- الإعلانات -

میانمار کے مسئلے پر سلامتی کونسل میں پھوٹ پڑ گئی

نیویارک: میانمار کے مسئلے پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ممبران میں پھوٹ پڑ گئی۔

میانمار کے معاملے پر 8 سال میں پہلی بار سلامتی کونسل کا اجلاس ہوا جس میں کونسل کے مستقل رکن ممالک کے درمیان اختلافات کھل کر سامنے آئے۔ چین اور روس نے میانمار کی حکومت کی حمایت کی جب کہ امریکا، برطانیہ اور فرانس نے روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی کو فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ کیا۔

امریکی سفیر نکی ہیلی نے کہا کہ سکیورٹی کونسل میانمار کی فوج کے خلاف تادیبی اقدامات تجویز کرے کیونکہ وہ اپنے ہی ملک کے لوگوں کے خلاف نفرت اور استحصال کا باعث بنی ہے۔ انہوں نے میانمار کو ہتھیاروں کی فراہمی روکنے کا مطالبہ بھی کیا۔ برطانیہ اور فرانس سمیت کئی ممالک نے امریکی موقف کی تائید کرتے ہوئے روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی کا سلسلہ فی الفور بند کرنے کا مطالبہ کیا۔