- الإعلانات -

‘پاکستانی سرزمین دہشت گردی کیلئے استعمال نہیں ہونی چاہیے’

پاکستان اور افغانستان کے لیے امریکا کی قائم مقام نمائندہ الیس ویلز کا کہنا ہے کہ پاکستان کی سرزمین پڑوسیوں کے خلاف دہشت گردی کے لیے ہر گزاستعمال نہیں ہونی چاہیے۔

امریکا کی جنوبی اور وسطی ایشیا کے امور کی قائم مقام اسسٹنٹ سیکریٹری اور پاکستان اور افغانستان کے لیے عبوری نمائندہ سفیر الیس ویلز نے زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی سرزمین ہمسائیوں کے خلاف دہشت گردوں کے حملوں یا دہشت گردی کی منصوبہ بندی کے لیے ہرگز استعمال نہیں ہونی چاہیے۔

دفترخارجہ سے جاری بیان کے مطابق سفیر الیس ویلز نے خطے میں تعارفی دورے کے سلسلے میں اسلام آباد کا دورہ کیا۔

الیس ویلز نے جنوبی ایشیا کے حوالے سے پالیسی پر نظرثانی کو رد کرتے ہوئے تجارت اور سیکیورٹی سمیت دوطرفہ مفادات اور افغانستان میں سیکیورٹی اور امن کے حوالے سے تعاون اور افادیت کو اجاگر کیا۔

اپنے دو روزہ دورے کے موقع پرالیس ویلز نے پاکستان کے نئے وزیرخارجہ خواجہ آصف، سیکریٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ، وزیرخزانہ اسحٰق ڈار اور پاک فوج کے چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف جنرل زبیر حیات سے ملاقات کی۔

دفترخارجہ کے بیان کے مطابق انھوں نے دہشت گردی کے خلاف لڑائی میں پاکستان کو اہم قربانیوں پر خراج تحسین پیش کیا۔

خیال رہے کہ افغانستان کے صدر اشرف غنی نے رواں سال جون میں کابل میں ہونے والےکاربم دھماکے کے بعد منعقدہ امن کانرنفس سے خطاب کرتے ہوئے الزام عائد کیا تھا کہ پاکستان ان کے ملک کے خلاف ’غیر اعلانیہ جنگ‘ مسلط کر رہا ہے۔