- الإعلانات -

کھارے پانی کو میٹھا بنانے والی ’سالماتی چھلنی‘

واشنگٹن: سائنسدانوں نے دنیا میں صاف پانی کے سب سے بڑے چیلنج کا حل پیش کرتے ہوئے ایک سالماتی (مالیکیولر) چھلنی بنائی ہے جو فوری طور پر پانی صاف کر کے اسے پینے کے قابل بناتی ہے۔

سیارہ زمین پر اس وقت ایک ارب سے زائد آبادی پینے کے صاف پانی سے محروم ہے۔ اس کے حل کے لیے ماہرین نے گرافین آکسائیڈ کی ایک تہہ (میمبرین) تیار کی ہے جسے سالماتی سطح کی ’چھلنی‘ قرار دیا جا سکتا ہے۔ اس سے پانی کے سالمات آسانی سے گزر جاتے ہیں جبکہ دیگر آلودگیوں کے مالیکیولز رک جاتے ہیں اور صاف پانی پیا جا سکتا ہے یا پھر صنعتوں میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔

پنسلوانیہ اسٹیٹ یونیورسٹی کے شعبہ فزکس اور کیمیا کے پروفیسر موریسیو ٹیرونس اور ان کی ٹیم نے یہ چھلنی تیار کی ہے تاہم یہ ابھی ابتدائی مراحل میں ہے۔ ابتدائی تجربات میں یہ 85 فیصد نمکیات اور ڈائی (رنگوں) کے 96 فیصد سالمات کو روک سکتی ہے۔ اس طرح یہ کم خرچ اور سادہ طریقہ ہے جس کے ذریعے صاف پانی کا مسئلہ بہت حد تک حل کیا جاسکتا ہے۔