- الإعلانات -

‘اداروں میں محاز آرائی نہیں ہونی چاہئے، مل کر چلنا ہو گا، آج پارلیمان کمزور ہے’

8 اگست 2016ء کو ہونے والے سانحہ سول ہسپتال نے وہ خونی داستان لکھی جس میں ایڈووکیٹ باز محمد کاکڑ سمیت ملک کے درجنوں نامور وکلاء جاں بحق اور زخمی ہوئے۔ سانحہ 8 اگست اور امن کی بحالی کے حوالے سے کوئٹہ میں ایک روزہ سیمینار منعقد ہوا جس سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ وکلاء کی تحریک برصغیر کی نہایت کم عرصہ میں کامیاب ہونے والی تحریک تھی، وکلاء نے بہت سی قربانیاں دیں۔

سیمینار کے مہمان خصوصی چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے اس موقع پر کہا کہ سول ہسپتال میں دہشت گردی کے واقعات میں قیمتی جانوں کا ضیاع الیمہ ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک کے استحکام کے لئے اداروں کا متحد ہونا ضروری ہے، آج کا پارلیمان بہت کمزور ہے، کوئی بھی اس پر چڑھائی کر دیتا ہے، ملک کو مستحکم کرنے کے لئے 1973ء کے آئین پر عملدرآمد کی ضرورت ہے۔

سیمینار میں وکلاء کی بڑی تعداد نے بھی شرکت کر کے 8 اگست 2016ء کو شہید ہونے والے وکلاء کو خراج عقیدت پیش کیا