خیبرپختونخوا کے ضلع شانگلہ میں ڈیجیٹل کرنسی کا مائننگ فارم پکڑ اگیا جو ڈیجیٹل یا کرپٹو کرنسی بنا کر مختلف ویب سائٹس پر فروخت کی جا رہی تھی

6

شانگلہ میں موجود کرپٹوکرنسی کے مائیننگ فارم میں ڈیجیٹل مشینیں نصب تھیں۔ اس میں ڈیجیٹل کرنسی یا کریپٹو کرنسی کے 65 یونٹس نصب تھے اور ہر یونٹ کے بارہ چینل تھے یعنی اس فارم سے 780 چینلز کام کر رہے تھے جن کے لیے درکار بجلی مقامی سطح پر نصب ٹربائن سے حاصل کی جا رہی تھی۔

یہ فارم شانگلہ کے ایک ایسے دیہی علاقے میں قائم کیا گیا تھا جو پہاڑوں میں گھرا ہوا تھا۔ اس مقام تک پہنچنے کے لیے تحقیقاتی ٹیم اور پولیس اہلکاروں کو پیدل جانا پڑا جہاں دو دو فٹ تک برف پڑی تھی۔اس مائیننگ فارم کے لیے سرد موسم کی ضرورت ہوتی ہے اور 220 وولٹ کی مکمل بجلی مستقل طور پر چاہیے ہوتی ہے۔ اگرچہ یہ دیہی علاقہ ہے لیکن یہاں مقامی سطح پر بجلی کے ٹربائن نصب ہیں اور موسم یہاں سرد ہوتا ہے۔اہلکاروں نے بتایا کہ ملزمان ٹربائن اور بجلی فراہم کرنے والوں کو ماہانہ 90 ہزار روپے تک بل کی ادائیگی کرتے تھے۔اہلکاروں نے بتایا یہ مشینری تپش پیدا کرتی ہے حالانکہ باہر برف پڑی تھی لیکن اس پانچ مرلے کے مکان میں جہاں مشینری نصب تھی وہاں لوگوں کو پسینہ آرہا تھا۔

واضح رہے کہ مائننگ فارم دراصل ڈیجیٹل کرنسی کا ٹیکنیکل ڈیٹا سنٹر ہوتا ہے جہاں پر بٹ کوائن یا دیگر کرپٹو کرنسیز تیار کی جاتی ہیں۔اسے مائیننگ فارم اس لیے بھی کہا جاتا ہے کیونکہ یہ مستقل طور پر ایک طریقہ کار کے تحت کرنسی تیار کی جاتی ہے جس کے لیے وافر مقدار میں انرجی یعنی بجلی اور تکینیکی مدد چاہیے ہوتی ہے۔ڈیجیٹل کرنسی بنیادی طور پر الیکٹرانک سطح پرادائیگی یا پےمنٹ کا طریقہ کار ہے۔ اس سے آپ خریدای کر سکتے ہیں لیکن اب تک یہ مخصوص مقامات پر ہی خرچ کی جا سکتی ہے۔ اس کے ذریعے آپ ویڈیو گیمز یا سوشل نیٹ ورکس پر ادائیگی کر سکتے ہیں۔

اس وقت دنیا میں لگ بھگ 5000 کرپٹو کرنسیز استعمال ہو رہی ہیں جن میں بِٹ کوائن سرفہرست ہے۔ ایک بٹ کوائن کی قیمت اس وقت 8300 ڈالر کے لگ بھگ ہے جبکہ ماضی میں یہ 20 ہزار ڈالر کی حد تک بھی پہنچ چکی ہے۔