- الإعلانات -

سری نگر: مسلح افراد کی فائرنگ سے 5 بھارتی فوجی زخمی

بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے بھارتی بارڈر سیکیورٹی فورس (بی ایس ایف) کے 5 اہلکار زخمی ہوگئے۔

این ڈی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بی ایس ایف عہدیدار نے نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کو بتایا کہ شام 6 بجے سری نگر کے علاقے پنتھا چوک میں مسلح افراد نے بی ایس ایف کی پٹرولنگ گاڑی پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں اس میں سوار 5 اہلکار زخمی ہوگئے۔

انہوں نے بتایا کہ زخمی اہلکاروں کو ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے جن میں سے ایک کی حالت تشویشناک ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ حملے کے بعد سیکیورٹی فورسز نے علاقے کی ناکہ بندی کرکے حملہ آوروں کی تلاش شروع کردی ہے۔

ادھر ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق آئی جی سی آر پی ایف روی دیپ سنگھ ساہی کا کہنا تھا ’معاملات اب کنٹرول میں ہیں، آج شام6 بجے بی ایس ایف ہیڈکوارٹر کے قریب ڈیوٹی سے واپس جانے والی 2 گاڑیوں پر فائرنگ کی گئی جس کے نتیجے میں 4 سے 5 اہلکار زخمی ہوئے‘۔

انہوں نے بتایا کہ زخمیوں کو قریبی ہسپتال منتقل کردیا گیا جبکہ علاقے میں سرچ آپریشن جاری ہے۔

عالمی برادری مسئلہ کشمیر کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالے، سید علی گیلانی

کشمیر میڈیا سروس کی رپورٹ کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں آل پارٹیز حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے بھارتی فورسز کی جانب سے ہتھیاروں کے بے دریغ استعمال کی مذمت کرتے ہوئے عالمی برادری سے مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالنے پر اصرار کیا۔

سری نگر سے جاری بیان میں سید علی گیلانی نے کہا کہ بھارت نے کشمیر کے جنوبی اضلاع میں شہریوں کے خلاف جنگ شروع کی ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی فورسز نے دیہاتوں کا محاصرہ کیا اور آپریشن کے خلاف آواز اٹھانے والے کشمیریوں پر گولیاں اور پیلیٹ برسائے ہیں۔

حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے کہا کہ ایک شہید نوجوان کی والدہ فاطمہ بیگم کے گھر پر پیلیٹ برسانا واضح اظہار ہے کہ جنرل راوت اور ارن جیتلے کشمیر پر بھارتی قبضہ اسی طرح قائم رکھنا چاہتے ہیں۔

خیال رہے کہ 21 اکتوبر کو مقبوضہ کشمیر کے علاقے کلگام میں بھارتی فوج کی جانب سے سرچ آپریشن کیا گیا تھا جس کے نتیجے میں کم از کم 14 کشمیری جاں بحق ہوئے تھے۔

جس پر انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنشینل انڈیا (اے آئی آئی) کی جانب سے کلگام میں کشمیریوں کے قتل کے خلاف آزاد اور منصفانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ 19 اکتوبر کو بھارتی فوج نے ضلع بارا مولا کے علاقے بونیار میں علاقے کا محاصرہ کیا تھا سرچ آپریشن کرتے ہوئے 4 کشمیری نوجوانوں کو قتل کردیا تھا۔

اس سے قبل 17 اکتوبر کو بھارتی فوج نے سری نگر کے علاقے فتح کَدال میں محاصرہ کرکے سرچ آپریشن کے دوران 3 نوجوانوں کو قتل کیا تھا۔

گزشتہ ماہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں خاتون سمیت 42 کشمیری جاں بحق ہوئے تھے۔