- الإعلانات -

خدیجہ حملہ کیس: مرکزی مجرم شاہ حسین کو 7 سال قید کی سزا

لاہور کی عدالت نے خدیجہ حملہ کیس کے مرکزی مجرم شاہ حسین کو 7 سال قید کی سزا سنادی جب کہ دیگر دفعات میں اسے مجموعی طور پر 19 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

گزشتہ سال 3 مئی کو نجی لاء کالج کی طالبہ خدیجہ صدیقی کو ان کے ہم جماعت شاہ حسین نے مبینہ طور پر اس وقت حملے کا نشانہ بنایا جب وہ اپنی چھوٹی بہن کو اسکول سے گھر واپس لانے کے لیے گاڑی میں بیٹھی ہی تھیں کہ ہیلمٹ پہنے شخص نے انہیں خنجر کے وار سے شدید زخمی کردیا تھا۔

خدیجہ کو لاہور کے علاقے ڈیوس رود پر مبینہ طور پر 23 مرتبہ چھریوں کے وار کرکے زخمی کیا گیا جس کے بعد ملزم فرار ہوگیا تھا تاہم موبائل کیمرے اور عینی شاہدین کی مدد سے ملزم کو گرفتار کرلیا گیا تھا۔

چند دن قبل متاثرہ لڑکی خدیجہ نے ملزم کو شناخت کیا جس کے بعد اسے قاتلانہ حملے کے کیس میں باضابطہ طور پر گرفتار کیا گیا۔

آج ملزم شاہ حسین کو عدالت میں پیش کیا گیا جہاں جوڈیشل مجسٹریٹ نے شواہد اور دلائل کو مد نظر رکھتے ہوئے اسے سزا سنائی جس کے بعد پولیس نے شاہ حسین کو کمرہ عدالت سے ہی گرفتار کرلیا۔

عدالت نے کیس کا تحریری فیصلہ جاری کردیا جس کے مطابق مجرم شاہ حسین کو مجموعی طور پر 19 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

تحریری فیصلے کے مطابق شاہ حسین پرقاتلانہ حملے سمیت 6 دفعات لگائی گئی تھیں، دیگر 5 فعات میں 12 سال اور خدیجہ حملہ کیس میں 7 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے اور تمام سزائیں ایک ہی دن سے شروع ہوں گے۔ عدالت نے مجرم کو طالبہ خدیجہ کے ہر زخم پر 50، 50 ہزار جرمانہ ادا کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔

دوسری جانب عدالتی فیصلے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خدیجہ نے انصاف ملنے پر اللہ کا شکر ادا کیا جب کہ ساتھ ہی انہوں نے جیو نیوز کے اینکر شاہ زیب خانزادہ کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے اپنے پروگرام میں اس مسئلے کو اٹھایا تھا۔

خدیجہ کا کہنا تھا کہ انصاف کی فراہمی ان کے ساتھ لوگوں کے کھڑے ہونے کے باعث ممکن ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میرا ساتھ دینے کے لیے وکلا اور سول سوسائٹی کی بھی شکر گزار ہوں جب کہ شاہ زیب خانزادہ اور دیگر کی شکر گزار ہوں جنہوں نے میری آواز بلند کی۔

انہوں نے کہا کہ یہ میرے لیے ایک کڑا امتحان تھا اور آج میں نے ایک پہاڑ سر کیا ہے، مجھ پر حملہ کرنے والے بھول گئے تھے کہ زندگی اور موت اللہ کے ہاتھ میں ہے۔

خیال رہے کہ خدیجہ حملہ کیس میں ملزم شاہ حسین، ایڈووکیٹ تنویر ہاشمی کے بیٹے ہیں جن کے خلاف اقدام قتل کے الزامات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔