- الإعلانات -

حکمت یار کی افغانستان میں امریکی فوجیوں کے اضافے کی مخالفت

افغانستان کے سابق وزیراعظم گلبدین حکمت یار نے ملک میں امریکی فوجیوں کی تعداد میں اضافے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ جنگ ذدہ ملک میں استحکام لانے کا واحد راستہ انتخابات ہیں۔

گلبدین حکمت یار رواں سال اپریل میں 20 سالہ طویل جلاوطنی کے بعد افغانستان میں واپس آئے تھے جس کو سنگ میل کہا جاتا تھا لیکن افغان حکومت کے ساتھ انھوں نے متنازع امن معاہدے پر دستخط کیے تھے۔

70 سالہ حکمت یارنے میڈیا کو بتایا کہ افغانستان کو ‘ایک مضبوط صدر کی رہنمائی میں ایک مضبوط مرکزی حکومت’ کی اشد ضرورت ہے۔

طویل جلاوطنی کے بعد اپنی پہلی پریس کانفرنس میں ان کا کہنا تھا کہ ‘اس کے بغیرملک میں امن و استحکام لانا ممکن نہیں ہے’۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ ‘حزب اسلامی امن اور استحکام میں حکومت کےساتھ تعاون کرنے کے لیے غیرمشروط طور پر تیار ہے’۔

انھوں نے کہا کہ ‘ہمیں تسلیم کرلینا چاہیے کہ سیاسی جماعتوں کو اختیارات دینے اور انتخابات میں شرکت ہی آگے بڑھنے کا واحد راستہ ہے’۔