا کہ گائیوں میں مدافعتی نظام کے لیے ضروری اینٹی باڈیز چند ہفتوں میں بن جاتی ہیں۔

ڈاکٹر سوک نے کہا ‘یہ انتہائی حیران کر دینے والا موقع تھا۔ انسانوں میں ایسے اینٹی باڈیز تیار ہونے میں تقریباً تین سے پانچ سال لگ جاتے ہیں۔‘