- الإعلانات -

’18 ویں ترمیم کے وقت کہا یہ غیرآئینی شقیں ہیں، نواز انہیں بڑوں کی نشانی سمجھتے رہے’

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے چترال میں جلسۂ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اصغرخان کیس، بھٹو ریفرنس اہم ترین کیسز ہیں، ہم منتظر ہیں کہ بھٹو کو کب انصاف ملے گا؟ آنے والے الیکشن کی بھرپور تیاری کر رہے ہیں، کسانوں کو قرضوں کیساتھ سبسڈی بھی دیں گے۔ بلاول بھٹو نے مزید کہا کہ کسان خوشحال ہوگا توملک خوشحال ہو گا، پیپلز پارٹی نے ہمیشہ محنت کشوں کے حقوق کی جنگ لڑی، سندھ حکومت نے چھوٹے شہروں میں ایمبولینس سروس شروع کی، غریبوں کو مفت تعلیم اور صحت کی سہولیات دینا چاہتے ہیں، اقتدار میں آ کر ان چیزوں کو ممکن بنائیں گے اور بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا دائرہ کار بڑھائیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ تختیاں لگاتے لگاتے میاں صاحب کا تختہ الٹ گیا، نواز شریف اور عمران خان ایک ہی سکے کے دورخ ہیں۔ انہوں نے چیئرمین پی ٹی آئی کو مخاطب کرکے کہا کہ خان صاحب! نیا نیا کرتے یہ کیا نیا کر دیا آپ نے؟ پڑھی لکھی خواتین تحریک انصاف کیوں چھوڑ رہی ہیں؟ بتاؤ تمہارے والد کو نوکری سے کیوں نکالا گیا؟