- الإعلانات -

’سابق وزیر اعظم نواز شریف کیخلاف ایف آئی آر درج کرانے کا فیصلہ‘

سابق ڈپٹی اٹارنی جنرل نے میاں محمد نواز شریف کیخلاف مقدمہ درج کرانے کا اعلان کر دیا ہے۔ ان کے بقول یہ ایف آئی آر سیکشن 22 کے تحت درج کرائی جائے گی کیونکہ انہوں نے 2013ء کے انتخابات میں اپنے کاغذات نامزدگی جمع کراتے وقت اپنے اثاثوں کے بارے میں جھوٹ بولا تھا۔

پشاور پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو میں سابق ڈپٹی اٹارنی جنرل محمد خورشید خان کا کہنا تھا کہ ہم کل (پیر) کے روز سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کیخلاف اسلام آباد سیکرٹریٹ کے پولیس تھانے میں ایف آئی آر درج کروانے جا رہے ہیں کیونکہ انہوں نے پارلیمنٹ کے سامنے نا صرف اثاثے چھپائے بلکہ ان کے بارے میں جھوٹ سے کام لیا۔

پاناما کیس پر سپریم کورٹ کے فیصلے کی تعریف کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف اور ان کے بچے منی لانڈرنگ، کرپشن اور قومی دولت کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے کے مرتکب ہوئے ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ 2013ء میں اقتدار میں آنے سے قبل نواز شریف کے اثاثے 250 ملین تھے لیکن وزیر اعظم بننے کے بعد یہ اثاثے 2350 ملین تک بڑھ چکے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے 2013ء کے انتخابات میں اپنے تمام اثاثے ڈکلیئر نہیں کیے تھے جو غیر قانونی اور جرم ہے۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ نواز شریف کو فوری طور پر گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دے