- الإعلانات -

‘سانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ ماننا، نہ ماننا، شائع کرنا، نہ کرنا حکومت کی مرضی ہے’

رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیق کیلئے بنائے گئے انکوائری کمیشن کی رپورٹ شائع کرنا یا نہ کرنا حکومت کی مرضی ہے مگر جے آئی ٹی کی رپورٹ پر چار افراد کو اشتہاری قرار دیا گیا، ماڈل ٹاؤن واقعہ افسوسناک تھا اور نہیں ہوناچاہئے تھا لیکن یہ واقعہ طے شدہ نہیں تھا، پولیس کے 9 افراد کو جے آئی ٹی نے ملزم قرار دیا۔ رانا ثناء اللہ نے مزید کہا کہ حکومت رپورٹ تسلیم کرے یا نہ کرے، یہ حکومت کی مرضی ہے، جسٹس باقر نجفی سے گزارش کی کہ ماڈل ٹاؤن واقعے کی رپورٹ جلد دیں، انہوں نے کہا میری تعیناتی چیلنج ہوئی ہے، ابھی رپورٹ نہیں دے سکتا مگر پھر اچانک رپورٹ دے دی۔