- الإعلانات -

موجود رمضان المبارک میں پوری دنیا کے مسلمانوں اور بنی نوع انسان کو عالمی وباء کا سامنا ہے جو اللہ تعالیٰ کی طرف سے انسانوں کی آزمائش ہے،اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا رمضان المبارک کی آمد کے موقع پر قوم کے نام پیغام

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ موجود رمضان المبارک میں پوری دنیا کے مسلمانوں اور بنی نوع انسان کو عالمی وباء کا سامنا ہے جو اللہ تعالیٰ کی طرف سے انسانوں کی آزمائش ہے۔ اللہ پاک نے اس مشکلات اور آزمائش میں ایک بار پھر ہمیں رمضان المبارک کی بابرکت سعاعتوں کی صورت میں ہمیں یہ موقع عطا فرمایا ہے کہ ہمیں سچی توبہ کے ساتھ اپنے رب کے ساتھ مسلسل رابط کر کے گناہوں کی معافی مانگیں اور اپنے رب کو راضی کر کہ اس عالمی وباء سے نجات حاصل کریں۔ ان خیالات انہوں نے رمضان المبارک کی آمد کے موقع پر قوم کے نام اپنے جاری بیان میں کیا۔انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک میں عاجزی اور انکساری کے ساتھ اسں عالمی وباء سے نجات حاصل کرنے اور اپنے رب کو راضی کرنے کا واحد ذریعے ہے۔انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک میں ہمیں اپنے اللہ کے حضور وہ خصوصی دعائیں مانگنی ہیں جن کے ذریعے ہمیں کورونا وائرس کی وباء سے نجات مل سکے۔اسپیکر اسد قیصر نے کہا ہے کہ رمضان المبارک میں ناداروں اور ضرورت مندوں کی حاجت روائی ایک اہم فریضہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک ایک بابرکت مہینہ ہے جس میں پوری دنیا کے مسلمان اللہ کی خوشنودی او ر رحمت کے حصول کے لیے روزے رکھتے ہیں اور عبادت کرتے ہیں۔انہوں کہا کہ اس مقدس مہینے میں دنیا بھر کے مسلمان اللہ تعالی کے حضور گڑ گڑ ا کر اپنے گناہوں کی معافی مانگتے ہیں اور ذات باری تعالی سے رحمت و نعمت کے طلبگار ہوتے ہیں۔ اسپیکر اسد قیصر نے کہا کہ اس مہینے میں ہمیں کھلے دل سے اپنے حاجت مند بھائیوں کی مدد کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالی مہربان اور رحیم ہے اور اپنی مخلوق کی خدمت کرنے والوں کو عزیز تر رکھتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس ماہ مقدس میں اللہ پاک رحمتوں و برکتوں کے بے شمار دروازے کھول دیتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ماہ صیام میں روزے رکھنے سے ہمارے اندر معاشرے کے کمزور اور ضرورت مند طبقے کے لیے ہمدردی اور قربانی کے جذبات پیدا ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ رمضان ہمیں نیکی اور اعتدال پسندی کی راہ پر چلنے کاسبق دیتاہے۔انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک معاشرے میں بھلائی کے فروغ اور بدی کے خاتمے کا راستہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا مذہب انتہا پسندی اور مذہب کی آڑ میں دہشتگردی اور فساد فی الارض میں ملوث فرقہ واریت کی بھی مذمت کرتا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ بابرکت مہینہ پوری دنیا میں امن و سلامتی کو بحال کرنے کا باعث بنتا ہے۔ اسپیکر نے کہا کہ اس ماہ مقدس میں مسلم امہ کے درمیان غلط فہمیوں،فرقہ ورانہ تعصب اور بدامنی کا مکمل خاتمہ ہو گا اور یہ ماہ رمضان المبارک پوری بنی نوع انسانوں کے لیے عالمی وباء کورونا وائرس سے نجات کا ذریعے بنیے گا۔انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک میں ہمیں اپنے کشمیری بھائیوں کی مشکلات اور ان پر بھارتی حکومت کی جانب سے ڈھائے جانے مظالم کو نہیں بھولنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ اس رمضان المبارک میں پوری دنیا کے مسلمانوں کو کشمیری مسلمانوں کی آزادی کے لیے خصوصی دعائیں مانگنے کی ضرورت ہے۔ اسد قیصر کا مزید کہنا تھا کہ رمضان المبارک میں عبادات کرنے کی ساتھ ساتھ ہمیں مکمل احتیاطی تدابیر پر بھی عمل کرنا ہے تاکہ وبائی مرض سے دوسروں کی زندگیوں کو محفوظ بنایا جا سکے۔ ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری نے اپنے پیغام کہا کہ رمضان المبارک امن، بھائی چارے، غریب اور متوسط طبقات کا خیال رکھنے کا درس دیتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کی بابرکت سعاعتوں میں ہمیں اپنے رب سے گڑ گڑا کا دعا کر کے کورونا وائرس سے نجات حاصل کرنی ہے۔انہوں نے کہا کہ عالمی وباء کورونا وائرس سے ہمارے ملک کی معیشت بری طرح متاثر ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی وباء پوری دنیا کے مسلمانوں کے لیے ایک آزمائش ہے جس سے نجات پانے کے رمضان المبارک اللہ کی طرف سے ہمارے لیے تحفہ ہے اور وباء سے نجات کا ذریعہ ہے۔انہوں نے کہا کہ اس رمضان المبارک میں پوری قوم آزمائش سے گزر رہی ہے، آزمائش کی اس گھڑی میں ہمیں اپنے غرباء اور وباء سے متاثرہ خاندانوں کا خیال رکھنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ رمضان المبارک کی آمد کے صدقے ہمیں اس وباء سے نجات ملے۔ ڈپٹی اسپیکر نے کہا کہ ہمیں رمضان المبارک میں عبادات کے ساتھ ساتھ احتیاطی تدابیر پر بھی پوری طرح عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے تاکہ ہم احتیاطی تدابیر پر عمل کرتے ہوئے دوسروں کی زندگیوں کو بھی محفوظ بنا سکیں