- الإعلانات -

شام کے مسئلے پر امریکا نے سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کرلیا

واشنگٹن: امریکا نے شام کے شہر ادلب پر حکومتی اور اتحادی افواج کے ممکنہ فضائی حملے کے خلاف سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا نے شام کو ادلب پر حملے اور کیمیائی ہتھیاروں کے ممکنہ استعمال سے روکنے کے لیے سلامتی کونسل کا اجلاس طلب کرلیا ہے۔ سلامتی کونسل کا اجلاس امریکی مندوب نکی ہیلی کی زیر صدارت جمعہ کو ہوگا۔

اقوام متحدہ میں امریکی مندوب نکی ہیلی نے پریس کانفرنس میں میڈیا کو بتایا کہ روسی طیارے ادلب پر حملہ کرنے کے لیے تیار ہیں جہاں ممکنہ طور پر کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال کیا جائے گا، جس سے معصوم شہریوں کی جانوں کو شدید خطرات لاحق ہیں جن پر سلامتی کونسل کے اجلاس میں گفتگو کی جائے گی۔

امریکا صدر ڈونلڈ ٹرمپ پہلے ہی شامی صدر بشارالاسد، روس اور ایران کو ادلب پر حملے پر وارننگ دے چکے ہیں۔ انہوں نے حملے کو عظیم انسانی المیہ اور فاش غلطی قرار دیتے ہوئے روس اور ایران کو جنگ سے علیحدہ ہونے کو کہا تھا۔

دوسری جانب قطری نشریاتی ادارے الجزیرہ کے مطابق روسی طیاروں نے ادلب پر فضائی حملہ کر دیا ہے جس سے بڑے پیمانے پر رہائشی عمارتوں کو شدید نقصان پہنچا ہے اور شہریوں کی ہلاکتوں کی خبریں موصول ہو رہی ہیں۔

واضح رہے کہ شامی حکومت نے داعش اور النصرہ کے زیر تسلط علاقے ادلب پر حتمی کارروائی کا فیصلہ کر لیا ہے۔ شامی حکومت کا دعویٰ ہے کہ  اس علاقے میں 30 ہزار سے زائد داعش اور النصرہ کے جنگجو موجود ہیں۔