- الإعلانات -

اداروں سے ٹکراؤ کے حامی نہیں، احتساب کے نام پر نشانہ بنایا گیا: نواز شریف

ذرائع کے مطابق، پنجاب ہاؤس میں نواز شریف اور چودھری نثار کی ملاقات میں ملک کی سیاسی صورتحال سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا اور میاں نواز شریف کی بدھ کو لاہور روانگی کے معاملے پر مشاورت کی گئی۔ چودھری نثار نے نواز شریف کو لاہور روانگی کے حوالے سے تیاریوں پر بریف کیا۔

دریں اثناء، ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف سے پنجاب ہاؤس میں سیاسی و عوامی حلقوں کی سرکردہ شخصیات کی ملاقاتیں جاری ہیں۔ لیگی رہنماؤں اور کارکنوں سے بات کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نے کہا کہ کارکنوں کے اصرار پر جی ٹی روڈ سے لاہور جانے کا فیصلہ کیا، عوام نے ہمیشہ مجھ سے والہانہ محبت کا اظہار کیا، عوام نے مسلم لیگ ن کو بھرپور مینڈیٹ دیا۔

نواز شریف نے مزید کہا کہ ہم اداروں کے ساتھ ٹکراؤ کے حامی نہیں، جو سلوک میرے ساتھ ہو رہا ہے، ماضی میں کسی کے ساتھ نہیں ہوا، جمہوریت کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے، احتساب کے نام پر مجھے اور شریف خاندان کو نشانہ بنایا گیا، ہمیشہ آئین اور قانون کی بالادستی کو یقینی بنایا۔ انہوں نے مزید کہا کہ جو جرم کیا ہی نہیں اس کی سزا بھی دے دی گئی۔
سابق وزیر اعظم نے مزید کہا کہ ن لیگ پہلے کی طرح آج بھی متحد ہو کر میرے ساتھ کھڑی ہے، پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ اور کارکنوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ نواز شریف سے اسلام آباد اور راولپنڈی کے تاجروں نے بھی ملاقات کی۔

ادھر، وزیر مملکت برائے اطلاعات مریم اورنگزیب نے بھی نواز شریف سے ملاقات کی۔ سابق وزیر اعظم نواز شریف نے وزارت اطلاعات کا قلمدان دوبارہ سنبھالنے پر مریم اورنگزیب کو مبارکباد دی اور وزیر اطلاعات کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کیا۔ ذرائع کے مطابق، نواز شریف نے منصوبوں کی تشہیر اور جماعت کا مؤقف اجاگر کرنے پر مریم اورنگزیب کی تعریف کی۔ ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن میڈیا کی آزادی پر یقین رکھتی ہے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ حکومت کے اچھے اقدامات کی عوام میں تشہیر کی جائے۔ وزیر اطلاعات نے اعتماد کرنے پر وزیر اعظم کا شکریہ ادا کیا۔